خبرنامہ نمبر1541/2022
دکی12اپریل۔ اسسٹنٹ کمشنر حضرت ولی کاکڑ نے اچانک بازار کا دورہ کیا اور عوامی شکایات پر گرانفروشی،کم وزن اور مضرصحت اشیاءخوردونوش فروخت کرنیوالے دکانداروں کیخلاف کاروائی کرتے ہوئے ایک دکان سیل کردیا گیا،جبکہ سرکاری نرخنامے پر عمل نہ کرنے اور ناجائز منافع خوری کرنے پر متعدد دکانداروں پر جرمانے بھی کئے گئے۔ اسسٹنٹ کمشنر حضرت ولی کاکڑ نے تمام دکانداروں کو وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ سرکاری نرخنامے پر عمل درآمد یقینی بنائیں اور نرخنامہ دکان میں واضح جگہ پر آویزاں کریں، انہوں نے کہا کہ ماہ رمضان میں عوام کو ریلیف دینا ہمارا فرض اولین ہے، مرغی گوشت فی کلو 360 روپے مقررہ کیا گیاہے لہذا اس سے زیادہ قیمت لگانے والوں کیخلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائیگی، ناجائز منافع خوری سے گریز کیا جائے انہوں نے کہا کہ عوام گرانفروشی کرنے اور سرکاری نرخنامے پر عمل نہ کرنیوالے دکانداران کی نشاندہی کیا کریں تاکہ فوری طور قانونی کاروائی عمل میں لائی جاسکے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1542/2022
لورالائی 12اپریل۔کمشنر لورالائی ڈویژن شاہداللہ خان نے اپنے عہدے کا چارج سنبھال کر کام شروع کردیآ ہے دریں اثناء ایکسین بی اینڈ آر عبدالرزاق اسسٹنٹ ڈائریکٹر انفارمیشن آفس لورالائی امیرجان لونی ایس ڈی او بی اینڈ آر بشیر خان حمزہ زئی سمیت دفتر سٹاف اور دیگرنے ان سے ملاقات کرکے مبارکباد دی اور ان کی دوبارہ تعیناتی پر خوشی کا اظہار کیا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1543/2022
گوادر12اپریل۔ڈپٹی کمشنر گوادر و ضلعی ریٹرننگ آفیسر گوادر کیپٹن ریٹائرڈ جمیل احمد نے کہا کہ ضلع گوادر میں بلدیاتی انتخابات 2022 کے تمام انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں گزشتہ روز ریٹرننگ اور اسسٹنٹ ریٹرننگ افسران کی تقریب حلف برداری میں بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر الیکشن کمشنر اور ریٹرننگ آفیسر گوادر محمد سمیع اللہ بھی موجود تھے انہوں نے کہا بلدیاتی انتخابات کے سلسلے میں ضلع بھر میں تعینات ہونے والے پانچ رینٹرنگ افسران اور دس اسسٹنٹ ریٹرننگ افسران سے حلف لیا گیا ہے حلف نامے میں یہ عہد کیا کیاگیا ہے کہ ہم بلدیاتی انتخابات کے دوران غیر جانبدار ہوکر پورے ایمانداری اور خلوص دل سے کام کریں گے اور ہم الیکشن کمیشن آف پاکستان کے قوانین اور ہدایات پریورا عمل کرکے انتخابات کو شفاف بنائیں گے انہوں نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کے پروگرام کیمطابق 15 سے 18 اپریل تک متعلقہ ریٹرننگ افسران کے پاس کاغزات نامزدگی جمع کیئے جاسکیں گے۔19 اپریل کو نامزد امیدواروں کی فہرستیں جاری کی جائیں گی جبکہ 20سے 22اپریل تک کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کی جائے گی اور 23سے 26اپریل تک ریٹرننگ افسران کے فیصلوں کیخلاف اعتراضات دائر کیئے جاسکیں گے۔ اور 27سے 30 اپریل تک ریٹرننگ افسران اپیلوں پر فیصلے کریں گے جبکہ یکم مئی کو امیدواروں کی نظر ثانی شدہ لسٹیں آویزاں کی جائیں گی 2مئی تک امیدوار دستبردار ہو سکیں گے 7 مئی کو امیدواروں کو انتخابی نشانات دیئے جائیںگے اور 29 مئی کو بلوچستان کے کوئٹہ اور لسبیلہ کے علاوہ پورے بلوچستان کی طرح گوادر میں بلدیاتی انتخابات کے لئے پولنگ ہوگی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1544/2022
کوئٹہ 12اپریل۔کمشنر کوئٹہ ڈویژن سہیل الرحمن بلوچ نے کہاکہ کوئٹہ شہر میں ٹریفک کے نظام کی بہتر ی اورغیر قانونی رکشوں کے خلاف موثر کارروائی کے لیے پرمٹوںکے نظام کو مکمل طور پر ڈیجیٹلایزڈ کردیا گیا ہے۔ٹرانسپورٹ کے شعبے میں جدید دور کے طرز پر تبدیلیاں ناگریز ہوچکی ہیں تاکہ عوام کے لیے آسانی اور ٹریفک کے نظام میں بہتری لائی جاسکے۔اس کے علاوہ اس نظام سے سرکاری ریونیو میں اضافہ، کرپشن کا خاتمہ اور غیر قانونی رکشوں کے روک تھام کے سلسلے میں آر ٹی اے عملہ اورٹریفک پولیس کو موثر کارروائی کرنے میں مدد ملے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کوئٹہ شہر کے تمام رکشوں کو ڈیجیٹلایزڈ کرنے اور کمپیوٹرائزڈ پرمٹ کے اجراءکرنے کا افتتاح کے موقع پر کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری آر ٹی اے کوئٹہ منظور احمد پہنور کی جانب سے رکشوں کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کے نظام کے حوالے سے بریفنگ دی۔ اس موقع پر ایس پی ٹریفک سٹی نصیراللہ حسن شاہ،سپرئٹنڈنٹ آر ٹی اے حمید اللہ محمد حسنی اور اسسٹنٹ ریونیو ریسیپٹ جان محمد محمد حسنی کے علاوہ آرٹی اے کا عملہ بھی موجود تھے۔کمشنر کوئٹہ ڈویژن نے کہا کہ آر ٹی اے کے تمام ریوینو سمیت ریکارڈ کو کمپیوٹرائزڈ کرکے ڈیٹا بیس میں منتقل کرنے سے غیر قانونی اور دونمبر رکشوں اور گاڈیوں کے خلاف کارروائی میں مدد ملنے کے ساتھ ساتھ ٹرانسپورٹرز اور عوام کے لیے آسانی ہوگی اور شہر میں غیر قانونی رکشوں سے چھٹکارا حاصل ہوگا۔انہوں نے کہا کہ موجودہ دور میں تمام سرکاری امور اور ریکارڈ ڈیجیٹل ہونے سے کام میں آسانی اور بروقت سرانجام دیاجاسکتاہے انہوں نے کہا کہ ریکارڈ اور ریونیو کا کام مکمل ہونے سے کوئٹہ شہر میں ٹریفک کے نظام کی بہتری اور ڈیجیٹلایزڈ کرنے سے لوگوں کی مشکلات میں کمی واقع ہوگی۔انہوں نے کہا کہ غیر قانونی رکشوں کے خلاف موثر کارروائی سے ٹریفک کے نظام میں بہتری کے ساتھ ساتھ رش میں بھی کمی واقع ہورہی ہے۔جس سے ٹریفک جام کا مسلہ کچھ حد تک حل ہوگیا ہے۔دریں اثناءکمشنر کوئٹہ ڈویژن سہیل الرحمان بلوچ کی زیر صدار ت وزیراعلیٰ بلوچستان پیکج کے تحت شہر کی سڑکوں کی توسیع منصوبوں پر کا م کی پیش رفت سے متعلقہ اجلاس منعقد ہوا۔جس میں منصوبوں پر کام کی رفتار میں تیزی لانے اور حائل رکاوٹوں کے حل کے لئے متعدد اقدامات اٹھانے پر زور دیا گیا۔ جبکہ تمام اسٹک ہولڈر کو اعتماد میں لے کر منصوبوں کو جلداز جلد پایہ تکمیل تک پہنچانے کی ہدایت کی گئی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1545/2022
کوئٹہ 12اپریل۔آئی جی پولیس بلوچستان محسن حسن بٹ نے کہا ہے کہ رمضان المبارک کے دوران اور تیسرے عشرے میں عید خریداری کے لئے ٹریفک کنٹرول کے لئے اضافی نفری تعینات کیا جائے جبکہ عید کے حوالے سے ٹریفک پلان کے بارے میں عوام الناس میں آگاہی مہم کا آغاز کیا جائے گا۔انہوں نے کہا ہے کہ ٹریفک کی روانی کو برقرار رکھنے کے لئے شہر بھر میں خصوصی انتظامات کئے جائیں گے یہ بات انہوں آج یہاں سینٹرل پولیس آفس میںرمضان المبارک اور عید کے حوالے سے ٹریفک انتظامات کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کر تے ہوئے کہی۔اس موقع پر اجلاس کو ایس ایس پی ٹریفک شیر علی نے ٹریفک کے مسائل، انتظامات اور اٹھائے گئے اقدامات کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ عید کے حوالے سے ٹریفک پلا ن کے بارے میں آگاہی مہم کا آغاز کیا جائے گا اجلاس میں ایڈیشنل آئی جی اسحاق جہانگیر ، ڈی آئی جی کوئٹہ سید فدا حسن شاہ ،اے آئی جی اسٹیبلیشمنٹ طاہر علاوالدین کاسی ، اے آئی جی آپر یشن رضوان عمر گوندل ، ایس ایس پی آپریشن عبدالحق عمرانی اورایس ایس پی ٹریفک شیر علی ہزارہ بھی موجود تھے۔آئی جی پولیس بلوچستان نے کہا کہ رمضان المبارک کے تیسرے عشرے میں عید کی خریداری کے موقع پر شہر میں ٹریفک کنٹرول کیلئے اضافی نفری تعینات کیا جائے تاکہ شہر میں ٹریفک کے مسائل حل اور عوام کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑیںرش کے اوقات میں خصوصی طور میں انتظامات کئے جائیں تاکہ ٹریفک کی روانی میں خلل نہ پڑے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1546/2022
کوئٹہ 12اپریل۔بلوچستان کے عوامی مسائل کے حل اور ترقیاتی منصوبوں پر عمل درآمد کے سلسلے میں ایک اجلاس منگل کے روز صوبائی وزیر منصوبہ بندی حاجی نور محمد دمڑ  کی زیر صدارت منعقد ہوا۔جس میں  ممبران صوبائی اسمبلی کی طرف سے گزشتہ اجلاس میں ا±ٹھائے گئے عوامی مسائل کے حل اور ترقیاتی منصوبوں پر عمل درآمد کے سلسلے میں کئے گئے فیصلوں اور وزیراعلیٰ کی طرف سے جاری کردہ احکامات پر پیشرفت کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں وزیر منصوبہ بندی نور دمڑ کو منتخب عوامی نمائندوں کی طرف سے ا±ٹھائے گئے مسائل اور ا±ن کے حل کے سلسلے میں اب تک کی پیشرفت پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ گزشتہ اجلاس میں بلوچستان  کے ترقیاتی منصوبوں کے مسائل کی نشاندہی کی گئی تھی جن میں 25 فصید مسائل حل کئے گئے ہیں اور 30 فصید مسائل کے حل پر کام جاری ہے جبکہ باقی مسائل پر عمل درآمد بعض تکنیکی وجوہات کی بنائ پر تاخیر کا شکار ہے۔ وزیر منصوبہ بندی نے منتخب عوامی نمائندوں کے حلقوں میں چھوٹے  عوامی مسائل بروقت حل کرنے کیلئے تمام صوبائی وزراءکو ہدایت کی ہے کہ وہ مہینے میں ایک دفعہ تمام اضلاع کے ممبران اسمبلی کے ساتھ ایک اجلاس منعقد کرکے اپنے محکمے سے متعلق مسائل کے حل کیلئے ٹھوس اقدامات ا±ٹھائیں۔ وزیر منصوبہ بندی و ترقیات نے اجلاس میں بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ عوامی فلاح و بہبود کے ترقیاتی منصوبوں کیلئے موزوں زمینوں کی نشاندہی اور خریداری کو بروقت یقینی بنائیں تاکہ ا±ن منصوبوں پر عمل درآمد میں تاخیر نہ ہو۔ا±نہوں نے مزید کہا کہ اضلاع کی سطح پر سرکاری محکموں کی ملکیتی زمین اصل میں صوبائی حکومت کی زمین ہے اور یہ صوبائی حکومت کا اختیار ہے کہ وہ کونسی زمین کس منصوبے کیلئے استعمال کرتی ہے  وزیر منصوبہ بندی و ترقیات نورمحمددمڑ کا کہنا تھاکہ صوبے کے تمام اضلاع کی یکساں بنیادوں پر ترقی کو اپنی حکومت کے اقدامات کا حتمی مقصد قرار دیا ہےاور کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت صوبے کے پسماندہ اضلاع کو ترقی یافتہ اضلاع کے برابر ترقی دینے کیلئے نہ صرف پر عزم ہے بلکہ عملی اور نتیجہ خیز اقدامات بھی ا±ٹھارہی ہ
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1547/2022
کوئٹہ 12اپریل۔ترجمان حکومت بلوچستان فرح عظیم شاہ نے صوبے کے تمام اضلاع کی یکساں بنیادوں پر ترقی کو اپنی حکومت کے اقدامات کا حتمی مقصد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت صوبے کے پسماندہ اضلاع کو ترقی یافتہ اضلاع کے برابر ترقی دینے کیلئے نہ صرف پر عزم ہے بلکہ عملی اور نتیجہ خیز اقدامات بھی ا±ٹھارہی ہے۔ موجودہ صوبائی حکومت بلوچستان عوامی پارٹی کی حکومت ہے جس میں ترقیاتی کاموں کے حوالے سے کسی بھی ضلع اور علاقے کے ساتھ کو ئی ناانصافی نہیں ہو گی۔ کوئٹہ پروجیکٹ اسپنی روڈ،سریاب روڈ سمیت تمام اضلاع کیلئے ترقیاتی کام موجودہ حکومت کا عوام کیلئے بہت بڑا تحفہ قرار دیتے ہوئے  ترجمان نے کہا ہے وزیراعلی بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو کی زیرصدارت صوبائی کابینہ نے کچھ ڈیلے ایکشن ڈیم ضلع کوئٹہ کی ڈی سلنگ کے منصوبے کی منظوری بھی دی ہیں جبکہ کچھ ڈیم میں پانی ذخیرہ کرنے کی استعداد میں اضافہ ہو گا اور کوئٹہ میں پانی کی ضروریات کو بڑی حد تک پورا کیا جا سکے گا اور اس منصوبے کی تکمیل سے بلوچستان میں ترقی کے ایک نئے دور کا آغاز ہو گا اور صوبے کی پسماندگی کو دور کرنے میں مدد ملے گی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1548/2022
کوئٹہ 12اپریل۔بلوچستان کے عوامی مسائل کے حل اور ترقیاتی منصوبوں پر عمل درآمد کے سلسلے میں ایک اجلاس منگل کے روز صوبائی وزیر منصوبہ بندی حاجی نور محمد دمڑکی زیر صدارت منعقد ہوا۔جس میںممبران صوبائی اسمبلی کی طرف سے گزشتہ اجلاس میں ا±ٹھائے گئے عوامی مسائل کے حل اور ترقیاتی منصوبوں پر عمل درآمد کے سلسلے میں کئے گئے فیصلوں اور وزیراعلیٰ کی طرف سے جاری کردہ احکامات پر پیشرفت کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں وزیر منصوبہ بندی نور دمڑ کو منتخب عوامی نمائندوں کی طرف سے مسائل اور ا±ن کے حل کے سلسلے میں اب تک کی پیشرفت پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ گزشتہ اجلاس میں بلوچستان  کے ترقیاتی منصوبوں کے مسائل کی نشاندہی کی گئی تھی جن میں 25 فصید مسائل حل کئے گئے ہیں اور 30 فصید مسائل کے حل پر کام جاری ہے جبکہ باقی مسائل پر عمل درآمد بعض تکنیکی وجوہات کی بناءپر تاخیر کا شکار ہے۔ وزیر منصوبہ بندی نے منتخب عوامی نمائندوں کے حلقوں میں چھوٹے عوامی مسائل بروقت حل کرنے کیلئے تمام صوبائی وزراءکو ہدایت کی ہے کہ وہ مہینے میں ایک دفعہ تمام اضلاع کے ممبران اسمبلی کے ساتھ ایک اجلاس منعقد کرکے اپنے محکمے سے متعلق مسائل کے حل کیلئے ٹھوس اقدامات ا±ٹھائیں۔ وزیر منصوبہ بندی و ترقیات نے اجلاس میں بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ عوامی فلاح و بہبود کے ترقیاتی منصوبوں کیلئے موزوں زمینوں کی نشاندہی اور خریداری کو بروقت یقینی بنائیں تاکہ ا±ن منصوبوں پر عمل درآمد میں تاخیر نہ ہو۔ا±نہوں نے مزید کہا کہ اضلاع کی سطح پر سرکاری محکموں کی ملکیتی زمین اصل میں صوبائی حکومت کی زمین ہے اور یہ صوبائی حکومت کا اختیار ہے کہ وہ کونسی زمین کس منصوبے کیلئے استعمال کرتی ہے  وزیر منصوبہ بندی و ترقیات نورمحمددمڑ کا کہنا تھاکہ صوبے کے تمام اضلاع کی یکساں بنیادوں پر ترقی کو اپنی حکومت کے اقدامات کا حتمی مقصد قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت صوبے کے پسماندہ اضلاع کو ترقی یافتہ اضلاع کے برابر ترقی دینے کیلئے نہ صرف پر عزم ہے بلکہ عملی اور نتیجہ خیز اقدامات بھی ا±ٹھارہی ہے اجلاس میں پارلیمانی سیکرٹری مٹھا خان کاکڑ ،و، دیگر متعلقہ حکام بھی موجود تھے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment