خبرنامہ نمبر1078/2022
کوئٹہ، 08 مارچ ؛۔صوبائی مشیر داخلہ و قبائلی امور میر ضیائاللہ لانگو نے سبی میں ہونے والے بم دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ملک دشمن عناصر نے تاریخی سبی میلے کو سبوتاڑ کرنے کی کوشش کی ترقی مخالف عناصر نہیں چاہتے کہ بلوچستان میں امن ہو عوام ترقی کریں۔ انہوں نے کہا کہ دہشتگرد اس قسم کی بزدلانہ کارروائیاں کرکے بلوچستان کے امن کو سبوتاڑ کرنے کی ناکام کوشش کر رہے ہیں بلوچستان کے امن کو کسی صورت خراب نہیں ہونے دیں گے صوبائی مشیر داخلہ نے کہا کہ سیکیورٹی ادارے ملک میں امن برقرار رکھنے کے لئے ہمہ وقت تیار ہیں عوام اور سیکورٹی فورسز نے صوبے میں امن کے لئے جو قربانیاں دیں وہ ناقابل فراموش ہیں صوبے کے غیور عوام اور بہادر سکیورٹی فورسز صوبے کو دہشت گردی سے پاک کرنے کے لیے پوری طرح متحد ہے صوبائی مشیر داخلہ نے شہدا کے لواحقین سے تعزیت وہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے دھماکے میں ہونے والے زخمیوں کی جلد صحت یابی کے دعا کی اور ہدایت دی کہ زخمیوں کو بہترین طبی امداد فراہم کی جائے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1079/2022
کوئٹہ 08مارچ۔پارلیمانی سیکرٹری اطلاعات و سماجی بہبود محترمہ بشریٰ رند نے سبی میں ہونے والے بم دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے بم دھماکے میں قیمتی انسانی جانوں کے نقصان پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے انہوں نے کہا ہے کہ ملک دشمن عناصر نے تاریخی میلے کو سبو تاڑ کرنے کی کوشش کی ہے۔ صوبے میں قیام امن اور ترقی کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1080/2022
کوئٹہ 08مارچ۔صوبائی پارلیمانی سیکرٹری برائے ترقی نسواں مہ جبین شیراں نے کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت خواتین کے حقوق کے حوالے سے ریکارڈ قانون سازی اور تمام شعبوں میں شمولیت کے یکساں مواقع فراہم کر رہی ہیں بلوچستان میں خواتین زندگی کے تمام شعبوں میںمردوں کے شانہ بشانہ فعال کردار ادا کر رہی ہیں خواتین کو تحفظ فراہم کرنے سے ہی معاشرے ترقی کی راہ پر گامزن ہو سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ ہر سال 8 مارچ کو پاکستان سمیت دنیا بھر میں خواتین کاعالمی دن ترقی نسواں کے طور پر منایا جاتا ہے پاکستان سمیت بلوچستان میں عورتوں کے مسائل کے حوالے سے بیداری میں اضافہ ہوا ہے۔ موجودہ حکومت بلوچستان نے میر قدوس بزنجو کی سربراہی میں متعدد منصوبوں کو پایہ تکمیل تک پہنچانے سمیت مختلف قانون سازی سمیت خواتین کی معاشی شراکت داری اور مواقع روزگار میں عورتوں کی نمائندگی کے پختہ عزم کا اعادہ ظاہر کیا ہے انہوں نے کہا کہ خواتین کے عالمی دن کے منانے کا مقصد اس کے وجود کی عظمت کا اعتراف تھا کہ وہ صرف ایک جسم نہیں بلکہ زی روح انسان ہے اور جذبات رکھتی ہے اس کو زرخریدغلام سمجھنے والے انسان نہیں بلکہ درندے ہیں انہوں نے کہا کہ اسلام دنیا کا واحد مذہب ہے جس نے مرد و زن کو برابر کے حقوق دیا ہے اور عزت و وقار دے کر ہر کسی کے بنیادی حقوق کا تحفظ کیا ہے پاکستان جیسے معاشروں میں بچیوں کی پیدائش سے ہی امتیازی رویوں کا ایک نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع ہو جاتا ہے لیکن یہ متعصب رویہ ہر گزرتے دن کے ساتھ ساتھ اس وقت پیچیدہ اور گہرے ہوتے نظر آتے ہیں جب تعلیمی میدان سے لے کر شادی کے معاملات اور نوکریوں کے حصول تک خواتین کو خود کو منوانے کے لئے ایک اضافی جدوجہد کا سامنا کرنا ہوتا ہے انہوں نے کہا کہ اللہ کا شکر ہے کہ بلوچستان میں ملک بھر کی طرح خواتین کو اب عزت قدر وقار کی نظر سے دیکھا جاتا ہے تمام صوبوں میں ان کی نمائندگی کے ساتھ ساتھ عورتوں کو تعلیم،صحت ، زراعت کے میدان میں غرض کے تمام شعبہ ہائے زندگی میں ترقی کے یکساں مواقع کے مل رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ترقی نسواں میں جو قانون سازی ہوئی اس کی وجہ سے عورتوں کو ان کے جائز حقوق ملے ہوئے ہیںانہوں نے کہا کہ ماحولیاتی تبدیلی بھی زندگی کے تمام شعبوں پر اثر انداز ہورہی ہے اکثر دیہاتی علاقوں میں بنیادی انفراسٹرکچر کی سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے ہماری خواتین ڈلیوری کے دوران یا تو مر جاتی ہے یا کئی پیچیدہ امراض کے شکار ہوتے ہیں انہوں نے کہا کہ بنیادی انسانی حقوق کی فراہمی کو یقینی نہیں بنائے جائے گا تو ہمارے معاشرے میں خواتین پرجبر تشدد اور ظلم کے ہوتے رہیں گے انہوں نے عورتوں سے کہا کہ اپنے حقوق حاصل کرنے کے لئے ڈٹ کر کھڑا ہونا ہے رونا دھونا نہیں ہے کسی کی ہمدردی کی ضرورت نہیں بلکہ آج بلوچستان میں خواتین مکمل طور پر اپنے حقوق حاصل کرنے میںبااختیار اور آزاد ہے زندگی کے تمام میدانوں میں عورتوں کو ان کے جائز حقوق مل رہے ہیں خواتین کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے تمام رکاوٹیں عبور کرنا ہے لوگوں کی باتوں کو خیال میں نہیں لانا ہے سر اٹھا کے چلو سینے تھان کے چلو۔اس موقع پر ریٹائر سینیٹر جاوید جبار پارلیمانی سیکرٹری برائے اقلیتی امور خلیل جارج ہیومن رائٹس ڈولپمنٹ کے ظفر بلیدی ذوالفقار درانی چیئرپرسن پروینشن کمیٹی ان دا سٹیٹس آف ومن فوزیہ شاہین زلیخا رئیسانی خورشید بروچہ صابرہ اسلام ایس ایچ او فرزانہ منظور ترین نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خواتین کی صلاحیتوں سے بھرپور استفادہ حاصل کرتے ہوئے صنفی مساوات اور ترقی نسواں کے لیے مزید اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے مضبوط معیشت کے لیے ضروری ہے کہ صوبے میں خواتین کی کلیدی کردار کو دیکھتے ہوئے ان کی شراکت بہت اہم ہیں انہوں نے کہا کہ خواتین کو تمام اداروں میں شامل کرکے کے ان کے خلاف ہونے والے تشدد کے واقعات کی روک تھام ممکن ہو سکے گا ضرورت اس امر کی ہے کہ تمام اسٹیک ہولڈرز صنفی مساوات اور ترقی نسواں کے لیے کام کرنے والے ادارے پروفیشنلزم عزم کے ذریعے موثر اقدامات اٹھائیں جس سے یقینی طور پر خواتین کی حوصلہ افزائی ہو گی اور اس کے دور رس اثرات ہمارے معاشرے پر مرتب ہوں گے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1081/2022
لورالائی08مارچ۔اسسٹنٹ کمشنربوری جمیل احمدبلوچ نے بلوچستان ریذیڈنشل کالج لورالائی کا دورہ کیا اس موقع پر کالج میں کلاسز، لیبارٹریز، لائبریری، دفاتر، سمیت مختلف شعبوں کا معائنہ کیا اور مختلف کلاس رومز میں درس و تدریسی عمل کابھی جائزہ لیا،اسسٹنٹ کمشنربوری جمیل احمدبلوچ نے کہا کہ تعلیمی اداروں کا مقصد معاشرے کو مفید اور باصلاحیت افراد کی فراہمی ہے اگر تعلیمی ادارے اپنا حق ادا کریں گے تو باصلاحیت افراد کی تعداد میں اضافہ ہوگاجس سے معاشرہ ترقی کی راہ پر گامزن ہوگا،انہوں نے طلباء سے انکے مضامین سے متعلق سوالات کئے،بہترین نتائج اور اچھی کارکردگی سے متعلق رہنمائی بھی فراہم کی،اسسٹنٹ کمشنر نے اس بات پر زور دیا کہ طلباءکی اچھی نشونما کیلئے مناسب ماحول کی فراہمی یقینی بنائیں جس میں بچوں کو زیادہ سے زیادہ سیکھنے کے مواقع فراہم ہوں،پرنسپل پروفیسرمنصورالرحمن نے کالج میں نصابی و غیرنصابی سرگرمیوں سمیت کالج میں تعمیرات،ٹرانسپورٹ،سیکورٹی اور دیگر معاملات پر تفصیلی بریفنگ دی، کالج میں غیر نصابی سرگرمیاں بھی شروع کیے جائیں تاکہ طلباءکو تفریحی کے مواقع فراہم ہو،اسسٹنٹ کمشنر نے اسٹاف روم میں کالج کے پروفیسرز سے ملاقات کی،انکے مسائل دریافت کئے اورسیکورٹی بڑھانے کی یقین دہانی بھی کرائی ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1082/2022
دکی08مارچ۔اسسٹنٹ کمشنربوری جمیل احمدبلوچ ضلعی انتظامیہ کے ہمراہ بازارکے اچانک دورے پراشیاء خوردونوش کی معیار،گرانفروشوں،کم وزنی اور صفائی نہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرتے ہو ئے قصابوں سمیت دیگردکانوں کو چیک کیااس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر بوری جمیل احمد بلوچ نے کہا کہ کم وزن کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کر یں گے اور اشیاء خوردونوش کا سرکار نے نرخ نامہ مقرر کیا ہے لہذا تمام تاجران سرکاری نرخ کے مطابق اشیاءکو فروخت کریں اور خود ساختہ مہنگائی پیدا نہ کریں تاکہ عوام کو سستی اور مناسب قیمتوں پر تمام ضروری اشیاءدستیاب ہوں،اسسٹنٹ کمشنربوری جمیل احمدبلوچ نے د کانداروں کو ہدایت کی کہ وہ صفائی اور کورونا ایس او پیز کا خاص خیال رکھیں اور خالص اشیاءاستعمال کریں،ضروری اشیاءخوردونوش کو مہنگا فروخت کرنے والوں کے ساتھ کسی بھی قسم کی رعایت نہیں برتی جائے گی،ناقص اشیاءفروخت کرنے والوں اور مصنوعی مہنگائی کرنے والے دکانداروں پر مقدمات بناکر انہیں جیل بھیجا جائے گا،اسسٹنٹ کمشنرنے کہا کہ مناسب منافع تاجروں کا حق ہے لیکن ناجائز منافع خوری کرنے والوں کے خلاف کاروائی کرنا کسی جہاد سے کم نہیں،اسسٹنٹ کمشنربوری جمیل احمدبلوچ نے کہا کہ عوامی شکایات پرہی کاروائی کی گئی ہے اور ان ہدایات پر عمل نہ کرنے والوں کے خلاف آئندہ بھی کاروائی جاری رہے گی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1083/2022
کوئٹہ08مارچ ؛۔ آئی جی پولیس محسن حسن بٹ نے گزشتہ دنوں بلوچستا ن کی تاریخ میں پہلی بار کوئٹہ میں خواتین پولیس اسٹیشن کا افتتاح کرکے زرغونہ منظور ترین کو پہلی خاتون ایس ایچ او تعینات کردیا۔ گزشتہ دنوں پولیس اسٹیشن انڈسٹریل ایریا کو ایک خاتون کی رپورٹ ملی جہاں ڈی آئی جی کوئٹہ فدا حسن شاہ اور ایس ایس پی آپریشن عبدالحق عمرانی نے رپورٹ خواتین پولیس اسٹیشن منتقل کرنیکی ہدات کی جس پر ایس ایچ او زرغونہ منظور ترین نے کارروائی کرتے پہلی ایف آئی آر درج کردی۔ایس ایچ او زرغونہ منظور ترین نے اس عزم کا اظہار کیاکہ خواتین کے مسائل حل کرنے میں وہ اپنا بھرپور کردار ادا کرئیگی ویمن پولیس اسٹیشن پر خواتین اپنی شکایات لے کر پہنچنے لگیں اوراپنی شکایات اور مسائل خواتین پولیس کے سامنے باآسانی اور بلا جھجھک بیان کر رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ محکمہ پولیس انصاف کا آئینہ ہے۔پولیس خواتین اسٹیشن کے قیام سے خواتین کے مسائل ایک چھت تلے حل نکلے گا۔ خواتین پولیس اِسٹیشن میں ایف آئی آر درج کرنے سمیت جرائم کے خاتمے میں مدد ملے گی خواتین اہلکار تفتیش اور ایف آئی آر کے اندراج سمیت چھاپے بھی مار ئیگی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1084/2022
لورالائی08مارچ۔کمشنر لورالائی ڈویژن کی خصوصی ہدایت پرایڈیشنل کمشنر محمد ایوب نے کمشنر کمپلیکس میں موجود مختلف محکموں لوکل گورنمنٹ۔ٹرانسپورٹ۔آئی ٹی۔انفارمیشن۔شہری دفاع کے علاوہ کمشنر آفس کے سیکشنز کا دورہ کیا انہوں نے ڈیوٹی پر موجود ملازمین سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ملازمین کسی بھی محکمہ میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں وہ عوام کی خدمت کومقصد بنائیں اور اپنی ڈیوٹی پابندی سے ادا کر تے رہیں ان کے جائز مسائل کا حل موجود ہے حکومت کی ترجیح ہے انھیں ہرممکن سہولیات فراہم کریں گے انہوں نے کہا کہ غیر حاضر ملازمین کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی جس میں اس کی تنخواہ سے کٹوتی بھی شامل ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1085/2022
کوئٹہ08 مارچ – کمشنر کوئٹہ ڈویژن سہیل الرحمن بلوچ نے کہا کہ صحت کی بنیادی سہولیات کی فراہمی ہر شہری کا بنیادی حق ہے صوبائی حکومت صوبے میں صحت کے شعبے پر خصوصی توجہ مرکوز کر رکھی ہے تاکہ لوگوں کو بروقت اور مفت علاج ومعالجہ کی سہولت کے ساتھ ساتھ ادویات کی فراہمی کو بھی ممکن بنایا جا سکے۔ دور دراز کے علاقوں میں لوگوں کو صحت کی بنیادی سہولیات فراہم کرنے کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ہسپتالوں اور بنیادی مراکز صحت میں طبی سہولیات کو مستحکم بنانے کے لیے اقدامات کیے جائیں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈویژنل کوآرڈینیشن ہیلتھ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ ڈاکٹر شوکت علی،  ڈپٹی کمشنر کوئٹہ عرفان نواز میمن موجود تھے جبکہ اجلاس میں ڈپٹی کمشنر قلعہ عبداللہ منیر کاکڑ، ڈپٹی کمشنر چمن جمعداد خان، ڈپٹی کمشنر پشین ظفر علی نے بزریعہ ویڈیو لنک شریک ہوئے اجلاس سے کمشنر کوئٹہ ڈویژن سہیل الرحمن بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام کو صحت سے متعلق سہولیات کی فراہمی کے لیے جامع منصوبہ بندی کرتے ہوئے دستیاب وسائل میں رہتے ہوئے علاج و معالجے کی بہترین سہولت کے لیے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں ہسپتالوں میں ادویات کی فراہمی اور ڈاکٹرز کی کمی کو دور کرنے کے لئے ایک جامع رپورٹ مرتب کرکے حکام بالا کو بھیجوایا جائے گاتاکہ جلد از جلد ان کے مسائل کو حل کر کے صحت کی سہولیات کی فراہمی کو ممکن بنایا جاسکے انہوں نے کہا کہ تمام اسپتالوں اور بی ایچ یوز کو مکمل فعال کرکے انڈور اور آو¿ٹ ڈور سروسز کے لیے بھی اقدامات اٹھائے جائیں انہوں نے کہا کہ جو ڈاکٹرز ز اپنی ڈیوٹیوں سے غیر حاضر ہیں یا غفلت اور لاپرواہی سے کام کر رہے ہیں ان تمام ڈاکٹرز کی لسٹ مرتب کیا جائے تاکہ ان کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی عمل میں لائی جائے گی اجلاس میں کہا گیا کہ ادویات کی فراہمی، ڈاکٹرز اور دیگر سہولیات اور درپیش مشکلات کے حل کیلئے تمام تر اقدامات اٹھائے جائیں اور اس کے علاوہ روزانہ کی بنیاد پر او پی ڈیز میں ڈاکٹرز کی موجودگی کو یقنی بنائی جائے تا کہ دور دراز سے آنے والے مریضوں کو کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے انھوں نے تمام ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ صحت کے حوالے سے ڈسٹرکٹ کمیٹی کے اجلاس کو جلد از جلد منعقد کریں اور جہاں ادویات، میل اور فی میل ڈاکٹرز کی کمی ہو انہیں پورا کیا جائے تاکہ ہر علاقے تک صحت کی بنیادی سہولیات کی فراہمی میں روکاوٹیں دور ہوسکے۔اجلاس میں صحت کی فراہمی کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کا بھی تفصیلا جائزہ لیا گیا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1086/2022
سبی 08 مارچ ۔سبی کا تاریخی و روایتی میلہ مویشیاں واسپاں 2022 اپنی تمام تر رعنائیوں کے ساتھ اختتام پذیر ہوا اس پر پروقار اختتامی تقریب کے مہمان خصوصی صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی تھے جبکہ دیگر شرکاء میں گورنر بلوچستان سید ظہور احمد آغا کور کمانڈر بلوچستان جنرل سرفراز علی ، چیف سیکرٹری بلوچستان مطہر نیاز رانا ، صوبائی وزراءمحمد خان لہڑی ضیاءاللہ لانگو میر نصیب اللہ مری، قادر نائل ، آئی جی پولیس بلوچستان محسن حسن بٹ ، کمشنر سبی ڈویڑن بالاچ عزیز، ڈی آئی جی پولیس سبی مسرور عالم کولاچی، ڈپٹی کمشنر سبی سیدذاہدشاہ کمانڈنٹ سبی سکاو¿ٹس حافظ شاہد ندیم لاشاری اور دیگر ضلعی وہ انتظامی افسران موجود تھے اس موقع پر سینئر صوبائی وزیر برائے بلدیات سردار صالح بھوتانی نے سپاسنامہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ سبی میلہ کی تاریخ صدیوں پر محیط ہے جہاں ہمیں قومی یکجہتی کا بہترین مظاہرہ دیکھنے کو ملتا ہے وہاں تفریح و معاشرتی سرگرمیوں کے فروغ کا باعث بھی ہے انہوں نے کہا کہ صوبے کا سب سے بڑا مسئلہ بے روزگاری ہے جس کی وجہ سے نوجوانوں میں مایوسی بڑھ رہی ہے صوبے میں 35 ہزار خالی سرکاری آسامیاں ہیں جس کے لئے صوبائی حکومت ایک جامع حکمت عملی مرتب کر رہی ہے جس کے تحت صرف اور صرف میرٹ اور اہل لوگوں کو نوکریاں فراہم کی جا سکیں گی انہوں نے صدر مملکت سے گزارش کی کہ فنی تعلیم کے حصول کے لیے نوجوانوں کو سکالرشپ کے زیادہ سے زیادہ مواقع فراہم کئے جائیں تاکہ وہ تکنیکی تعلیم حاصل کر کے اپنا بہتر روزگار حاصل کر سکیں گے انہوں نے کہا کہ صوبے میں اب تک صحت کارڈ کا اجراء نہیں کیا گیا ہے صحت کارڈ کا اجراءجلد کرایا جائے تاکہ غریب لوگوں کو علاج معالجے کی بہتر سہولیات فراہم ہو سکیں انہوں نے کہا کہ صوبے کے ساحلی علاقوں میں ماہی گیروں کو معاشی تباہی سے بچایا جائے سمندری حدود میں باہر سے آئے ہوئے لوگوں کی جانب سے غیر قانونی ٹرالنگ کا نہ صرف خاتمہ کیا جائے بلکہ وہاں کے لوکل ماہیگیروں کے لئے جامعہ پالیسی مرتب کرائی جائے انہوں نے کہا کہ یہ انتہائی افسوسناک بات ہے کہ ہم ایک بات بچپن سے سنتے آ رہے ہیں کہ بلوچستان کے لوگوں کا احساس محرومی کا خاتمہ۔ لیکن اب تک اس کا خاتمہ حقیقی طور پر نہیں ہوا ہے انہوں نے صدر پاکستان سے اپیل کی کہ وہ ناراض لوگوں کو قومی دھارے میں شامل کرانے کے لیے اپنا بنیادی کردار ادا کریں اور بلوچستان کو اس کا جائز حق دلوانے میں کردار ادا کریں حق ملنے پر یہ بات دعوے سے کہی جا سکتی ہے کہ نہ صرف صوبہ بلکہ پاکستان بے پناہ ترقی کرے گا انہوں نے کہا کہ زراعت کے شعبے کو ترقی دینے کے لیے سولر سسٹم کو فروغ دیا جائے تو زراعت میں کافی ترقی حاصل کی جا سکتی ہے قبل ازیں کمشنر سبی ڈویڑن بالاچ عزیز نے مہمانوں کو روایتی پگڑی پہنائی سبی میلہ کی مناسبت سے اسٹیڈیم میں رنگا رنگ پروگرام ترتیب دیے گئے تھے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1087/2022
سبی 08 مارچ؛۔کمانڈنٹ سبی سکاوٹس کرنل حاظ شاہد ندیم لاشاری نے سبی میلہ مویشیاں واسپاں کے موقع پر زرعی و صنعتی نمائش میں سائنس اینڈ انفارمیشن ٹیلنالوجی کے سٹال کا معائنہ کیا ڈویژنل ڈائریکٹر سائنس اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی میر عمران لاشاری نے کمانڈنٹ سبی سکاوٹس کو بریفنگ دیتے ہوے بتایا کہ صوبے بھر میں آئی ٹی مختلف پراجیکٹس پر کام کر رہی ہیں جسمیں کوئٹہ سیف سٹی ، آئی ٹی پارک ، فری لانسنگ اینڈ ٹریننگ ، ای فائلنگ ، ورچول ایجوکیشن 100 سے زائد سکولز، ڈیٹا سینٹر وغیرہ شامل ہیں کمانڈنٹ سبی سکاوٹس کرنل حافظ شاہد ندیم لاشاری نے بات چیت کرتے ہوے کہا کہ سائنس اینڈ آئی ٹی وقت کی اہم ضرورت ہے اور محکمہ آئی ٹی کی اہمیت سے موجودہ دور میں کسی کو بھی انکار نہیں ہے تمام شعبہ ہائے میں کوئی گوشہ ایسا نہیں جہاں آئی ٹی اور کمپیوٹر کی ضرورت یا استعمال نہ ہوتا ہو انہوں نے محکمہ کی بہتر کارکردگی اور کاوشوں کو سراہا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1088/2022
کوئٹہ 08مارچ۔سینئر صوبائی وزیر خزانہ نورمحمددمڑ نے سبی جیل روڈ میں دھماکے کی شدید مذمت  کی ہےوزیرخزانہ نے دھماکے میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اورافسوس کا اظہارکیا ہے۔وزیر خزانہ نے جاں بحق افراد کے لواحقین سے دلی ہمدردی و اظہار تعزیت کیا ہےوزیر خزانہ نے زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے دعاکی ہےصوبائی حکومت کی تمام تر ہمدردیاں جاں بحق افراد کے لواحقین اور زخمیوں کے ساتھ ہیں۔ وزیر خزانہ نے کہاکہ غمزدہ خاندانوں کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں۔ وزیر خزانہ کا کہنا تھاکہ معصوم لوگوں کو نشانہ بنانا انتہائی قابل مذمت فعل ہےدہشت گردی کا یہ واقعہ امن و امان کی فضا کو سبوتاڑ کرنے کی مذموم کارروائی ہے۔ اسطرح دہشت گرد بزدلانہ کارروائیوں سے قوم کا حوصلہ پست نہیں کرسکتے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment