HomeNews28-02-2019 THURSDAY (FILE NO.1)

28-02-2019 THURSDAY (FILE NO.1)

28-02-2019 THURSDAY (FILE NO.1)

خبرنامہ نمبر760/2019 
تربت 28فروری ۔ صوبائی وزیر اطلاعات و ہائر ایجو کیشن ظہور احمد بلیدی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں مواصلات اور بنیادی ڈھانچہ کی ترقی صوبائی حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے ۔ ان خیالات کاا ظہار انہوں نے میرمزار بلوچ کی سربراہی میں یونین کونسل پیدارک کے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ وفد کے دیگر ارکان میں قمبر بزنجو اور شاہجان بزنجو بھی شامل تھے ۔ انہوں نے کہا کہ جب ہم نے اقتدار سنبھالا تو بلوچستان میں مواصلات کا نظام ابتری کا شکا ر تھا مگر اب اس میں بتدریج بہتری آرہی ہے انہوں نے کہا کہ تربت بلیدہ شاہراہ کی تعمیر کا آغاز یقیناًصوبائی حکومت کی کوششوں کا نتیجہ ہے ۔صوبائی وزیر نے کہا کہ تربت بلیدہ روڈ کی تعمیر انتہائی تیزی سے جاری ہے جس کی تکمیل رواں سال جون تک ریکارڈ مدت میں مکمل ہوجائے گی ۔ جس سے لوگوں کو آمد رفت میں آسانیاں میسر ہوں گی اور تربت سے بلیدہ کا فاصلہ آدھے گھنٹے میں طے کیا جائیگا اس دوران انہوں نے وفد کے اراکین کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ اگلے مرحلے میں جلد تربت پسنی شاہراہ پر کام کا آغاز کیا جائیگا جو یونین کونسل پیدارک سے گزر تا ہوا تربت سے پسنی پہنچے گا اس شاہراہ کی تکمیل سے مکران ڈویژن کے دو شہر تربت اور پسنی آپس میں منسلک ہوجائیں گے جس سے علاقے میں ٹرانسپورٹ کے نظام میں بہتری آئیگی اور لوگوں کی سفری سہولیات مزید بہتر ہوجائیں گی ۔انہوں نے کہا کہ پسنی تربت روڈ کی تکمیل کے بعد تربت سے پسنی کا فاصلہ 2گھنٹے سے بھی کم وقت میں طے کیا جاسکے گا ۔ آخر میں وفد نے صوبائی وزیر اطلاعات کو علاقے میں بارشوں کے باعث زرعی اراضی کو نقصانات کے بارے میں آگاہ کیا ۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر761/2019 
کوئٹہ 28فروری :۔صوبائی وزیر داخلہ و پی ڈی ایم اے میر ضیاء اللہ لانگو نے محکمہ شہری دفاع کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ کسی بھی ملک اورمعاشرہ کے لئے محکمہ شہری دفاع انتہائی اہمیت کا حامل ادارہ ہوتا ہے جو کسی بھی جنگی یا ہنگامی صورتحال پر ملک کے غیر متحارب شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے یا کسی بھی قسم کے جنگی ہتھیاروں کے استعمال کی صورت میں حفاظتی تدابیر اپنانے کی تربیت دیتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ شہری دفاع کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے شہری دفاع کے بنیادی اصولوں انخلاء ، بچاؤ، ایمرجنسی، بازیابی اور مستعدی پر عمل کرتے ہوئے ملکی استحکام اور غیر متحارب شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کے لیے مکمل طور پر مستعد اور تیار ہے ۔ صوبائی وزیر نے کہا پاکستان اور پاکستان پر جارحیت اور دراندازی کرنے والے ملک بھارت کے درمیان کشیدگی کی موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے محکمہ شہری دفاع اپنی تمام تر پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے ملک میں غیر متحارب شہریوں کو جنگ کے صورت میں روایتی یا غیر روایتی ہتھیاروں کے حملے کی صورت میں بچاؤ کے لیے عوام میں احتیاطی اور حفاظتی تدابیر اپنانے کیلئے شعور اجاگر کرنے کے لئے بھرپور کردار ادا کرے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر762/2019 
کوئٹہ 28 فروری :۔انسپکٹر جنرل پولیس بلوچستان محسن حسن بٹ نے آج سینٹرل پولیس آفس میں جرات اور جوانمردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تین افراد کو قتل کرنے والے ملزم کو فرار ہونے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے موقع پر اسلحہ سمیت گرفتار کرنے پر ٹریفک پولیس کے چار اہلکاروں کو نقد انعامات اور تعریفی اسناد دیے۔اس موقع پر ایڈیشنل آئی جی جہانزیب خان جوگیزئی بھی موجود تھے آئی جی پولیس بلوچستان نے ان کی سراہتے ہوئے کہا کہ پولیس اہلکاروں نے اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران ملزم کی فرار ہونے کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے ملزم کو موقع پر گرفتار کر کے ثابت کیا کہ پولیس عوام کے جان و مال کے تحفظ کے لیے پوری طرح مستعد ہے اور قانون کو ہاتھ میں لینے وا لے ہرگز رعایت کے مستحق نہیں ہیں۔ انہوں نے پولیس اہلکاروں جرات کو سراہا اور نقد انعامات و تعریفی اسناد دئیے۔
()()()
خبرنامہ نمبر763/2019 
کوئٹہ28فروری۔ ڈپٹی کمشنر کوئٹہ کے ایک اعلامیہ کے مطابق موجودہ ملکی صورتحال کے پیش نظر ڈپٹی کمشنر آفس میں کنٹرول روم قائم کردیا گیا ہے ۔ جوکہ صوبائی کنٹرول روم سے منسلک رہے گا ۔وفاقی اور صوبائی قانون نافذ کرنے والے اداروں اور محکمہ شہری دفاع سے مسلسل رابطے اور صوبائی حکومت کے احکامات پر فوری طور پر عمل درآمد کریگا ۔ میجر رسالدار لیویز کوئٹہ گل کاکڑ کنٹرول روم کا انچارج مقرر کئے گئے ہیں جوکہ دیگر متعلقہ اداروں اور محکموں سے رابطے میں رہے گا جبکہ کنٹرول روم میں تمام ضروری محکموں اور اداروں کے نمائندے موجود رہیں گے ۔ کنٹرول روم کا فون نمبر 081-9202268 فیکس نمبر 081-9202193 جبکہ انچار ج سیل نمبر 03003812041 ہے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر764/2019 
کوئٹہ28فروری۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ( جنرل ) نصیب اللہ کاکڑ کی زیر صدارت موجودہ ملکی صورتحال کے پیش نظر ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے سلسلے میں شہری دفاع کے آفیسران کا اجلاس منعقد ہوا ۔ اجلاس میں محکمہ شہری دفاع کے آفیسران اور رضاکاروں نے شرکت کی ۔ا جلاس میں موجودہ صورتحال میں شہری دفاع کی جانب سے کئے گئے حفاظتی اقدامات اور ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیاریوں کا بھی جائزہ لیا گیا ۔ اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل نے کہا کہ شہری دفا ع امن او رجنگ دونوں میں عوام کی جان کے تحفظ اور کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ہمیشہ تیار رہتی ہے تاکہ بر وقت امداد کارروائیوں سے لوگوں کو بچایا جاسکے ۔ اس سلسلے میں حکومتی اور امداد ی اداروں کے ساتھ ملکر لوگوں کے بچاؤ کیلئے فوری اقدام اٹھاتی ہے انہوں نے کہا کہ شہری دفاع کسی بھی ہنگامی صورتحال میں لوگوں کو حفاظتی تدابیر اپنانے کے حوالے سے آگاہی فراہم کرے تاکہ بوقت ضرورت عوام اپنے طور پر حفاظتی اقدامات اٹھا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ شہری دفاع کے رضاکارکسی قسم کی صورتحال سے نمٹنے کیلئے پیشہ وارانہ صلاحیت سے لیس ہیں اور اپنی خدمات کو احسن طریقے سے سر انجام دیتے ہوئے زیادہ سے زیادہ لوگوں تک رسائی حاصل کریں ۔ انہوں نے کہا کہ ہنگامی صورتحال میں شہری دفاع کی اہمیت اور ضرورت سے کسی صورت انکار نہیں کیا جاسکتا کیونکہ ہماری تھوڑی سے کوشش سے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ریلیف اور امداد مل سکے گا ۔ انہوں نے شہری دفاع کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ عوام میں بچاؤ اور حفاظتی تدا بیر اختیار کرنے کیلئے آگاہی مہم چلائی جائے اور کسی بھی ہنگامی صورتحال کے پیش نظر تیار رہیں۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر765/2019 
کوئٹہ28فروری۔تنظیم شہری دفاع پورے عزم کے ساتھ شب و روز سر گرم ہے کہ انسانیت کی بقا میں ہی کائنات کی بقا ہے او ر یہی وقت کا تقاضہ بھی ہے ۔ عوام کو شہری دفاع کی اہمیت کی جانب راغب کرنا اور اس کے ساتھ ساتھ بتانا ہے کہ عہد حاضر میں انسان کے تحفظ کا دائرہ مزید بڑھنا ہے ۔ان خیالات کا اظہار رکن صوبائی اسمبلی اور وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے حج و اوقاف اور مذہبی امور دنیش کمار محکمہ شہری دفاع کے زیر اہتمام عالمی یوم شہری دفاع کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ کی افادیت اور رضا کاروں کی حالت امن اور حالت جنگ میں خدمات قابل ستائش ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ شہری دفاع زخمیوں کی طبی امداد ، آگ پر قابو پانے اور ملبے سے پھنسے ہوئے لوگوں کو نکالنے کیلئے شہری دفاع کے رضاکارہر وقت ہر میدان میں پیش پیش ہیں ۔ تقریب سے محکمہ کے اہلکاروں اور رضاکاروں کی جامنب سے ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے عملی مظاہرہ کیا گیا جس میں بم دھماکے کے بعد پید اہونے والی صورتحال سے نمٹنا ، مختلف قسم کی آگ پر قابو پانے کے طریقے ، سرچنگ سو یپنگ ، ریسکیو سروس اور فرسٹ ایڈسروس کا عملی مظاہرہ کیا گیا عملی مظاہرے میں مختلف اسکولوں کے بچوں اور شہری دفاع کے رضا کاروں نے بڑی تعداد میں حصہ لیا ۔ تقریب کے آخر میں مختلف اسکولوں کے بچوں اور شہری دفاع کے رضا کاروں میں شیلڈ اور محکمہ شہری دفاع میں تربیت پانے والے اہلکاروں میں سر ٹیفکیٹ تقسیم کئے گئے ۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر766/2019 
کوئٹہ 28فروری۔ ڈپٹی ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر میل چلتن ٹاؤن کوئٹہ شبیر احمد لانگو کے کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک اعلامیہ کے مطابق چلتن ٹاؤن کوئٹہ کے تمام معزز اساتذہ کو تاکید کی گئی ہے کہ وہ یکم مارچ 2019 سے نئے تعلیمی سال کے آغاز پر اپنے متعلقہ اسکولوں میں اپنی حاضری یقینی بنائیں۔ دریں اثناء اعلامیہ میں چلتن ٹاؤن کے مانیٹرنگ ٹیموں اور رابطہ معلمین(Learning Coordinators) کو بھی سختی سے تاکید کی گئی ہے کہ وہ اپنے متعلقہ سرکلز میں اپنے مانیٹرنگ کو یقینی بناتے ہوئے غیر حاضر اور غفلت برتنے والے اساتذہ کی تفصیلی رپورٹ دفتر ہذامیں روزانہ کی بنیاد پر پیش کریں۔
()()()
خبرنامہ نمبر767/2019 
خضدار28فروری :۔خضد ار میں مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے فراریوں میں امدادی رقم تقسیم کی گئی۔ حکومت کی جانب سے پْرامن بلوچستان کے تحت 172فراریوں میں قریباً5کروڑ 43لاکھ کی خطیر رقم تقسیم کی گئی۔ تقریب کے مہمان خاص کمانڈنٹ قلات اسکاؤٹس کرنل ارشد محمود ملک تھے جنہوں نے امدادی رقم تقسیم قومی دھارے میں شامل ہونے والے افراد میں تقسیم کی۔ ہتھیار پھینکنے والے فراریوں میں خضدار، آوران و دیگر اضلاع کے افراد شامل تھے۔ رقم تقسیم کرنے کی پْروقار تقریب فرنٹیئر کور قلات اسکاؤٹس کیمپ کھٹان میں منعقد ہوئی۔ جس میں مہمان خاص اسسٹنٹ کمشنر خضدار محمد وارث ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر خضدار عبدالقدوس اچکزئی ، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر خضدارسید جاوید غرشین ، بلوچستان ریذیڈیشنل کالج خضدار کے پرنسپل حاجی محمد عالم جتک ، ایڈمن آفیسر بی یو ائی ٹی انجینئر رضا زہری ،و دیگر سول و عسکری آفیسران شامل تھے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کمانڈنٹ قلات اسکاؤٹس کرنل ارشد محمود ملک کا کہنا تھا کہ خوشی کی بات ہے کہ اتنی بڑی تعداد میں لوگ ہتھیار پھینک کرقومی دھارے میں شامل ہوئے ہیں اوروہ محب وطن بنے ہیں ، ملک سے وفاداری ، ملک سے محبت ہی بہترین راستہ ہے جو کہ آج ان نوجوانوں نے چنا ہے۔ پْرامن بلوچستان و خوشحال بلوچستان ہم سب کا خواب ہے یہ فورسز اور بلوچستان کی عوام کی قربانیوں کا نتیجہ ہے کہ آج بلوچستان پہلے سے کافی زیادہ پْرامن ہے۔ قومی دھارے میں شامل ہونے والے افراد ہمارے بھائی ہیں انہوں نے ہتھیار پھینک کر قومی دھارے میں شامل ہونے کا جو راستہ اختیار کیا ہے وہ اچھا راستہ ہے جس کے دور رس نتائج برآمد ہونگے۔ بد قسمتی سے ہمارے دشمن نے ہمارے نوجوانوں کو ورغلایا ہے اور انہیں پہاڑوں پر بھیجا ہے ، تاہم جن کو سمجھ آرہی ہے وہ واپس وطن کی خدمت کے لئے آرہے ہیں ، آج اس پنڈال میں بیٹھے قومی دھارے میں شامل اپنے بھائیوں سے کہتا ہوں کہ جتنے دیگر لوگ ہیں ان کو بھی سمجھائیں اور ان کو بھی قومی دھارے میں لائیں یہی ان کے لئے اچھااور مستقبل کا بہترین راستہ ہے۔ انہوں نے کہاکہ اللہ تعالیٰ نے ہمیں اچھا ملک عطاء اللہ فرمایا ہے اور اس میں پھر صوبہ بلوچستان کی بہت بڑی اہمیت ہے آئندہ مستقبل میں صوبے کو خوشحال اور ترقی یافتہ بننا ہے۔جس میں آپ سب اور ہم سب کو اپنی خدمات شامل کرکے ملک و قوم کی خدمت کرنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کی جانب سے امدادی رقم تقسیم کرنے کا مقصد قومی دھارے میں شامل ہونے والے افراد کی سرپرستی و حوصلہ افزائی کرنا اور انہیں اپنے لئے روزگار کا مواقع دینا ہے۔ انہوں نے کہاکہ انڈیا ہمارے ملک کے خلاف سازش ہرزہ سرائی میں ملوث ہے انڈیا کی اس بدمعاشی اور دہشت گردی کا مل کر مقابلہ کرنا ہے۔ پاکستان ایک ناقابل تسخیر ملک ہے اور انشاء اللہ یہ ملک تاحیات قائم و دائم رہیگا۔ تقریب کے اختتام پر قومی ترانہ پڑھاگیا جس کے احترام میں سب کھڑے ہوگئے اور نعرہ تکیبر اللہ اکبر اللہ اکبر لگایا گیا۔ پاکستان زندہ باد و بلوچستان پائندہ باد کا نعرہ بھی لگایا گیا۔
()()()
خبرنامہ نمبر768/2019 
نصیر آباد 28فروری۔ ممبر بورڈ آف ریونیو سید ظفر علی بخاری نے کہا ہے کہ کورٹ آف ریونیو کے قیام سے نصیرآباد ڈویژن کی عوام کو اب کوئٹہ کی بجائے یہاں پر سہولیات میسر ہوں گی ریونیو اراضی سمیت دیگر کیسز کی سماعت عباسی کورٹ میں ہوا کریں گی کیونکہ ریونیو کورٹ کے قیام سے عوام کی مشکلات میں کمی آئے گی نصیرآباد زرعی علاقہ ہونے کے باعث یہاں کے عوام کو ریونیو کے کیسز کے حوالے سے انہیں بہت سے مسائل کا سامنا تھا مگر حکومت نے یہ اقدام اٹھا کر ان کی مقامی سطح پر مسائل کو حل کردیا ہے ہماری بھر پورکوشش ہے کے یہاں کے عوام کو بغیر کسی تکلیف اور سفری اخراجات سے بچایا جا سکے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈپٹی کمشنر آفس ڈیرہ مراد جمالی میں کلکٹر کورٹ روم کے افتتاح کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نصیرآباد قربان علی مگسی اسسٹنٹ کمشنر غلام حسین بھنگرجاوید احمدمنگل محمد یعقوب سمیت دیگر ریونیو کے آفیسران بھی موجود تھے ممبر بورڈ سید ظفر علی شاہ بخاری نے کہا کہ محکمہ ریونیو صوبے کی معیشت میں اپنا اہم کردار ادا کر رہا ہے کیونکہ عشر اور آبیانہ سمیت دیگر ٹیکسز وصول کر کے سرکاری خزانے کو فائدہ پہنچا رہا ہے اس شعبے سے وابستہ افرادکے مسائل کو حل کرنے کے لیے ہرممکن حکومتی سطح پر کوششیں کی جا رہی ہیں یہی وجہ ہے کہ عوامی مشکلات اور مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے کلکٹر کورٹ کا قیام عمل میں لایا گیا ہے تاکہ زمینداروں کے مسائل مقامی سطح پر حل ہو سکیں ڈپٹی کمشنر کے ساتھ مل کران کے کیسز کی سماعت کی جائے گی کلکٹر کورٹ باقاعدگی سے یہاں پر کیسز کی سماعت کرے گی۔
()()()

خبرنامہ نمبر760/2019 
تربت 28فروری ۔ صوبائی وزیر اطلاعات و ہائر ایجو کیشن ظہور احمد بلیدی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں مواصلات اور بنیادی ڈھانچہ کی ترقی صوبائی حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے ۔ ان خیالات کاا ظہار انہوں نے میرمزار بلوچ کی سربراہی میں یونین کونسل پیدارک کے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ وفد کے دیگر ارکان میں قمبر بزنجو اور شاہجان بزنجو بھی شامل تھے ۔ انہوں نے کہا کہ جب ہم نے اقتدار سنبھالا تو بلوچستان میں مواصلات کا نظام ابتری کا شکا ر تھا مگر اب اس میں بتدریج بہتری آرہی ہے انہوں نے کہا کہ تربت بلیدہ شاہراہ کی تعمیر کا آغاز یقیناًصوبائی حکومت کی کوششوں کا نتیجہ ہے ۔صوبائی وزیر نے کہا کہ تربت بلیدہ روڈ کی تعمیر انتہائی تیزی سے جاری ہے جس کی تکمیل رواں سال جون تک ریکارڈ مدت میں مکمل ہوجائے گی ۔ جس سے لوگوں کو آمد رفت میں آسانیاں میسر ہوں گی اور تربت سے بلیدہ کا فاصلہ آدھے گھنٹے میں طے کیا جائیگا اس دوران انہوں نے وفد کے اراکین کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ اگلے مرحلے میں جلد تربت پسنی شاہراہ پر کام کا آغاز کیا جائیگا جو یونین کونسل پیدارک سے گزر تا ہوا تربت سے پسنی پہنچے گا اس شاہراہ کی تکمیل سے مکران ڈویژن کے دو شہر تربت اور پسنی آپس میں منسلک ہوجائیں گے جس سے علاقے میں ٹرانسپورٹ کے نظام میں بہتری آئیگی اور لوگوں کی سفری سہولیات مزید بہتر ہوجائیں گی ۔انہوں نے کہا کہ پسنی تربت روڈ کی تکمیل کے بعد تربت سے پسنی کا فاصلہ 2گھنٹے سے بھی کم وقت میں طے کیا جاسکے گا ۔ آخر میں وفد نے صوبائی وزیر اطلاعات کو علاقے میں بارشوں کے باعث زرعی اراضی کو نقصانات کے بارے میں آگاہ کیا ۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر761/2019 
کوئٹہ 28فروری :۔صوبائی وزیر داخلہ و پی ڈی ایم اے میر ضیاء اللہ لانگو نے محکمہ شہری دفاع کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ کسی بھی ملک اورمعاشرہ کے لئے محکمہ شہری دفاع انتہائی اہمیت کا حامل ادارہ ہوتا ہے جو کسی بھی جنگی یا ہنگامی صورتحال پر ملک کے غیر متحارب شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے یا کسی بھی قسم کے جنگی ہتھیاروں کے استعمال کی صورت میں حفاظتی تدابیر اپنانے کی تربیت دیتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ شہری دفاع کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے شہری دفاع کے بنیادی اصولوں انخلاء ، بچاؤ، ایمرجنسی، بازیابی اور مستعدی پر عمل کرتے ہوئے ملکی استحکام اور غیر متحارب شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کے لیے مکمل طور پر مستعد اور تیار ہے ۔ صوبائی وزیر نے کہا پاکستان اور پاکستان پر جارحیت اور دراندازی کرنے والے ملک بھارت کے درمیان کشیدگی کی موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے محکمہ شہری دفاع اپنی تمام تر پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے ملک میں غیر متحارب شہریوں کو جنگ کے صورت میں روایتی یا غیر روایتی ہتھیاروں کے حملے کی صورت میں بچاؤ کے لیے عوام میں احتیاطی اور حفاظتی تدابیر اپنانے کیلئے شعور اجاگر کرنے کے لئے بھرپور کردار ادا کرے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر762/2019 
کوئٹہ 28 فروری :۔انسپکٹر جنرل پولیس بلوچستان محسن حسن بٹ نے آج سینٹرل پولیس آفس میں جرات اور جوانمردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تین افراد کو قتل کرنے والے ملزم کو فرار ہونے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے موقع پر اسلحہ سمیت گرفتار کرنے پر ٹریفک پولیس کے چار اہلکاروں کو نقد انعامات اور تعریفی اسناد دیے۔اس موقع پر ایڈیشنل آئی جی جہانزیب خان جوگیزئی بھی موجود تھے آئی جی پولیس بلوچستان نے ان کی سراہتے ہوئے کہا کہ پولیس اہلکاروں نے اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران ملزم کی فرار ہونے کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے ملزم کو موقع پر گرفتار کر کے ثابت کیا کہ پولیس عوام کے جان و مال کے تحفظ کے لیے پوری طرح مستعد ہے اور قانون کو ہاتھ میں لینے وا لے ہرگز رعایت کے مستحق نہیں ہیں۔ انہوں نے پولیس اہلکاروں جرات کو سراہا اور نقد انعامات و تعریفی اسناد دئیے۔
()()()
خبرنامہ نمبر763/2019 
کوئٹہ28فروری۔ ڈپٹی کمشنر کوئٹہ کے ایک اعلامیہ کے مطابق موجودہ ملکی صورتحال کے پیش نظر ڈپٹی کمشنر آفس میں کنٹرول روم قائم کردیا گیا ہے ۔ جوکہ صوبائی کنٹرول روم سے منسلک رہے گا ۔وفاقی اور صوبائی قانون نافذ کرنے والے اداروں اور محکمہ شہری دفاع سے مسلسل رابطے اور صوبائی حکومت کے احکامات پر فوری طور پر عمل درآمد کریگا ۔ میجر رسالدار لیویز کوئٹہ گل کاکڑ کنٹرول روم کا انچارج مقرر کئے گئے ہیں جوکہ دیگر متعلقہ اداروں اور محکموں سے رابطے میں رہے گا جبکہ کنٹرول روم میں تمام ضروری محکموں اور اداروں کے نمائندے موجود رہیں گے ۔ کنٹرول روم کا فون نمبر 081-9202268 فیکس نمبر 081-9202193 جبکہ انچار ج سیل نمبر 03003812041 ہے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر764/2019 
کوئٹہ28فروری۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ( جنرل ) نصیب اللہ کاکڑ کی زیر صدارت موجودہ ملکی صورتحال کے پیش نظر ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے سلسلے میں شہری دفاع کے آفیسران کا اجلاس منعقد ہوا ۔ اجلاس میں محکمہ شہری دفاع کے آفیسران اور رضاکاروں نے شرکت کی ۔ا جلاس میں موجودہ صورتحال میں شہری دفاع کی جانب سے کئے گئے حفاظتی اقدامات اور ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیاریوں کا بھی جائزہ لیا گیا ۔ اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل نے کہا کہ شہری دفا ع امن او رجنگ دونوں میں عوام کی جان کے تحفظ اور کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ہمیشہ تیار رہتی ہے تاکہ بر وقت امداد کارروائیوں سے لوگوں کو بچایا جاسکے ۔ اس سلسلے میں حکومتی اور امداد ی اداروں کے ساتھ ملکر لوگوں کے بچاؤ کیلئے فوری اقدام اٹھاتی ہے انہوں نے کہا کہ شہری دفاع کسی بھی ہنگامی صورتحال میں لوگوں کو حفاظتی تدابیر اپنانے کے حوالے سے آگاہی فراہم کرے تاکہ بوقت ضرورت عوام اپنے طور پر حفاظتی اقدامات اٹھا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ شہری دفاع کے رضاکارکسی قسم کی صورتحال سے نمٹنے کیلئے پیشہ وارانہ صلاحیت سے لیس ہیں اور اپنی خدمات کو احسن طریقے سے سر انجام دیتے ہوئے زیادہ سے زیادہ لوگوں تک رسائی حاصل کریں ۔ انہوں نے کہا کہ ہنگامی صورتحال میں شہری دفاع کی اہمیت اور ضرورت سے کسی صورت انکار نہیں کیا جاسکتا کیونکہ ہماری تھوڑی سے کوشش سے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ریلیف اور امداد مل سکے گا ۔ انہوں نے شہری دفاع کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ عوام میں بچاؤ اور حفاظتی تدا بیر اختیار کرنے کیلئے آگاہی مہم چلائی جائے اور کسی بھی ہنگامی صورتحال کے پیش نظر تیار رہیں۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر765/2019 
کوئٹہ28فروری۔تنظیم شہری دفاع پورے عزم کے ساتھ شب و روز سر گرم ہے کہ انسانیت کی بقا میں ہی کائنات کی بقا ہے او ر یہی وقت کا تقاضہ بھی ہے ۔ عوام کو شہری دفاع کی اہمیت کی جانب راغب کرنا اور اس کے ساتھ ساتھ بتانا ہے کہ عہد حاضر میں انسان کے تحفظ کا دائرہ مزید بڑھنا ہے ۔ان خیالات کا اظہار رکن صوبائی اسمبلی اور وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے حج و اوقاف اور مذہبی امور دنیش کمار محکمہ شہری دفاع کے زیر اہتمام عالمی یوم شہری دفاع کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ کی افادیت اور رضا کاروں کی حالت امن اور حالت جنگ میں خدمات قابل ستائش ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ شہری دفاع زخمیوں کی طبی امداد ، آگ پر قابو پانے اور ملبے سے پھنسے ہوئے لوگوں کو نکالنے کیلئے شہری دفاع کے رضاکارہر وقت ہر میدان میں پیش پیش ہیں ۔ تقریب سے محکمہ کے اہلکاروں اور رضاکاروں کی جامنب سے ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے عملی مظاہرہ کیا گیا جس میں بم دھماکے کے بعد پید اہونے والی صورتحال سے نمٹنا ، مختلف قسم کی آگ پر قابو پانے کے طریقے ، سرچنگ سو یپنگ ، ریسکیو سروس اور فرسٹ ایڈسروس کا عملی مظاہرہ کیا گیا عملی مظاہرے میں مختلف اسکولوں کے بچوں اور شہری دفاع کے رضا کاروں نے بڑی تعداد میں حصہ لیا ۔ تقریب کے آخر میں مختلف اسکولوں کے بچوں اور شہری دفاع کے رضا کاروں میں شیلڈ اور محکمہ شہری دفاع میں تربیت پانے والے اہلکاروں میں سر ٹیفکیٹ تقسیم کئے گئے ۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر766/2019 
کوئٹہ 28فروری۔ ڈپٹی ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر میل چلتن ٹاؤن کوئٹہ شبیر احمد لانگو کے کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک اعلامیہ کے مطابق چلتن ٹاؤن کوئٹہ کے تمام معزز اساتذہ کو تاکید کی گئی ہے کہ وہ یکم مارچ 2019 سے نئے تعلیمی سال کے آغاز پر اپنے متعلقہ اسکولوں میں اپنی حاضری یقینی بنائیں۔ دریں اثناء اعلامیہ میں چلتن ٹاؤن کے مانیٹرنگ ٹیموں اور رابطہ معلمین(Learning Coordinators) کو بھی سختی سے تاکید کی گئی ہے کہ وہ اپنے متعلقہ سرکلز میں اپنے مانیٹرنگ کو یقینی بناتے ہوئے غیر حاضر اور غفلت برتنے والے اساتذہ کی تفصیلی رپورٹ دفتر ہذامیں روزانہ کی بنیاد پر پیش کریں۔
()()()
خبرنامہ نمبر767/2019 
خضدار28فروری :۔خضد ار میں مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے فراریوں میں امدادی رقم تقسیم کی گئی۔ حکومت کی جانب سے پْرامن بلوچستان کے تحت 172فراریوں میں قریباً5کروڑ 43لاکھ کی خطیر رقم تقسیم کی گئی۔ تقریب کے مہمان خاص کمانڈنٹ قلات اسکاؤٹس کرنل ارشد محمود ملک تھے جنہوں نے امدادی رقم تقسیم قومی دھارے میں شامل ہونے والے افراد میں تقسیم کی۔ ہتھیار پھینکنے والے فراریوں میں خضدار، آوران و دیگر اضلاع کے افراد شامل تھے۔ رقم تقسیم کرنے کی پْروقار تقریب فرنٹیئر کور قلات اسکاؤٹس کیمپ کھٹان میں منعقد ہوئی۔ جس میں مہمان خاص اسسٹنٹ کمشنر خضدار محمد وارث ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر خضدار عبدالقدوس اچکزئی ، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر خضدارسید جاوید غرشین ، بلوچستان ریذیڈیشنل کالج خضدار کے پرنسپل حاجی محمد عالم جتک ، ایڈمن آفیسر بی یو ائی ٹی انجینئر رضا زہری ،و دیگر سول و عسکری آفیسران شامل تھے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کمانڈنٹ قلات اسکاؤٹس کرنل ارشد محمود ملک کا کہنا تھا کہ خوشی کی بات ہے کہ اتنی بڑی تعداد میں لوگ ہتھیار پھینک کرقومی دھارے میں شامل ہوئے ہیں اوروہ محب وطن بنے ہیں ، ملک سے وفاداری ، ملک سے محبت ہی بہترین راستہ ہے جو کہ آج ان نوجوانوں نے چنا ہے۔ پْرامن بلوچستان و خوشحال بلوچستان ہم سب کا خواب ہے یہ فورسز اور بلوچستان کی عوام کی قربانیوں کا نتیجہ ہے کہ آج بلوچستان پہلے سے کافی زیادہ پْرامن ہے۔ قومی دھارے میں شامل ہونے والے افراد ہمارے بھائی ہیں انہوں نے ہتھیار پھینک کر قومی دھارے میں شامل ہونے کا جو راستہ اختیار کیا ہے وہ اچھا راستہ ہے جس کے دور رس نتائج برآمد ہونگے۔ بد قسمتی سے ہمارے دشمن نے ہمارے نوجوانوں کو ورغلایا ہے اور انہیں پہاڑوں پر بھیجا ہے ، تاہم جن کو سمجھ آرہی ہے وہ واپس وطن کی خدمت کے لئے آرہے ہیں ، آج اس پنڈال میں بیٹھے قومی دھارے میں شامل اپنے بھائیوں سے کہتا ہوں کہ جتنے دیگر لوگ ہیں ان کو بھی سمجھائیں اور ان کو بھی قومی دھارے میں لائیں یہی ان کے لئے اچھااور مستقبل کا بہترین راستہ ہے۔ انہوں نے کہاکہ اللہ تعالیٰ نے ہمیں اچھا ملک عطاء اللہ فرمایا ہے اور اس میں پھر صوبہ بلوچستان کی بہت بڑی اہمیت ہے آئندہ مستقبل میں صوبے کو خوشحال اور ترقی یافتہ بننا ہے۔جس میں آپ سب اور ہم سب کو اپنی خدمات شامل کرکے ملک و قوم کی خدمت کرنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کی جانب سے امدادی رقم تقسیم کرنے کا مقصد قومی دھارے میں شامل ہونے والے افراد کی سرپرستی و حوصلہ افزائی کرنا اور انہیں اپنے لئے روزگار کا مواقع دینا ہے۔ انہوں نے کہاکہ انڈیا ہمارے ملک کے خلاف سازش ہرزہ سرائی میں ملوث ہے انڈیا کی اس بدمعاشی اور دہشت گردی کا مل کر مقابلہ کرنا ہے۔ پاکستان ایک ناقابل تسخیر ملک ہے اور انشاء اللہ یہ ملک تاحیات قائم و دائم رہیگا۔ تقریب کے اختتام پر قومی ترانہ پڑھاگیا جس کے احترام میں سب کھڑے ہوگئے اور نعرہ تکیبر اللہ اکبر اللہ اکبر لگایا گیا۔ پاکستان زندہ باد و بلوچستان پائندہ باد کا نعرہ بھی لگایا گیا۔
()()()
خبرنامہ نمبر768/2019 
نصیر آباد 28فروری۔ ممبر بورڈ آف ریونیو سید ظفر علی بخاری نے کہا ہے کہ کورٹ آف ریونیو کے قیام سے نصیرآباد ڈویژن کی عوام کو اب کوئٹہ کی بجائے یہاں پر سہولیات میسر ہوں گی ریونیو اراضی سمیت دیگر کیسز کی سماعت عباسی کورٹ میں ہوا کریں گی کیونکہ ریونیو کورٹ کے قیام سے عوام کی مشکلات میں کمی آئے گی نصیرآباد زرعی علاقہ ہونے کے باعث یہاں کے عوام کو ریونیو کے کیسز کے حوالے سے انہیں بہت سے مسائل کا سامنا تھا مگر حکومت نے یہ اقدام اٹھا کر ان کی مقامی سطح پر مسائل کو حل کردیا ہے ہماری بھر پورکوشش ہے کے یہاں کے عوام کو بغیر کسی تکلیف اور سفری اخراجات سے بچایا جا سکے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈپٹی کمشنر آفس ڈیرہ مراد جمالی میں کلکٹر کورٹ روم کے افتتاح کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نصیرآباد قربان علی مگسی اسسٹنٹ کمشنر غلام حسین بھنگرجاوید احمدمنگل محمد یعقوب سمیت دیگر ریونیو کے آفیسران بھی موجود تھے ممبر بورڈ سید ظفر علی شاہ بخاری نے کہا کہ محکمہ ریونیو صوبے کی معیشت میں اپنا اہم کردار ادا کر رہا ہے کیونکہ عشر اور آبیانہ سمیت دیگر ٹیکسز وصول کر کے سرکاری خزانے کو فائدہ پہنچا رہا ہے اس شعبے سے وابستہ افرادکے مسائل کو حل کرنے کے لیے ہرممکن حکومتی سطح پر کوششیں کی جا رہی ہیں یہی وجہ ہے کہ عوامی مشکلات اور مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے کلکٹر کورٹ کا قیام عمل میں لایا گیا ہے تاکہ زمینداروں کے مسائل مقامی سطح پر حل ہو سکیں ڈپٹی کمشنر کے ساتھ مل کران کے کیسز کی سماعت کی جائے گی کلکٹر کورٹ باقاعدگی سے یہاں پر کیسز کی سماعت کرے گی۔
()()()

Share With:
Rate This Article
No Comments

Leave A Comment