خبر نامہ نمبر 1496/2019
کوئٹہ 26 اپریل۔ صوبائی وزیر مواصلات و تعمیرات میر محمد عارف محمد حسنی نے کہا ہے کہ حالیہ وزارتوں میں تبدیلی وزیر اعلیٰ جام کمال خان کی کاوشوں اور اس وژن کا ثمر ہے کہ وہ صوبے کی ترقی اور خوشحالی کے لئے محکموں کی کارکردگی زیادہ بہتر بنانے کیلئے کابینہ میں شامل وزراءکو انکی صلاحیتوں کے مطابق ذمہ داریاں تفویض کرتے ہیں،انہوں نے کہا کہ نئی صوبائی حکومت تشکیل پانے کے بعدوزیراعلیٰ نے ان پر اعتماد کرتے ہوئے وزارت خزانہ کا قلمدان انہیں سونپا اور اس مختصر عرصے میں ان کی محنت اور کوشش رہی کہ وہ محکمہ خزانہ کی کارکردگی بہتر کرتے ہوئے کرپشن اور بدعنوانی کے تدارک کیلئے عملی اقدامات کرسکیں لہٰذا گزشتہ چند ماہ کے دوران محکمے میں قابل اور دیانتدار آفیسران و دیگر اہلکاروں کی تعیناتی سے نہ صرف محکمے کی کارکردگی میں اضافہ ہوا بلکہ اس ٹیم ورک کے نتیجے میں بعض اہم محکمانہ امور میں بہتر تبدیلیاں بھی رونما ہوئیں اور آج فنانس ڈیپارٹمنٹ کا شمار صوبے کے فعال محکموں میں ہوتا ہے، انہوں نے کہا کہ گزشتہ دنوں وزیراعلیٰ کے احکامات کی روشنی میں انہیں وزارت مواصلات و تعمیرات کا قلمدان سونپ کر ان پر دوبارہ جس اعتماد کا اظہار کیا گیا ہے انشاءاللہ وہ اپنی محنت اور عزم کے ساتھ محکمہ مواصلات و تعمیرات کی ترقی اور محکمانہ کارکردگی میں اضافے کیلئے بھرپور کوششیں کریں گے،انہوں نے اس حوالے سے محکمے کے آفیسران بالا و دیگر اہلکاروں سے امید ظاہر کی ہے کہ وہ صوبائی وزیر کی جانب سے کیے جانے والے اقدامات میں بھرپور تعاون کریں گے تاکہ اس اہم محکمے کی بہتر کار کردگی ملک و صوبے کی ترقی میں معاون ثابت ہوسکے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1497/2019
کوہلو26اپریل :۔ صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ مری نے اپنے حلقہ انتخاب کے تحصیل گرسنی میں کھلی کچہری کا انعقادکیا ہے اُن کے ہمراہ ڈپٹی کمشنر کوہلو عبداللہ خان کھوسہ،میجر رسالدار شیر محمد مری، تحصیلدار علی مرتضٰی مری،حاجی عبدالر حمٰن مری،ڈی سی اسسٹنٹ حاجی قادر قیصرانی ،دوست علی و دیگر موجود تھے کھلی کچہری میں لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی ہے صوبائی وزیر نے عوام کے مسائل سن کر انہیں حل کرنے کی یقین دہانی کروائی جبکہ بعض ہنگامی نوعیت کے کاموں کے لئے فوری احکامات جاری کئے صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ خان مری نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کے مسائل اُن کے دہلیز پر حل کرنے کے لئے کوشاں ہیں عوام سے اُن کے مسائل کے حل کے لئے کئے گئے تما م وعدے انشااللہ پورا کروں گا کوہلو سمیت صوبے میں ترقی کے حقیقی دور کا آغاز ہواہے جس کے ثمرات عوام تک پہنچ رہے ہیں خود ہر علاقے میں جاکر عوام کے مسائل سن کر حل کرنے کی کوشش کررہا ہوں تاکہ لوگوں کو اپنے مسائل کے لئے مجھ تک آنے کی زحمت بھی نہ کرنا پڑے بعدازاں صوبائی وزیر نے تحصیل گرسنی میں قلت آب کے لئے واٹر سپلائی جبکہ کالکانی میں روڈ کی تعمیر مرمت کےلے ایک کروڑ روپے دینے کا اعلان کیا ہے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1498/2019
لسبیلہ 26اپریل ۔ ہنگلاج میلے کا آغاز ہوتے ہی محکمہ صحت لسبیلہ اور ڈبلیو ایچ او کی ٹیمیں ہنگلاج پہنچ گئیں دشوار گزار پہاڑی گھاٹیوں میں پولیو ویکسین کے کیمپ قائم کردیے گئے ہیں وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال کی خصوصی ہدایت پر ڈپٹی کمشنر لسبیلہ شبیر احمد مینگل کی جانب سے مائیکرو پلان کے تحت تشکیل دی گئی پولیوویکسین پلانے والی آٹھ ٹیمیں ہنگلاج اور مضافاتی دیہاتوں میں اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے سرانجام دے رہی ہیں ضلع لسبیلہ میں دریا ہنگول کے کنارے واقع ہندوﺅں کی مقدس دیوی ہنگلاج ماتا کا سالانہ سہ روزہ میلہ آج سے شروع ہوگیا ہے جوکہ 28 اپریل تک جاری رہے گاہنگلاج ماتا کے سالانہ میلے میں شرکت کیلئے سندھ اور بلوچستان سمیت پاکستان بھر اور دنیا کے مختلف ممالک ہندوستان، بنگلادیش، نیپال اور مالدیپ سمیت ایشیائی ممالک سے ہندو یاتریوں کے قافلے بڑے پیمانے پر پہنچنا شروع ہوگئے ہیں۔وزیر اعلیٰ بلوچستان کے احکامات کی روشنی میں ضلعی انتظامیہ لسبیلہ کی زیر نگرانی محکمہ صحت اور ڈبلیو ایچ او کی ٹیمیں اپنے ٹاسک کے مطابق اونٹوں کے ذریعے دشوار گزار پہاڑی گھاٹیاں عبور کرکے ہنگول ندی کے مضافاتی دیہاتوں میں میلے میں شریک یاتریوں کے پانچ سال سے کم عمر کے بچوں کو پولیو ویکسین پلا کر قومی ذمہ داریاں ادا کررہے ہیں وزیر اعلی بلوچستان جام کمال کے احکامات کی روشنی میں ڈپٹی کمشنر لسبیلہ شبیر مینگل کی جانب سے ترتیب دیئے گئے سیکیورٹی پلان کے تحت ہنگلاج ماتا کے میلے پر آنے والے لاکھوں ہندو یاتریوں کو لیویز فورس، پولیس اور ایف سی بلوچستان مکمل تحفظ فراہم کرنے کیلئے 24 گھنٹے الرٹ ہے اور مندر کی حدود سمیت سیکورٹی فورسز ہندو یاتریوں کو مکمل سیکورٹی کی فراہمی کیلئے کوشاں ہیں اسپیشل برانچ کی ٹیم کے جوان بھی ہنگلاج میلے میں شریک یاتریوں کی حفاظت کیلئے واک تھرو سیکیورٹی گیٹ کے ذریعے مختلف مقامات پر سرچنگ کا م¶ثر سسٹم قائم کرچکے ہیں علاوہ ازیں وزیر اعلیٰ جام کمال کے خصوصی توجہ اور پارلیمانی سیکرٹری برائے مذہبی امور دنیش کمار پلیانی کے فنڈز سے ہنگلاج ماتا کے مندر اور گردونواح جاری ترقیاتی کاموں سے یاتری اور ہندو کمیونٹی بہت خوش اور سیکیورٹی انتظامات سے مطمئن دکھائی دیتے ہیں یاتریوں کا کہنا ہے کہ موجودہ وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال کے ہم انتہائی ممنون ہیں جنہوں نے ہنگلاج میں شریک لاکھوں یاتریوں کے لئے دس لاکھ روپے کی ادویات فراہم کی ہیں اور ہیلتھ مینجمنٹ اور سیکیورٹی کا بہترین پلان دیا ہے یہاں آکر ہمیں خوشی کیساتھ اس بات کا ادراک ہواہے کہ پاکستان میں ہندو کمیونٹی کو اپنی مذہبی رسومات کی ادائیگی میں مکمل آزادی حاصل ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1499/2019
کوئٹہ 26اپریل ۔ صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی نے کہا ہے کہ نصابی سر گرمیوں کے ساتھ ساتھ غیر نصابی سر گرمیاں طلباءو طالبات کی ذہنی نشو و نما کیلئے نہایت ضروری ہیں ۔ صوبہ بھر کے تمام اسکولوں میں غیر نصابی سر گرمیوں کا انعقاد یقینی بنایا جائے گا تاکہ طلباءو طالبات کو صحت مندانہ ماحول فراہم کیا جاسکے ۔ ان خیالات کا انہوں نے صوبہ خیبر پختونخواہ کے محکمہ تعلیم کے لئے معاون خصوصی نذیر اسلم خٹک پاک الائنس فار میتھس اینڈ سائنس کے عمر اورکزئی اور سلمان نوید خان سے ملاقات کے دوران کیا ۔ صوبائی مشیر تعلیم نے کہا کہ طلباءو طالبات کو غیر نصابی پروگرام مثلاً سبی میلہ ، فوڈ فیسٹیول ، سپورٹس فیسٹیول ، ادبی و ثقافتی تقریبات ، فلاور شوز اور دیگر تقریبات میں شرکت کے مواقع فراہم کرنے سے نہ صرف تعلیم ماحول میں بہتری آتی ہے بلکہ طلباءکی ذہنی صلاحیتوں میںاضافہ بھی کیا جاسکتا ہے اس موقع پر خیبر پختونخواہ کے محکمہ تعلیم کے لئے معاون خصوصی نذیر اسلم خٹک نے کہا کہ غیر نصابی سر گرمیوں میں مقامی بزنس کمیو نٹی کے اشتراک سے اس میں مزید بہتری لائی جاسکتی ہے ۔ محمد خان لہڑی نے مزید کہا کہ اس سلسلے میں تمام ضروری اقدامات اٹھا ئے جارہے ہیں اور اسکولوں میں غیر نصابی سر گر میوں کے حوالے سے سہولیات کی کمی کو دور کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان کی طرف سے تعلیم کے حوالے سے خصوصی پروگرام کے آغاز سے تعلیم کے شعبے میں مزید بہتری آئے گی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1500/2019
تربت26 اپریل۔ کمشنر مکران ڈویڑن کیپٹن (ر) طارق زہری نے کہا ہے کہ کسی بھی معاشرے میںخواتین کا کردار کلیدی اور انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے، انہوں نے کہا اس بات سے انکار نہیں کیا جاسکتا کہ خواتین کا شمار معاشرے کے ذمہ دار طبقے میںہوتا ہے اور وہ اپنا کام پوری ایمانداری اور دیانت داری  کے ساتھ ادا کرتی ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے تربت یونیورسٹی میں فیمیل ایجوکیشن اینڈ وومن امپاورمنٹ کے موضوع پر منعقد سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس دوران انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مکران ڈویژن میں خواتین میں تعلیم حاصل کرنے کا تناسب صوبے کے دیگر علاقوں سے زیادہ اور وہ امید کرتے ہیں کہ یہاں کی خواتین تربت یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہونے کے بعد ملک کے کونے کونے میں صوبے کا نام روشن کرینگے دریں اثناءانہوں نے خطاب کرتے ہوئے  کہاکہ وہ گوادر میں بلوچستان کی تاریخ کا سب سے پہلی خواتین لیویز تھانہ کھولنے جارہے ہیں جہاں پر لیویز اسٹاف گوادر کے مقامی بلوچ خواتین ہوں گی انہوں نے سیمینار میں موجود خواتین پر زور دیا کہ وہ مکران کی نائب تحصیل دار کی خالی آسامیوں، پٹواری اور دیگر ریوینو اسٹاف کی اسامیوں کی بھرتی کے لیے مقابلہ میں حصہ لیں وہ مکمل طور پر انکو سپورٹ کرینگے اس دوران انہوں نے تربت یونیورسٹی اور تربت شہرکے دیگرتعمیراتی منصوبوں پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا  تربت ایک  بدلا ہوا مختلف شہر ہے اور مجھے یقین نہ ہوتا کہ یہ وہی بد حال اور کھنڈرات والا شہر ہے، شہر کا جو انفراسٹرکچر بنا ہے، یونیورسٹی اور میڈیکل کالج کی دلکش اور بے نظیر عمارتیں قائم ہوئی ہیں یہ نہ صرف قلیل عرصہ کے اندر بنے ہیں بلکہ اسکی کوالٹی عالمی معیار کے مطابق ہے اور کسی کو یقین نہ ہوگا کہ بلوچستان جیسے پسماندہ صوبہ کے دورافتادہ علاقہ تربت میں یہ سب کچھ ممکن ہوا ہے، سیمینار سے نیشنل پارٹی کے رہنماءچیئرمین حلیم بلوچ، ڈی ڈی او فیمیل ضلع کیچ زمرد واحد، ڈین ریسرچ فیکلٹی اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر ریاض بلوچ، ڈین نیچرل سائنسز فیکلٹی اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر حنیف الرحمن بلوچ اور دیگر نے بھی خطاب کیا ،سیمینار میں نظامت کے فرائض نظام مراد نے سرانجام دئیے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1501/2019
کوئٹہ26 اپریل۔بلوچستان میں مختلف کھیلوں کا انعقاد اداور اس میں خواتین کی بڑی تعداد میں شرکت اس بات کا مظہر ہے کہ صوبے میں مکمل امن قائم ہے اور کھلاڑیوں کا کھیلوں کی سر گرمیوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینااس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ ان خیالات کا اظہاراسسٹنٹ ڈائریکٹراسپورٹس محمد آصف لانگو ، ملک افضل اعوان صدر بلوچستان اولمپک ایسو سی ایشن ، شیر محمد ترین ، محمد افضل سو لہری چیئرمین بلوچستان اوشو ، حاجی محمد خان دمڑ ، سمیع اللہ کاکڑ صدرپاکستان کک باکسنگ فیڈریشن اور دیگر نے دوسری آل بلوچستان کک باکسنگ چیمپئن شپ کی اختتامی تقریب کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ان کا کہنا ہے کہ کک باکسنگ چیمپئن شپ 2019 کا انعقاد اور اس میں صوبے کے مختلف اضلاع کے کھلاڑیوں کی شرکت جن میں کوئٹہ ، پشین ، لورالائی ، ژوب ، سبی ، نصیر آباد ، نوشکی ، انتہائی خوش آئند ہے ۔ بلا شبہ بلوچستان کک باکسنگ فیڈریشن لائق تحسین ہے جنہوں نے انتھک محنت سے اس چیمپئن شپ کے کا میاب انعقاد کو ممکن بنایا ۔ مقررین نے کہا کہ نصابی سر گرمیوں کے ساتھ ساتھ غیر نصابی سر گرمیوں کا انعقاد نوجوان نسل کیلئے انتہائی ضروری ہے اس سے نہ صرف شخصیت میں توازن پیدا ہوتا ہے بلکہ مختلف صلاحیتیںنکھارنے کاموقع بھی ملتا ہے ۔ ایک صحت مند اور ترقی یافتہ معاشرے کا وجو د تب ہی ممکن ہے جب مرد اور عورت زندگی کے ہر میدان میں مل کر حصہ لیں اس ضمن میں حکومت بلوچستان کی کاوشیں قابل تحسین ہیں ۔ اختتامی تقریب میں سید عبدالمنان آغا ، منظور احمد درانی نے کہا کہ دوسری آل بلوچستان کک باکسنگ چیمپئن شپ میں صوبے بھر کے کھلاڑیوں کی شرکت یہ ثابت کرتی ہے کہ بلوچستان کے کھلاڑی باقی صوبوں کے کھلاڑیوں کے ہم پلہ ہیں ملک اور بالخصوص بلوچستان کی ترقی میں ہر وقت کام کرنے کیلئے پر عزم ہیں تقریب کی آخر میں ممتاز قبائلی شخصیت حاجی محمود دمڑ نے بلوچستان کک باکسنگ ایسو سی ایشن کےلئے ایک لاکھ روپے نقد کا اعلان کیا اور تقریب کے شرکاءمیں اعزازی شیلڈز اور سرٹیفکیٹ بھی تقسیم کیئے گئے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1502/2019
کوئٹہ 26 اپریل ۔ کمشنر کوئٹہ ڈویژن کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک تعریفی بیان میں شائق حسین ولد نادر علی سینئر کلرک کی اچانک اور ناگہانی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا گیا ہے ۔ اپنے جاری کردہ تعزیتی پیغام میں مرحوم کی وفات پر انکے لواحقین سے تعزیت کی گئی ہے اور دوران سروس ان کی خدمت کو خراج عقیدت پیش کی گئی ہے اور اللہ تعالیٰ سے مرحوم کے درجات بلند ی اور لواحقین کیلئے صبر وجمیل کی دعا بھی کی گئی ہے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1503/2019
لورالائی26اپریل :۔ایڈیشنل کمشنر ژوب ڈویژن محمد ایوب کی زیر صدارت ڈویژنل رابطہ کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈپٹی کمشنر لورالائی کاشف نبی،ڈپٹی کمشنر بارکھان گل محمد خلجی،اسسٹنٹ ڈائریکٹر لورالائی نور اللہ لونی،ڈپٹی ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ ژوب ڈویژن محمد داود موسیٰ خیل،سی او ڈی سی بارکھان پرویز ،ایڈمنسٹریٹر مشتاق جمالی،ایڈمنسٹریٹر اے ڈی ایل جی شیرانی نسیم جوگیزئی ،ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر محمد انور شاہ،ڈپٹی ہیلتھ آفیسر طارق محمود اور دیگرضلعی آفیسران نے شرکت کی ،اجلاس سے ایڈیشنل کمشنر ژوب ڈویژن محمد ایوب نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آفیسران کو چاہیے کہ عوام کی زندگی میںبہتری لانے کیلئے ہر ممکن کوشش کریں عزائم اچھے اور نیت صاف ہو تو وسائل کا صحیح استعمال ہوتا ہے کوئی بھی منصوبہ انفرادی نوعیت کا نہ ہو،اجتماعی نوعیت کے منصوبوں سے زیادہ سے زیادہ لوگ مستفد ہوتے ہیں انہوں نے کہا کہ ماضی میں لوگوں میں سکولوں اور ڈسپنسروں کو اپنا سمجھ کر اسے مہمان خانوں کے طور پر استعمال کیا اب ایسا ہر گز نہیں ہوگا تاکہ سرکاری وسائل کا صحیح استعمال ہو اس لئے ایک ایک پائی خرچ کرتے وقت بھی غور کرو کہ یہ پیسہ عوام کی امانت ہے انہوں نے کہا کہ ڈسٹرکٹ کونسل کی تمام یونین کونسلوں میں مختلف ترقیاتی کام کرنے سے یقینا تبدیلی آئےگی ،اجلاس میں ترقیاتی اور غیر ترقیاتی بجٹ اور تجویز کردہ سکیموں پر تفصیلی بحث کی گئی اور ضروری اور عوامی فلاح وبہبود کے حامل منصوبوں کیلئے بجٹ کی منظوری کی سفارش کی گئی اور غیر ضروری چیزوں کو مسترد کیا گیا ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1504/2019
نصیر آباد 26اپریل :۔ سینئر ممبر آف بورڈ ریونیو بلوچستان ڈاکٹر محمد شعیب گولہ کی زیرصدارت کمشنر نصیر آباد آفس میں اجلاس منعقد ہوا جس میں کمشنر نصیرآباد ڈویژن جاوید اختر محمود ڈپٹی کمشنر نصیرآباد ظفر علی ایم شہی ڈپٹی کمشنر صحبت پور محمدیونس سنجرانی ڈپٹی کمشنر جعفرآباد آغا شیر زمان خان ڈپٹی کمشنر جھل مگسی محمد رمضان پلال ڈپٹی کمشنر کچھی سلطان احمد بگٹی ظفر بنگلزئی نور احمد ڈومکی جاوید احمد سمیت دیگر افسران نے شرکت کی کمشنر نصیرآباد جاوید اختر محمود نے سینئر ممبر آف بورڈریونیو کونصیر آباد ڈویژن کے مختلف اضلاع میں سیلاب سے ہونے والی تباہ کاریوں انتظامیہ کی جانب سے کئے گئے ریلیف کے کاموں اور ڈویژن بھر سے عشر آبیانہ کی وصولی کے متعلق تفصیلی بریفنگ دی کمشنر نصیرآباد نے بتایا کہ سیلاب سے نصیرآباد ڈویژن کے تین اضلاع متاثر ہوئے ہیں جہاں پر ریلیف کے کام جاری ہیں سیلاب متاثرین میں 960 ٹینٹ جبکہ 2963 راشن کے تھیلے تقسیم کئے گئے تینوں اضلاع کے مختلف علاقوں میں ریلیف کیمپس بھی قائم کیے گئے ہیں انہوں نے بتایا کہ نصیرآباد ڈویژن میں انکروچمنٹ کے خلاف کارروائیاں بھی جاری ہیں سرکاری اراضی پر قبضہ مافیاسے خالی کرایا جارہا ہے اور کاروائی کایہ سلسلہ بدستورجاری ہے اب تک کروڑوں روپے کی سرکاری اراضی قبضہ مافیا سے واگزار کرائی گئی ہے قبضہ مافیا کے خلاف ہماری بلاامتیاز کارروائی جاری رہے گی جبکہ نصیرآباد ڈویژن کے تمام اضلاع میں عشر و آبیانہ کی وصولی گزشتہ سال سے بہتر ہے تمام ڈپٹی کمشنرز کی نگرانی میں وصولی کے عمل کو مزید بہتر بنایا گیا ہے بڑے بڑے زمینداروں کی رجسٹریشن کی جارہی ہے تاکہ نئے اور شفاف طریقے سے سرکاری ٹیکس وصول کیاجائے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو ڈاکٹر محمد شعیب گولہ نے کہاکہ زرعی انکم ٹیکس کی وصولی کو یقینی بنایا جائے جن علاقوں میں سیلاب نہیں آیا وہاں سے عشر آبیانہ کی رقم کو جلد از جلد وصول کی جائے اس میں کسی قسم کی کوتاہی یالا پرواہی ہرگز نہ برتی جائے ٹیکس کی مد میں جو رقم حاصل ہوتی ہے وہ عوام کے مسائل حل ہونے پر خرچ کی جاتی ہے تمام زمیندار ٹیکس دے کر اپنا فریضہ ادا کریں سرکاری مقروض زمینداروں کو نوٹسز جاری کیے جائیں تاکہ وہ عشروآبیانہ کے ٹیکسیز جمع کروائیں انہوں نے کہا کہ سرکار کی ہزاروں ایکڑ اراضی کو قبضہ مافیا سے خالی کرایا جائے تاکہ وہ اراضی سرکار کے کام آئے اس سلسلے میں اقدامات کو یقینی بنایا جائے انہوں نے تمام زمیندار اصولی طریقے سے اپنی عشر آبیانہ جمع کروائیں تاکہ حکومت زمینداروں اورکسانوں کی فلاح و بہبود کے لئے اقدامات کو یقینی بنا سکے کیونکہ زمینداروں اورکسانوں سے حاصل ہونے والی رقوم عوام کے بہتر مفادات میں خرچ کی جاتی ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1505/2019
نصیر آباد 26اپریل :۔کمشنرنصیرآباد ڈویژن جاویداختر محمود اورڈپٹی کمشنر نصیرآباد ظفرعلی بلوچ کی خصوصی ہدایت پراسسٹنٹ کمشنر ڈیرہ مراد جمالی غلام حسین بھنگرتحصیلدار ڈیرہ مراد جمالی بہادرخان کھوسہ میونسپل عملہ کے ہمراہ قومی شاہراہ مین بازار میںتجاوزات کےخلاف کارروائی کی اسسٹنٹ کمشنرغلام حسین بھنگر اور تحصیلدار بہادرخان کھوسہ نے کہا ہے کہ کاروباری ودکاندار حضرات کو چاہیے کہ وہ تجاوزات سے اجتناب کریں اور قومی شاہراہ اور فٹ پاتھ پر تجاوزات قائم کرنے کی ہرگز کسی کو اجازت نہیں دی جائیگی خلاف ورزی کرنے والوں سے کوئی رعایت نہیں برتی جائیگی انھوں نے کہا ہے کہ تجاو زات کے خلاف کاروائی جاری رہے گی سبزی فروٹ کے تھڑے ،کھو کھے اورریڑھی بانوں سمیت دیگر کی جانب سے قائم کیے گئے تجاوزات کو ہٹانے کے لیے اسسٹنٹ کمشنر کی نگرانی میں شیڈز ،چھپروں اورتھڑوں کو ہٹاکرمرکزی شاہراہ کو کشادہ کیا گیاشہرمیں تجاوزات کے باعث قومی شاہراہ پر ٹریفک کی روانی میں بھی بے تحاشہ خلل پڑرہا ہے جس کے پیش نظر شہر میں بے جا تجاوزات کے خلاف کاروائی عمل میں لائی گئی ہے آئندہ بھی ایسی کارروائی کاعمل جاری رہے گا تاکہ شہریوں کی مشکلات میں کمی لائی جاسکے اور ٹریفک کی روانی کو بہتر بنایا جاسکے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment