خبر نامہ نمبر 334/2019
کوئٹہ 31 جنوری۔گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا ہے کہ کہ دنیا بڑی تیزی سے اپنی کر وٹیں بدل رہی ہے جو نئی ترجیحات کا تعین اور اپنے اہداف حاصل کرنے کیلئے جامع حکمت عملی وضع کرنے کا تقاضہ کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ دور کی تر جیحات میں عوام کی معاشی آسودگی اور پرامن زندگی سر فہرست ہیں اور تجا رت پیشہ افراد کیلئے مزید بہتر مواقع کی فراہمی کیلئے نئی راہیں تلاش کی جارہی ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کے روزگورنر ہاؤس کوئٹہ میں جمعیت علماء اسلام کے مرکزی رہنماء مولانا حاجی محمد حنیف اچکزئی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر گورنر نے کہا کہ بلوچستان کے عوام محنت اور لگن کے حامل ہیں اور قدرتی وسائل و معدنیات بھی وافر مقدار میں دستیاب ہیں اگر منصوبہ بندی کے ساتھ صوبے کے وسائل اور افراد ی قوت کو مناسب طور پر بروئے کار لایا جائے تو بلوچستان بہت جلد وسط ایشیاء اور دیگر ممالک کے تیار اشیاء برآمد کرنے کے قابل ہوجائے گا ۔ وفد نے گورنر بلوچستان کو چمن کے عوام کو درپیش مشکلات کے حوالے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ پاک افغان بارڈ ر بالخصوص چمن میں ایسے قبائل آباد ہیں جو سرحد کے دونوں طرف زندگی گزار رہے ہیں۔ موجود باڑ لگانے کے حوالے سے انہوں نے گورنر کو عوامی مشکلات سے بھی آگاہ کیا اور چمن میں فوری طور پر ایک عوامی لائبریری کا مطالبہ بھی کیا ۔ گورنر نے ان کے مسائل اور مشکلات کے حوالے سے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 335/2019
کوئٹہ31جنوری۔صوبائی وزیر نوابزادہ طارق مگسی سے صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ مری صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی ، پارلیمانی سیکریٹری بی ڈی اے میر سکندر عمرانی ،سابق صوبائی وزیر میر عاصم کرد گیلو اور سیکریٹری آبپاشی سلیم اعوان نے جمعرات کے روز یہاں علیحدہ علیحدہ ملاقات کی ۔ صوبائی وزیر آبپاشی نوابزادہ طارق مگسی نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آبی وسائل سے معاشی فائدہ اٹھانے کیلئے محکمہ آبپاشی کو جدید خطوط پر استور کرنے کیلئے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لایا جارہا ہے ہمیں بارشوں کے پانی کو ذخیرہ کرنے کیلئے مزید ڈیمز تعمیر کرنے ہوں گے جن سے زیر زمین پانی کے ذخائر میں اضافے کے ساتھ ساتھ سیلابی اور بارشوں کے پانی کو ذخیرہ کرنے میں مد د ملے گی اور دستیاب پانی کے بہتر استعمال کو بھی یقینی بنایا جاسکتا ہے ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ موجودہ حکومت آبپاشی سمیت تمام شعبوں کی بہتری کیلئے جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات کررہی ہے ۔ جس کے بہت جلد مثبت نتائج عوام کے سامنے آنا شروع ہو جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام میں مفا د عامہ اور اجتماعی نوعیت کے ترقیاتی منصوبے بنائے جا رہے ہیں جس سے نچلی سطح پر ترقی اور خوشحالی آئے گی ۔ 
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ 31 جنوری۔ بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما اور ممبر صوبائی اسمبلی احمد نواز بلوچ نے کہا ہے کہ کوئٹہ ہم سب کا مشترکہ گھر ہے اور اس شہر کی خوبصورتی اور درپیش مسائل کا حل ہماری اولین ترجیحات میں شامل ہے اس حوالے سے بحیثیت سیاسی کارکن اور ممبر صوبائی اسمبلی انکی کوشش رہی ہے کہ وہ متعلقہ تمام محکموں کی معاونت سے ان مسائل کے حل کیلئے ضروری اقدامات کریں لہٰذا اس ضمن میں سریاب روڈ پر ٹریفک کے سنگین مسائل اور تجاوزات کے خاتمے کیلئے ٹریفک پولیس کی محنت اور کاوشیں قابل تحسین ہیں کیونکہ گزشتہ کئی دنوں سے ٹریفک پولیس کے آفیسر سیف اللہ کھیتران، یونس بنگلزئی اور ان کی ٹیم نے جس جانفشانی سے سریاب روڈ پر ٹریفک کی روانی اور تجاوزات کے خاتمے کیلئے جو عملی اقدامات کیے ہیں اس سے نہ صرف ٹریفک جام کے مسئلے میں کمی آئی ہے بلکہ علاقے کی خوبصورتی میں بھی اضافہ ہوا ہے۔
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ31جنوری۔ آل پاکستان جرائد سوسائٹی رجسٹرڈ کا خصوصی اجلاس سوسائٹی کے مرکزی سیکریٹریٹ میں مرکزی صدر اور سینئر صحافی محمود اقبال کی صدارت میں ہوا۔ اس خصوصی اجلاس میں جرائد و رسائل سے تعلق رکھنے والے صحافیوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی صدر نے کہا کہ ایک طویل عرصہ سے بلوچستان کے جرائد ورسائل کے مالکان ذہنی پریشانیوں میں مبتلاء تھے اخبارات و جرائد کے بقایا جات کی وصول مشکل ہی نہیں ناممکن بھی ہوگئی تھی جرائد کی ایک کثیر تعداد کی اشاعت نہ ہونے کے برابر تھی ۔ جرائد ورسائل دراصل صحافت کی بنیادی اکائیاں ہوتی ہیں موجودہ ڈی جی پی آر نے جب سے چارج سنبھالا ہے جرائد ورسائل کے مالکان میں ایک خوشی کی لہر آگئی ہے بے یقینی کی صورتحال تیزی سے تبدیل ہوگئی ہے اخبارات جرائد و رسائل کی تقسیم بروقت اور منصفانہ طریقے سے ہورہی ہیں ، جرائد و رسائل کے بقایا جات کی ادائیگی تقریباً مکمل ہوگئی ہے ۔ موجودہ ڈی جی پی آر کی معاملہ فہم ذہانت کی وجہ سے بلوچستان کے اخبارات جرائد و رسائل اپنی اشاعت میں باقاعدگی لارہے ہیں جو موجودہ بلوچستان کی سیاسی وسماجی صورتحال میں بہتری کی طرف ایک قدم ہے ۔ اخبارات و جرائد کی میڈیا پالیسی کے بارے میں ان کی سوچ قابل تعریف ہیں۔ آل پاکستان جرائدسوسائٹی رجسٹرڈ ڈی جی پی آر بلوچستان سے اپیل کرتی ہے کہ جرائد و رسائل کی میڈیا پالیسی بناتے وقت آل پاکستان جرائدو سوسائٹی رجسٹرڈ کے ممبران کوبھی باہمی مشورہ کے لئے دعوت دی جائے ۔ آل پاکستان جرائد وسوسائٹی رجسٹرڈ ڈی جی پی آر کو اپنے مکمل تعاون کا یقین دلاتی ہے اور ان کے شانابشانہ ہر اول دستہ کا کردار ادا کرتی رہے گی ۔ 
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment