خبر نامہ نمبر 1480/2019
سبی 25 اپریل ۔گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا ہے کہ میر چاکر خان رند یونیورسٹی سبی کے قیام سے نہ صرف سبی ڈویژن بلکہ نصیرآباد ڈویژن کے طلباءکو بھی اعلی تعلیم کی جدید سہولتیں میسر آئیں گی ان خیالات کا اظہار انہوں نے میر چاکر خان رند یونیورسٹی سبی کے افتتاح کے موقع پر منعقدہ ایک پروقار تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر خصوصی مشیر برائے معاون خصوصی وزیراعظم پاکستان اور صوبائی اسمبلی سردار یار محمد رند رکن قومی اسمبلی شازین بگٹی کمشنر سبی ڈویڑن سید فیصل احمد ڈپٹی کمشنر سبی سید زاہد شاہ بریگیڈیئر پاک فوج اویس مجید کرنل ضیاءاللہ ایف سی۔ وائس چانسلر میر چاکر خان رند یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر علی نواز مینگل سابق صوبائی وزیر اطلاعات ملک خرم شہزاد ڈی پی او سبی عبدالحق عمرانی سمیت ضلعی انتظامیہ افسران قبائلی عمائدین موجود تھے گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا کہ یہ بات نہ صرف میرے لیے بلکہ اہلیان بلوچستان کے لیے انتہائی مسرت کی ہے کہ سبی یونیورسٹی کا نام میر چاکر خان رند کے نام سے منسوب کیا گیا ہے جو کہ تاریخی اور علاقائی اعتبار سے انتہائی اہمیت کا حامل ہے انہوں نے کہا کہ فنڈز کی کمی کے باوجود چار ماہ کے مختصر عرصے میں یونیورسٹی کا قیام کسی چیلنج سے کم نہیں تھا انہوں نے کہا کہ یہ مشکل ٹاسک ہے لیکن میں پرامید ہوں کہ صوبائی حکومت سول سوسائٹی طلباءقبائلی عمائدین کے تعاون سے یونیورسٹی کو ترقی سے ہمکنار کرکے علاقے کے لوگوں کے لئے اعلی تعلیم کا حصول کا بہترین ذریعہ بنا سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کے قیام میں خصوصا وزیراعلی بلوچستان اور کورکمانڈر بلوچستان کا کردار اہم رہا ہے جن کی کاوشوں کی بدولت آج یونیورسٹی کا قیام عمل میں آیا انہوں نے کہا کہ وائس چانسلر میرچاکرخان رند یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر علی نواز مینگل جوان اور انتہائی مخلص اور محنتی ہیں امید ہے کہ اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے یونیورسٹی کو کامیابی سے ہمکنار ضرور کریں گے انہوں نے کہا کہ یونیورسٹیز اپنے وائٹل رول کی وجہ سے معلومات کو فروغ دے کر ذہنوں کو تبدیل کرتے ہیں ہم اس وقت سے سائنسی اصلاحات سے گزر رہے ہیں جب اس تناظر میں سائنس اور ٹیکنالوجی تعلیم کا فروغ اس یونیورسٹی کی اہم علامت ہے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کے معاون خصوصی سردار یار محمد رند نے کہا کہ تعلیم کے بغیر قومیں علاقے ہمیشہ پسماندہ رہتی ہیں انہوں نے کہا کہ میرے چند خوابوں میں سے ایک خواب میرچاکرخان رند یونیورسٹی کا قیام تھا جسے آج گورنر بلوچستان نے اپنی ذاتی کاوشوں سے عملی جامہ پہنایا انہوں نے کہا کہ میری یہ ذاتی کوشش ہے کہ صوبے کے تمام ڈویژنوں میں یونیورسٹی بنائی جائے کیونکہ اعلی تعلیمی کے ذریعے ہم مستقبل کے چیلنجز سے نبرد آزما ہو سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ میرچاکرخان رند یونیورسٹی یہاں بسنے والے تمام لوگوں کے لیے ہے میری یہاں رہنے والے تمام لوگوں سے گزارش ہے کہ وہ رنگ و نسل کو بالائے طاق رکھتے ہوئے یونیورسٹی کی ترقی کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائیں انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ بلوچستان میں مزید زرعی یونیورسٹی کا قیام بھی عمل میں لایا جائے انہوں نے صوبے میں کثیر تعداد میں پرائمری اسکولوں کی بلڈنگ کی تعمیر کو بھی فنڈز کا زیاں قرار دیتے ہوئے کہا کہ صرف میرے علاقے میں 70 پرائمری اسکول بند پڑے ہیں جسے لاکھ کوششوں کے باوجود میں نہ کھلا سکا بلڈنگ وہ اچھے ہیں جہاں پر اساتذہ بھی موجود ہو اور بچوں کو معیاری تعلیم بھی مل سکے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر میرچاکر خان رند یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر علی نواز مینگل نے کہا کہ یونیورسٹی میں جلد ہی باقاعدہ درس و تدریس کا سلسلہ شروع کر دیا جائے گا انہوں نے کہا کہ اس سال مختلف سائنسی مضامین میں بی ایس کی کلاسز شروع کی جائیں گی جبکہ آئندہ سال سے ایل ایل بی کی کلاسز بھی شروع کی جائے گی انہوں نے خصوصی طور پر کمشنر سبی ڈویژن سید فیصل احمد،ڈپٹی کمشنر سبی سید زاہد شاہ اور کمانڈنٹ ایف سی کے تعاون کو سراہا انہوں نے سبی میں بسنے والے تمام لوگوں اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اس یونیورسٹی کو کامیاب بنانے میں ہمارا بھرپور ساتھ دیں تقریب کے آخر میں وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر علی نواز مینگل نے گورنر بلوچستان امان اللہ یاسین زئی کو خصوصی سوینئر پیش کیا جبکہ گورنر بلوچستان نے سرداریارمحمد۔شازین بگٹی کمشنر سبی ڈویڑن سید فیصل احمد ڈپٹی کمشنر سید زاہد شاہ ڈی پی او سبی عبدالحق عمرانی پاک فوج کے بریگیڈئر اویس مجید کرنل ایف سی ضیاءاللہ کو شیلڈز دیے قبل ازیں انہوں نے گورنر بلوچستان نے باقاعدہ یونیورسٹی کا افتتاح کیا اور یونیورسٹی کے احاطے میں پودا بھی لگایا مہمان کی آمد پر پولیس کے چاک و چوبند دستے نے انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1481/2019
کوئٹہ 25اپریل:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے چمن میں خواتین پولیو ورکرز پر فائرنگ کے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے واقعہ کی رپورٹ طلب کی ہے، انہوں نے دہشت گردی کے اس واقعہ میں ایک خاتون ورکر کے جاں بحق اور دوسری خاتون کے زخمی ہونے پر دکھ ا ور افسوس کا اظہار کیا ہے وزیراعلیٰ نے پولیس اور انتظامیہ کو واقعہ میں ملوث عناصر کی گرفتاری اور پولیو ورکرز کے تحفظ کو ہر صورت یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے، وزیراعلیٰ نے فائرنگ کے واقعہ کو انتہائی شرمناک اور بزدلانہ فعل قرادیتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین پر حملہ صوبے کی روایت اور اسلامی اقدار کے بھی منافی ہے اور حملے میں ملوث عناصر سخت ترین سزا کے مستحق ہیں، انہوں نے کہا کہ پولیو مہم میں رکاوٹ پیدا کرنے کی ہرسازش کو ناکام بناتے ہوئے ہم اپنے بچوں کے صحت مند مستقبل کو محفوظ بنائیں گے اور چمن سمیت صوبہ بھر میں پولیو مہم اپنے مقررکردہ شیڈول کے مطابق جاری رکھی جائے گی، وزیراعلیٰ نے جاں بحق خاتون کے لواحقین سے تعزیت اور ہمدردی کا ظہار کرتے ہوئے دعا کی ہے کہ اللہ تعالیٰ مرحومہ کو اپنے جوار رحمت میں جگہ دے اور سوگوار خاندان کو یہ صدمہ صبروہمت سے برداشت کرنے کا حوصلہ عطا فرمائے، وزیراعلیٰ نے زخمی پولیو ورکر کو علاج معالجہ کی تمام سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت بھی کی ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1482/2019
کوئٹہ 25اپریل:۔ قائد ایوان وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی زیرصدارت صوبائی حکومت میں شامل سیاسی جماعتوں کے مشترکہ پارلیمانی گروپ کا اجلاس منعقد ہوا، اجلاس میں صوبے کی سیاسی صورتحال اور ترقیاتی امور کے ساتھ ساتھ صوبائی اسمبلی کے رواںاجلاس کے ایجنڈا کا جائزہ لیا گیا اور اس حوالے سے لائحہ عمل مرتب کیا گیا، بعدازاں وزیراعلیٰ کی جانب سے اجلاس کے شرکاءکے اعزاز میں ظہرانہ دیا گیا، چیف سیکریٹری اور آئی جی پولیس سمیت صوبائی محکموں کے سیکریٹری بھی ظہرانہ میں شریک ہوئے،
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1483/2019
کوئٹہ 25اپریل:۔حکومت بلوچستان نے حالیہ بارشوں سے صوبے کے ڈیموں میں پانی کی وافر مقدار ذخیرہ ہونے سے ماہی پروری کے پیدا ہونے والے مواقعوں سے بھرپور استفادہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے مقامی سطح پر معاشی سرگرمیاں بھی پیدا ہونگی اور لوگوں کو روزگار کے مواقع ملیں گے۔ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی جانب سے محکمہ ماہی گیری کو اس ضمن میں جامع منصوبہ بندی کرکے تین دن کے اندر رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1484/2019
کوہلو25اپریل ۔ صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ مری اِن دنوں اپنے حلقے کے دورے پر ہیں انہوں نے دوسرے روز بھی اپنے ضلعی دفتر میں کھلی کچہری لگائی اور لوگوں کے مسائل سنے ۔صوبائی وزیر نے کہا ہے کہ عوامی نمائندہ ہوں عوام کی خدمت میری سیاست ہے میری کوشش ہے کہ جتنی جلدی ممکن ہوسکے لوگوں کے مسائل اُن کے دہلیز پر حل ہوں عوام نے ووٹ دے کر منتخب کیا ہے انشااللہ عوام کوضلع میں ریکارڈ ترقیاتی کام اور روزگار کے مواقع ملے گے صوبائی وزیر نے بعض ہنگامی بنیاد کے کاموں کے لئے فوری احکامات جاری کئے ہیں جبکہ بعدازاں کھلی کچہری کے انہوں نے اپنے وعدے کے مطابق شہید ایف سی اہلکار حق نواز مری کے والد کو ایک لاکھ روپے بطور امداد دیئے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1485/2019
لورالائی25اپریل ۔ صوبائی وزیرصنعت وتجارت حاجی محمد خان طور اتمانخیل نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام کی زندگی کی تمام بنیادی سہولیات کی فراہمی کےلئے اقدامات کررہی ہے اور اس ضمن میں اپنے موجود وسائل بروے کارلارہی ہے دنیا میں کوئی بھی تبدیلی لانا مشکل کام ہے مشکلات سے گھبرانا نہیں بلکہ پورے عزم ویقین کے ساتھ کام کرنا چایئے کامیابی ضرور ملے گی تمام افسران اپنی ذمہ داری کوجانیں اور عوام کی خدمت کواپناشعار بنائیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملٹی سٹوریز ڈویژنل کمپلیکس کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ایکسین بی اینڈ آر جانزیب خان ،ایس ڈی او قیوم کبزئی، محمد انور لونی، ملک صمد شبوزئی اور دیگر افسران نے شرکت کی صوبائی وزیر حاجی محمد خان طور اتمانخیل نے کہا کہ 18کروڑ روپے کی لاگت سے ڈویژنل کمپلیکس کی تعمیر سے لورالائی ترقی کی راہ پر گامزن ہوگا۔ضلع لورالائی کو ایک مثالی ضلع بنائیں گے تعلیم میری پہلی ترجیح ہے صحت کا شعبہ انتہائی اہم ہے اس حوالے سے کوئی بھی کوتاہی ناقابل برداشت ہے انہو ں نے کہا کہ ہماری پارٹی نے عوامی مسائل حل کرنے کیلئے عوام سے ووٹ لئے تھے اور پارٹی کارکنوں کو اپنا سرمایہ سمجھتے ہیں اور عوامی خدمت پر یقین رکھتے ہیں انہون نے کہا کہ مخلوق صوبائی حکومت میں شامل تمام پارلیمانی ،سیاسی قوتیں بلوچستان کی خوشحالی اور ترقی کے جذبے سے سرشار ہے حکومت جس طرز پر کام کر رہی ہے اس کے ثمرات جلد سامنے آنا شروع ہو جائیں گے ماضی میں عوام کے ساتھ صرف وعدے کئے گئے لیکن موجودہ حکومت خالی دعوں اور طفیل تسلیوں پر یقین نہیں رکھتی،بلوچستان کی تقدیر بدلنے کیلئے عملی اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں موجودہ حکومت عوام دوست اور صوبے کی مجموعی ترقی اور لوگوں کو اقتصادی طور پر خوشحال بنانے کیلئے موثر پالیسیاں اور ٹھوس اقدامات اٹھا رہی ہے اور لوگوں کی فلاح وبہبود کیلئے ہر ممکن کوشش کی جا ئے گی تاکہ عوام تک ان منصوبوں کے ثمرات پہنچ سکیں ،عوام کو زندگی کی تمام تر بنیادی سہولیات کی فراہمی موجودہ حکومت کا نصب العین ہے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1486/2019
کوئٹہ 25اپریل ۔ صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی نے کہا ہے کہ محکمے میں صاف و شفاف بھرتیوں کی ہرممکن کوشش کریں گے۔ میرٹ کو ہر صورت یقینی بنائیں گے ۔ ماضی میں محکمے میں ہونے والی نا انصافیوں کا ازالہ کیا جائے گاان خیالات کا اظہار انہوں نے چیئرمین بی ڈی اے میر سکندر علی عمرانی اور رکن صوبائی اسمبلی مبین خان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ صوبائی مشیر نے کہاکہ محکمے میںقلیل مدت میں اصلاحات لائی گئی ہیں جس کی مثال ماضی میں نہیںملتی اساتذہ کی غیر حاضریوں کو خاطر خواہ حد تک کنٹرول میں لایا گیا ہے عوام کا سرکاری اسکولوں میں اعتماد بحال ہورہا ہے جس کا واضح ثبوت کامیاب داخلہ مہم ہے ۔ اس سال سرکاری اسکولوں میں ریکارڈ داخلے ہوئے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ عوام کے اعتماد پر پورا اتریں گے ۔ محکمے میں اصلاحات اولین ترجیحات میں شامل ہے ۔ اس موقع پر رکن صوبائی اسمبلی مبین خان صوبائی مشیر تعلیم کی محکمے کیلئے کیئے جانے والے اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ حالیہ اصلاحات اور محکمانہ کارروائیوں کے دورس نتائج برآمد ہوں گے ۔ انہوںنے صوبائی مشیر تعلیم کو اپنے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔ اس موقع پر صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی نے کہا کہ صوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ بڑے پیمانے پر بھرتیاں عمل میں لائی جارہی ہیں ۔ صوبے کے تمام اضلاع کے اسکولوں کی خالی آسامیوں پر بھرتی عمل میں لائی جائے گی ۔ محمد خان لہڑی نے کہا کہ بلا امتیاز عوامی خدمت پر یقین رکھتے ہیں۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1487/2019
کوئٹہ 25اپریل ۔صوبائی محتسب بلوچستان عبدالغنی خلجی کی ہدایت پر بی بی عارفہ خیر محمد کو محکمہ تعلیم ضلع زیارت میں میرٹ کے مطابق جے ای ٹی ( JET) تعینات کردیا گیا تفصیلات کے مطابق شکایت کنندہ نے صوبائی محتسب سے گزارش کی تھی کہ یونین کو نسل سپیز ندی ضلع زیارت میں جے ای ٹی کی آسامی کیلئے میرٹ میں آنے کے باوجود متعلقہ حکام انہیں تعینات نہیں کررہے ہیں ۔ صوبائی محتسب بلوچستان نے قانون کے مطابق کارروائی کرنے کے بعد درخواست گزار کی شکایت کو حقیقت پر مبنی قرار دے کر ڈسٹرکٹ ایجو کیشن آفیسر زیارت کو ہدایت جاری کی کہ انہیں ایک مہینے کے اندر تعینات کرکے آگاہ کیا جائے ۔ جس پر عملدرآمد کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ایجو کیشن آفیسر نے مجاز حکام کی منظوری کے بعد بی بی عارفہ کو جے ای ٹی تعینات کرکے شکایت کا ازالہ کردیا ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1488/2019
کوئٹہ 25اپریل ۔عدالت عالیہ بلوچستان کے ایک اعلامیہ کے مطابق معزز چیف جسٹس بلوچستان ہائی کورٹ جسٹس سیدہ طاہرہ صفدر نے عدالت عالیہ بلوچستان سبی بینج کی عدالتی کارروائی کے بعد ڈسٹرکٹ جیل سبی کا دورہ کیا ۔ دورے کے دوران سپرنٹنڈنٹ ڈسٹرکٹ جیل سبی نے جیل کے حوالے سے چیف جسٹس صاحبہ کو بریفنگ دی ۔ جیل کے دورے کے موقع پر چیف جسٹس صاحبہ نے قیدیوں سے بھی ملاقات کی ان کے مسائل سنے اور انہیں جلد از جلد حل کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ چیف جسٹس بلوچستان ہائی وکورٹ جسٹس سیدہ طاہرہ صفدر نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ کا بھی دورہ کیا اور جوڈیشل آفیسران سے ملاقات کی ان کے مسائل سنے اور انہیں حل کرنے کی یقین دہانی کرائی ۔ چیف جسٹس صاحبہ نے ججز کو قانون و انصاف کے تقاضوں کو مد نظر رکھتے ہوئے فریقین کو بھر پور شنوائی کا موقع دے کر فیصلے کرنے کی ہدایت کی ۔ چیف جسٹس جسٹس سیدہ طاہرہ صفدر نے دورہ بار روم کے موقع پر وکلاءسے ملاقات کی ان کے مسائل سنے اور ان کو جلد از جلد حل کرنے کی یقین دہانی کرائی اختتام پر وکلاءکا شکریہ ادا کیا وکلاءبار کے لئے ایک لاکھ روپے کا اعلان بھی کیا جس پر تمام وکلا ءصاحبان نے شکریہ ادا کیا اس موقع پر جسٹس ہاشم خان کاکڑ ، جسٹس محمد اعجاز سواتی ، جسٹس عبداللہ بلوچ، رجسٹرار عدالت عالیہ روزی خان بڑیچ ، عبدالقیوم لہڑی سیشن جج انسپکشن ، سیشن جج سبی و دیگر جوڈیشل آفیسران بھی اس موقع پر موجود تھے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1489/2019
کوئٹہ 25اپریل۔ڈپٹی اسپیکر بلوچستان اسمبلی سردار بابر موسیٰ خیل کی صدارت میں بلوچستان اسمبلی کی قائمہ کمیٹیوں کیلئے ایک روز ہ تعارفی ورکشاپ بلوچستان صوبائی اسمبلی اور یون این ڈی پی کے اشتراک سے ہوئی ۔ جس میں قائمہ کمیٹیوں کے چیئرمینز اور اراکین نے شرکت کی ۔ تعارفی ورکشاپ میں قائمہ کمیٹیوں کے اختیارات پر کھل کر بات چیت کی گئی ورکشاپ کے شرکاءکو بتایا گیا کہ کمیٹیاں مفاد عامہ سے متعلق کسی بھی مسئلے پر متعلقہ ادارے کے سربراہ کو بلا سکتی ہیں اور ان سے اس مسئلے پر بریفنگ لے سکتی ہیں کمیٹی اگر اپنی سفارشات کسی بھی مسئلے پر مرتب کریں تو متعلقہ ادارے کو اس پر عملدرآمد ہر صورت میں یقینی بنانا ہوتا ہے ۔ کمیٹی کسی بھی رکن اسمبلی کی استحقاق مجروح ہونے پر کارروائی کرسکتی ہے اور ملوث ذمہ داروں کے خلاف تادیبی کارروائی کی سفارش بھی کرسکتی ہے ۔ ورکشاپ کے دوران اس بات کا مشاہدہ کیا گیا کہ بلوچستان اسمبلی کی قائمہ کمیٹیوں کے اصول اور ضابطوں میں کسی بھی مسئلے پر از خود کارروائی کا آغاز کا شق نہیں ہے ایساکرنے کیلئے اسپیکر یا اسمبلی کی طرف سے مسئلہ ریفر ہوگا تب کارروائی کا آغاز ہوگا تعارفی ورکشاپ میں یواین ڈی پی کے کریم گبول ، دا¶د ننگپال ، سینیٹ آف پاکستان سے حفیظ شیخ اور طلبا و طالبات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبر نامہ نمبر 1490/2019
لورالائی25اپریل ۔ضلعی الےکشن کمشنر و رجسٹرےشن آفےسر سےد نذےر احمد حرےفال کی زےر صدارت ووٹر رجسٹرےشن کے حوالے سے اجلاس ہوا جسمےں تحصےلدار بوری اسد شےرانی،اے ڈی او لورالائی ادرےس کدےزی ،ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفےسر اےجوکےشن دکی سردارزادہ عبدلرشےد جوگےزئی،نمائندہ ڈسٹرکٹ اےجوکےشن دکی روبن عون , الےکشن آفےسر محمد سلےم اور دےگر نے شرکت کی اس موقع پر برےفنگ دےتے ہوئے سےد نذےر حرےفال نے کہا کہ تمام اسسٹنٹ رجسٹرےشن آفےسران ضلع لورا لائی و دکی اپنے تمام رائے دہندگان کو اس بات کا پابند بنائےں کہ وہ اپنا ووٹ سےکشن 27 الےکشن اےکٹ 2017 کے تحت اپنے شناختی کارڈ پر درج عارضی ےا مستقل پتے پر اندارج کروائےں اور تےسرے پتے والے اپنے ووٹ 31 مئی 2019 تک شناختی کارڈ پر درج مستقل ےا عارضی پتے کے مطابق منتقل کروائےں اس سلسلے مےں ضلعی الےکشن کمشنر لورالائی اور اسسٹنٹ رجسٹرےشن آفےسرز کے دفاتر عوام کی سہولت کے لئے کھلے رہیں گے اور اس ضمن مےں مذکورہ تمام دفاتر مےں عوام کو اپنے ووٹ کے بارے مےں مکمل طور پر آگاہی اور ووٹ کی رجسٹرےشن مےں ہر قسم کا تعاون کےا جائے گاضلعی الےکشن کمشنر رجسٹرےشن آفےسرنے تمام اسسٹنٹ رجسٹرےشن آفےسرز پر اس بات کی تاکےد کی کی سےکشن27 الےکشن اےکٹ2017 کے بارے مےں آگاہی پےدا کرےںاور اسی سےکشن کے تحت ووٹر رجسٹرےشن مےں کسی قسم کی کوتاہی نہےں کی جائے گی تمام اسسٹنٹ رجسٹرےشن آفےسرز نے اس بات کا عزم کےا کہ انکے دفاتر مذکورہ ووٹر رجسٹرےشن کے حوالے سے عوام مےں بھر پور آگاہی پےدا کرےنگے اور ووٹ رجسٹرےشن کے فارم وصول کئےے جائےں گے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
پریس ریلیز
کوئٹہ 25اپریل ۔صدر بلوچستان پینشنرز ایسو سی ایشن ڈاکٹر محمد زمان بلوچ کی زیر صدارت تعزیتی اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں محمد اسحاق نائب قاصد ( ریٹائرڈ ) کی ناگہانی وفات پر افسوس کاا ظہار کرتے ہوئے مرحوم محمد اسحاق کیلئے دعا ئے مغفرت کی گئی اور ان کے لواحقین سے اظہار ہمدردی کیا گیا ۔ اللہ تعالیٰ مرحوم و مغفور محمد اسحاق کو مغفرت فرمائے اور اپنے قرب و جوار رحمت میں جگہ عطا فرمائے ۔ مرحوم پینشنرز ایسو سی ایشن کا سر گرم رکن بھی تھا ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
پریس ریلیز
کوئٹہ 25اپریل ۔ بلوچستان فینسنگ ایسو سی ایشن کے زیر اہتمام تیسری نیشنل فینسنگ چیمپئن شپ2019 مورخہ 26 اپریل 2019 سے پی ایس بی ہال ایوب اسٹیڈیم کو ئٹہ میں شروع ہورہی ہے جس میں چاروں صوبوں کی فینسنگ ٹیموں کے علاوہ گلگت بلتستان پاکستان ریلوے ، پاکستان واپڈا اورپاکستان پولیس کی ٹیمیں شرکت کر رہی ہیں ۔ چیمپئن شپ کا افتتاح صوبائی مشیر برائے وزیراعلیٰ انرجی ڈیپارٹمنٹ مبین خلجی کررہے ہیں چیمپئن شپ 26 اپریل سے 28 اپریل تک جاری رہے گی ۔ چیمپئن شپ کے حوالے سے بات چیت کرتے ہوئے بلوچستان فینسنگ ایسو سی ایشن کے سیکریٹری جنرل حاجی محمد قاسم نے کہا کہ صوبے بلوچستان کے لئے ایک اعزاز کی بات ہے کہ فینسنگ کے کھیل کے فروغ اور ترقی کے لئے صوبہ سب سے آگے ہے یہ دوسری نیشنل چیمپئن شپ ہے جوکہ بلوچستان کے دار الخلافہ کوئٹہ میں منعقد کی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کی تمام تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ صوبائی حکومت اور محکمہ کھیل اس حوالے سے ہماری بھر پور معاونت اور تعاون فراہم کررہا ہے جس کے لئے ایسو سی ایشن ان کی شکر گزار ہے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment