خبرنامہ نمبر1377/2022
کوئٹہ 29 مارچ ۔ صوبائی محتسب بلوچستان کا ادارہ عوام کی داد رسی اور انہیں مفت انصاف کی فراہمی میں مصروفِ عمل ہے لہذٰا اس ضمن میں ڈسٹرکٹ لسبیلہ سے خاتون ٹیچر کنول حناءنے صوبائی محتسب کو درخواست دی تھی کہ وہ سال 2000 سے محکمہ تعلیم میں بطور جے وی ٹیچر خدمات انجام دے رہی ہیں اور انہوں نے یکم جنوری 2017 تا یکم جنوری 2019  دو سال کی بغیر تنخواہ چھٹی کی درخواست جمع کروائی جو بعد میں منظور بھی ہوئی، دو سال کی چھٹیاں ختم ہونے کے بعد جب انہوں ڈی ای او لسبیلہ رپورٹ کی تاکہ انہیں دوبارہ کسی سکول میں تعینات کیا جائے لیکن انہیں کسی بھی سکول میں پوسٹ نہیں کیا گیا، دریں اثناء صوبائی محتسب بلوچستان نذر محمد بلوچ ایڈوکیٹ کے احکامات کی روشنی میں انویسٹیگیشن آفیسر نور اللہ خان کاکڑ نے ڈی ای او لسبیلہ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے وضاحت طلب کیں، ڈی ای او نے اپنے تحریری جواب میں آگاہ کرتے ہوئے کہاکہ محترمہ حناءکنول کی پوسٹنگ کے حوالے سے(DAE) کی میٹنگ میں سفارشات مرتب کیے گئے ہیں کہ انہیں ضلع لسبیلہ کے گورنمنٹ گرلز ہائی سکول بریدہ کیمپ میں پوسٹ کرنے کے احکامات اور تنخواہوں کی مد میں بقایا جات کی ادائیگی کی جائے۔ اپنی شکایت کے ازالے پر شکایت کنندہ محترمہ کنول حناء نے صوبائی محتسب بلوچستان کا شکریہ ادا کیا، علاو¿ہ ازیں ضلع مستونگ سے محمد رفیق نے صوبائی محتسب بلوچستان کو درخواست دی تھی کہ انہوں نے محکمہ تعلیم میں نان ٹیچنگ اسٹاف کیلئے درخواست جمع کروائی تھی لیکن بعد ازاں انہیں تعیناتی کے حوالے سے بتایا گیا کہ چند ناگزیر وجوہات کی بناءپر تعیناتیوں پر عملدرآمد نہیں کیا گیا جس کی رپورٹ سیکریٹری ایجوکیشن کو بھجوائی گئی ہے، درخواست گزار نے اس حوالے سے موقف اپنایا کہ محکمہ تعلیم کے متعلقہ حکام سے رپورٹ طلب کرنے پر بھی انہیں رپورٹ فراہم نہیں کی گئی، صوبائی محتسب کے احکامات کی روشنی میں انویسٹیگیشن آفیسر نور اللہ خان کاکڑ نے نوٹس جاری کرتے ہوئے محکمہ تعلیم کے متعلقہ حکام سے وضاحت طلب کیں، دریں اثناء شکایت کنندہ محمد رفیق نے صوبائی محتسب کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی محتسب کے احکامات کی روشنی میں محکمہ تعلیم نے انہیں عدم تعیناتی کی وجوہات سے آگاہ کیاہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1378/2022
لورالائی29 مارچ۔صوبائی وزیر کھیل وثقافت عبد الخالق ہزارہ نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت باڈی بلڈنگ فیسٹیول سمیت صوبے بھر میں کھیلوں کی سرگرمیوں کوفروغ دینے کے لیے جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات اٹھارہی ہے کیونکہ صوبے میں کھیلوں کوترقی دے کرہم اپنے آنے والی نسلوں کو صحت مند اور تندرست ماحول فراہم کرسکتے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسٹر بلوچستان باڈی بلڈنگ23مارچ سپو ر ٹس فیسٹیول کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر مسٹرپاکستان حاجی نثارخان خلجی،سیکرٹری جنرل پا کستان باڈی بلڈنگ فیڈریشن زیرنگرانی محمو د خان خلجی،سینئروائس پریذ یڈنٹ بلو چستان وصدرفورڈسٹرکٹ با ڈی بلڈنگ ا یسوسی ایشن کے اسرارخان خلجی ِ،ڈسٹرکٹ سپو ر ٹس آفیسرظفر اللہ شاہ،ڈسٹر کٹ آفیسر دکی سجا د حیدر خجک موجود تھے اس مو قع پر مسٹرہزارہ لاچین،مسٹر کو ئٹہ،مسٹردکی،مسٹر لو رالائی،مسٹرمسلم با غ،مسٹرکرسچن لورالائی اور مسٹر بلو چستان کے مقابلے ہوئے،تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر کھیل وثقافت عبد الخالق ہزارہ نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت صوبے میں اپنے کھلاڑیوں کے لیے صوبائی اور قومی سطح کے کھیلوں کے مقابلے منعقد کروارہی ہے، با ڈی بلڈنگ اور رائفل شو ٹینگ جیسے بڑے ایونٹس کے انعقاد سے کھلاڑیوں کو آگے آنے اور اپنی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے کا موقع ملاہے انہوں نے کہا کہ ہمارے صوبے کی کھیل کے شعبے میں بین الاقوامی شناخت ہے با ڈی بلڈنگ میں ہمارے کھلاڑیوں نے بین الاقوامی مقابلوں میں کئی اعزازات حاصل کیے ہیں جوکہ انتہائی فخر کی بات ہے تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ بلوچستان کے کھیلاڑیوں میں بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت باڈی بلڈنگ کے صوبائی اور قومی سطح پر مقا بلے منعقد کراکر نوجوانوں کو آگے آنے کا موقع فراہم کریگی،اور صوبائی حکومت اپنے کھلاڑیوں اور نوجوانوں کی ہر سطح پر حوصلہ افزائی کے لیے تمام تر وسائل بروئے کار لارہی ہے انہوں نے کہا کہ ماضی میں کھیلوں کے شعبے کو ہمیشہ نظر انداز کیا گیا جس سے میدانوں میں ویرانی چھائی اور نوجوان نسل بے راہ روی کی جانب راغب ہوئے لیکن موجودہ صوبائی حکومت کی کھیل دوست پالیسیوں کی وجہ سے آج میدان آباد اور صوبہ امن کی جانب لوٹ رہا ہے اس موقع پر کھلاڑیوں اور شائقین کثیر تعداد میں موجود تھے، صوبائی وزیر کھیل وثقافت عبد الخالق ہزارہ نے باڈی بلڈنگ کے مقابلے مسٹر بلو چستان عبدالرازق، مسٹرلورالائی نقیب خان اور با ڈی بلڈنگ کے تن سازوں میں ٹرافی سنداوررائفل شو ٹینگ کے شو ٹرزمیں شیلڈاور نقد انعا ما ت تقسیم کیے بعد ازیں صوبائی وزیر کھیل وثقافت عبد الخالق ہزارہ سپو ر ٹس کمپلیکس اور ہزارہ قبر ستا ن کی چار دیواری کا معا ئنہ بھی کیا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1379/2022
گودار29مارچ۔ڈپٹی کمشنر گوادر کیپٹن ریٹائرڈ جمیل احمد نے کہا ہے کہ گوادر مستقبل میں میگا سٹی بننے جارہا ہے اس کہ ترقی میں ہم سب کو ملکر کردار اداکرنا چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گوادر بار ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام گوادر میگا سٹی کی ترقی میں گوادر بار کے کردار اور اہمیت کے عنوان پر منعقدہ ایک روزہ سمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کے پروان چڑھنے اور سی پیک کا مرکز ہونے کی وجہ سے گوادر میگا سٹی بننے جارہا ہے اس حوالے سے گوادر بار کا یہ سمینار اہمیت کا حامل ہے کیونکہ میگا سٹی کی ترقی میں جہاں دیگر اسٹیک ہولڈرز کا کردار اہم ہوتا ہے اس میں گوادر بار کے کردار کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ گوادر کی ترقی میں ہم سب کو ملکر حکمت عملی بنانے کی ضرورت ہے بالخصوص وکلاءبرادری کا ترقی کے عمل میں شراکت داری کسی بھی بڑے شہر کی تعمیر میں قانونی تقاضے پورے کرنے اور معاونت کی فراہمی کو سہل بنایا سکتی ہے۔  وکلاءمعاشرے کے کریم ہوتے ہیں انصاف کی فراہمی میں بار کلیدی کردار اداکرتا ہے گوادر شہر کی بطور میگا سٹی بننے کے عمل میں وکلاءکی گائیڈنس سے ہمیں آگے بڑھنے میں آسانی پیداہوگی۔ انہوں نے کہا کہ تنقید برائے تعمیر کا جذبہ کسی بھی ادارے یا معاشرے کی سمت کو درست کرتا ہے ہمیں ہر چیز کو تعمیری سوچ کے پیش نظر دیکھنا چاہیئے تاکہ اس کا نتیجہ مثبت نکلے۔  انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ گوادر بار کو آن بورڈ لیگی، قانونی معاونت حاصل کرنا ہو یا مشاورت گوادر بار سے گائے بگائے رابطہ کیا جائے گا اور ان سے رہنمائی لی جائے گی۔ سمینار سے خطاب کرتے ہوئے گوادر بار کے صدر عبیداللہ ایڈووکیٹ، سابقہ صدر آصف رحیم ایڈووکیٹ، شے خالد حسین ایڈووکیٹ، شبیر احمد رند ایڈووکیٹ اور اے ڈی پی پی گوادر احسان برکت نے کہا کہ گوادر بار کریم آف سوسائٹی ہے کسی بھی ملک اور شہر میں وکلاءکی معاونت قانونی تقاضوں سے ہم آہنگ ہونے کو آسان بناتی ہے گوادر ایک ابھرتا ہوا شہر بننے جارہا ہے یہاں مستقبل میں قانونی حوالے سے لا گریجویٹ کی ضرورت پیش آسکتی ہے نئے رولز بنانے ہوں یا ریگولیشن کا نفاذ کرانا ہو وکلائ کا کردار اہم ہوتا ہے جس سے ترقی کے عمل میں قانونی معاونت ناگزیر بن جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گوادر بار گوادر شہر کی ترقی کے تناظر میں قانونی مشاورت اور قانونی مدد کی فراہمی کے لئے ہر طرح سے تیار رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ گوادر شہر کی ترقی کے تناظر میں جو دیگر اسٹیک ہولڈر ہیں جس میں ضلعی ایڈمنسٹریشن یا دیگر ادارے شامل ہیں وہ گوادر بار کو بھی ترجیح دیں تاکہ ترقی کے عمل میں گوادر بار کا بھی کردار شامل ہو۔ سمینار میں صدر کیچ بار عبدالطیف ایڈووکیٹ، ڈسٹرکٹ پبلک پراسیکوٹر الفت حسین کے علاوہ گوادر بار کے وکلا کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ سیمینار کے نظامت کے فرائض گوادر بار ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری معراج علی ایڈوکیٹ نے اداکئے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1380/2022
کوئٹہ 29مارچ۔صوبائی سیکرٹری مذہبی و اقلیتی امور شاہ عرفان غرشین نے رند ہاو¿س کوئٹہ میں بلوچستان کے بزرگ ونامور سیاسی شخصیت سابق صوبائی وزیر و سابق سینیٹر (مرحوم) میرمحمد علی رند کی وفات پر ان کے فرزند نائب صدر بلوچستان عوامی پارٹی میرعبدالرو¿ف رند سے تعزیت کی اور مرحوم کی روح کے ایصال ثواب اور بلند درجات کے لیے فاتحہ خوانی بھی کی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1381/2022
گوادر29مارچ۔ڈپٹی کمشنر گوادر کیپٹن ریٹائرڈ جمیل احمد نے کہا ہے کہ ٹیکنیکل ایجوکیشن کسی بھی معاشرے کے تعلیمی اور معاشی استحکام کی ضامن ہوتی ہے اور گوادر کا مستقبل فنی تعلیم سے جڑا ہے اور نوجوان نسل کو فنی علوم سے آراستہ کرکے نہ صرف بے روزگاری کے مسئلے پر قابو پایا جاسکتا ہے بلکہ ملک کو ترقی و خوشحالی کی راہ پر بھی گامزن کیا جاسکتا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے کلانچی محلہ میں ای ایس پی UNICEF کے تحت قائم کیا گیا ALP سنٹر کا دورہ کے موقع پر ALP سنٹر میں نئے قائم کئے گئے ووکیشنل ٹریننگ سنٹر کے افتتاح کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر عزیز الرحمن ڈسٹرکٹ پروگرام منیجر ESP/UNICEF گوادر عادل نودیزئی و ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ کوارڈینیٹر RTSM گوادر ساجد بلوچ و دیگر ان کے ہمراہ تھے انہوں نے کہا کہ دنیا میں انہی قوموں نے تیزی سے ترقی کی منازل طے کی ہیں جنہوں نے اپنی نوجوان نسل کو عہدِ حاضر کی ضروریات سے ہم آہنگ کرتے ہوئے جدید علوم سے آراستہ کیا انہوں نے کہا کہ تعلیم انسان کو شعور اور معاشرتی ادب سکھا کر معاشرے میں رہنے کے قابل بناتی ہے جسے حاصل کرنے سے انسان ایک قابل قدر شہری بن جاتا ہے جبکہ فنی تربیت انسان کے اندر چھپی ہوئی صلاحیتیں بروئے کار لاتے ہوئے اسے باعزت روزگار کمانے کے قابل بناتی ہے تاکہ وہ معاشی طور پر خوشحال زندگی بسر کرسکے۔اس شعبہ پر توجہ دینے سے نہ صرف روزگار کے مواقع بڑھ سکتے ہیں بلکہ اس کے فروغ سے ہم بیش قیمت زرِمبادلہ بھی حاصل کر سکتے ہیں ڈپٹی کمشنر نے ووکیشنل ٹریننگ سنٹر کے مختلف حصوں کا معائنہ کیا ۔ ووکیشنل ٹریننگ سنٹر کے ٹرینر فرید گوادری نے ڈپٹی کمشنر کو تفصیلی بریفنگ دی جس پر ڈپٹی کمشنر نے اطمینان کا اظہار کیا اور ای ایس پی ٹیم کی تعریف کی ڈپٹی کمشنر نے کلاس روم کے دورہ کے موقع پر بچوں سے سوالات بھی کیے درست جواب دینے پر بچوں میں نقد انعامات تقسیم کیے اور سینٹر میں رکھے ڈسپلے کا بھی معائنہ کیا اور ایجوکیشن سپورٹ پروگرام یونیسف کے اس انقلابی اقدام کی تعریف کی ڈپٹی کمشنر گوادر نے ایجوکیشن سپورٹ پروگرام یونیسف کے ڈسٹرکٹ پروگرام منیجر عادل نودیزئی کی کوشش کو سراہا اور امید ظاہر کیا کہ وہ آیندہ بھی اس طرح کے سنٹرز قائم کرکے یہاں پر بچوں کو تعلیم اور فنی تربیت فراہم کریں گے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1382/2022
کوئٹہ 29مارچ۔کیپٹن ریٹائرڈ عارف احمد نے ڈپٹی سیکرٹری II گورنر سیکرٹریٹ بلوچستان کے عہدے کا چارج سنبھال کر کام شروع کر دیا ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1383/2022
نصیرآباد 29مارچ ؛۔ریجنل ڈائریکٹر محتسب نصیرآباد علی رضا مگسی نے اپنے دفتر کے احاطے میں پودے لگائے کر شجرکاری مہم کا آغاز کردیا۔اس موقع پر نائب ناظم جنگلات و جنگلی حیات شیر احمد کرد سمیت دیگر افسران بھی موجود تھے ریجنل ڈائریکٹر محتسب نصیرآباد علی رضا مگسی اور شیر احمد کرد نے کہا کہ ملک بھر میں پودے لگا کر پاکستان کو ماحولیاتی آلودگی سے پاک کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے کیا درخت برکت کی علامت ہے اور یہ ایک قومی دولت بھی ہیں درخت اور پودوں کے کئی فوائد ہیں اور ان کی نشوونما اور دیکھ بال انسان کی فطرت سے وابستگی ظاہر کرتا ہے درخت جتنے زیادہ ہونگے وہاں کی آب و ہوا اتنی صاف و شفاف ہوگی قدرت نے جو اوصاف رکھے ہیںاس کی بدولت یہ فضائی آلودگی کم کرنے میں اہم کردار ادا کرتے چلے آرہے ہیں صحت مند ماحول کیلئے درخت کی اہمیت بڑھتی چلی آرہی ہے آج درختوں کی اہمیت کے پیش نظر دنیا بھر میں درختوں اور پودے لگانے کی مہم چلائی جاتی ہیں تاکہ لوگوں اس جانب متوجہ کر کے آلودگی سے چھٹکارہ حاصل کیا جا سکے انہوں نے کہاکہ محکمہ جنگلات علاقے میں شجر کاری مہم کو کامیاب بنانے کیلئے نہ صرف ملک کی تعمیرو ترقی میں بلکہ ماحول کو صاف شفاف بنانے میں بھی ا پنا مثبت کردار اداکررہا ہے نصیرآباد ڈویژن میں زوروشور سے شجر کاری مہم جاری ہے درختوں سے شہرکی خوبصورتی کے ساتھ ساتھ آلودگی میں بھی کمی واقع ہونے اورسرسبز ماحول عوام کوفراہم میں مدد ملے گی درخت لگانا ایک صدقہ جاریہ ہے عوام اس مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور ذیادہ سے ذیادہ درخت لگا کربا شعور ہونے کا ثبوت دیں انہوں نے کہا کہ درخت لگانے کے ساتھ ساتھ ان کی دیکھ بھال کو اولین ترجیح دی جائے تاکہ پودے تناور درخت بن سکیں جس سے علاقے کی عوام بھرپورفائدہ انداز میں فائدہ اٹھائیں۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment