خبرنامہ نمبر1977/2022
چمن 17مئی۔ڈپٹی کمشنر چمن کیپٹن (ر) جمعہ داد خان مندوخیل نے کہا ہے کہ ضلعی انتظامیہ عوام کے مسائل کے حل کے لئے کوشاں ہے اس سلسلے میں عوام کی تکالیف کو سامنے رکھتے ہوئے نادرا آفس میں مزید دو کاو¿نٹر قائم کئے گئے ہیں جس سے شناختی کارڈ بنانے والے افراد کو زیادہ انتظار کئے بغیر شناختی کارڈ کے حصول میں آسا نی ہوگی صرف یہی نہیں بلکہ آئندہ ہفتے نادرا آفس مین خواتین کے لئے بھی ایک کاو¿نٹر بنا ہا جارہاہے انہوں نے کہا کہ بہت جلد چمن کے دور افتادہ علاقوں کے فیمیل اور سینیر سیٹیزن کیلیے نادرا شناختی کارڈ بنانے والی وین بھیجی جائیگی جس سے لوگوں کے لئے آسانیاں پیدا ہوجائے گی اور ان کی مشکلات کم ہوں گیڈپٹی کمشنر نے کہا کہ سرحدی شہر چمن میں مسایل کی وجہ سے کاروبارِ زندگی متاثر ہورہا تھا اب عوام کا دیرینہ مسلئہ بھی حل کر لیا گیا ہے
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1978/2022
نصیر آباد 17مئی۔ڈپٹی کمشنر نصیرآباد کے ایک حکم نامے کے مطابق سارہ بانو دختر غلام علی ذات کھوسہ سکنہ نصیر آباد کا لوکل سرٹیفکیٹ ان کی اپنی درخواست پر منسوخ کیا جاتا ہے
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1979/2022
کوئٹہ۔ 17 مئی ۔پارلیمانی سیکرٹری قانون و پارلیمانی امور ڈاکٹر ربابہ خان بلیدی نے کہا ہے کہ پاکستان میں دو کروڑ سے زائد افراد بلڈ پریشر کے مرض میں مبتلا ہیں  جبکہ مرض کی شرح پھیلاﺅ میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے دنیا بھر میں سالانہ ایک لاکھ افراد بلڈ پریشر کے مرض کے باعث زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں بلڈ پریشر کے مرض سے امراض دل،دماغی شریان پھٹنے اور گردوں کے امراض لاحق ہو سکتے ہیں جو کہ جان لیوا ثابت ہو سکتے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلند فشار خون کی آگاہی سے متعلق عالمی دن کے موقع پر اپنے ایک پیغام میں کیا ، ڈاکٹر ربابہ خان بلیدی نے کہا کہ اس دن کے منانے کا مقصد بلڈ پریشر کی وجوہات، علامات، علاج و پرہیز اور اس کے تدارک کے متعلق عوامی شعور اجاگر کرنا ہے انہوں نے کہا کہ وزن اور بلڈ پریشر کا دل کی بیماریوں سے انتہائی گہرا تعلق ہے اور دل کے امراض میں مبتلا زیادہ تر مریض اضافی وزن اور ہائی بلڈ پریشر کا شکار ہوتے ہیں لہٰذا دل کے امراض کو کم سے کم کرنے کیلئے موٹاپا اور بلڈ پریشر پر کنٹرول اشد ضروری ہے طبی اصطلاح میں دل سکڑنے اور پھیلنے کے دوران خون کی نالیوں پر پڑنے والا دباو¿ “بلڈ پریشر” کہلاتا ہے۔عموما” بلند فشار خون کا عارضہ چالیس سال کی عمر کے بعد لاحق ہوتا ہے لیکن آج کل نوجوانوں میں بھی دیکھنے میں آرہا ہے اس کی عام علامات میں سر درد ، چکر آنا، بصری خرابی ، تھکاوٹ کا احساس، قے آنا، گھبراہٹ اور سانس میں دشواری ہیں اگر وقت پہ اس بیماری کا علاج نہ کیا جائے تو یہ ہارٹ اٹیک ، فالج اور گردوں کی خرابی کا سبب بھی بن سکتی ہے ۔ عموماً ہائی بلڈ پریشر میں مبتلا افراد کو احساس نہیں ہوتا کہ انھیں یہ عارضہ لاحق ہوچکا ہے جب تک وہ اپنی صحت میں گراوٹ محسوس کرکے یا کسی اور بیماری کی وجہ سے اپنا طبی معائنہ نہ کروالیں ڈاکٹر ربابہ خان بلیدی نے کہا کہ بلڈ پریشر کے مرض سے محفوظ رہنے کیلئے سادہ طرز زندگی اپنایا جائے مرغن غذاﺅں سے پرہیز کیا جائے اور ورزش کو معمولات زندگی کا حصہ بنایا جائے
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
پریس ریلیز
کوئٹہ 17مئی۔ظریف خان خٹک کی بیوہ بقضائے الہی انتقال کر گئیں وہ مرحوم حاجی گل محمد،مرحوم علی احمد،منظور احمد،مرحوم ظہور احمد،منور احمد کی والدہ تھی۔ وہ جاوید احمد، پرویز احمد، امجد احمد، شکیل احمد، ظفر احمد ،جمیل احمد، عدیل احمد ،مظفراحمد ،یاسراحمد،حمزہ احمد کی دادی،وہ زبیر احمد کھوسہ، ڈآکٹر نور احمد کھوسہ،اصف خٹک، نثار احمد،شاہد احمد،اسلم خٹک،کی نانی تھی۔ان کی فاتحہ خوانی ٹین ٹاو¿ن کاسی روڈ مدنی مسجد میں جاری ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment