خبرنامہ270/2019 
کوئٹہ25جنوری۔ صوبائی وزیر آبپاشی نوابزادہ طارق مگسی نے کہا ہے کہ بلوچستان کی نصف آبادی کا گزر بسر زراعت اور لائیو اسٹاک پر ہے اور اگر زراعت کے لیے پانی میسر نہیں ہوگا تو اس کے براہ راست اثرات معیشت پر ہونگے اس سنگین صورتحال سے نمٹنے کے لیے ہمیں صوبہ بھر میں ڈیمز کا نیٹ ورک بچھانا ہوگا۔تاکہ پانی کے ممکنہ بڑے بحران سے بچا جا سکے ۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے صوبائی مشیر لائیوسٹاک مٹھا خان کاکڑ اور سابق صوبائی وزیر میر طارق کھیتران سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جنہوں نے گذشتہ روز یہاں ان سے علیحدہ علیحدہ ملاقات کی۔اس موقع پر سیکرٹری آبپاشی سلیم اعوان بھی موجود تھے۔ نوابزادہ طارق مگسی نے کہا کہ بلوچستان میں ڈیموں کی تعمیر اشد ضروری ہے اور محکمہ آبپاشی اس ضمن میں جامع حکمت عملی کے تحت موثر اقدامات اٹھانے کے لیے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لارہا ہے۔ صوبائی وزیر نے مزید کہا کہ ہمیں سیلابی پانی کو ذخیرہ کرنے کیلئے چیک اور بڑے ڈیمز تعمیر کرنے ہوں گے جن سے زیر زمین پانی کے ذخائر میں اضافہ ہوگا اس کے علاوہ دستیاب پانی کے بہتر استعمال کو بھی یقنی بنانا ہوگا۔ نوابزادہ طارق مگسی نے کہا کہ ڈیمز اور بلوچستان کے نہری نظام کی بہتری اور توسیع کیلئے وفاق کا تعاون ناگزیر ہے اس ضمن میں اب وفاقی حکومت سے فنڈز کی فراہمی کیلئے رابطہ کیا جائے گا۔صوبائی وزیر نے کہا کہ بارشوں میں کمی کی وجہ سے زیر زمین پانی کی سطح تیزی سے گر رہی ہے اس صورتحال پر قابو پانے کے لیے محکمہ آبپاشی قابل عمل سفارشات کی تیاری اور زیر تعمیر ڈیمز کی فوری تکمیل کو یقنی بنانے کے لیے موثر اقدامات اٹھا رہا ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ مجوزہ ڈیمز کے لیے مکمل سروے اور اسٹڈی کیساتھ ساتھ آئندہ سوپارکو سے بھی مواصلاتی معاونت لی جائے گی تاکہ ڈیمز کی تعمیر کے لئے مناسب مقام منتخب کیا جاسکے۔
()()()
خبرنامہ271/2019 
کوئٹہ25جنوری۔صوبائی مشیر کھیل و ثقافت عبدا لخالق ہزارہ نے کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت و زیراعلیٰ بلوچستان جام کمال کی قیادت میں مسائل کے حل اور ترقی و خوشحالی کیلئے کوشاں ہے صحت تعلیم سمیت دیگربنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے عملی اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے رکن صوبائی اسمبلی قادر نائل ، سابق صوبائی امیر جماعت اسلامی عبدالمتین اخوندزادہ ، مختلف قبائلی عمائدین اور اپنے حلقے سے آئے ہوئے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کے معیار کی بہتر ی وسائل کے درست استعمال اور ترقیاتی منصوبوں کو مرتب کرنے کے حوالے سے جامع پالیسی اور حکمت عملی اپنائی جارہی ہے تاکہ عوام کو فوری ریلیف مل سکے ترقیاتی اسکیموں کو ہر صور ت میں پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے گاجس سے ترقیاتی کاموں کے خاطر خواہ نتائج حاصل ہونگے صوبائی مشیر کھیل کا مزید کہنا تھا کہ عوام کے مسائل انکی دہلیز پر حل کرنااور عوامی خدمت ہماری اولین ترجیح ہے اقتدار اور ذات ہماری منزل نہیں بلا رنگ و نسل عوامی کی خدمت کرنامیری اہم تر جیحات میں شامل ہیں عوام نے جس اعتماد کا اظہار کیا ہے انہیں مایوس نہیں کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ میرے دروازے عوام کی خدمت کیلئے ہر وقت کھلے رہیں گے۔ 
()()()
خبرنامہ272/2019 
کوئٹہ 25جنوری ۔کمشنر کوئٹہ ڈویژن محمد ہاشم غلزئی کی زیر صدارت کوئٹہ میں کلچر ل فیسٹیو ل کے انعقاد کے حوالے سے اجلاس منعقد ہوا ۔ اجلاس میں ڈپٹی کمشنر کوئٹہ طاہر ظفر عباسی ، اسسٹنٹ کمشنر (ریو نیو ) کوئٹہ ثناء ماہ جبین ، ڈسٹرکٹ ایجو کیشن آفیسر اعجاز احمد ، مطیب خان محکمہ ادارہ ثقافت سے اصغر علی ، خدائے رحیم اور دیگر ادارے میں ریلوے ،سمال انڈسٹریز کے آفیسران بھی موجود تھے ۔ اجلا س میں فیصلہ کیا گیا کہ عوام کو تفریحی سہولیات کی فراہمی اور مثبت سر گرمیوں کے فروغ کے سلسلے میں کوئٹہ میں مختلف غیر نصابی سر گرمیوں کا انعقاد کیا جائے گا جس میں تصویری نمائش ، کوئٹہ کی پرانی تصویریوں کے مقابلے ، کشید کاری اور دستکاری کی نمائش ، میوزیکل پروگرام ، مختلف مقامی زبانوں میں مشاعرہ ، ڈرامہ نگاری ، رائفل شوٹنگ اور دیگر کلچر ل مقابلوں کا انعقاد کیا جائے گا ۔ ان مقابلوں میں عوام کی شرکت کو یقینی اور جیتنے والوں کیلئے انعامات بھی مقرر کئے جائیں گے ۔ اجلاس سے کمشنر کوئٹہ ڈویژن نے کہا کہ صوبائی حکومت کی جانب سے عوام کی تفریحی سہولیات اور مثبت سر گرمیوں کے فروغ کے سلسلے میں ایسے کلچر ل فیسٹیول کا انعقاد کیا گیا جس میں لوگوں کو صحت مندانہ سر گرمیوں کی طرف راغب کیا جاسکے ۔انہوں نے کہا کہ تفریحی پروگراموں کے انعقاد سے مقامی نوجوانوں کو اپنی صلاحیتیں اجاگر کرنے کا موقع ملے گا جبکہ وہ اپنی صلاحیتیوں کو بروئے کار لاتے ہوئے صوبے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکیں گے انہوں نے کہا کہ کلچرل فیسٹیول میں طلباء و طالبات کیلئے بھی غیر نصابی سر گرمیوں کا انعقاد سے تعلیمی ماحول میں بہتری آئے گی جبکہ ان کی صلاحیت بھی اجاگر ہو گی ۔ 
()()()
خبرنامہ273/2019 
کوئٹہ 25جنوری ۔صوبائی سیکرٹری ٹرانسپورٹ ڈیپارٹمنٹ بلوچستان اور کمشنر کوئٹہ کی خصوصی ہدایت پر ٹریفک پولیس و آر ٹی اے کے عملہ نے سریاب روڈ یونیورسٹی چوک پر کم عمر ڈرائیور،کاغذات،لائسنس,پرمٹ نہ رکھنے والے اور بغیر فٹنس سرٹیفکیٹ والے ڈرائیوروں کے خلاف مشترکہ کارروائی کے دوران 39 گاڑیوں کے چالان کیے اور 10 رکشوں کو غیر قانونی ہونے اور کم عمر ڈرائیونگ پر بند کر دیئے اس موقع پرسپریڈنٹ آر ٹی اے کوئٹہ حمید اللہ محمد حسنی، ڈی ایس پی ٹریفک پولیس(صدر) شیراحمد کاکڑ کے علاوہ پولیس اور لیویز عملہ بھی موجود تھا سپرنٹنڈنٹ آر ٹی اے حمید اللہ محمد حسنی نے کہا کہ شہر میں دو نمبر گاڑیوں،رکشوں اور بغیر فٹنس سرٹیفکیٹ والے ڈرائیوروں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کر دیا ہے اور پچھلے کئی دنوں سے روزانہ کی بنیاد پر کارروائیاں جاری ہیں اور آگے بھی مزید ایسی کاروائیاں مشترکہ طور پر جاری رہیں گی انہوں نے کہا کہ کوئٹہ شہر میں ٹریفک کے حوالے سے کافی بہتری دیکھنے میں نظر آ رہی ہے ڈی ایس پی ٹریفک پولیس کوئٹہ شیر احمد کاکڑنے بھی کہا کہ شہر میں بغیر فٹنس سرٹیفیکیٹ اور غیر لائیسنس یافتہ ڈرائیوروں کے خلاف کاروائی بے حد ضروری ہے اس سے شہر میں ٹریفک کی روانی میں کافی بہتری آئے گی انہوں نے کہا کہ کوئٹہ شہر میں نان کسٹم پیڈ گاڑیوں اور بغیر رجسٹرد گاڑیوں کی وجہ سے ٹریفک کا نظام متاثر ہو رہا ہے اس قسم کی کاروائیوں کا مقصد شہر میں ٹریفک کی روانی کو بہتر اور غیر قانونی گاڑیوں کا خاتمہ ہے۔
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ 25جنوری ۔محکمہ زراعت بلوچستان کی پریس ریلیز کے مطابق یہ امر نہایت خوش آئند ہے کہ معروف عالمی ادارہ نے پورے پاکستان کی سطح پر بلوچستان کے ضلع لسبیلہ اور بار کھان سے پیدا کردہ کپاس کو نامیاتی قرار دیا ہے ۔ یہ بلوچستان کے لئے ایک نہایت منفرد اعزاز ہے ۔ اس اعزاز کے حصول میں محکمہ زراعت بلوچستان ،W.W.F پاکستان اور بلوچستان کے زمیندار حضرات کی مسلسل محنت و کاوش قابل تحسین ہے۔ عالمی اور ملکی سطح پر نامیاتی کپاس کی بڑھتی ہوئی ضرورت اور مانگ کے پیش نظر نیز بلوچستان میں نامیاتی کپاس کے موجود بہترین مواقع و صلاحیت کو مد نظر رکھتے ہوئےW.W.F پاکستان اور محکمہ زراعت بلوچستان کی ایک افتتاحی تقریب بسلسلہ ’’ نامیاتی کپاس کی پہلی گانٹھ ‘‘ 30 جنوری 2019 کوکوٹ سبزل صادق آباد میں منعقد کی گئی ہے ۔ جس میں وزیر زراعت حکومت بلوچستان جناب انجینئر زمرک خان اچکزئی ، سیکریٹری زراعت و دیگر اعلیٰ حکام و ضلع لسبیلہ اور بارکھان کے زمیندار شرکت کریں گے۔ 
()()()
پریس ریلیز
کوئٹہ 25جنوری ۔میڈیکل سپرنٹنڈنٹ بولان میڈیکل کمپلیکس ہسپتال کوئٹہ برائے سال 2018 بی ایم سی ہسپتال کی کار کردگی کے بارے میں بمقام بی ایم سی ہسپتال کانفرنس ہال میں مورخہ 28 جنوری 2019 بروز پیر بوقت 01:00 بجے دوپہر کو پریس کانفرنس کریں گے ۔ 
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ 25جنوری ۔عبدالغفور پائنز ئی جوکہ گزشتہ روز وفات پاگئے تھے اُن کے آبائی گاؤں زندارن میں سپر دخاگ کیا گیا برواز اتوار 27جنوری سے اُنکی فاتحہ خوانی جامعہ مسجد اے ون سٹی میں ہوگئی ۔مرحوم عبدالرؤف پائنزئی ،ماسٹر عبدلو دود پائنزئی کے بھائی تھے ۔مدثر ، محبوب اور فداکے والد، مرحوم ڈاکٹر ظفر پائنزئی ،علی گل پائنزئی اور جمعیت کے صوبائی رہنما عبدلرازق پائنزئی کے چچا تھے ۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment