خبرنامہ نمبر1731/2022
کوئٹہ 25اپریل۔ترجمان حکومت بلوچستان فرح عظیم شاہ نے وزیراعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان کے حالیہ دورہ کوئٹہ کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ ان کے دورے سے بلوچستان میں ترقی کے نئے دور کا آغاز ہو گا خصوصاً کراچی تا کوئٹہ ڈیول کیرج روڈ کے سنگ بنیاد کے افتتاح ہے کیونکہ اس سڑک پر ہونے والی حادثات میں اب تک بلا شبہ کئی قیمتی جانیں ضائع ہو چکی ہیں اور سیکڑوں لوگ معذور ہو چکے ہیں انہوں نے کہا کہ آئے دن حادثات میں قیمتی جانیں ضائع ہونے کی وجہ سے عوام نے اس سڑک کو خونی روڈ اور قاتل روڈ کا نام دے دیا ہے دو رویہ سٹرک کی تعمیر سے بلوچستان میں ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہو گا۔ ترجمان حکومت بلوچستان کا کہنا تھاکہ موجودہ صوبائی حکومت نے وزیر اعلی بلوچستان کی قیادت میں بلوچستان کے اپنے دور حکومت میں بھرپور انداز میں ہر فورم پر بلوچستان کے لیے آواز اٹھائی ہے جو اس سے پہلے کی حکومت اٹھانے میں ناکام ہو چکی ہے ترجمان حکومت بلوچستان کا کہنا تھا کہ شہریوں کا تحفظ اور ان کے ساتھ خیر خواہی ریاست کا فرض ہے  وزیراعظم پاکستان کا اس حوالے سے یہ کہنا معنی خیز ہے کہ لاپتہ افراد کے حوالے سے وہ باختیار لوگوں سے بات چیت کریں گے اور جلد از جلد اس مسئلہ کو نمٹائیں گے یقینا لاپتہ افراد کا معاملہ انتہائی اہم ہے جس کو وفاقی اور صوبائی حکومت وزیراعلی بلوچستان  کی قیادت میں حل کریں گی۔ فرح عظیم شاہ کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعظم پاکستان شہباز شریف کا یہ امر رمضان المبارک کے علاو¿ہ بھی بلوچستان میں سستی اشیا کی فراہمی رمضان کے بعد بھی جاری رکھی جائے جس میں وزیراعلی بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو کی جانب سے 183.3ملین روپے کی سبسڈی پیکج کی منظوری جو آج سے بلوچستان 34اضلاع میں 37سستے بازاروں کے قیام سے شروع ہو جاے گا تاکہ عوام کی فلاح و بہبود کے اقدامات جاری رکھے جائیں۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1732/2022
کوئٹہ 25اپریل۔سینئر صوبائی وزیر منصوبہ بندی و ترقیات حاجی نور محمد دمڑ نے محکمہ منصوبہ بندی کے متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ تمام متعلقہ سیکشن ،سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل عوامی فلاح و بہبود کے منصوبوں کی منظوری، ان پر عملدرآمد اور مقررہ مدت کے اندر ان منصوبوں کی تکمیل کے سلسلے میں اپنے اپنے حصے کی ذمہ داریاں بروقت پوری کریں تاکہ عوامی فلاح و بہبود کے ان منصوبوں کا بلاتاخیر فائدہ عوام کو پہنچ سکیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ ترقیاتی منصوبوں کی منظوری اور ان پر عملدرآمد کے لئے محکموں، کی ذمہ داریاں متعین ہیں اور ان ذمہ داریوں کو بطریق احسن نبھانا متعلقہ محکموں کے حکام کے فرائض منصبی میں شامل ہے جن کی انجام دہی میں غیر ضروری تاخیر کسی صورت قابل قبول نہیں۔ وزیر منصوبہ بندی و ترقیات نے متعلقہ حکام پر یہ بھی واضح کیا ہے کہ کسی بھی حلقے میں عوام فلاح و بہبود کے منصوبوں پر عدم عملدرآمد میں تاخیر یا کوتاہی کی شکایت موصول ہونے پر متعلقہ ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ وہ صوبائی دارالحکومت کوئٹہ کے مختلف ترقیاتی منصوبوں اور عوامی فلاح و بہبود کے اقدامات پر پیشرفت کا جائزہ لیا۔ وزیر منصوبہ بندی نے مذکورہ حلقے میں ترقیاتی منصوبوں پر پیشرفت کا تفصیلی جائزہ لیا گیا جبکہ بعض منصوبوں پر عملدرآمد کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرکے ان منصوبوں پر مقررہ ٹائم لائینز کے مطابق پیشرفت یقینی بنانے کے لئے متعلقہ حکام کو ضروری احکامات جاری کئے گئے۔ وزیر منصوبہ بندی نے متعلقہ محکموں اور ضلعی انتظامیہ کے حکام کو ہدایت کی کہ وہ آپس میں مل بیٹھ کر اس سلسلے میں ایک ہفتے کے اندر قابل عمل لائحہ عمل تیار کرکے پیش کریں۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو مزید ہدایت کی۔ وزیر منصوبہ بندی و ترقیات یہ بھی ہدایت کی مذکورہ بالا منصوبوں پر پیشرفت کا جائزہ لینے کے لئے ایک ہفتے کے اندر دوبارہ اجلاس منعقد کیا جائے گا اور تمام متعلقہ محکمے اس سلسلے میں اپنے اپنے حصے کی ذمہ داریاں پوری کرکے ٹھوس پیشرفت سے آگاہ کریں۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1733/2022
کوئٹہ 25 اپریل 2022۔ صوبائی محتسب بلوچستان نذر محمد بلوچ ایڈوکیٹ کے احکامات کی روشنی میں خاتون لیکچرارز کو یونیورسٹی آف بلوچستان پشین کیمپس سے تنخواہوں کی مد میں واجبات کی ادائیگی کے علاو¿ہ انہیں دوبارہ وزیٹنگ لیکچرار تعیناتی کے آرڈرز فراہم کیے گئے، صوبائی محتسب بلوچستان کے ترجمان کے مطابق خاتون لیکچرارز نسیمہ احمد اور عائشہ کاسی نے صوبائی محتسب کو درخواست دی تھی کہ وہ بطورِ وزیٹنگ لیکچرار یونیورسٹی آف بلوچستان پشین کیمپس میں پڑھاتی رہیں ہیں، یونیورسٹی انتظامیہ کے متعلقہ حکام نے تنخواہوں کی مد انہیں واجبات کی ادائیگی نہیں کی جبکہ انہوں نے یونیورسٹی میں درخواست بھی جمع کروائی کہ انہیں دوبارہ وزیٹنگ لیکچرار تعینات کیا جائے لیکن اس حوالے سے ان کے درخواست پر عملدرآمد نہیں ہوا لہذٰا ان کی داد رسی کی جائے، صوبائی محتسب سیکرٹریٹ کے ایڈیشنل رجسٹرار/انویسٹیگیشن آفیسر جمیل خان کاکڑ نے بلوچستان یونیورسٹی پشین کیمپس کے متعلقہ حکام کو نوٹس جاری کرتے ہوئے اس حوالے سے وضاحت طلب کی، دریں اثنائ بلوچستان یونیورسٹی پشین کیمپس انتظامیہ کے متعلقہ حکام نے صوبائی محتسب کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ بالا خاتون لیکچرارز کی تعیناتی اور تنخواہوں کی ادائیگی کیلئے یونیورسٹی ہذا کے متعلقہ حکام نے مکمل انکوائری کی اور اس انکوائری رپورٹ کی روشنی میں دونوں لیکچرارز کو واجبات کی ادائیگی جلد کی جائے گی جبکہ دونوں خواتین کو بطورِ وزیٹنگ لیکچرار کے آرڈرز کی منظوری بھی دی گئی ہے، بعد ازاں صوبائی محتسب بلوچستان نذر محمد بلوچ ایڈوکیٹ نے محتسب سیکرٹریٹ میں درخواست گزار نسیمہ احمد اور عائشہ کاسی کو وزیٹنگ لیکچرار تعیناتی کے آرڈرز فراہم کیے، اپنے شکایت کے ازالے پر خاتون لیکچرارز نے صوبائی محتسب کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ محتسب ادارے کی بہترین کارکردگی کی بدولت ان کا ایک اہم مسئلہ حل ہوا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1734/2022
کوئٹہ 25 اپریل :- سینٹرل پولیس آفس بلوچستان کوئٹہ کے ایک اعلامیہ کے مطابق تعیناتی کے منتظر عثمان غنی صدیقی (پی ایس پی/ بی ایس- 19) کو ڈی آئی جی آپریشن سی پی او کوئٹہ اور رضوان عمر گوندل کو (پی ایس پی/ بی ایس- 18) ڈی آئی جی آپریشن کوئٹہ کی خدمات حکومت پنجاب کے حوالے کر دیا گیا جبکہ محمد ہارون (ڈی ایس پی/ بی ایس- 17) کو ڈی ایس پی سکیورٹی اسپیشل برانچ سی ایم سیکرٹریٹ کوئٹہ کے عہدے کا اضافی چارج تاحکم ثانی دے دیا گیاہے اس کے علاوہ آصف علی مستوئی کو (پی پی/ بی ایس- 18) ایس پی آپریشنز سریاب ڈویژن کا تبادلہ کرکے انہیں کمانڈر سی پی سی کوئٹہ جبکہ عبدالسلام کو ڈی ایس پی کمانڈنٹ سی پی سی کوئٹہ کا تبادلہ کرکے انہیں ایس پی انویسٹیگیشن سٹی ڈویژن کوئٹہ اور شمروز خان کو ڈی ایس پی ڈسٹرکٹ کمپلینٹ کوئٹہ کا تبادلہ کرکے انہیں ایس پی آپریشنز سریاب ڈویژن تعینات کر دیا گیا اس کے علاوہ سکندر خان (ڈی ایس پی/ بی ایس- 17) ایس ڈی پی او بارکھان کا تبادلہ کرکے انہیں ڈی ایس پی کرائم برانچ کوئٹہ تعینات کر دیا گیا ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1735/2022
نصیر آباد 25اپریل ؛۔ڈپٹی کمشنر نصیرآباد اظہرشہزاد نے ڈیرہ مرادجمالی میں زیرتعمیرروڈزکے کام کا جائزہ لیا انہوں نے چیزل آباد،ابڑومحلہ بلیک ٹاپ روڈ جبکہ ٹف ٹائل روڈ کے تعمیراتی کام کے متعلق آگاہی حاصل کی چیزل آباد اور ابڑومحلہ روڈکے کام کے معیارکو مزید بہتربنانے پر زوردیا دورے کے موقع پر انہوں نے روڈکا گریول اور تھکنیس بھی چیک کیا اس موقع پر انجینئرسعداللہ مری سمیت دیگر متعلقہ آفیسران موجودتھے انہوں نے روڈ کے کام کے متعلق ڈپٹی کمشنر کو تفصیل سے آگاہی فراہم کی اس موقع پر ڈپٹی کمشنراظہرشہزاد نے متعلقہ محکمے کے انجینئرکو سختی سے ہدایات دیں کہ روڈ کے تعمیراتی کام کی کڑی نگرانی کی جائے تاکہ معیار کے مطابق روڈ کا تعمیراتی کا کام مکمل کیاجاسکے ،انہوں نے کہاکہ حکومت کی جانب سے فراہم کردہ فنڈز کے صحیح معنوں میں استعمال کو ہر صورت یقینی بنایا جائے تاکہ یہ تعمیراتی کام دیرپاثابت ہوسکے ان روڈز کی تعمیرسے شہرکی نہ صرف خوبصورتی میں اضافہ ھوتا ھے بلکہ آمدورفت میں بھی آسانی پیدا ھوتی اس لئے ان اسکیمات پر خصوصی توجہ مبذول کریں انہوں نے کہاکہ یہ ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ ہم معیاری اور پختہ تعمیراتی کام پر کسی قسم کا سمجھوتہ ہرگزقبول نہ کریں تاکہ عوام کو کسی شکایت کا موقع نہ مل سکے ڈپٹی کمشنر نے سید عاشق رسول شاہ گلی کے ٹف ٹائل کے کام کا بھی جائزہ لیا زیرتعمیر روڈ کے کام پر متعلقہ محکمے کے انجینئرکی عدم موجودگی پر انہوں نے اظہاربرہمی کیا اور کہاکہ لاپراہی کے مرتکب آفیسران کے خلاف سخت محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے گی ہمیں عوامی مفادات عزیز ہیں ان پر سمجھوتہ ہرگزقبول نہیں کیا جائے گا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1736/2022
نصیر آباد 25اپریل۔اسسٹنٹ ڈائریکٹر انفارمیشن نصیرآباد ڈویژن نیک محمد پلال نے کہاہے کہ مثبت صحافت اور خدمت خلق کرنے کا بہترین جذبہ ہے اگر ہم مثبت صحافت کو اپنا شعار بنا لیں تو علاقائی مسائل حل ہوسکتے ہیں صحافیوں کی پہچان مثبت صحافت ہی ہونی چاہیے اس سے معاشرے میں صحافیوں کو عزت وقار کی نظر سے دیکھا جاتا ہے بلوچستان حکومت صحافیوں کے مسائل حل کرنے کےلئے کوشاں ہے اور مثبت صحافت کے کردار کو پروان چڑھانے کےلئے اقدامات کررہی ہے انہوں نے اوستہ محمد پریس کلب کے دورے کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر صدر پریس کلب اوستامحمد عبداللہ مگسی جنرل سیکرٹری علی حسن ڈومکی و دیگر صحافی موجود تھے پریس کلب اوستہ محمد کے صدر عبداللہ مگسی نے محکمہ انفارمیشن نصیرآباد ڈویژن کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر نیک محمد پلال کو پریس کلب کے مسائل سے آگاہی فراہم کرتے ہوئے بتایاکہ اوستہ محمد پریس کلب مندرجہ زیل مسائل سے دوچار ہے۔جن میں خستہ ہال چھت۔کمپیوٹر۔فرنیچر۔پریس کانفرنس ہال کےلئے کرسیوں کی کمی کا بھی سامنا ہے جبکہ پریس کلب کے صدر اور۔جنرل سیکریٹری کی آفیس۔ کےلئے بھی فرنیچر کی اشد ضرورت ہے ان کے علاوہ یہاں پر آڈیٹوریم ہال بھی تعمیر کیا گیا ہے مگر فرنیچر ودیگر ضروری چیزوں کا فقدان ہے دیگر کئی مسائل کا بھی ذکر کیا جن میں بجلی فٹنگ۔پریس کلب کے چار دیواری اور بلڈنگ کی مکمل مرمت۔فرسٹ فلور پر دو کمرے سٹیج باتھ بنائے جائیں تاکہ باہر سے آنے والے صحافی دوستوں کو رہائش کی سہولت میسر ہو سکےکیو نکہ اوستہ محمد میں نہ کوئی اچھا ہوٹل ھے اور نہ ہی کوئی ریسٹ ہاو¿س جن کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا کر نا پڑتا ہے اسسٹنٹ ڈائریکٹر انفارمیشن نصیرآباد ڈویژن نیک محمد پلال نے کہاکہ اوستہ محمد پریس کلب کےمسائل ڈائریکٹر جنرل پبلک ریلیشن کے توسط سے صوبائی حکومت کے نوٹس میں لائے جائیں گے.
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment