خبر نامہ نمبر 302/2019 
کوئٹہ 29جنوری :۔گورنر بلو چستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا کہ صوبے میں نئے حالات اور بڑ ھتی ہوئی انسانی ضروریات کے مطابق صوبے بھر میں قلت، آب کے مسلے پر قابوپانے اور چھوٹے بندات کی تعمیر پر خصوصی توجہ مرکوز رکھنے کی مناسبت سے جامع حکمت عملی وضح کرنے کی اشد ضرورت ہے ۔فی الو قت صوبے میں صاف پینے کے پانی کا فقدان اور قلت آب کی گھمبیر صورتحال بیان کر تے ہوئے گورنر نے کہاکہ اگر اس کی بہتر ی کیلئے ٹھوس اور بروقت اقدامات نہ اٹھا ئے گئے توموجود کھیت وبا غات بنجر بھی ہو سکتے ہیں ۔جس کے نتیجے میں انسانی آبادی کی منتقلی کا غیر معمو لی عمل شروع ہوسکتا ہے ۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے خاران کے تحریک انصاف کے صوبائی رہنما میر شوکت بلو چ کی قیادت میں وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر گورنر بلوچستان نے کہا کہ پانی کی سطح کی گرتی ہوئی صورتحال خطر ناک شکل اختیار کرچکی ہے اوراب قلت آب کا مسلہ پورے خطے کا مسلہ بن چکا ہے ۔ا س سے صوبے بھر کے تمام اضلاع میں زراعت ما لداری او رباغات کو شدید نقصان پہنچاہے ۔زیر زمین پانی کی سطح کو بڑھانے کیلئے مربو ط حکمت عملی کی ضرورت ہے ۔میر شوکت بلوچ نے گورنر کو خا ران کے عوامی مسائل ومشکلات سے آگاہ کیا اور گورنر کو خاران کا خصوصی دورہ کرنے کی خصوصی دعوت بھی دی ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 303/2019 
کوئٹہ29 جنوری۔صوبائی مشیرتعلیم حاجی محمد خان لہڑی نے کہا ہے کہ تدریسی نصاب کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کیلئے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ۔ تدریس کے شعبے میں اساتذہ کو نئے رجحانات سے بار آور ہونا وقت کی اہم ضروت ہے ۔ اساتذہ کی تربیت پر خصوصی توجہ دے رہی ہیں ۔ اس سلسلے میں ٹھوس منصوبہ بندی عمل میں لائی جارہی ہے اساتذہ کی پیشہ ورانہ مہارات اور استعداد کار بڑھانے خصوصاً انگریزی زبان کے تدریس کے حوالے سے سنجید ہ اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف وفود سے ملاقات کے دوران کیا صوبائی مشیر نے کہا کہ صوبے میں تعلیم کو دوسرے صوبوں کے برابر لانے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کام کررہے ہیں صوبائی حکومت معیار تعلیم کی بہتری کیلئے ہر ممکن قدم اٹھارہی ہے ۔ محمد خان لہڑی نے کہا کہ اساتذہ تعلیم کی اہمیت وافادیت کو سمجھتے ہوئے اپنے آپ کو جدید طرز تعلیم کے اصولوں سے بارآورکرتے ہوئے ملک کی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 304/2019 
گوادر 29 جنوری:۔وفاقی وزیر دفاعی پیداوار محترمہ زبیدہ جلال نے کہا ہے کہ گوادر میں کپر کے مقام پر شپ بریکنگ یارڈ تعمیر کی جائے گی جسکی تعمیر سے گوادر سمیت ملک بھر میں ترقی کے نئے دور کا آغاز ہوگیا اس منصوبوں کے شروع ہوتے ہی پانچ ہزار نوجوان کو روزگار کے مواقع فراہم ہونگے اس میں اولین ترجیح کپر کے مقامی لوگوں دی جائے گی اس بعد میں گوادر مکران ڈویژ ن اور پھر بلوچستان کے نوجوان کو روزگار فراہم کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دورے گوادر اور تربت کے مواقع پر ایک مقامی ہوٹل میں پریس کانفرنس سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ہے اس موقع پر سابق نگراں صوبائی وزیر میر نوید کلمتی اور سابق ضلع ڈسٹرکٹ چیئر مین بابو گلاب اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل انیس طارق سمت دیگر حکام بھی ان کے ہمراہ تھے محترمہ زبیدہ جلال پریس بریفنگ کرتے ہوئے بتایا کہ آج گوادر بندرگاہ تعمیر ہو کرکام کررہی ہے اور بندرگاہ پر دنیا بھر کی نظریں لگی ہوئی ہے یہ میرے سابق حکومت کی مرہون منت ہے اس کے علاوہ میرانی ڈیم کوسٹل ہائی وے اور زبیدہ جلال روڈ تربت بھی میرے سابق حکومت کے منصوبے ہیں ان اجتماعی منصوبوں سے آج عوام بھر پور استفادہ حاصل کررہے ہیں جو ملک بھر اور پورے خطے کی خوشحالی کے باعث ہیں وفاقی وزیر نے بتایا کہ موجودہ وفاقی اور صوبائی حکومتیں عوامی مسائل اور علاقے کی ترقی کیلئے کوششیں کررہی ہیں ۔گوادر کی ترقی میں مقامی لوگوں کو اولین ترجیحات دی جائے گی انہوں نے کہا کہ ماہی گیری کے شعبے کی ترقی اور ماہی گیروں کے فلاح و بہبود کیلئے بھی حکومت ہرممکن اقدامات کررہے ہیں حکومت کی اس عمل میں نیک نیتی کا عنصر شامل ہے اس حوالے سے کسی کو شک وشبہات کی ضرورت نہیں ہے ماضی کی غلط پالیسی کی وجہ سے بہت سے منصوبے سست روی کا شکار ہوئے ہیں انہیں درست کرنے کے لیے موجودہ حکومت مختلف منصوبوں پر عمل درآمد کررہی ہے انہوں نے بتایا کہ موجودہ وفاقی اور صوبائی حکومتیں گوادر میں کپر کے مقام پر کنسٹرکشن یارڈ اور آئل سروس پروجیکٹ شروع کرنے جارہے ہیں اس منصوبوں کے شروع میں پانچ ہزار سے زائد لوگوں کو روزگار کے مواقع ملیں گے۔ان ملازمتوں میں مقامی لوگوں کو اولین ترجیح دی جائے گیNRDCکے گوادر کے حقوق کی تحفظ کرتے ہوئے سب سے پہلے مقامحا افراد کے حقوق کا تحفظ کریں گے جبکہ گریڈ 1سے 16 تک مقامی اور بلوچستان کے لوگوں کو ترجیحی بنیادوں پر ملازمتیں فراہم کی جائیں گی شپ بریکنگ یارڈ کو جدید خطوط پر استوار کرکے جدید سہولیات اور جدید ایڈوانس طریقے سے لاؤنج کرکے کار آمد بنائیں گے جس سے ماحولیات کے تمام حقائق کو بھی مد نظر رکھا جائے گا انہوں نے بریفنگ میں بتایا کہ 10بلین ڈالرز سے سعودی حکومت آئل ریفائنری پروجیکٹ بھی شروع ہو نے جارہے ہیں جو اس خطے کے لیے انہتائی اہم ہے ان تمام منصوبوں کو مد نظر کرتے ہوئے ابھی سے گوادر سمیت بلوچستان بھر کے لوگوں کو ٹیکنیکل تعلیم کے لیے پروجیکٹ شروع ہورہے ہیں جبکہ ووکیشنل ٹریننگ سنٹر کو پرائیوٹ فرم کے لیے کوششیں کررہے تاکہ علاقے کے لیے جدید ٹیکنیکل تعلیمی ادارے کھولے جائیں گے جس سے یہاں کے مقامی نوجوان مستفید ہوکر آنے والے دنوں میں اعلی مقام حاصل کریں بریفنگ میں بتایا گیا ہے کہ گوادر سمیت بلوچستان بھر کے فارغ التحصیل انجینئرز کیلئے کوشش کررہے ہیں کہ انہیں نیشنل کمپنیوں میں تربیت دلائیں تاکہ ٹرینڈ بلوچستان میں شروع ہونے والے پراجیکٹس میں اپنا حصہ لے سکے ایک سوال کے جواب میں بتایا ہے کہ گوادر سے مشرق کی جانب45/50 کلومیٹر کے فاصلے پر 750 ایکڑ اراضی پر مشتمل شپ بر یکنگ یارڈ تعمیر کی جائے گی اس کے ساتھ ہی علاقے میں مقامی لوگوں کے لئے ٹیکنیکل ٹریننگ سینٹر جدید ہسپتال اور اسکول و کالج اور بجلی فراہم کی جائے ان منصوبے میں کپر اور گوادر کے طلباء کو ترجیح دی جائے گی اس کے بعد مکران اور بلوچستان کے نوجوانوں کو موقع دیا ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 305/2019 
کوئٹہ29 جنوری۔ ایڈیشنل ڈائریکٹر کریکیولم اینڈ بک ڈسٹری بیو شن محمد سلیم سرپرہ نے کہا ہے کہ موجودہ دور جدید ٹیکنالوجی وسائنسی ترقی کا دور ہے اپنے مستقبل کے معماروں کو عصر حاضر کے تقاضوں سے ہم آہنگ تعلیم دلانا ناگزیر ہو چکا ہے ۔مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی اور سیکریٹری تعلیم محمد طیب لہڑی کی خصوصی ہدایات کی روشنی میں صوبے بھر کے 33اضلاع میں پہلی بار ماہ جنوری میں تمام ضلعی تعلیم آفیسران کو مفت درسی کتب کی ترسیل مکمل کرلی گئی ہے بلوچستان کے تمام ضلعی تعلیمی افسران اور اسکولز کے کلسٹر ہیڈز کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں کہ تعلیمی سیشن 2019 کے لئے 10 فروری تک تمام اسکولوں میں طلباء و طالبات کو تعداد کے مطابق مفت درسی کتب کی ترسیل سو فیصد یقینی بنا ئی جائے ۔ اس کے علاوہ بلوچستان بھر میں آ ر ٹی ایس ایم (RTSM) ٹیموں کی کتابوں کی بروقت ترسیل کی رپورٹ کرنے کی بھی ہدایت کی گئی ہے جس میں کتابوں کی تقسیم کی کاغذی کارروائی کو اپنی نگرانی میں مکمل کریں اور اسکی رپورٹ جلد از جلد حکام بالا کو ارسال کریں ۔ سیکریٹری تعلیم کی ہدایت پر چیئرمین بلوچستان ٹیکسٹ بک بورڈ یحییٰ مینگل کی دن رات محنت اور کوششوں سے درسی کتب کی ترسیل امسال پورے صوبے کے تمام اضلاع میں مکمل ہوچکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے طلباء و طالبات کو تعلیمی پسماندگی سے نکالنے کیلئے اسکولوں میں کتب و دیگر تعلیمی سہولتوں کی فراہمی کو یقینی بنا یا جارہا ہے اس ضمن میں صوبائی حکومت پورے بلوچستان میں پرائمری سے لیکر ہائر سیکنڈ ری اسکولز تک کے طلباء و طالبات کو مفت درسی کتب فراہم کررہی ہے تاکہ بلوچستان کا ہر بچہ تعلیم سے محروم نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ در سی کتب کے چند مسنگ Titles کی فراہمی کو ایک ہفتے میں یقینی بنانے کیلئے بلوچستان ٹیکسٹ بک بورڈ کو ہدایات جاری کی گئی ہیں تعلیمی اداروں میں کتب کی بروقت ترسیل سے تعلیمی ماحول پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 306/2019 
قلعہ عبداللہ 29جنوری۔ڈپٹی کمشنر قلعہ عبداللہ کی ہدایت پر اسسٹنٹ کمشنرقلعہ عبداللہ جہانزیب شیخ نے ٹریفک کے بڑھتے ہوئے حادثات کو روکنے کے لئے لیویز فورس کے ہمراہ قلعہ عبداللہ میزئی اڈہ جنگل بازار سید حمید کراس کے مختلف اطراف میں کرسٹل لائٹس اور فل بیم لائٹس کیخلاف کارروائی کی۔ یاد رہے کہ اس سے قبل تقریبا ایک ہفتہ عوام میں آگہی مہم چلائی گئی اور اس کے بعد یہ کارروائی عمل میں لائی جارہی ہے شہر کے تمام تھانوں اور چیک پوسٹوں کو اس حوالے سے بھی آگاہ کردیا گیا ہے۔ عوام الناس سے گزارش ہے کہ اپنی گاڑیوں کی کرسٹل لائٹس خود اتار لیں اور فل بیم پر گاڑی چلانے سے گریز کریں خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔
()()() 
خبر نامہ نمبر 307/2019 
کوئٹہ29 جنوری۔محکمہ ثانوی تعلیم حکومت بلوچستان کے ایک ہدایت نامے کے مطابق صوبے کے تمام ڈی ای اوز کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ EMIS چینج فارم 2017-18 کے اندراج کے عمل کو ایک ہفتے کے اندر مکمل کرکے متعلقہ یونٹ کو ارسال کریں ۔ اسکے علاوہ ان تمام آفیسران و اساتذہ کی تنخواہیں روک دی جائیں گی جنہوں نے دی گئی مہلت میں اپنے کوائف جمع نہیں کروائے ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 308/2019 
قلات29 جنوری۔ڈپٹی کمشنر قلات شہک بلوچ نے کہا ہے کہ لائبریریاں کسی بھی قوم کا اثاثہ ہیں ۔کتب خانوں کی افادیت و اہمیت اور ان کو درپیش مسائل سے بخوبی آگاہ ہیں ۔ ضلع کی لائبریریوں کو جدید سہولیات کی فراہمی کیلئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی پی ایل پبلک لائبریری قلات کے دورے کے موقع پر کیا ۔ اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر قلات ایوب مری ، ڈی پی او قلات دوستین دشتی ، ڈسٹرکٹ ایجو کیشن آفیسر قلات عزیز الرحمن رند سمیت دیگر آفیسران ان کے ہمراہ تھے ۔ شہک بلو چ نے کہا کہ پبلک لائبریری کا چارج محکمہ اطلاعات کو دینے سے اس میں مزید بہتری آئیگی ۔ انہوں نے لائبریری میں موجود طلباء سے ان کے مسائل دریافت کیئے اور ان کے حل کی یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے لائبریری میں عصر حاضر کے مطابق کتب کی کمی کو دور کرنے کیلئے فوری اقدامات اٹھانے کی یقین دہانی بھی کرائی ۔ انہوں نے لائبریری کے کمپیو ٹرسیکشن کی فعالی اور انٹر نیٹ کی فراہمی کو سراہتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ محکمہ اطلاعات لائبریری کی بہتری اور فعالیت کیلئے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لائے گا ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 309/2019 
سبی 29جنوری :۔ڈپٹی کمشنر سبی سید زاہد شاہ کی صدارت میں ایک اعلیٰ سطح کا اجلاس منعقد ہوا جس میں ایس پی عبدالحق عمرانی 144 ونگ کے ونگ کمانڈر کرنل ضیاء اللہ سمیت دیگر ضلعی انتظامی افسران بھی موجود تھے اجلاس میں سالانہ تبلیغی اجتماع سبی کے حوالے سے انتظامات کا خصوصی جائزہ لیا گیا ۔اس موقع پر امن و امان کو برقرار رکھنے اور ٹریفک کی روانی کو رواں دواں رکھنے کے لئے بھی خصوصی ہدایات دی گئیں۔
()()()
خبر نامہ نمبر 310/2019 
نصیرآباد29جنوری :۔حکومت بلوچستان جشن نصیرآباد اسپورٹس فیسٹیول کلچر رنگا رنگ تقریب کے ساتھ اختتام پذیر ہوگیاتقریب میں سینکڑوں افرادنے شرکت کی فنکاروں اورجمناسٹک ،ہوشو،کراٹے کی ٹیموں نے اپنے فن کا مظاہرہ کرکے حاضرین سے دادوصول کی اختتامی تقریب فٹبال گراونڈ ڈیرہ مراد جمالی میں منعقد ہوئی جس کے مہمان خصوصی صوبائی پارلیمانی سیکرٹری برائے بلوچستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی میر سکندر خان عمرانی تھے جبکہ اعزازی مہمانوں میں سابق صوبائی وزیر میر عبدالغفور لہڑی ڈپٹی کمشنر نصیرآباد قربان علی مگسی۔ایف سی کے ونگ کرنل کمانڈنٹ انجم شکیل اور ایس ایس پی نصیرآباد عرفان بشیر تھے تقریب میں اسسٹنٹ کمشنر ڈیرہ مراد جمالی حاجی غلام حسین بھنگرسپورٹس آفیسررحیم بخش جویا سمیت اسپورٹس مینوں نے کثیر تعدادمیں شرکت کی سندھ بلوچستان کے مشہور فنکاروں نے اپنے فن کا مظاہرہ کیا جبکہ بلوچی چاپ اور سندھی جھومر بھی پیش کی گئی اس سے قبل ڈپٹی کمشنر نصیرآباد قربان علی مگسی کی جانب سے تمام مہمانوں میں سندھی ٹوپی اور اجرک کے تحائف پیش کیے گئے سپورٹس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی پارلیمانی سیکرٹری برائے بلوچستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی میر سکندر خان عمرانی اورڈپٹی کمشنر نصیرآبادقربان علی مگسی نے اپنے خطاب میں کہا کہ نصیر آباد کے نوجوانوں میں بہت ٹیلنٹ ہے اگر انہیں مواقع فراہم کیا جائے تو وہ اپنا اور صوبے کا نام روشن کر سکتے ہیں اس فیسٹیول میں جن ٹیموں نے اور ان کے کھلاڑیوں نے حصہ لیا اور کامیابی سمیٹ لی میں ان تمام کھلاڑیوں کو مبارکباد پیش کرتا ہوں اور امید کرتا ہوں کہ وہ اسی لگن اور جوش و جذبے کے ساتھ کھیلتے رہیں گے اور ہمارا بھی فرض ہے کہ ہم سپورٹ سے تعلق رکھنے والے تمام افراد کی حوصلہ افزائی کرتے رہیں گے۔ اسپورٹس فیسٹیول میں کبڈی ملاکھڑا کرکٹ بیڈمنٹن کراٹے رساکشی مارشل آرٹ اور دیگر کھیلوں کے مقابلے ہوئے فاتح کھلاڑیو اور ٹیموں کو مبارکباد پیش کرتاہوں انہوں نے کہاکہ جہاں کھیلوں کے میدان آباد ہوتے ہیں وہاں کے ہسپتال ویران ہوتے ہیں صوبائی حکومت کھیلوں کے فروغ کے لئے اپنی تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لارہی ہے تاکہ نوجوانوں کو صحت مندانہ ماحول فراہم کیا جاسکے انہوں نے کہاکہ فیسٹیول کرانے کا مقصد بھی یہی تھا کہ علاقے میں امن پیار محبت کا پیغام دیا جاسکے آج ہم پرسکون ماحول میں کھیلوں کے مقابلے دیکھ رہے ہیں اور علاقے میں اگر امن قائم ہے تویہان قانون نافذ کرنے والے شہداء کی مرحون منت ہے جنہوں نے خون کا نذرانہ دیکھ کر ہمیں پرسکون ماحول فراہم کیا اگر آج کی اس تقریب میں ان کا ذکر نہ کیا جائے تو یہ زیادتی کے مترادف ہوگا ہم اپنے شہداء کو سرخ سلام پیش کرتے ہیں اس طرح کے ایونٹ سے عوام کو تفریح کے موقع فراہم ہوئے ہیں آج ہم یہ جشن منا رہے ہیں۔ اس میں ایف سی کے جوانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں کہ ان کی بدولت امن امان بحال ہوا ہے میر سکندر خان عمرانی نے اگلے سال جشن نصیرآباد کے لیے پچاس لاکھ روپے کا اعلان کیا آخر میں کرکٹ۔بیٹ منٹن،ملاکھڑا،کبڈی ، دوڑ ، کراٹے ،جمپنگ کے ونر کھلاڑیوں اور آفیسران اور قبائلی شخصیات میں نقد انعامات اور شیلڈز تقسیم کی گئیں جبکہ آخر میں آتش بازی کابھی مظاہرہ کیا گیا۔
()()()
خبر نامہ نمبر 311/2019 
خضدار29جنوری ۔میٹرنل نیو بورن چائلڈ ہیلتھ پروگرام (ایم این سی ایچ ) خضدار کے زیر اہتمام ماں اور بچے کی صحت کے حوالے سے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر خضدار عبدالقدوس اچکزئی کی قیادت میں گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال خضدار سے واک کا اہتمام کیا گیا ۔شعور و آگاہی فراہمی کے لئے نکالی گئی واک میں شہریوں وخواتین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ واک مختلف شاہراہوں سے ہوتی ہوئی گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال میں اختتام پزیر ہو ا۔ نیشنل اسٹاپ آفیسر وزیر اعظم سیکرٹریٹ برائے انسداد پولیو ڈاکٹر شفیع دانش ایم ایس سول ہسپتال خضدار ڈاکٹر محمد اسماعیل باجوئی کوآرڈینٹرنیشنل پروگرام ڈاکٹر عبدالنبی زہری سینئر فزیشن ڈاکٹر منظور احمد موسیانی کوآرڈینیٹر ٹی بی کنٹرول پروگرام ڈاکٹر محمد رفیق ساسولی ڈاکٹر میرین صاحبہ سوشل ویلفیئر آفیسر ملک محمد اقبال خوجہ خیل سوشل آرگنائزر ایم این سی ایچ میران جان بلوچ پی پی ایچ آئی کے مرتضی زہری و دیگر آفیسران بھی واک میں شریک تھے۔ اس موقع پر واک کے شرکاء سے اے ڈی سی خضدار عبدالقدوس اچکزئی و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک صحت مند و توانا بچے کے لئے ماں کا صحت مند ہونا انتہائی ضروری ہے ایک شیر خوار بچے کے لئے دو سال تک ماں کا دودھ بچے کی صحت کے لئے اہمیت کا حامل ہے کیونکہ ماں کے دودھ جیسی نعمت مارکیٹ میں فروخت ہونے والے دودھ میں ہرگز نہیں ہوتی اس بات کو پوری دنیا نے مان رہی ہے کہ ماں کادودھ بچے کے لئے نعمت خداوندی ہے یہی وجہ ہے کہ آج دنیا بھر میں ماں کے دودھ کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتامقررین نے کہا کہ خواتین بھی ماں اور بچے کی صحت کے حوالے سے آگاہی مہم میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔اس مہم کے دوران ہیلتھ ورکرز گھر گھرجاکر لوگوں میں شعور و آگہی پیدا کریں ۔ 
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ29 جنوری۔بلوچستان پبلک سروس کمیشن کے ایک پریس ریلیز کے مطابق اسسٹنٹ کمشنرز ، تحصیلدار اور ٹریژری اکاؤنٹنٹ کے محکمانہ امتحانات 11 فروری 2019 سے شروع ہوں گے ۔ 
()()()
انتقال پرملال 
کوئٹہ29 جنوری۔ مرحوم محبوب عتیق خان کی اہلیہ بقضائے الہٰی انتقال کر گئیں ۔مرحومہ مقصود عتیق خان ، جاوید محبوب ، فیصل محبوب ، محسن محبوب کی والدہ ، محمود عتیق خان ،حیدر عتیق خان ، منظور عتیق خان ، طارق عتیق خان کی بھابھی ، نسیم اسلم خان کی خوشدامن اور جنید محمود خان کی چچی تھیں ۔ مرحومہ کی روح کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی مسجد قدیم جان نزد صدیقہ مسجد صدیقہ مرکز روڈکوئٹہ میں جاری ہے ۔ 
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment