خبرنامہ نمبر1555/2022
کوئٹہ13اپریل: چیف سیکرٹری بلوچستان مطہر نیاز رانا کی زیر صدارت رمضان المبارک میں سستے بازاروں کے انعقاد اور اشیاء ضروریہ کی قیمتوں پر کنٹرول کے حوالے سے اجلاس منعقد ہوا جس میں یوٹیلیٹی اسٹورز اور سستے بازاروں میں اشیاء ضروریہ کی فراہمی اور قیمتوں پر کڑی نظر رکھنے سے متعلق امور کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں ایڈیشنل چیف سیکریٹری داخلہ محمد ہاشم غلزئی، سیکرٹری خوراک محمد ایاز مندوخیل، سیکرٹری زراعت امید علی کھوکھر، ڈپٹی کمشنر کوئٹہ عرفان نواز میمن جبکہ ڈویڑنل کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز نے بذریعہ وڈیو لنک شرکت کی۔ چیف سیکرٹری نے ہدایت کی کہ رمضان المبارک میں یوٹیلیٹی اسٹورز پر عوام کو اشیاء ضروریہ کی فراہمی کیلیے موثر اقدامات کیے جائیں تاکہ اسٹورز میں کسی قسم کی سامان کی کمی نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو ضروری اشیاء خصوصی رعایتی نرخوں پر دستیاب ہوں گی۔ چیف سیکرٹری نے کہا کہ یوٹیلیٹی سٹورز کا سامان اوپن مارکیٹ میں فروخت ہونے کی صورت میں ذمہ داران کے خلاف قانونی کارروائی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کے مہینے میں صارفین کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے سبسڈائزنرخوں پر اشیائے خوردنوش کی فراہمی کے لئے صوبائی حکومت کی جانب سے صوبے کے تمام اضلاع میں سستے بازارو قائم کئے گئے ہیں۔ جس میں عوام کو سرکاری نرخ پر معیاری اشیاء فراہم کی جائے گی۔جس میں مختلف سٹالز لگا کر عوام کو سرکاری نرخوں پر اشیاءکی فراہمی یقینی بنائے جائے گی۔ چیف سیکرٹری نے ہدایت کی کہ مصنوعی مہنگائی پر کنٹرول کیا جائے تاکہ عوام کو رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں سستے داموں چیزوں کی فراہمی کو یقینی بنائی جا سکے۔انہوں نے ہدایت کی کہ رمضان المبارک میں سستے بازاروں کا روزانہ کی بنیاد پر نگرانی کریں تاکہ عوام کو ریلیف کی فراہمی ممکن ہو۔ انہوں نے ہدایت کی کہ اشیاءضروریہ کی مقررہ نرخوں سے زیادہ قیمتوں پر فروخت کرنے والوں کے سخت کاروائی عمل میں لائی جائے کیونکہ لوگوں کو منافع خوروں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جاسکتا۔ چیف سیکرٹری نے تمام ڈویژنل کمشنرز و ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی کہ تمام دکانداروں کو پابند کیا جائے کہ صوبائی حکومت کی جانب سے جاری کردہ پرائس لسٹ اپنے دکانوں پر آویزاں کریں تاکہ سرکاری نرخ نامے کے مطابق اشیاءکی فروخت کو ممکن بنایا جائے۔ چیف سیکرٹری نے اجلاس کے شرکاءکو ہدایات جاری کرتے ہوئے یہ واضح کیا کہ وہ عوام کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے سخت اقدامات اٹھائیں گے اور خود ساختہ افراط زر کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1556/2022
سبی 13 اپریل ۔ڈپٹی کمشنر سبی منصور قاضی نے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر سبی وحید شریف کے ہمراہ رات گئے ڈویژنل ہسپتال سبی کا دورہ کیا اور انھوں نے مختلف شعبوں اور وارڈ ز کا معائنہ کیا ڈپٹی کمشنر سبی منصور احمد قاضی فردا فردا مریضوں سے ملے ان کی خیریت دریافت کی اور علاج و معالجہ کے حوالے سے طبی سہولیات کے بارے میں معلومات لیں اس موقع پر ڈپٹی کمشنر سبی نے ایم ایس سول ہسپتال سبی کو سختی سے ہدایت کی ہے ہسپتال میں صفائی ستھرائی کا خاص طور پر خیال رکھا جائے اور علاج کے غرض سے آنے والے مریضوں کو صحیح سے دیکھ بھال اور علاج و معالجہ کی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنائیں انہوں نے کہا کہ سول ہسپتال میں ڈاکٹروں کی کمی کو دور کرنے کے لئے محکمہ صحت کے اعلی حکام سے رابطہ کیا جائے گاعلاوہ ازیں انہوں نے لیویز لائن اور لیویز تھانے کا دورہ کیا لیویز لائن اور تھانے کے مختلف شعبوں کا معائنہ کیا اس موقع پر ڈپٹی کمشنر سبی منصوراحمد قاضی لیویز جوانوں سے ملے اور انھیں ہدایت کی ہے کہ وہ کسی بھی ممکنہ صورتحال سے نمٹنے کے لئے 24 گھنٹے الرٹ رہے اور فرائض کو ایماندار ی کے ساتھ سر انجام دیں انہوں نے کہا کہ لیویز جوانوں کی غیر حاضری اور فرائض کے دوران غفلت اور کوتاہی کسی صورت برادشت نہیں کیا جائے گا غیر حاضر اہلکاروں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1557/2022
کوئٹہ 13 اپریل 2022۔ صوبائی محتسب بلوچستان نذر محمد بلوچ ایڈوکیٹ کے احکامات کی روشنی میں ضلع سوراب کے شہری حاجی خیر محمد کو گھر کے کرایہ کے مد میں واجبات ادا کر دیئے گئے، صوبائی محتسب بلوچستان کے ترجمان کے مطابق سوراب کے شہری حاجی خیر محمد ریکی نے صوبائی محتسب کو درخواست دی تھی کہ انہوں نے اپنا گھر بمقام تحصیل سوراب سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کو کرایہ پر دیا تھا اور مذکورہ محکمے کے متعلقہ حکام نے انہیں یکم جولائی 2018 تا اکتیس اکتوبر 2021 تک مبلغ 635000 روپے مکان کا کرایہ ادا نہیں کیا لہذا اس ضمن میں اسکی داد رسی کی جائے، محتسب سیکرٹریٹ کے ایڈیشنل رجسٹرار/انویسٹیگیشن آفیسر جمیل خان کاکڑ نے نوٹس جاری کرتے ہوئے سیکرٹری سوشل ویلفیئر بلوچستان سے اس حوالے سے وضاحت طلب کی، دریں اثناءڈی جی سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ نے اپنے تحریری جواب میں وضاحت کرتے ہوئے لکھا کہ شکایت کنندہ کو کرایہ کے واجبات کی ادائیگی کیلئے فنانس ڈیپارٹمنٹ کو خط ارسال کیا جاچکا ہے، بعد ازاں سیکشن آفیسر (بجٹ۔IX) نے مبلغ 457000 روپے رورل کیمونٹی سینٹر سوراب کے مکان کیلئے کرایہ کے مد میں ادائیگی کیلئے جاری کر دئیے، اپنے شکایت کے ازالے پر درخواست گزار حاجی خیر محمد ریکی نے صوبائی محتسب کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ محتسب ادارے کی بروقت کارروائی سے اس کی داد رسی ممکن ہوئی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1558/2022
جھل مگسی 13اپریل۔ضلع جھل مگسی کی عوام کو ماہ صیام میں سستے داموں اشیائے خوردو نوش کی فراہمی کے لیے گھی تیل چاول دالیں آٹا چینی سمیت دیگر اشیاءخورد و نوش سے بھرا یوٹیلیٹی وین گنداواہ پہنچ گیا حکومت کی جانب سے دی جانے والی سبسڈی سے لوگوں کو استعفادہ کرنے کے لیے عوام کا جم غفیر خریداری کے لیے لائنوں میں جمع رہا اور لوگوں نے بالترتیب اشیاءخوردونوش خریدیں عوام کی جانب سے یوٹیلٹی وین اسٹور ضلع جھل مگسی بھجوانے پر کمشنر نصیر آباد ڈویژن فتح خان خجک کا شکریہ ادا کیا کہ ان کی کاوشوں کے طفیل عوام کو ماہ صیام میں ریلیف فراہم کرنے کے لیے یوٹیلٹی وین کے ذریعے عوام کو سستے داموں اور معیاری اشیائ خوردونوش کی فراہمی کو یقینی بنایا گیا ضلع جھل مگسی میں یوٹیلیٹی سٹور نہ ہونے کی وجہ سے یہاں کی عوام حکومت کی جانب سے دی جانے والی سبسڈی سے یکسر محروم چلے آ رہے تھے اس کمی کو محسوس کرتے ہوئے کمشنر نصیرآباد ڈویژن فتح خان خجک نے مختلف اضلاع کے ان علاقوں میں جہاں پر یوٹیلٹی سٹور قائم نہیں ہیں وہاں کے لوگوں کے لئے یوٹیلٹی وین کیلئے صوبائی سطح پر عملی طور پر اقدامات کیے تاکہ یوٹیلٹی سٹور کے ذریعے دور دراز علاقوں کے عوام کو ان کی دہلیز پر حکومتی سبسڈی ریٹ کے حساب سے اشیاءخورد و نوش کی فراہمی ممکن ہو سکے۔ اسسٹنٹ کمشنر گنداواہ ہدایت اللہ جاموٹ کی نگرانی میں یوٹیلٹی اسٹورز وین سے خرید و فروخت کا عمل جاری رہا ضلعی انتظامیہ کی جانب سے یوٹیلٹی وین اور عملے کو سیکورٹی بھی فراہم کی گئی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1559/2022
جھل مگسی 13اپریل۔ضلع مگسی کے ہیڈ کوارٹر گنداواہ میں ضلعی انتظامیہ جھل مگسی کی جانب سے پاکستان زندہ باد رمضان المبارک فلڈ لائیٹ فیسٹیول کا افتتاح جناب برکت علی مرغزانی ایڈیشنل سیشن جج جھل مگسی بمقام گنداواہ نے کیا افتتاحی تقریب میں ڈپٹی کمشنرجھل مگسی ڈاکٹر شرجیل نور ،عاطف جمیل جوڈیشل مجسٹریٹ گنداواہ حافظ سعید قاضی سیاسی سماجی شخصیت سید صفدر اکبر علی شاہ حسینی اسسٹنٹ کمشنر گنداواہ ہدایت اللہ چندڑ ایس ایچ او گنداواہ سکندر لہڑی اسپورٹس آفیسر قاضی الطاف حسین کلواڑ و دیگر نے شرکت کی افتتاحی تقریب میں معزز مہمانوں نے ضلع جھل مگسی کے کھلاڑیوں میں کٹ و دیگر سامان تقسیم کئے میزبان ڈپٹی کمشنر جھل مگسی ڈاکٹر شرجیل نور چنہ اور اسسٹنٹ کمشنر گنداواہ ہدایت اللہ چندڑ نے معزز مہمانوں جناب برکت علی مرغزانی ایڈیشنل سیشن جج جھل مگسی بمقام گنداواہ ،عاطف جمیل جوڈیشل مجسٹریٹ گنداواہ حافظ سعید قاضی گنداواہ سیاسی سماجی شخصیت سید صفدر اکبر علی شاہ کو اجرک پہنائے افتتاحی تقریب کا آغاز تلاوت قرآن پاک و قومی ترانہ سے کیا اس کے بعد صدام حسین گھوٹیہ نے تمام ٹیموں کا معزز مہمانوں سے تعرف کرایا شیشن جج ڈپٹی کمشنر جھل مگسی ڈاکٹر شرجیل نور اسسٹنٹ کمشنر گنداواہ نے خود کھیل کر کرکٹ کا آغاز کیا افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر جھل مگسی ڈاکٹر شرجیل نور نے کہاکہ ضلع جھل مگسی کے نوجوانوں کے ٹیلنٹ کو ابھارنے کے لیے اس طرح کا یونٹ سود مند ثابت ہوگا ضلعی انتظامیہ صحت مند معاشرے کے قیام کیلئے اسپورٹس کی سرگرمیوں میں خاطر خواہ اضافہ کروا رہی ہے تاکہ نوجوان نسل کو مثبت سرگرمیوں کی جانب راغب کیا جا سکے انہوں نے کہاکہ اس ایونٹ میں نوجوانوں کی جانب سے زیادہ سے زیادہ حصہ لینا اس بات کا ثبوت ہے کہ ضلع جھل مگسی کے نوجوان کھیلوں کے فروغ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں اور کھیلوں سے پیار کا اظہار کر رہے ہیں ماہ صیام میں فلڈ لائٹ فیسٹیول کو دیکھنے کے لیے شہریوں کی بڑی تعداد جمع ہو رہی ہے جو کہ خوش آئند اقدام ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1560/2022
کوئٹہ ؛ 13 اپریل 2022: سیکرٹری سیکنڈری ایجوکیشن عبدالرو¿ف بلوچ نے کہا ہے کہ حکومت بلوچستان صوبہ میں تعلیم کے فروغ میں دستیاب محدود وسائل میں رہتے ہوئے اقدامات اٹھا رہی ہے، صوبے میں سب سے زیادہ بچے سرکاری اسکولوں میں زیر تعلیم ہیں عصری علوم سمیت کوالٹی اور بہتر آموزش کا حصول آئندہ آنے والے دنوں میں بھر پور توجہ مرکوز ہو گا تاکہ تعلیم کا معیار بلند ہو سکے اور بلوچستان اپنی تعلیمی اہداف کا حصول ممکن بنا سکے۔ یہ بات انہوں نے 22ویں لوکل ایجوکیشن گروپ کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس نے بتایا کہ صوبے میں پرائمری اور سیکنڈری تعلیم کے حوالے سے ایجوکیشن گروپ کو بنیادی حیثیت حاصل ہے۔اجلاس میں اس عزم کا اعادہ ظاہر کیا گیا کہ بلوچستان ایجوکیشن سیکڑ پلان 2020-2025کی مکمل عمل داری کو ہر صورت ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے پالیسی سازی اور فروغ تعلیم کے لیے متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت کو ہر صورت مقدم رکھا جائے گا۔ اجلاس میں جائزہ برائے ایجوکیشن سیکڑ پلان اور اسکی عملدرآمد و پیشرفت ، صوبے میں غیر رسمی تعلیم کی پیشرفت اور مستقبل کے لائحہ عمل سمیت محکمہ سماجی بہبود اور متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مربوط کوارڈینیشن، ASPIRE پروجیکٹ کی پیشرفت اور جائزہ ، یونیسف کی جانب سے بلوچستان ایجوکیشن سپورٹ پروگرام فیز 2 کی پیشرفت اور جائزہ، بی آر ایس پی اور ترقی فاو¿نڈیشن کی جانب سے ECW پروجیکٹ کی پیشرفت اور جائزہ، گلوبل پارٹنرشپ فار ایجوکیشن کی جانب سے کوآرڈینیٹنگ ایجنسی کی سلیکشن سمیت صوبے میں جاری ایجوکیشن پروگرام سے منسلک دیگر اہم اقدامات اور اصلاحات کے حوالے سے سیر حاصل بحث کی گئی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری سیکنڈری ایجوکیشن عبدالرو¿ف بلوچ نے کہا کہ مربوط پالیسی سازی سمیت شعبہ تعلیم کے فروغ میں تمام اسٹیک ہولڈرز کے اقدامات کو حکومت بلوچستان قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے ، انہوں نے کہا کہ صوبہ میں تقریباً دس لاکھ بچے سرکاری اسکولوں میں حصول علم کے لیے جاتے ہیں مگر ان کے مشاہدے اور زاتی تجربے کی بناء پر بچوں کی صلاحیتوں کو جس طرح ہونا چاہیے وہ اس معیار کے نہیں کوالٹی اور بہتر آموزش پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ صوبے میں یکساں قومی نصاب کے سلسلے میں ٹیکسٹ بکس کو صوبے بھر میں تقسیم کر دیا گیا ہے، صوبے میں اساتذہ کی صلاحیتوں کو مزید بہتر بنانے کے لیے یونیسف کے اشتراک سے معقول فنڈز رکھے گئے ہیں۔ سیکرٹری سیکنڈری ایجوکیشن نے مزید کہا کہ صوبہ بھر میں ٹیچنگ اسٹاف کی کمی کو پورا کرنے کے لیے ممکنہ نئے اساتذہ کی بھرتی کے لیے محکمے سیکنڈری ایجوکیشن نے صوبائی کابینہ سے اساتذہ کی ممکنہ قابلیت کے طریقہ کار میں نرمی دی ہے جبکہ بھرتی کے بعد انکو ممکنہ قابلیت کی ٹریننگ دی جائے گی اس اقدام سے صوبہ بھر میں غیر فعال اسکولوں کو فعال کرنے میں کامیابی حاصل ہو سکے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ صوبے میں مڈل اسکول اور پرائمری سکول میں واضح فرق موجود ہے 8 پرائمری اسکولوں میں ایک مڈل اسکول ، انہوں نے مزید بتایا کہ جاری مالی سال میں 33 پرائمری اسکولوں کو مڈل جبکہ 66 مڈل کو ہائی سکول بنانے کے لیے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں جبکہ 200 پرائمری سکولوں کو مڈل اسکول لیول پر لے جانے کے لیے مالی سال -22 2021 کا ایک منصوبہ بھی پی ایس ڈی پی میں منظور کیا گیا ہے۔ تقریب کے اختتام پر سیکریٹری نے گلوبل پارٹنرشپ آف ایجوکیشن، یورپین یونین، ورلڈ بینک ، JICA، ای سی ڈبیلو اور یونیسف سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز کا خصوصی شکریہ ادا کیا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1561/2022
کوئٹہ 13اپریل۔صوبائی خاتون محتسب بلوچستان نے ہراسگی کیس میں ڈائریکٹر ایڈمن کی برطرفی اور تین لاکھ روپے جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا،  بدھ کے روز صوبائی خاتون محتسب صابرہ اسلام کے  مصدرہ فیصلہ کے مطابق یہ سزا ہیپلر آئی اسپتال کی ہراسگی میں متاثرہ نرس مسمات( ش) کے معاملے میں دی گئی جس میں متاثرہ نرس نے فراہمی انصاف کے صوبائی محتسب سیکرٹریٹ سے رجوع کیا جہاں سعید احمد شاہوانی نامی ڈائریکٹر ایڈمن نے کیس کے مرکزی ملزم کی معاونت میں مدعیہ کو ذہنی اذیت کا نشانہ بنایا اور کیس کی واپسی کے لئے دباو¿ مختلف حربے استعمال کئے ڈرایا دھمکایا گیا اور توہین عدالت کا نوٹس بھی دیا گیا  متاثرہ خاتون کی تنخواہ ایک سال سے مرکزی ملزم نے بند کروا دی جس پر انصاف کی متلاشی خاتون فاقہ کشی کا شکار ہوگئی متاثرہ خاتون نے مایوسی کے عالم میں خاتون صوبائی محتسب سیکرٹریٹ سے رجوع کیا جہاں تمام پہلووں کا جائزہ لیا گیا اور  سماعت و ضروری کارروائی کے بعد صوبائی محتسب آفس کے ڈائریکٹر ایڈمن سعید احمد شاہوانی کو قصور وار پایا گیا جس پر خاتون محتسب صابرہ اسلام نے ملوث اہکار کی برطرفی اور تین لاکھ روپے جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیا، جبکہ اعلی صوبائی حکام سے رابطہ کرکے متاثرہ خاتون کی تنخواہ گیارہ ماہ بعد کرادی ، اس موقع پر متاثرہ خاتون نے انصاف کی فراہمی پر صوبائی خاتون محتسب کا شکریہ ادا کیا،  خاتون محتسب صابرہ اسلام نے کہا کہ ہراسگی قابل تعزیر سنگین جرم ہے کوئی کتنا ہی بااثر کیوں نہ ہو قانون سے بالا نہیں،  براہ راست  ہراسمنٹ یا اس جرم کی معاونت میں شامل عناصر قابل معافی نہیں، صوبائی حکومت کے ارباب اختیار اور تمام اداروں کے سربراہان اس اخلاقی جرم میں ملوث یا شریک افراد کے خلاف سخت تادیبی کارروائی کریں اور ہراسمنٹ میں ملوث افراد کو ایسے کلیدی عہدوں پر فائز نہ کریں جہاں بیٹھ کر وہ ہراسمنٹ کے مرتکب ہوں دریں اثناءعورت فاونڈیشن سمیت سول سوسائٹی کی تنظمیوں نے صوبائی خاتون محتسب کے فیصلے کو سراہتے ہوئے اپیلانٹ اتھارٹی سے اپیل کہ ہے کہ وہ ملوث ملزمان کی اپیلیں مسترد کرتے ہوئے حق و انصاف پر مبنی فیصلوں کی توثیق کریں اور معاشرے کو ہراسگی جیسے سنگین اخلاقی جرم سے پاک کرنے کے لئے اپنا کردار ادا کریں
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1562/2022
زیارت خبرنامہ 13اپریل ۔ڈپٹی کمشنر زیارت حبیب نصیر کی زیارت محکمہ زراعت کے افسران کا جائزہ پیشرفت اجلاس منعقد ہوا اجلاس میں ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیعی حاجی نذیر احمد پانیزئی ،ڈپٹی ڈائریکٹر واٹر مینجمنٹ مختار کاکڑ، ڈائریکٹر ریسرچ اختر گل زرعی انجینئر زرعی انجینرنگ ودود بازئی اور شاجھان دمڑنے شرکت کی۔اجلاس میں ڈپٹی کمشنر زیارت حبیب نصیر کو ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیعی حاجی نذیر احمد پانیزئی نے محکمہ زراعت زیارت کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی ڈپٹی کمشنر زیارت حبیب نصیر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ زراعت ملک کی ترقی میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے ضلع زیارت کے عوام کازیادہ ترگزر بسر زراعت سے وابستہ ہےزراعت کے فروغ اور محکمہ زراعت کو جدید خطوط پر استوار کریں گےانہوں نے کہا ضلع زیارت میں کسانوں کو ریلیف دینے کے لیے اقدامات ضروری ہے حکومت کسانوں کو خوشحال دیکھنا چاہتی ہے انہوں نے کہا کہ محکمہ زراعت کے ملازمین اپنے فرائض منصبی ایمانداری اور لگن سے ادا کریں اس سلسلے میں کسی قسم کی کوئی کوتاہی کو برداشت نہیں کریں گے،ڈپٹی کمشنر زیارت نے محکمہ زراعت کے منتظمین کو ہدایت کی کہ وہ زمینداروں کو سبسڈی دیں اور کھاد کی فراہمی کو یقینی بنائیں تاکہ زمینداروں کے مشکلات کا خاتمہ ہوسکے۔انہوں نے کہا حکومت محکمہ زراعت سمیت تمام محکموں کے فروغ کے لیے تمام وسائل بروئے کار لارہی ہے اس سلسلے میں ضلع زیارت کے تمام محکموں کو فعال کرکے عوام کے تمام جائز مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1563/2022
کوئٹہ،  13 اپریل ۔بلوچستان میں حقوق و تحفظ نسواں کے لئے کام کرنے والے تین بڑے سرکاری اسٹیک ہولڈرز وویمن پارلیمنٹرین کاکس ،  صوبائی خاتون محتسب اور کمیشن آن اسٹیٹس آف وویمن نے جائیداد و ترکہ میں خواتین کو اسلامی شرعی ہدایات کے مطابق  حصہ داری کی تقسیم و حصول کو یقینی بنانے کے لیے معاشرے میں شعوری آگاہی کی ترویج پر زور دیا ہے اور اس ضمن میں رائج الوقت قوانین پر عمل درآمد کے لئے اقدامات کو موثر بنانے پر اتفاق کیا ہے  بدھ کو یہاں محکمہ قانون میں منعقدہ ایک مشاورتی نشست میں پارلیمانی سیکرٹری قانون و پارلیمانی امور و چئیرپرسن وویمن پارلیمنٹرین کاکس ڈاکٹر ربابہ خان بلیدی،  صوبائی خاتون محتسب صابرہ اسلام ایڈوکیٹ،  کمیشن آن اسٹیٹس آف وویمن کی چئیرپرسن فوزیہ نے کہا کہ بلوچستان میں خواتین کے استحصال کو روکنے کے لئے رائج قوانین پر عمل درآمد ضروری ہے اس مقصد کے لئے تحفظ نسواں کے لئے قائم اداروں کو زیادہ سے زیادہ بااختیار بناکر خوا تین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھانے ہونگے ، مشاورتی نشست میں اظہار خیال کرتے ہوئے صوبائی خاتون محتسب صابرہ اسلام ایڈوکیٹ نے کہا کہ بلوچستان میں خواتین کو ہراساں کرنے کے لئے واقعات کی شرح  تشویشناک ہے تاہم قبائلی روایات کے باعث ایسے واقعات رپورٹ نہیں ہوتے تھے لیکن اب شعور بیدار ہو رہا ہے اور واقعات رپورٹ ہونے کی شرح بڑھ رہی ہے دوسری جانب مختلف محکموں اور شعبوں میں موجود  ہراسر ایک دوسرے جرائم پر پردہ پوشی کرتے ہیں ایسے عناصر کی حوصلہ شکنی کرنی ہوگی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کمیشن آن اسٹیٹس آف وویمن کی چئیرپرسن فوزیہ شاہین نے کہا کہ اسٹیک ہولڈرز کے مابین مضبوط ریفرل سسٹم کے تحت اشتراکی اقدامات کو موثر بنایا جاسکتا ہے اور مختلف کیسوں میں نوعیت کے مطابق اسے متعلقہ فورم پر ریفر کرکے متاثرہ خواتین کو فوری ریلیف فراہم کی جاسکتی ہے مشاورتی نشست کو سمیٹے ہوئے پارلیمانی سیکرٹری قانون و پارلیمانی امور و چئیرپرسن ڈبلیو پی سی ڈاکٹر ربابہ خان بلیدی نے کہا ہے کہ جائیداد اور ترکہ میں خواتین کے شرعی حصہ کے تحفظ کیلئے قوانین پر عمل درآمد ضروری ہے جبکہ حصہ داری کی تقسیم کے عمل کو سہل بنانے کے لیے دیگر صوبوں کی طرز پر یہ اختیارات خاتون محتسب کو سونپ دئیے جائیں تو آسانی ممکن ہے انہوں نے کہا کہ ڈبلیو پی سی ،صوبائی خاتون محتسب اور سی ایس ڈبلیو کے کثیر الجہتی اقدامات کے ذریعے بلوچستان کی خواتین  کے  معاشرتی تشخص کو اجاگر کیا جائیگا
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1564/2022
کوئٹہ :13اپریل؛۔ آئی جی پولیس بلوچستا ن محسن حسن بٹ نے کہا کہ ایگل اسکواڈ کی مجموعی کارکردگی اور خاص طور پر اسٹریٹ کرائمز کے تدارک کے لیے موثر اقدامات پر فورس کو عام شہری کے ساتھ رویہ بہتر رکھنا اور عوام کے ساتھ دوستانہ رویہ اختیار کرتے ہوئے چیکنگ کریں جبکہ ٹریفک کی روانی کو بہتر اوربزرگوں اور بچوں کو سڑک کراسنگ میں مدد کریں۔یہ بات انہوں آج یہاں سینٹرل پولیس آفس میںایگل اسکواڈکی 4 سالہ کارکردگی کا جائزہ اور بہتری کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کر تے ہوئے کہی۔ اس موقع پرایڈیشنل آئی جی اسحاق جہانگیر ، ڈی آئی جی کوئٹہ سید فدا حسن شاہ ، اے آئی جی آپر یشن رضوان عمر گوندل ، ایس ایس پی آپریشن عبدالحق عمرانی اور ایس پی ایگل اسکواڈ بابر مشاق بھی موجود تھے۔انہوں نے کہا کہ عوام کے تعاون سے ہی شہریوں اور پولیس کے مسائل موقع پر ہی حل ہونے کے ساتھ ساتھ جرائم کا خاتمہ بھی ممکن ہوگا۔اور ہمیں اپنے رویہ میں بہتری پیدا کرکے عوام کا پولیس پر اعتماد بحال کرنا ہے۔شرپسند عناصر خاص طور پر اسٹریٹ کرائمز پر کڑی نظر رکھی جائے۔اس موقع پر ایس پی بابر مشاق نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ایگل اسکواڈ کا قیام 2018میںہوا تھاجو ڈسٹرکٹ کوئٹہ اور بلوچستان کانسٹیبلری کے جوانوں پر مشتمل ہیں ایگل اسکواڈ صوبے کے مختلف اضلاع میں اس وقت 3شفٹوں میںڈیوٹی سرانجام دے رہے ہیں۔آئی جی پولیس بلوچستان نے کہا کہ دہشت گردی اور اسٹریٹ کرائمز کے تدارک میںایگل اسکواڈ کی کارکردگی قابل ستائش ہے ایگل اسکواڈ کی گشت سے کوئٹہ میں جرائم میں خاطرخواہ کمی واقع ہوئی ہے اور عوام میں تحفظ کا احساس اجاگر ہو ا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایگل اسکواڈکے لئے مزید نفری کو جدید ٹریننگ دی جائے گی۔ مواصلات کے نظام کو بہتر بنایا جائےگااورایگل اسکواڈ کے درپیش مسائل کو فوری حل کرنے کیلئے متعلقہ افسران کو احکامات جاری کر دیا گیا ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1565/2022
کوئٹہ13اپریل۔چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی/ڈپٹی کمشنر کوئٹہ عرفان نواز میمن کی زیر صدرات بلوچستان ہائی کورٹ کے احکامات پر شہر بھرمیں دودھ اور دہی کے نرخ کا تعین کے حوالے سے ایک اہم اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں ڈیری فارم ایسوسی ایشن کے عہدیداران سمیت تمام اسٹک ہولڈر موجود تھے۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ شہر میں دودھ اور دہی کی قمیتوں کے کا ازسرنو تعین کرکے مناسب قیمت مقرر کیا جائے گا۔جس میں تمام اسٹک ہولڈر کے تحفظات دور کرکے عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات کیے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ سرکاری قیمت متعین ہونے کے بعد اس ریٹ پر ہر صورت عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا۔شہر میں خود ساختہ قیمت وصول کرنے کی کسی صورت اجازت نہیں دیا جاسکتی ہے۔ڈیری فارم مالکان اور دکاندار مقررہ نرخ پر دودھ اور دہی کی فروخت کو یقینی بناتے ہوئے عوام کو ریلیف فراہم کریں۔انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے عوام کو ہرممکن ریلیف فراہم کرنے کے لیے جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1566/2022
کوئٹہ 13اپریل۔سینئر صوبائی وزیر منصوبہ بندی و ترقیات نورمحمد ڈمڑ نے کہا ہے کہ بحیثیت وزیراعلیٰ میر عبدالقدوس بزنجو نے صوبے کے تمام اضلاع اور حلقوں کو بلا تفریق ترقی دینے کے خواہاں ہیں وزیر اعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو کی حکومت تمام علاقوں کی یکساں بنیادوں پرترقی کیلئے نہ صرف پرعزم ہے بلکہ اس مقصد کیلئے ٹھوس اقدامات کر رہی ہے صوبے کے دیگر علاقوں کی طرح جنوبی اضلاع کی پائیدار  ترقی اور علاقے کے عوامی مسائل کے حل کیلئے عملی اقدامات کئے جا رہے ہیں جس کے نتائج جلد عوام کے سامنے آئیں گے۔ ان خیالات کا اظہار ا±نہوں نے بدھ کے روز اپنے دفتر میں عمائدین پر مشتمل ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا وزیر منصوبہ بندی و ترقیات نے کہاکہ ماضی میں جنوبی اضلاع کی تعمیر و ترقی پر کوئی خاص توجہ نہیں دی گئی لیکن وزیراعلیٰ بلوچستان جنوبی اضلاع کو خصوصی اہمیت دے رہے ہیں اور زیارت کی ترقی کیلئے متعد د اہم منصوبوں پر کام جاری ہے جن کی تکمیل سے علاقہ ترقی کی راہ پر گامزن ہو جائے گا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1567/2022
کوئٹہ 13اپریل۔ترجمان حکومت بلوچستان فرح عظیم شاہ نے کہا ہے کہ بلوچستان عوامی پارٹی کے 14 اراکین  کی جانب سے وزیر اعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو  کوپارٹی کاقائدایوان ڈکلئیر کیا جانااس امر کی تصدیق ہے کہ اراکین اسمبلی کاوزیر اعلیٰ کی قیادت پر مکمل اعتماد حاصل ہے انکا کہنا تھا کہ بلوچستان عوامی  پارٹی ایک باقاعدہ منصوبہ بندی کیساتھ عوامی معاملات کو چلا رہی ہے اور انکی جماعت صوبہ میں امن و امان،کی مکمل صورتحال پر قابو پانے کو اپنی اولین ترجیح سمجھ رہی ہے۔ترجمان نے کہا کہ ارکان اسمبلی  نے وزیر اعلی کی قیادت، عوام کی فلاح و بہبود کے لیے جاری حکومتی پالیسیوں پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا فرح عظیم شاہ نے کہا کہ ریکوڈک منصوبہ بیرک گولڈ کا پاکستان سے معاہدہ جرمانے کی تلافی اور منصوبہ دوبارہ شروع کرنے پر اتفاق سے بلوچستان کی قسمت بدل جاے گی اور11 ارب ڈالر کے جرمانے کی تلافی کے ساتھ ساتھ 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری بھی ہو گی۔فرح عظیم شاہ کا کہنا تھا کہ اس سرمایہ کاری سے بلوچستان میں ملازمتوں کے آٹھ ہزار مواقع پیدا ہوں گے اورپاکستان،بلوچستان کو بے پناہ فوائد ملیں گے۔ جس سے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کوٹیکسوں کی مد میں اربوں ڈالر کی ریونیو حاصل ہو گا ترجمان حکومت بلوچستان کا مزید کہنا تھا کہ وزیراعلی میر عبدالقدوس بزنجو میں جو سیاسی بصیرت ہے جو کہ بہت کم سیاستدانوں میں پائی جاتی ہے اور انہوں نے ہمیشہ اخلاق کے دائرے میں رہتے ہوئے سیاست کی ہے  جس کی انہوں نے اپنے ساتھی ممبران کو بھی ہدایت کی ہے انہوں نے کہا کہ  وزیر اعلی بلوچستان کے ویڑن کے مطابق بلوچستان کی ترقی میں  اپوزیشن ہوں یا حکومتی حکومتی ممبران ان سب کو ساتھ لے کر چلیں گے اور کسی بھی علاقے ،دیہات کو نظر انداز نہیں کریں گے جیسا کہ ماضی کی حکومتوں میں ہوتا آیا ہے ترجمان کا کہنا تھا کہ بلوچستان عوامی پارٹی ایک مضبوط اور مستحکم پارٹی ہے اور بہت جلد انٹرا پارٹی الیکشن بھی کرے گی تاکہ پارٹی کو نیشنل لیول پر تقویت دی جا سکے تاکہ عوام کی بلا رنگ و نسل سے بالاتر ہوکر  خدمت کی جاسکے
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1568/2022
کوئٹہ 13اپریل۔ترجمان حکومت بلوچستان فرح عظیم شاہ نے جنوبی وزیرستان میں دہشت گردوں کے ساتھ مقابلے میں میجر شجاعت حسین اور سپاہی عمران احمد کی شہادت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ ترجمان حکومت بلوچستان نے کہا ہے کہ ہمارے اصل ہیرو شہید اور غازی ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ملک وقوم کے دفاع کے لئے اپنی جان کا نذزانہ پیش کرنے والے شہیدوں کو سلام پیش کرتے ہیںانہوں نے کہا کہ وطن کے دفاع کے لیے جانیں قربان کرنے والے شہداءاور ان کے اہل خانہ کو ہم  ہر گز فراموش نہیں کرے گی۔ انہوں نے دعا کی کہ اللہ تعالی شہید کے درجات بلند فرمائے اور زخمی ہونے والے مکمل صحت یابی کیلئے دعا بھی کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment