خبرنامہ نمبر623/2019 
کوئٹہ22فروری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے حالیہ بارشوں اور سیلاب سے متاثرہ اضلاع میں جاری امدادی سرگرمیوں میں پاک فوج کے بھرپور تعاون کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ پاک فوج نے اپنی شاندار روایات کو برقرار رکھتے ہوئے قدرتی آفت اور ہنگامی صورتحال میں متاثرین کو ریسکیو کرنے،انہیں محفوظ مقامات تک پہنچانے اور ان تک امدادی سامان کی ترسیل میں ضلعی انتظامیہ کی بھرپور معانت کی جس کی وجہ سے بہت سی قیمتی جانوں کو بچانا ممکن ہوسکا، اپنے ایک بیان میں وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ پاک فوج کی جانب سے فراہم کئے جانے والے ہیلی کاپٹر اور حکومت بلوچستان کا ہیلی کاپٹر متاثرہ علاقوں میں جہاں زمینی راستوں سے رسائی ممکن نہیں، مربوط امدادی سرگرمیوں میں مصروف عمل ہیں، وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ حکومت کی کوشش ہے کہ تمام متاثرہ علاقوں تک رسائی ممکن بناتے ہوئے متاثرین کو خوراک اور دیگر ضروری اشیاء پہنچائی جاسکیں، اس کے ساتھ ساتھ ان علاقوں میں میڈیکل کیمپ اورمال مویشیوں کی ڈسپنسریاں بھی قائم کی گئی ہیں،جلد متاثرین کی بحالی اور متاثر ہونے والے بنیادی ڈھانچے کی تعمیر نو کا آغاز بھی کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مشکل کی اس گھڑی میں عوام، پاک فوج اور صوبائی حکومت متاثرین کے ساتھ ہیں اور متاثرین کی امدادوبحالی کے جاری عمل کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے تمام تر وسائل فراہم کئے جائیں گے۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر624/2019
کوئٹہ22فروری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی ہدایت پر پارلیمانی سیکریٹری برائے کیوڈی اے محترمہ بشریٰ رند نے آغا خان ہسپتال کراچی جاکر مضر صحت خوراک کھانے سے جاں بحق ہونے والے بچوں کے لواحقین سے ملاقات کی جن کا تعلق ضلع پشین کی تحصیل خانوزئی سے ہے، محترمہ بشریٰ رند نے سوگوار خاندان سے وزیراعلیٰ بلوچستان اور اپنی جانب سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت سوگواران کے دکھ میں برابر کی شریک ہے اور ان کی ہرطرح کی معاونت کرے گی۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 625/2019
کوئٹہ22فروری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی جانب سے کمشنر قلات ڈویژن کو حالیہ باش اور سیلاب کے متاثرین کے لئے خوراک اور دیگر ضروری اشیاء کی مقامی مارکیٹ سے خریداری کی ہدایت کی گئی ہے، اس اقدام کا مقصد امدادی اشیاء کی خریداری میں وقت کی بچت اور مقامی سطح پر معاشی سرگرمی پیدا کرنا ہے، وزیراعلیٰ کی ہدایت کی روشنی میں امدادی اشیاء کی خریداری کے لئے ڈپٹی کمشنر خضدار اور ڈپٹی کمشنر لسبیلہ کی سربراہی میں کمیٹیاں قائم کی گئی ہیں جن میں کمشنر قلات کے مقرر کردہ نمائندے، پی ڈی ایم اے کے ضلعی حکام اور متعلقہ اسسٹنٹ کمشنر بھی شامل ہوں گے۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 626/2019
کوئٹہ22فروری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کراچی میں ہوٹل کا مضر صحت کھانا کھانے سے ایک ہی خاندان کے پانچ بچوں کے جاں بحق ہونے پر دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے، اپنے ایک بیان میں وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ یہ واقعہ انتہائی افسوسناک ہے اور ہم لواحقین کے غم میں شریک ہیں، انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت سوگوار خاندان کے ساتھ ہرممکن تعاون کرے گی جبکہ وزیراعلیٰ نے پارلیمانی سیکریٹری بشریٰ رند کو جو کہ کراچی میں موجود ہیں لواحقین سے فوری رابطہ کرنے کی ہدایت کی ہے، وزیراعلیٰ نے توقع ظاہر کی ہے کہ کراچی پولیس واقعہ کی جلد تحقیقا ت کرکے محرکات کا تعین کرے گی، وزیراعلیٰ نے دعا کی ہے کہ اللہ تعالیٰ مرحومین کو اپنے جوار رحمت میں جگہ دے اور سوگوار خاندان کو صبرجمیل عطا کرے۔
()()()
خبرنامہ نمبر 627/2019
کوئٹہ22فروری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی ہدایت پر حالیہ بارشوں اور سیلاب سے متاثرہ علاقوں کی صورتحال کی مانیٹرنگ ، متاثرین کی شکایات کے حصول اور امدادی سرگرمیوں کو مربوط کرنے کے لئے وزیراعلیٰ سیکریٹریٹ میں کنٹرول روم کے قیام کو متاثرہ علاقوں کے عوام کی جانب سے سراہاجارہا ہے، اور اپنی شکایات اور مشکلات سے کنٹرول روم کو آگاہ کیا جارہا ہے، جمعہ کے روز لسبیلہ، بارکھان، خضدار کے اضلاع سے متاثرین نے کنٹرول روم کو بارش اور سیلاب سے پیدا مسائل سے آگاہ کیا، کنٹرول روم کی جانب سے فوری طور پر ڈی جی پی ڈی ایم اے اورمتعلقہ کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو ان مسائل کے حل اور پیشرفت رپورٹ دینے کی ہدایت کی گئی جسے وزیراعلیٰ کو پیش کیا جائے گا۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 628/2019
کوئٹہ22فروری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی ہدایت پر محکمہ صحت کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل صحت کی سربراہی میں ڈاکٹروں کی ٹیموں نے متاثرہ علاقوں میں میڈیکل کیمپ قائم کرکے متاثرین کو علاج معالجہ کی سہولتوں کی فراہمی شروع کردی ہے اور انہیں ادویات بھی دی جارہی ہیں، ٹیموں میں سینئر ڈاکٹر اور پیرامیڈیکل عملہ شامل ہے جن کے پاس وافر مقدار میں ادویات، طبی آلات اور ایمبولینس بھی موجود ہیں۔
()()()
خبرنامہ نمبر 629/2019 
کوئٹہ22فروری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے گوٹھ غلام رسول لہڑی میں کمسن بچی کے بہیمانہ قتل کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے کرائمز برانچ کو واقعہ کی تحقیقات کرتے ہوئے اس میں ملوث عناصر کا تعین کرکے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے، وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ انہیں قتل کے واقعہ پر دکھ پہنچا ہے، سوگوار خاندان کو انصاف فراہم کیا جائے گا اور واقعہ میں ملوث عناصر کو قرارواقعی سزا دی جائے گی۔ انہوں نے کہا ہے کہ ضرورت پڑنے پر واقعہ کی تحقیقات کے لئے جی آئی ٹی تشکیل دی جائے گی۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 630/2019
خضدار 22فروری ۔ممتاز محقق دانشور پروفیسر لیاقت سنی ،دانشور سلطان احمد شاہوانی اور بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کے مرکزی چیئرمین ڈاکٹر نواب بلوچ نے کہا ہے کہ بلوچ اور برائیوئی ایک گل دستے کے دو پھول ہے بلوچی اگر جسم تو برائیوئی اس کی جان ہے جسم اور جان ایک دوسرے کے لئے لازم ملزوم ہوتے ہیں ہمیں اندرونی و بیرونی سازشوں کو ناکام بنا کر اپنی زبان ،ثقافت اور دو و ربیدہ کی حفاظت کے لئے عملی کام کرنا ہو گا ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی اور برائیوئی اکیڈمی خضدار کے زیر اہتمام خضدا رپریس کلب میں مادری زبانوں کے عالمی دن کے مناسبت سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب سے عالم برائیوئی ،محمد وارث شائین،پروفیسر مان منصور ،پروفیسر سیراج ساگر بلوچ، رشید کریم بلوچ ،پروفیسر محمد عالم جتک،گودی جہلاوان ہماء رئیسانی،عید محمد ایڈووکیٹ، ڈاکٹر صبہ بلوچ ،عمران بلوچ ،عبدالرزاق شاہوانی ،حیدر زمان بلوچ ،محمد وارث شائین،آصف رضا بلوچ اور دیگر نے خطاب کیا مقررین نے کہا کہ دنیا میں 12000 زبانیں تھیں جو کم ہو کر اب 7000 ہزار تک رہ گئی ہیں مادری زبانیں اس وقت ختم ہوتی ہیں جب ہم خود ان کی تحفظ کے لئے کچھ نہیں کرتے ہم لوگ تو کرتے ہیں مگر عملی کام نہیں کرتے ،تنقید کرتے ہیں مگر تعمیر کا نہیں سوچھتے ،سوال اٹھاتے ہیں مگر خود کوئی کردار ادا نہیں کرتے ہیں ،زبان کی باتیں کرتے ہیں مگر اپنی گھروں میں دوسرے زبانوں کو اہمیت دیتے ہیں ،دوسروں پر انحصار کرتے ہیں مگر خود کوئی کام نہیں کرتے یہ تمام بیماریوں کا اعلاج اس میں ہیں کہ ہم انحصار کم کریں خود انحصاری سے کام کریں تنقید کم کرے تعمیر شروع کریں تب جا کر ہماری زبان ہماری ثقافت اور ہمارے دود و ربیدہ محفوظ ہو گی اب تک تو ہم رسم الخط سے محروم ہیں ہمارے ادیب لکھاری اور دانشوروں کو اس جانب سوچھنا ہو گا تقریب سے پروفیسر لیاقت سنی نے اپنے خطاب میں کہا کہ جدید تحقیق کے مطابق بلوچ کے چھ زبانیں ہیں جن میں ایک برائیوئی بھی ہے اور برائیوئی بنیادی طو رپر بلوچ کا ابتدائی زبان ہے دونوں میں تفریق کرنے کی سازشوں کو ہمیں نا کام بنانا ہو گا اندرونی و بیرونی سازشوں کو بے نقاب کر کے ان کا حوصلہ شکنی کرنی ہو گی تقریب میں ایک قرار داد کے زریعے اس بات پر زور دیا گیا کہ برائیوئی زبان کو بھی سی ایس ایس کے امتحانات میں شامل کیا جائے جھالاوان کے ادبی شخصیات کا بھی بی اے اور ایم اے کے امتحانات میں تزکرہ شامل کیا جائے تقریب میں سیاسی جماعتوں کے کارکنان ،خواتین و حضرات نے بڑی تعداد میں شرکت کی شرکاء نے بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی اور برائیوئی اکیڈمی خضدار شاخ کی جانب سے مادری زبانوں کے عالمی دن کو ایک ساتھ منانے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ اس تقریب سے برائیوئی اور بلوچی زبان کو الگ کرنے والے عناصر کی حوصلہ شکنی ہو گی انہوں اس امید کا اظہار کیا کہ آئندہ بھی اسی طرح مشترکہ تقریبات کا انعقاد کر کے اندرونی و بیرونی سازشوں کا ناکام بنائیںَ۔
()()()
خبرنامہ نمبر631/2019
خضدار 22فروری:۔کمشنر قلات ڈویژن بشیر احمد بنگلزئی نے قلات ڈویژن میں حالیہ بارشوں کے بعدکے صورتحال سے نمٹنے اور اس حوالے سے جاری امدادی سرگرمیوں کی نگرانی کے لئے کمشنر سیکرٹریٹ میں کنٹرول روم قائم کردیا ہے کنٹرول روم کے قیام کامقصد امداد و بحالی کی سرگرمیوں کو مربوط کرنا ہے متاثرہ علاقوں کے عوام اپنے مسائل اور مشکلات سے متعلق کنٹرول روم 0848413285پرآ گاہ کرسکتے ہیں۔
()()()
خبر نامہ632/2019
خضدار22فروری :۔وزیراعلیٰ بلوچستان کے اسپیشل اسسٹنٹ آغا شکیل احمد درانی نے کہاہے کہ بارش سیلاب سے نقصان پہنچنے والے خاندانوں کی ہرممکن مدد کی جائیگی حکومت ایسے گھرانوں کو بے بس نہیں چھوڑے گی جو کہ سیلاب سے متاثر ہوئے،خضدار کے دور دراز علاقوں آڑینجی ، سارونہ و دیگر مقامات پر سیلاب سے متاثر ہونے والے خاندانوں کو راشن کی فراہمی کے لئے فوری اقدامات کیئے گئے ، کمشنر قلا ت ڈویژن ایڈیشنل کمشنر اور ڈپٹی کمشنر خضدار ، ڈپٹی کمشنر لسبیلہ نے بروقت ریسکیو آپریشن اور ریلیف میں حصہ لیکر متاثرین کی داد رسی کی، جب کہ اس موقع پر پاک آرمی کی بھی مدد لی گئی، اوتھل میں پھنسے افراد کو پاک آرمی کے ہیلی کاپٹرنے ریسکیو کرکے بحفاظت ان کی جان بچائی گئی ، پاک فوج اور ضلع انتظامیہ کے مشترکہ فضائی آپریشن میں اب تک دو سو سے زائدپھنسے افراد کو نکال لیا گیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ وزیراعلیٰ بلوچستان کے اسپیشل اسسٹنٹ آغا شکیل احمد درانی نے کہاکہ حکومت متاثرین کا اعدادو شمار جمع کررہی ہے جن کے نقصانات ہوئے یا جو خاندان متاثر ہوئے ان کی ہرممکن مدد کی جائیگی۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں گزشتہ دنوں کافی بارشیں ہوئیں اورسیلاب آیا لیکن حکومت کی ہدایت پر اضلاع کے انتظامیہ نے بروقت و موثر ریسکیو میں حصہ لیکر عوام کی جان و مال کو بچانے میں کامیاب ہوئے ، کمشنرز ،ایڈیشنل کمشنرز ،ڈپٹی کمشنر ز، اسسٹنٹ کمشنرز اور ان کے دوسرے معاونین کا کردار قابل تحسین رہا۔ انہوں نے کہاکہ حکومت متاثرہ خاندانوں کو تنہائی نہیں چھوڑے گی اور ان کو ضروری اشیاء کی فراہم کے لئے فوری اقدامات کیئے گئے اور مز ید سامان فراہم کیا جارہاہے۔
()()()
خبرنامہ نمبر 633/2019
بارکھان22فروری : ۔صوبائی وزیرخوراک بہبودآبادی سردار عبدالرحمن کھیتران کے دورہ بارکھان کے دوران یونین کونسل عیشانی شادوخان عیشانی پہنچنے پر لوگوں کی بڑی تعدادنے ان کا شاندار استقبال کیا۔ اس موقع پر صوبائی وزیر نے یونین کونسل عیشانی شادوخان عیشانی اور دیگر بستیوں سے آئے ہوئے لوگوں سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔ ان کے ہمراہ سابق چیئرمین میونسپل کمیٹی سردارذادہ سلام شاہ کھیتران ،وڈیرہ ذوالفقار اولیانی ،وڈیرہ خان داد کرورانی،وڈیرہ نیک محمد باڈیانی ،میرشاہ بازخان ،حاجی لیاقت، ایس ڈی او ایریگشن امیر محمدکیھتران، ایس ڈی او بی اینڈ آر محمداسماعیل ،ایس ڈی او پی ایچ ای نسیم زرکون ودیگر سرکاری آفیسران وقبائلی معتبرین تھے۔صوبائی وزیر نے اس موقع پر لوگوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ موجودہ صوبائی حکومت وزیراعلیٰ جام کمال خان کی قیادت میں صوبے کی ترقی اور امن وامان کی صورت حال کو برقراررکھنے کیلئے اپنے تمام تر وسائل بروئے کار لارہی ہے۔ آنے والے سال ترقی کیلئے نہایت اہم ہیں، نوجوان اپنی تمام تر توجہ تعلیم پر مرکوز رکھیں ۔تعلیم یافتہ نوجوان ہمارے ملک کااصل سرمایہ ہیں۔ جنہوں نے مستقبل میں اس ملک کی باگ دوڑسنبھالنی ہے ۔عوام کی خدمت ہمارانصب العین ہے عوام کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے کرینگے ،میرے دورے کامقصد عوام سے مسائل معلوم کرکے وسائل کے اندر رہ کر ان کو حل کرنا ہے۔ اجتماعتی منصوبو ں کی نشاندہی کریں تاکہ ان سکیمات کے زیادہ سے زیادہ لوگ مستفید ہو،یونین کونسل عیشانی کے دورے کے موقع پر صوبائی وزیر نے مختلف گاؤں کیلئے ترقیاتی سکیمات کا اعلان بھی کیا ۔صوبائی وزیر نے علاقہ بہدیانی کے لیے بی ایچ او ،بستی وڈیرہ ترین صدرانی کیلئے بی ایچ او،بستی دوست محمد پرائمری اسکول کی بلڈنگ اور بستی رمضان بندیانی کیلئے پختہ روڈ ، بستی حاجی علی محمد خیالانی کیلئے کڑواروڈ سے ایک پختہ روڈ اور واٹرسپلائی سکیم کا بھی اعلان کیا اور بستی کڑوا میں زچہ وبچہ سینٹر اور بستی شادوخان عیشانی میں گرلز مڈل سکول اورزچہ وبچہ سینٹر اور زمینداروں کیلئے ڈوزرکے گھنٹے تقسیم کئے اور ماسٹر ظریف خان کی بستی کیلئے پختہ روڈ کابھی اعلان کیا ،آخر میں یونین کونسل عیشانی کی طرف سے ماسٹر ظریف خان کے گھر انکے اعزازمیں دئیے گئے عشائیہ میں بھی شرکت کی ۔ قبل ازیں صوبائی وزیر خوراک وبہودآبادی سردار عبدالرحمن کیھتران ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ بارکھان بمقام رکنی گئے ۔ڈسٹر کٹ بار ایسوسی ایشن بارکھان کے صدر شبیر خان ایڈوکیٹ، محمد شفیع ایڈوکیٹ اور عتیق الر حمن بزدار ایڈوکیٹ ودیگر وکلاء نے صوبائی وزیر سے ملاقات کی اور ان کے اعزاز میں چائے پارٹی دی ۔ اس موقع پرصوبائی وزیرخوراک بہبودآبادی سردار عبدالرحمن کھیتران نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ بارکھان بمقام رکنی کیلئے ریسٹ ہاؤس کا اعلان کیا۔
()()()
خبرنامہ نمبر 634/2019
کوئٹہ22فروری:۔محکمہ صحت کی جانب سے جاری کئے گئے پریس ریلیز میں ضلع لسبیلہ اور خضدار میں متاثرین کے لئے جاری علاج معالجہ کی سرگرمیوں کے حوالے سے تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ جمعہ کے روز پانچ افراد کو بذریعہ ہیلی کاپٹر سیلابی ریلے سے نکال کر محفوظ مقام تک پہنچایا گیا، ضلع لسیبلہ میں سیلاب سے آج تک چھ افراد جاں بحق ہوئے ہیں، ضلع خضدار کی تحصیل آڑنجی میں ڈاکٹروں، طبی عملہ اور ادویات پر مشتمل دو ٹیمیں پہنچ چکی ہیں جبکہ مزید ایک ٹیم کو بذریعہ ہیلی کاپٹر آرنجی بھجوایا جارہا ہے، ڈائریکٹر جنرل صحت اور ڈائریکٹر پبلک ہیلتھ ادویات کے ہمراہ اوتھل پہنچے ہیں جہاں وہ علاج معالجہ کی سرگرمیوں کی نگرانی کریں گے۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 635/2019 
کوئٹہ22فروری:۔بلوچستان اکیڈمی فار کالج ٹیچرز BACT میں 5روزہ ٹریننگ ورکشاپ کا اختتامی تقریب کا انعقاد کیاگیا ۔ کالج پروفیسرز کے لئے منعقد کی گئی اس ٹریننگ ورکشاپ کا آغازمورخہ 18فروری سے ہوا ۔ 5 دن مسلسل ٹریننگ سیشنز کے بعدمورخہ 22فروری کو یہ ٹریننگ اپنے اختتام پر پہنچی ۔ بی ایس پروگرام کی اس ٹریننگ کے لئے BACT کے ساتھ ہائر ایجوکیشن کالجز اینڈ ٹیکنیکل ایجو کیشن اور HEC اسلام آباد نے تعاون کیا تھا ۔ اس ٹریننگ سیشن میں بلوچستان بھر سے تقریباً 30 لیکچرز اور پرو فیسر ز صاحبان نے شرکت کی ۔ اختتامی تقریب کے مہمان خصوصی عبدالصبور کاکڑ سیکریٹری کالجز ٹیکنیکل اینڈ ہائر ایجو کیشن حکومت بلوچستان موجود تھے اور اس تقریب کے لئے احمد یحییٰ ڈی جی HECنے خصوصی طور پر شرکت کی۔ اس موقع پر ڈائریکٹر BACTپروفیسر سعد اللہ توخئی نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے BACT کی کار کردگی پر ایک جائزہ پیش کیا اور مستقبل قریب میں ہونے والی ٹریننگ اور منصوبوں کے بارے میں آگاہ کیا ۔ مہمان خصوصی نے شرکاء ٹریننگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آپ سب کیلئے ٹریننگ اس لئے بھی ضروری ہے کہ اب BS تمام کالجوں میں لازمی قرار دے دیا گیا ہے اور اب ہائر ایجو کیشن بیکٹ کو State of Art بنانا ہماری اولین ذمہ داری ہوگی۔ اس تقریب میں ڈائریکٹر کالجز ٹیکنیکل اینڈ ہائر ایجوکیشن محترمہ رباب حمید درانی ، ڈی جی HEC احمد یحییٰ ، ایڈیشنل سیکریٹری کالجز ٹیکنیکل اینڈ ہائر ایجو کیشن فاروق کاکڑ صاحب بھی موجود تھے۔ 
()()()
پریس ریلیز 
کو ئٹہ 22 فروری۔ یزدان خان ماڈل اسکول کے سابق پرنسپل اور تعمیر نو پرائمری سکول کے پرنسپل مبین احمد کے بڑے بھائی حاجی محمد نعیم حیدر آباد میں انتقال کرگئے جس کی تدفین میں شرکت کے بعد مبین احمد کوئٹہ پہنچ گئے ہیں وہ ھفتے اور اتوار کے روز اپنی رہائش گاہ واقعہ بلاک نمبر2 سیٹلائٹ ٹاؤن نزد لیبر ہال میں اپنے بھائی حاجی محمد نعیم کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی جاری ہے ۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment