خبر نامہ نمبر 601/2019
کوئٹہ21فروری۔ گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی سے گورنر ہاؤس کوئٹہ میں کوئٹہ کے دورے پر آئے ہوئے خیبر پشتونخواہ کے اراکین اسمبلی کے وفد نے اپنے ڈپٹی اسپیکر محمود جان کی قیادت میں ملاقات کی۔ گورنر بلوچستان نے بلوچستان کی تاریخ ، ثقافت اورموجودہ صورتحال سے متعلق تفصیلات سے انہیں آگاہ کیا ۔ انہوں نے وفد کے اراکین سے بات چیت کے دوران کہا کہ بلوچستان میں سیکیورٹی فورسز کی کاوشوں اور عوام کے بھر پور تعاون سے امن و امان کی صورتحال میں نمایاں بہتر ی آئی ہے اور خاص طور سے افغانستان اور ایران کے ساتھ ملنے والی سر حدوں پر حالات معمول کے مطابق ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ صوبے میں امن کی بحالی کے ساتھ ہی سرمایہ کاری کے امکانات اور مواقع میں منطقی طور پر بہتری آئی ہے ۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ بلوچستان عام آدمی کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی ، غربت اور بیروزگار ی کے خاتمے پر توجہ دی جاری ہے اور ہمیں یقین ہے کہ سماجی اقتصادی ترقی کے ذریعے عوام میں موجود احساس محرومی کو دور کرنے میں کامیاب ہوں گے جس کے بعد سماج دشمن عناصر کے پیدا ہونے کا خطرہ ختم ہو جائیگا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ بلوچستان میں مالی اور انتظامی عملداری قائم ہورہی ہے اور معاشرے سے کمیشن اور کرپشن کے خاتمے کیلئے ہم پر عزم ہیں ۔ آخر میں مہمانان گرامی کے درمیان تحائف اور یادگاری شیلڈز کا تبادلہ بھی ہوا۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 602/2019 
کوئٹہ21فروری۔ گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی جو پبلک سیکٹر میں بلوچستان کی یونیورسٹیوں کے چانسلر بھی ہیں نے کہا ہے کہ اعلیٰ تعلیمی اداروں کے قیام اور تعمیر کافی نہیں ہے بلکہ یونیورسٹیوں اور ان کے کیمپسز میں ضروری سہولیات کی فراہمی اور معیار تعلیم کی بہتری کیلئے نتیجہ خیز عملی اقدامات پر توجہ دینا ضروری ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے صوبے میں سرکاری شعبے کی یونیورسٹیوں کی کار کردگی خاص طور سے مالی و انتظامی امور ، مالی مشکلات انڈوومنٹ فنڈ کی منظوری ، نئے اساتذہ کی تعینا تیوں کا جائزہ لینے کیلئے منعقدہ وائس چانسلر ز مشاورتی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر گورنر بلوچستان نے کہا کہ اعلیٰ تعلیمی اداروں میں تدریس کا عمل محض نصاب تک محدود نہیں ہونا چاہیئے ۔ بلکہ تحقیق ذرائع اورا مواقع کے فروغ دیکر معاشرے میں جدت ، تعمیر اور ترقی کے عمل کو مستحکم بنانا بھی ان اداروں کے فرائض میں شامل ہیں ۔ مشاورتی اجلاس میں مختلف امور و معاملات پرتجاویزو سفارشات پیش کی گئیں جن کا جائزہ لینے اور مرتب کرنے کے بعد انہیں صوبائی اوروفاقی سطح پر متعلقہ اداروں کو بھیجوایا جائیگا ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 603/2019
سبی 21فروری :۔سالانہ سبی میلا 2019 کی مناسبت سے 23 فروری کو مینا بازار منعقد کیا جائے گا یہ بازار خصوصی طور پر خواتین اور بچوں کے لئے ہر سال منعقد کیا جاتا ہے خصوصا سبی کی خواتین کے ساتھ ساتھ دیگر علاقوں سے آئی ہوئی خواتین کے لئے بھی انتہائی دلچسپی کا مظہر ہوتا ہے ڈپٹی کمشنر سبی سید زاہد شاہ اور ڈی او خواتین سبی نصرت اقبال اور ڈی ای او خواتین سبی شازیہ حفیظ کا کردار مینا بازار کو منعقد کرنے میں اہم ہوتا ہے مینا بازار 23 فروری کو صبح (9:00)بجے شروع ہو کر شام پانچ بجے تک رہتا ہے جن میں خواتین اور بچوں کی دلچسپی کے لئے کلچر شو ورائٹی شو پپٹ شو کا دلکش مظاہرہ پیش کیا جاتا ہے جبکہ کھانے پینے کے اسٹال کے ساتھ ساتھ کاسٹ میٹکس دستکاری سنٹر اور دیگر اشیا کے اسٹال نمایاں لگا یاجاتے ہیں۔
()()()
خبر نامہ نمبر 604/2019
لسبیلہ21فروری :۔ سیکریٹری ثانوی تعلیم محمد طیب لہڑی نے کہا ہے کہ گورنمنٹ مڈل سکول جام یوسف کالونی حب میں تعلیم کا اعلیٰ معیار قائم کرنے میں اساتذہ کی محنت اور بلوچستان ایجوکیشن پراجیکٹ کا تعاون قابل ستائش ہے۔ سکول میں بچوں کی تعداد اور اعلی معیار کو دیکھتے ہوا سکول کو ہائی کا درجہ دے کر ہائی کلاسوں کا اجراء اور ادارے کو جدید سہولیات سے آراستہ کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گورنمنٹ مڈل سکول جام یوسف کالونی کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیاسیکرٹری تعلیم نے کہا کہ حکومت جدید اور معیاری تعلیم کے فروغ کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کررہی ہے۔سیکرٹری تعلیم نے کہا کہ صوبے میں معیار تعلیم کی بہتری کیلئے مشترکہ جدوجہد کی ضرورت ہے۔ سرکاری ا سکولوں میں معیاری تعلیم کے فروغ میں بلوچستان ایجوکیشن پراجیکٹ کا تعاون اور کردار قابل تعریف ہے۔ اس موقع پر بلوچستان ایجوکیشن پراجیکٹ کے منیجر ہارون کاسی نے شرکاء کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ محکمہ تعلیم کی ہدایات کی روشنی میں پرائمری سکول جام یوسف کالونی حب کو مڈل کا درجہ دے کر اسے جدید سہولیات سے آراستہ کیا گیا ہے جس میں باقاعدہ این ٹی ایس کے ذریعے ای ایس ٹی اساتذہ کی تقرری اوران کو جامع انداز میں تربیت دینے کے علاوہ ا سکول میں ابتدائی تعلیمی مرکز (ای سی ای) ، آئی ٹی اور سائنس لیبارٹری کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔ ادارے میں بچوں کو تدریسی مواد فراہم کرنے کے علاوہ ایک لائبریری بھی قائم کیا گیا ہے جبکہ تفریحی و غیر نصابی سرگرمیوں کے فروغ کے لیے اسپورٹس کا جدید سامان بھی مہیا کیا گیا ہے گورنمنٹ مڈل سکول جام یوسف کالونی میں بچوں کو تعلیمی ماحول کی فراہمی کیلیے آئی ٹی لیبارٹری کو جدید لیپ ٹاپس سے آراستہ کیا گیا ہے جبکہ لیب میں بجلی کی عدم موجودگی کی صورت میں باقاعدہ سولر نظام کی تنصیب عمل میں لائی جائے گی۔ منیجر ہارون کاسی نے کہا کہ بلوچستان ایجوکیشن پراجیکٹ بلوچستان میں اسکولوں اور تعلیمی بہتری کے لیے محکمہ تعلیم کو ہر ممکن تعاون اور مدد فراہم کرنے کی کوششیں کر رہی ہے تاکہ بلوچستان کے بچوں کو اعلی معیار کی تعلیم دی جا سکے۔افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر واحد شاکر نے سیکریٹری تعلیم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ تعلیم ضلع لسبیلہ میں تعلیم کے فروغ میں خصوصی دلچسپی لے رہی ہے اور گورنمنٹ مڈل سکول جام یوسف کالونی کی کارکردگی اس بات کا مظہر ہے۔ انہوں نے مزید کہا بلوچستان ایجوکیشن پراجیکٹ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی کو بھرپور تعاون فراہم کررہی ہے اور نئے اسکولوں کے قیام کے علاوہ موجودہ سرکاری ا سکولوں میں جدید سہولیات کی فراہمی میں مدد و کمک فراہم کر رہی ہے ۔سیکریٹری ثانوی تعلیم نے اس اُمید کا اظہار کیا کہ جام یوسف کالونی سکول علاقے میں تعلیمی بہتری کے لیے سنگ میل ثابت ہوگا اور محکمہ تعلیم اس حوالے سے ہر ممکن اقدامات اٹھائے گی۔
()()()
خبر نامہ نمبر 605/2019 
سبی 21فروری :۔ڈپٹی کمشنر سبی آرگنائزنگ کمیٹی سبی میلا 2019 انتہائی جوش و خروش سے 24 فروری 2019 کو منعقد کیا جائیگا میلے میں ہارس اینڈ کیٹل شو پاک فوج ایف سی اور پولیس کی جانب سے بینڈ کا دلکش مظاہرہ فلاور شو کا بہترین مظاہرہ پیش کیا جائے گا جبکہ بالاناڑی کے بہترین نسل کے بیل گائے اور مختلف علاقوں کے بھیڑ بکریوں کا خوبصورت نمائش بھی پیش کیا جا تا ہے سبی میلے کو مزید خوبصورت بنانے کے لئے گھوڑا ڈانس علاقائی رقص آرمی پریڈ نیزابازی موٹرسائیکل جمپ اسپیشل چلڈرن شو اور رات کو محفل موسیقی اور آتش بازی کا زبردست مظاہرہ میلے کے اختتام تک جاری رہتا ہے سبی میلے میں خواتین کے لیے 26 فروری بروز منگل کو ایک دن خصوصی مختص کیا جاتا ہے جس میں صرف اور صرف خواتین اور بچوں کو اجازت ہوتی ہے سبی میلے کے دوران پاک فوج ایف سی اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے سکیورٹی کے موثر انتظامات کرتے ہیں۔
()()()
خبر نامہ نمبر 606/2019
کوئٹہ 21 فروری :۔ سیکرٹری ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی کوئٹہ ڈویژن روحانہ گل کاکڑ اور ڈی ایس پی ٹریفک پولیس شبانہ حبیب نے پولیس اور لیویز کے ہمراہ مل کر ائیرپورٹ روڈ کوئٹہ پر غیر قانونی گاڑیوں، سرچ لائٹس، فٹنس سرٹیفکیٹ ، ڈرائیونگ لائسنس ،کاغذات اور روٹ پرمٹ نہ رکھنے والی پبلک اور مال برادر گاڑیوں کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے 2بسیں،3منی بسیں،ایک مزدا اور2 پک اپ بغیر فٹنس اور پرمٹ نہ رکھنے پر بند کردئیے گئے اور 35 گاڑیوں کو ڈرائیونگ لائسنس ، فٹنس سرٹیفیکٹ نہ رکھنے پر چالان کئے گئے۔سیکرٹری آر ٹی اے روحانہ گل کاکڑ نے کہا کہ کوئٹہ شہر اور قومی شاہراہوں پر غیر قانونی گاڑیوں، سرچ لائٹس ،اورلوڈنگ ،بغیر فٹنس ،کاغذات اورروٹ پرمٹ نہ رکھنے والی گاڑیوں کے خلاف کاروائی جاری رہے گی ۔ٹرانسپورٹ کی حالت زار بہتر بنانے اور عوام کے جان و مال کے تحفظ کے لئے ہر ممکن اقدامات کئے جارہے ہیں جبکہ قومی شاہراہوں پر حادثات کی روک تھام کے سلسلے میں پبلک اور مال بردار گاڑیوں میں لگی سرچ لائٹس ہٹانے کا عمل بھی جاری ہے اس کے علاوہ غیر قانونی گاڑیوں کے خلاف کارروائی میں مزید تیزی لائی جا رہی ہے جبکہ قومی شاہراہوں پر اور لوڈنگ اور تیز رفتاری کا مظاہرہ کرنے والے ڈرائیوروں کے خلاف بھی سخت اقدامات کئے جا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ شہر میں غیر قانونی گاڑیوں کے خلاف کاروائیاں جاری رہے گی لہٰذا عوام الناس ٹریفک پولیس کے قانون کے مطابق گاڑیوں کے ڈ رائیونگ لائسنس، کاغذات اور روٹ پرمٹ کی موجودگی کو یقینی بنائے کاروائی کے دوران گاڑیوں کے مالکان کے پاس اصل کا غذات اور روٹ پرمٹ نہ ہونے پر ان کی گاڑی بند کردی جائے گی۔
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ21فروری۔ حاجی بشیر احمد سمالانی سابقہ چیف آفیسر لوکل گورنمنٹ گزشتہ روز بروز جمعرات بقضائے الٰہی انتقال کرگئے ۔ وہ میر شادی خان سمالانی ( مرحوم ) کے کزن اور محمد ندیم اختر سمالانی محکمہ ( پی اینڈ ڈی ) کے سسر اور ظہیر احمد،رشید احمد کے والد،نصیر احمد سمالانی کے بھائی تھے ۔ مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی ان کی رہائش گاہ مسجد توت طوغی روڈ تیل گودام میں کل مورخہ 22فروری 2019 بروز جمعہ سے لی جائیگی ۔ 
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment