HomeNews23-01-2020 THURSDAY (FILE NO.2)

23-01-2020 THURSDAY (FILE NO.2)

23-01-2020 THURSDAY (FILE NO.2)

خبرنامہ

خبرنامہ نمبر265/2020
گوادر23جنوری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان سے ماہی گیر اتحاد کمیٹی کے اراکین پر مشتمل وفد نے ملاقات کی، وفد نے وزیراعلیٰ کو بریک واٹر کی تعمیر کے منصوبے میں تاخیر اور گوادر اولڈ سٹی میں نکاسی آب کے نظام کی خرابی سمیت دیگر مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے ان کے حل کی درخواست کی، اس موقع پر وزیراعلیٰ بلوچستان نے ڈائریکٹر جنرل جی ڈی اے کو ہدایت کی گوادر کے پرانے شہر میں نکاسی آب سمیت جاری دیگر ترقیاتی منصوبوں کی فوری تکمیل کو یقینی بنایا جائے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ جلد ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کا اجلاس منعقد کرکے بریک واٹر کے منصوبے کی منظوری دی جائے گی اور اس منصوبے پر فوری طور پر کام کا آغاز کیا جائے گا۔ وفد نے توجہ اور ہمدردی سے ان کے مسائل سننے اورا ن کے حل کے احکامات جاری کرنے پر وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا۔
()()()
خبرنامہ نمبر 266/2020
گوادر23جنوری:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی زیرصدارت منعقد ہونے والے ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں گوادر ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے امور اور تعلیم اور صحت کے جاری منصوبوں کی پیشرفت کا جائزہ لیا گیا، ڈائریکٹر جنرل جی ڈی اے شاہ زیب کاکڑ نے اجلاس کو بریفنگ دی۔ صوبائی وزیر ظہور احمد بلیدی، وزیراعلیٰ کے کوآرڈینیٹر عبدالرؤف رند، ایڈیشنل چیف سیکریٹری منصوبہ بندی وترقیات عبدالرحمن بزدار، سیکریٹری مواصلات، سیکریٹری صحت، کمشنر مکران ڈویژن اور ڈپٹی کمشنر گوادر کے علاوہ دیگر متعلقہ حکام اجلاس میں شریک ہوئے، اجلاس کو بتایا گیا کہ گوادر اولڈ سٹی کی ٹاؤن پلاننگ، نکاسیء آب، سڑکوں کی پختگی اور پانی کی فراہمی کے منصوبوں پر کام جاری ہے، تین ارب 80کروڑ روپے کی لاگت سے سورڈ ڈیم سے گوادر تک پانی کی پائپ لائن کی تنصیب کے بعد ڈیم سے گوادر کو پانی کی فراہمی کا آغاز کردیا گیاہے، گوادر کی تمام چھوٹی بڑی اسکیموں کو روڈ نیٹ ورک سے منسلک کیا جارہا ہے اور گوادر میں 90منزل تک ہائی رائز عمارتیں تعمیر ہوسکیں گی، اجلاس کو بتایا گیا کہ گوادر میں دس کروڑ روپے کی لاگت سے ٹراما سینٹر اور پندرہ کروڑ روپے کی لاگت سے ڈی ایچ کیو ہسپتال کی نئی عمارت کی تعمیر کے کام کا آغاز کیاجارہا ہے، گوادر میں فٹ سال گراؤنڈ کی تعمیر کے علاوہ سپورٹس کمپلیکس بھی تعمیر کیا جائے گا جبکہ کوہ باطل پر سنسٹ پوائنٹ پارک رواں سال میں مکمل کرلیا جائے گا، اجلاس کو بتایا گیا کہ نیوٹاؤن ہاؤسنگ اسکیم میں پارک کی تعمیر اور سٹریٹ لائٹس کی تنصیب کا کام بھی جاری ہے، اجلاس میں گوادر ماسٹر پلان کی منظوری کے تناظر میں جی ڈی اے کے بائی لاز کا جائزہ بھی لیا گیا جن کی منظوری کے بعد تعمیرات کے لئے این او سی کا اجراء شروع کردیا جائے گا، اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ گوادر اب عملی ترقی کررہا ہے اور اس کا شمار جلد دنیا کے ترقیافتہ شہروں میں ہوگا، گوادر کی ترقی مربوط حکمت عملی کے تحت کی جارہی ہے، وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ گوادر واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ کا پانی پارکوں، کارواش اور تعمیراتی کاموں کے لئے تجارتی طور پر استعمال میں لایا جائے اور حاصل ہونے والی آمدنی پلانٹ کو چلانے پر خرچ کی جائے۔ انہوں نے ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل اور معیار کو یقینی بنانے کی ہدایت کی، وزیراعلیٰ نے گوادر میں صحت اور تعلیم کے محکموں میں خالی اسامیوں پر اہلیت کے مطابق بھرتی کی ہدایت بھی کی۔
()()()
خبرنامہ نمبر 267/2020
گوادر23جنوری:۔بلوچستان عوامی پارٹی کے صدر وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان سے بی اے پی گوادر کے عہدیداروں اور کارکنوں نے ملاقات کی، اس موقع پر پارٹی امور، اس کی تنظیم نو اور دیگر معاملات پر بات چیت کی گئی، پارٹی کارکنا ن نے پارٹی کومتحرک اور فعال بنانے پر پارٹی کے صدر کی کاوشوں اور پالیسیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ان کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا، کارکنوں کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان جس طرح پارٹی کو آگے لے کر چل رہے ہیں اور گوادر سمیت صوبہ بھر کی ترقی کویقینی بنارہے ہیں اس کی مثال ماضی میں نہیں ملتی، وزیراعلیٰ نے پارٹی کارکنوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انہیں اپنے ساتھیوں پر مکمل اعتماد ہے کہ وہ بی اے پی کو مزید مقبول اور متحرک بنانے میں اپنا کردار ادا کریں گے، صوبائی وزیر ظہور احمد بلیدی، وزیراعلیٰ کے کوآرڈینیٹر عبدالرؤف رند اور پارٹی کے ضلعی رہنما بھی اس موقع پر موجود تھے۔
()()()
خبرنامہ نمبر268/2020
گوادر23جنوری:۔ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان واجہ شئے محمد مرحوم کی رہائش پر گئے جہاں انہوں نے ان کی وفات پر ان کے بھائی شئے محمد عمر سے تعزیت کا اظہار کیا اور مرحوم کے لئے فاتحہ خوانی کی، صوبائی وزیر میر ظہور احمد بلیدی او ر وزیراعلیٰ کے کوآرڈینیٹر عبدالرؤف رند بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔
()()()
خبرنامہ نمبر269/2020
کوئٹہ23جنوری:۔چیف سیکرٹری بلوچستان کیپٹن (ر) فضیل اصغر نے کہاکہ صوبائی حکومت کوئٹہ کی روایتی خو بصورتی کو بحال کرنے کیلئے اقدامات کررہی ہے اور شہر میں ٹریفک نظام کی بہتری پربھی خصوصی توجہ دے رہی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کو ئٹہ شہر کی خو بصورتی اور ٹریفک نظام میں بہتری کے حوالے سے اجلا س کی صدارت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہاکہ ٹریفک نظام کی بہتری کیلئے پارکنگ پلازے اور انڈر پاسز تعمیر کیلئے جائینگے،اور ٹریفک سگنلز بھی فعال کیئے جائینگے انہوں نے کہاکہ شہر کی خوبصورتی کیلئے مختلف جگہوں پر با غبانی کی جائیگی۔انہوں نے شہرصفائی اور سیوریج نظام کو بہتر کرنے کی ہدایت کی انہوں نے ائیر پورٹ روڈ کے دونوں اطراف آمد ورفت کو متاثر کرنے والی ریڑ ھیو ں کے خلا ف کاروائی کی بھی ہدایت کی انہوں نے کہا کہ ٹریفک انجینئر نگ کو بہتر بنایا جائے۔
()()()
خبرنامہ نمبر270/2020
کوئٹہ23جنوری:۔ چیف سیکرٹری بلوچستان کیپٹن (ر) فضیل اصغر سول سیکرٹریٹ میں مختلف محکموں کا دورہ کیا اس موقع پر انہوں نے آفیسرز اور عملے کی موجودگی کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ تمام سرکاری ملازمین عوام کی فلاح و بہبود کی بہتری کیلئے کام کریں اور اپنے فرائض منصبی کوپوری دیا نتداری او ر لگن کے ساتھ سرانجام دیں۔انہوں نے کہاکہ ملازمین بلوچستان کی ترقی میں اپنا کردار اور عوام کی خدمت کو اپنا شعار بنائیں۔انہوں نے غیر حاضر ملازمین کے خلاف قانونی کا روائی کی بھی ہدایت کی انہوں نے کہاکہ تمام محکموں میں صفائی کانظام بہتر بنایاجائے اور بلاکس کے آگے درخت لگائیں تاکہ سول سکرٹریٹ سرسبز وشاداب نظرآئے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر271/2020
کوئٹہ 23جنوری:۔ صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو نے کہا کہ لیویز فورس کی استعداد کار میں اضافہ اور جدید آلات اور گاڑیوں کی فراہمی سے صوبے میں امن وامان کی مجموعی صورتحال بہتر ہوگی صوبے بھر میں امن و امان کی صورتحال اطمینان بخش ہے۔جس کا سہرا قانون نافذ کرنے والے تمام اداروں کو جاتاہے.جن کی قربانیوں اور فرض شناسی کی بدولت امن و امان کی صورتحال ماضی کے مقابلے میں بہت بہترہوچکی ہے۔ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر داخلہ نے کوئٹہ میں ڈائریکٹرجنرل لیویز کے دفتر کے دورے کے مو قع پر کیا۔ اس موقع پر ڈائریکٹر جنرل لیویز فورس مجیب الرحمن قمبرانی بھی انکے ہمراہ موجود تھے صوبائی وزیر داخلہ نے کہا کہ لیویز فورس اپنے فرائض منصبی کو خلوص نیت اور ایمانداری سے سرانجام دیتے ہوئے صوبے کے دور دراز علاقوں اور سنگلاخ پہاڑوں پر تعینات ہیں۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی وجہ سے معاشرے میں جرائم کی شرح میں نمایاں کمی آئے گی۔ فورس کی استعداد کار کو بڑھانے کے لئے صوبائی حکومت اقدامات اٹھا رہی ہے۔ تاکہ شرپسند عناصر کا مقابلہ کرنے کے لیے فورسز کو نئے ہتھیاروں سے لیس کیا جائے گا۔ موجودہ صوبائی حکومت امن و امان کی پرامن صورتحال برقرار رکھنے کیلئے پرعزم ہے۔ صوبائی حکومت پولیس/لیویز سمیت دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہل کاروں کی فلاح و بہبود کے لئے بھی موثر اقدامات کر رہی ہے۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ میں سلام پیش کرتا ہوں سکیورٹی فورسز کے ان جوانوں کو جنہوں نے ملک و صوبے کی خاطر اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیااور ان کی قربانیوں کی بدولت آج ہم پرامن بلوچستان میں سکون کی زندگی گزار رہے ہیں۔
()()()
خبرنامہ نمبر272/2020
گوادر23جنوری:۔سیکریٹری مواصلات اور تعمیرات نورالامین مینگل نے وزیراعلیٰ کی ہدایت پر ٹراما سینٹر اور ڈی ایچ کیو ہسپتال کی نئی عمارت کی تعمیر کے لئے مختص اراضی کا معائنہ کیا جہاں انہیں تعمیراتی منصوبوں کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ اراضی کے حتمی انتخاب کے بعد جلد تعمیراتی کام کا آغاز کردیا جائے گا، سیکریٹری مواصلات نے کہا کہ دونوں منصوبے گوادر کی مجموعی ترقی میں اہمیت کے حامل ہیں جن کی تکمیل سے ضلع گوادر کے عوام کو صحت اور علاج معالجہ کی بہتر سہولتیں مل سکیں گی، دریں اثناء سیکریٹری مواصلات نے ناقص کارکردگی کی بنیاد پر ایس ڈی او بلڈنگ پسنی امین اللہ مندوخیل کو فوری طور پر معطل کردیا ہے اور زیرتعمیر پسنی ہسپتال کے منصوبے کی انکوائری کی ہدایت کرتے ہوئے ایس ای کیچ کو انکوائری افسر مقرر کیا گیا ہے۔
()()()

خبرنامہ نمبر273/2020
کوئٹہ23جنوری:۔ڈپٹی کمشنر /کلکٹر ضلع مستونگ ایک نوٹیفکیشن کے مطابق موضع کپ ٹاپہ اسپلنجی تحصیل دشت میں کوئٹہ الیکٹرانک سپلائی کمپنی لمیٹڈ کو 132کے وی گریڈ اسٹیشن کے لیے 6ایکٹر اراضی درکار ہے لہذا مذکورہ موضع کے قابضین کو مطلع کیا جاتا ہے کہ مذکورہ اراضی معلومات اور دیگر امور کے بارے میں دفتر ہذا سے دفتری اوقات کار میں رابطہ کرسکتے ہیں۔
()()()
خبرنامہ نمبر274/2020
کوئٹہ 23 جنوری:۔ صوبائی وزیر آبپا شی نوابزادہ طارق مگسی سے سینیٹر شمیم آفریدی، رکن قومی اسمبلی احسان اللہ ریکی اور سابق سینیٹر نوابزادہ سیف اللہ مگسی نے یہاں ان کے دفتر میں ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران صوبے میں جاری ترقیاتی منصوبوں سمیت دیگر باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
()()()

Share With:
Rate This Article
No Comments

Leave A Comment