خبرنامہ نمبر 643/2020
سبی19فروری :۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ موجودہ دو رمیں صنعتکاری کے شعبہ میں انقلابی ترقی کے باوجود بلوچستان کے لوگوں کی معیشت زراعت اور مالداری سے وابستہ ہے، یہ دونوں شعبے ایک دوسرے کے ساتھ منسلک ہیں، صوبائی حکومت کی پالیسیوں اور صوبائی اور وفاقی حکومت کی توجہ سے زراعت اور مالداری کے شعبے ترقی کریں گے جس کا فائدہ ان شعبوں سے منسلک افراد کو پہنچے گا، اس کے باوجود کہ صوبے کی اسی فیصد آبادی کا روزگار انہی دو شعبوں پر انحصار کرتا ہے،ماضی میں ان دونوں شعبوں کو نظر انداز کیا گیا جس کاازالہ موجودہ حکومت کررہی ہے، ان خیالات کا اظہار انہوںنے تاریخی سبی میلہ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا جس کے مہمان خصوصی صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی تھے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ بلوچستان بنیادی طور پر ایک زرعی علاقہ ہے اور مالداری اور زراعت صوبے کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں یہی وجہ ہے کہ سبی میلے میں ان دونوں شعبوں کی خصوصی نمائندگی ہوتی ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت صوبے کے وسائل کی ترقی اور انہیں ملک اور صوبے کے معاشی و اقتصادی استحکام کے لئے بروئے کار لانے کی ایک واضع پالیسی پر عمل پیرا ہے اور رواں مالی سال کے صوبائی بجٹ میں خاص طور سے زراعت اور مالداری کے شعبوں کی ترقی کے منصوبوں کے لئے خطیر فنڈز مختص کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ زرعی ترقی کے لئے زمینداروں اور کاشتکاروں کے لئے گرین ٹریکٹر پروگرام کا آغاز کیا گیا ہے جس کے تحت ایک ہزار ٹریکٹر دیئے جائیں گے ، آن فارم واٹر مینجمنٹ پروجیکٹ کے ذریعہ واٹر چینلز، واٹر سٹوریج ٹینکس، اور آبپاشی کے جدید طریقوں کو متعارف کرانے کے منصوبے شروع کئے گئے ہیں۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ بلوچستان لائیو اسٹاک کے شعبہ میں ترقی کی بے پناہ گنجائش رکھتا ہے اور حکومت اس شعبہ کی ترقی کو بھی خصوصی اہمیت دے رہی ہے جس سے چھوٹے پیمانے پر معاشی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا، صوبائی سطح پر لائیو اسٹاک پالیسی متعارف کرائی گئی ہے جبکہ صوبے کی چراہ گاہوں کی ترقی کے منصوبے بھی شروع کئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ صوبے کی پہلی بلوچستان لائیو اسٹاک ایکسپو 2019ءکا کامیاب انعقاد کیا گیا جس کے مہمان خصوصی صدر محترم تھے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ سبی میلہ حکومت اور عوام کے درمیان رابطے کا بہترین ذریعہ ہونے کے ساتھ ساتھ مالداروں او ر زمینداروں کے لیے نئے تجربات سے استفادہ کرنے کا بہترین موقع بھی فراہم کرتا ہے ۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ بلوچستان ایک وسیع وعریض صوبہ ہے جہاں دورویہ قومی شاہراہوں کی بہت زیادہ ضرورت ہے، وزیراعظم عمران خان نے سی پیک کے ویسٹرن روٹ ژوب تاکوئٹہ دورویہ شاہراہ کی تعمیر کا سنگ بنیاد رکھ دیا ہے جبکہ چمن تا کراچی شاہراہ کو دورویہ کرنے کے منصوبے کا بھی جائزہ لیا جارہا ہے اور فزیبیلیٹی رپورٹ پر کام جاری ہے، وزیراعلیٰ نے صدرمملکت سے جعفرآباد، ڈیرہ مراد جمالی، سبی کوئٹہ شاہراہ کو دورویہ بنانے کی درخواست کی اور توقع ظاہر کی کہ صدر مملکت آئندہ مالی سال کی وفاقی پی ایس ڈی پی میں اس منصوبے کو شامل کرانے کے لئے اپنا کردار ادا کریں گے، اس شاہراہ کی تعمیر سے علاقے میں اقتصادی اور معاشی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا۔انہوںنے کہا کہ مالداری ہو یا زراعت ، دیہی ترقی ہو یا جدید شہری ترقی ان سب کیلئے پرامن ماحول کا ہونا ضروری ہے، امن اور ترقی کا چولی دامن کا ساتھ ہے ۔ ہماری حکومت صوبہ میں امن کے قیام کو دیگر تمام باتوں پر ترجیح دیتی ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہم صوبے کے وسائل کو ترقی دینے کے ساتھ ساتھ اس امر کو یقینی بنانے کے لئے بھی کوشاں ہیں کہ ترقی کے عمل سے بلوچستان کے عوام بھرپور استفادہ کرسکیں، چین پاکستان اقتصادی راہداری بلوچستان اور پاکستان کی معیشت میں مثبت تبدیلی کا منصوبہ ہے جس سے پورے خطہ کی تقدیر بد ل جائے گی۔انہوں نے کہا ہمیں مکمل اتحاد و اتفاق کے ساتھ صرف اس بات کی کوشش کرنی چاہیے کہ ہم اس سنہری موقع سے بھرپور فائدہ اٹھاسکیں اور بلوچستان کے عوام کو زیاد ہ سے زیادہ مستفید کرسکیں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہم نے بلوچستان سے ہر قسم کی دہشتگردی ختم کر کے اسے ایک بار پھر سے امن ، بھائی چارہ اور رواداری کا گہوارہ بنانے کا تہیہ کر رکھا ہے ، امن اور ترقی ہمارے مشترکہ مقاصد ہیں۔ بلوچستان ہم سب کا گھر ہے اور اس کی تعمیر و ترقی ہم سب کی ذمہ داری بھی ہے۔وزیراعلیٰ نے سبی میلے کے شاندارانعقاد پر منتظمین کو مبارکباد پیش کی اورمیلے کی افتتاحی تقریب میں شرکت پر صدر مملکت کا شکریہ ادا کیا۔
خبرنامہ نمبر 644/2020
کوئٹہ19فروری: ۔خاتون اول ثمینہ عارف علوی سے بدھ کے ر وز گورنر ھاوس کوئٹہ میں سابق سینیٹر روشن خورشید بروچہ کی قیادت میں ایس اوایس ویلج کے بچوں اور بچیوں نے ملاقات کی. اس موقع پر بیگم گورنربلوچستان ڈاکٹرثمینہ امان اور رکن صوبائی اسمبلی شاہینہ کاکڑ، خاتون اول کے ہمراہ تھیں. چیئرپرسن ایس اوایس ویلیج اور سابق سینیٹر روشن خورشید بروچہ نے خاتون اول کو ایس اوایس ویلیج کی کارکردگی اور آئندہ کے لائحہ عمل سے آگاہ کیا۔اس دوران خاتون اول ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ نادار اور بے سہارا بچوں سے ملکر ذہنی سکون میسر ھوا اور یہ بچے بہت سی خداداد صلاحیتوں کے حامل ہیں. انکی پوشیدہ صلاحتیوں میں نکھار پیدا کرنے کے حوالے سے ایس او ایس ویلیج کی چیئرپرسن اور انکی پوری ٹیم کی انتھک کاوشیں لائق تحسین ہیں- خاتون اول نے کہا کہ معاشرے میں ہر ذی فہم شخص کا یہ قومی فریضہ بنتا ھے کہ وہ ان بے سہارا بچوں کا سہارا بنکر اپنے حصے کا بھرپور کردار ادا کرے. انہوں نے اس بات پر یقین کا اظہار کیا کہ ایس او ایس ویلج کی معاونت اور رہنمائی سے یہ بچے معاشرے کے کارآمد اور مفیدشہری بن جائیں گے۔
خبرنامہ نمبر 645/2020
سبی19فروری: ۔چیف سیکرٹری بلوچستان کیپٹن ریٹائرڈ فضیل اصغر نے کہا ہے کہ چاکر خان رند کے نام سے منسوب یہ میلا تاریخی اعتبار سے انتہائی ا ہمیت کاحامل میلہ ہے جہاں ایک جانب مختلف علاقوں سے آئے ہوئے قبائلی معتبرین میں اتحاد و یکجہتی کو فروغ ملتا ہے تو دوسری جانب معاشی اعتبار سے بھی یہ میلہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے سبی میلے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیااس پروقار میلے کے مہمان خصوصی صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی تھے جبکہ دیگر شرکاءمیں وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان عالیانی،گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی، کورکمانڈر بلوچستان لیفٹننٹ جنرل وسیم اشرف، رکن قومی اسمبلی نوابزادہ خالد مگسی صوبائی وزراءسرداریارمحمدرند ملک نعیم خان بازئی انجینئر زمرک خان مٹھا خان کاکڑ انسپکٹر جنرل پولیس محسن حسن بٹ، انسپکٹر جنرل فرنٹیئر کور، کمشنر سبی ڈویژن سید فیصل احمد ڈپٹی کمشنر سبی سید زاہد شاہ ڈی آئی جی سبی پرویزاحمد چانڈیو اور دیگر سول و فوجی حضرات وقبائلی معتبرین کی کثیر تعداد موجود تھی چیف سیکرٹری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان کی والہانہ محبت کی بدولت صوبے میں مالدار زراعت اور دیگر شعبوں کی ترقی کے لیے عملی اقدامات کیے جارہے ہیں جس میں پکے تالاب وہ نالیاں مارکیٹوں کا قیام، قطراتی نظام آبپاشی لائیوسٹاک کی ایکسپو کا کامیاب انعقاد، صوبے میں سڑکوں کا جال صحت تعلیم صحت ثقافت ماہی گیری اور دیگر شعبوں میں یہ منصوبے ایسے ہیں جن کی تکمیل سے صوبے میں ہر شعبے میں ترقی کا انقلاب برپا ہوگا اور لوگوں میں خوشحالی آئے گی انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان کی ذاتی دلچسپی سے کچھی کینال کا منصوبہ جلد پایا تکمیل کو پہنچے گا جس سے صوبے کے سات لاکھ ایکڑ غیر آباد زمین کو قابل کاشت بنایا جائے گا جس کی بدولت زرعی اجناس کے معاملے میں نہ صرف صوبے کی ضروریات پوری ہوگی بلکہ پورے ملک کی ضروریات پوری ہونے کے ساتھ ساتھ باہر ممالک کو بھی برآمد کر کے کثیر زرمبادلہ کمایا جاسکے گا انہوں نے کہا کہ ترقی کیلئے امن و امان کا ہونا انتہائی ضروری ہے موجودہ حکومت نے امن و امان کو بہتر بنانے کیلئے عملی اقدامات کئے ہیں جس سے صوبے میں ماضی کی بدولت امن و امان کی صورتحال میں کافی بہتری آئی ہے۔
خبرنامہ نمبر 646/2020
سبی19فروری: ۔ڈائریکٹر جنرل پبلک ریلیشن شہزادہ فرحت احمد زئی نے آج یہاں زرعی و صنعتی نمائش میں لگائے محکمہ تعلقات عامہ کے سٹال کا معائنہ کیا انہوں نے افسران و اہلکاروں کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ وہ تاریخی سبی میلے کی کامیابی میں اپنا اہم کردار ادا کریں اور کوشش کی جائے کہ تمام پروگراموں کی کوریج بہتر طور پر ہو۔
خبرنامہ نمبر 647/2020
سبی19فروری: ۔سیکرٹری امور حیوانات دوستین خان جمالدینی نے آج یہاں سبی میلے میں لگائے گئے نمائش میں محکمہ تعلقات عامہ کے سٹال کا معائنہ کیا انہوں نے اسٹال میں لگائے کے مختلف تصاویر میں گہری دلچسپی لیتے ہوئے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں اور دیگر اہم منصوبوں کی افادیت اور انہیں عوام کے سامنے اجاگرکرنے میں محکمہ تعلقات عامہ کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے انہوں نے کہا کہ میں فخر سے یہ بات کہہ سکتا ہوں کہ لائیوسٹاک ایکسپو کو کامیاب کرنے میں محکمہ تعلقات عامہ کے افسران کا کلیدی کرداررہاہے انہوں نے اس توقع کا اظہار کیا کہ وہ تاریخی سبی میلے میں بھی اسی جذبے سے اپنا کردار ادا کریں گے۔
خبرنامہ نمبر 648/2020
سبی19فروری: ۔صوبائی وزیر زراعت انجینئر زمرک خان اچکزئی نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کوئٹہ سبی قومی شاہراہ کو دو رویہ بنایاجائے، قومی شاہراہ پر آئے روزحادثات میں قیمتی جانیں ضائع ہورہی ہیں جن کی روک تھام کے لئے صوبے میں قومی شاہرا¶ں کو دو رویہ بنانا ناگزیر ہوچکاہے۔ یہ مطالبہ انہوں نے سبی میلے کی افتتاحی تقریب سے صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کو حکومت بلوچستا ن کی طرف سے سپاسنامہ پیش کرتے ہوئے کیا۔سبی میلے کی افتتاحی تقریب میں صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی، وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان، صوبائی وزرائ، اراکین اسمبلی اور صوبے اور ملک کے مختلف حصوں سے آئے ہوئے لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ صوبائی وزیرزمرک خان اچکزئی نے صدر پاکستان کو سبی میلے میں شرکت پر خوش آمدید کہتے ہو کہا کہ بلوچستان ملک کا بڑا صوبہ ہونے کے باوجود دو رویہ شاہرا¶ں سے محروم ہے جس کی وجہ سے روزانہ کی بنیاد پر حادثات پیش آرہے ہیں، انہوں نے صدر پاکستان سے مطالبہ کیا کہ کوئٹہ سبی شاہراہ کوو فاقی پی ایس ڈی میں شامل کر کے اس کی فوری فزیبلٹی روپورٹ تیار کرو ائی جائے اور اس پر جلد کام کا آغاز کیا جائے،صوبائی وزیر نے کہا کہ سبی میلہ اپنی نوعیت کا انتہائی اہم اور منفرد میلہ ہے جس میں ملک بھر سے لوگ شرکت کرتے ہیں اوراس سے قومی یکجہتی کا احساس مزید مضبوط ہوجاتا ہے، انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت سبی سمیت صوبے کی تمام اضلاع کی ترقی اور خوشحالی کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھارہی ہے۔ صدر پاکستان نے اپنے خطاب میں کوئٹہ سبی شاہراہ کو دو رویہ بنانے کا اعلان کیا جبکہ وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے صوبائی وزیر انجینئر زمرک خان اچکزئی کے موقف کا مکمل تائید کیا۔

خبرنامہ نمبر 649/2020
لسبیلہ 19فروری :۔سیکرٹری سکینڈری ایجوکیشن بلوچستان غلام علی بلوچ نے کہا ہے کہ کلسٹر بجٹ ایک امانت ہے اور اسکا جس طرح ماضی میں غلط استعمال کیا گیا اس کو روکا جائے گا اور معصوم بچوں کی امانت کو صحیح طریقہ کار کے مطابق خرچ کیا جائے جس کلسٹر ہیڈ نے مروجہ طریقہ کار کے مطابق کام نہیں کیا اس کا کلسٹر بجٹ منظور نہیں کیا جائیگا ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز لسبیلہ میں میٹرک کے امتحانی مراکزکے دورے کے بعدضلعی محکمہ تعلیم کے افسران اور تدریسی عملے سے جائزہ اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیاانھوں نے کلسٹر بجٹ کے حوالے سے اور داخلہ مہم کے حوالے سے تفصیلی احکامات جاری کئے سیکریٹری سیکنڈری ایجوکیشن ڈیپارٹمینٹ غلام علی بلوچ نے کہا کہ وہ لفاظی پر نہیں عملی اقدامات پر یقین رکھتے ہیں زمینی حقائق کے مطابق تعلیمی صورتحال کی بہتری کیلئے عملی اقدامات کئے جائیں گے سیکریٹری سیکنڈری ایجوکیشن نے اساتذہ پرزور دیا کہ وہ اپنی تدریس کو بہتر بنائیں تاکہ طلباءامتحانات میں بہتر کارگردگی کا مظاہرہ کریں سیکریٹری سیکنڈری ایجوکیشن غلام علی بلوچ صاحب نے گرلز ہائیر سیکنڈری اسکول اوتھل کے امتحانی مرکز طالبات کی کارکردگی کی تعریف کی اور کہا کہ طلباءکے مقابلے میں طالبات منظم انداز میں پیپر حل کررہی ہیں۔سیکریٹری سیکنڈری ایجوکیشن غلام علی بلوچ صاحب نے کہا کہ وہ عنقریب لسبیلہ کے تمام تحصیلوں کا دورہ تعلیمی سہولیات کی فراہمی کے حوالے اقدامات اٹھائیں گے تاکہ دیہی علاقوں کے سرکاری اسکولوں میں زیر تعلیم مستقبل کے معماروں وہ تمام تعلیمی سہولیات میسر ہوں جو شہری علاقوں کے سرکاری اسکولز کے طلباءکو میسر ہیں اس موقع پر ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر لسبیلہ حاجی نوید احمد ہاشمی اور ڈسٹرکٹ آفیسر(فیمیل)ایجوکیشن لسبیلہ محترمہ نیئر یاسمین،پرنسپل محمد رضوان مرزا بھی انکے ہمراہ تھے.
خبرنامہ نمبر 650/2020
لسبیلہ19فروری :۔ حکومتی پالیسی کے تحت صوبے کے دوردراز علاقوں کے رہنے والوں کو ریلیف دینے کیلئے سستا بازار انعقاد کا سلسلہ شروع ہوگیا،لسبیلہ کے صنعتی شہر حب میں شہریوں کو مہنگائی سے نجات دلانے اور ریلیف دینے کیلئے ڈپٹی کمشنر لسبیلہ حسن وقار چیمہ نے ضلعی انتظامیہ کی زیر نگرانی سستا بازار کا انعقاد کیا گیا ڈپٹی کمشنر لسبیلہ حسن وقار چیمہ نے باقاعدہ فیتہ کاٹ کر سستا بازار کا افتتاح کیا،افتتاحی تقریب میں اسسٹنٹ کمشنر حب روحانہ گل کاکڑ بھی شریک ہوئیں ڈپٹی کمشنر لسبیلہ کی ہدایت پر تحصیل انتظامیہ حب کی جانب سے سستا بازار کی سیکیورٹی کیلئے اقدامات اٹھائے گئے لسبیلہ کے شہریوں نے سستا بازار کے انعقاد کا خیر مقدم اور حکومت بلوچستان کی جانب سے غریب عوام کو ریلیف دینے کیلئے عملی اقدامات پر ضلعی انتظامیہ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ ڈپٹی کمشنر لسبیلہ میں گڈگورننس کیساتھ عوام کو درپیش مسائل حل کرنے کیلئے عملی طور پر کوشاں ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment