خبرنامہ نمبر1454/2019
کوئٹہ 20اپریل:۔حکومت بلوچستان نے ضلع لسبیلہ میں واقع ہنگلاج ماتا میں ہندو یاتریوں کو سہولتوں کی فراہمی کے لئے جامع ترقیاتی پلان مرتب کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیراعلیٰ بلوچستان کی جانب سے مواصلات ، سیاحت اور مذہبی امور کے محکموں کو ہنگلاج ماتا میں آنے والے ہندو یاتریوں اور سیاحوں کو سہولیات کی فراہمی اور علاقے کی مجموعی ترقی کے لئے پارلیمانی سیکریٹری برئے مذہبی امور دنیش کمار کی مشاورت سے ترقیاتی پلان بناکر 25اپریل 2019ء تک پیش کرنے کی ہدایت کی گئی ہے تاکہ ان منصوبوں کو اگلے مالی سال کے ترقیاتی پروگرام میں شامل کیا جاسکے۔واضح رہے کہ ہر سال ہزاروں کی تعداد میں ہندو یاتری اور سیاح ہنگلاج ماتا کا دورہ کرتے ہیں اور یہ مقام ہندوؤں کے لئے انتہائی مقدس حیثیت کا حامل ہے جہاں وہ مذہبی رسومات ادا کرتے ہیں۔
()()() 
خبرنامہ نمبر1455/2019 
سبی 20اپریل :۔صوبائی وزیرداخلہ میر ضیاء اللہ لانگو اورصوبائی وزیر محنت و افرادی قوت سردار سرفراز خان ڈومکی نے کہا ہے کہ سیلاب متاثرین کی بحالی حکومتی ترجیحات میں شامل ہیں،سیلابی ریلوں سے متاثر ہونے والے بلوچستان کے زمینداروں اور کسانوں کی بحالی کے لیے کل وزیراعظم عمران خان اپنے ایک روزہ کوئٹہ کے دورہ کے موقع پر10ارب روپے کا اعلان کریں گے ،زمینداروں اور کسانوں کی بحالی ہرصورت ممکن بنائی جائے گی،ضلعی انتظامیہ ہنگامی بنیادوں پر متاثرہ افراد تک ادویات و خوراک پہنچا رہی ہے ،سبی اور کچھی کے اضلاع سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں ،بحالی کا کام ہنگامی بنیادوں پر تیزی کے ساتھ جاری ہے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کے روز ضلع سبی اور کچھی کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا فضائی معائنہ کرنے کے بعد سیلاب متاثرین سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ ڈائریکٹر جنرل پراونشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ عمران زرکون اورڈپٹی کمشنر سبی سید زاہد شاہ بھی ان کے ہمراہ تھے، دریں اثناء صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو نے ڈپٹی کمشنر ہاؤس میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ طوفانی بارشوں سے گرین بیلٹ جس میں سبی ،کچھی اور نصیرآباد کے اضلاع شامل ہیں سب سے یادہ متاثر ہوئے ہیں جہاں پر سیلابی ریلوں نے تباہی مچا دی ہے انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں پہلے ہی خشک سالی نے یہاں کے زمینداروں اور لوگوں کو متاثر کررکھا تھا جبکہ رہی سہی کسر بارشوں اور سیلابی ریلوں نے پوری کردی ہے انہوں نے کہا کہ جہاں پر سیلابی ریلوں سے مکانات و املاک کا نقصان ہوا ہے وہاں پر زمینداروں اور کسانوں کی ہزاروں ایکڑ اراضی پر کھڑی تیار گندم کی فصلات بھی تباہ ہوچکی ہیں جس سے یقیناًزمینداروں کا ناقابل تلافی نقصان ہوا ہے جس کا ازالہ کرنا تو ممکن نہیں لیکن پھر بھی صوبائی حکومت نے وزیراعظم عمران خان سے 10ارب روپے کی گرانٹ کا مطالبہ کیا ہے تاکہ سیلاب سے متاثرہ افراد کی بحالی کو یقینی بنایا جاسکے انہوں نے کہا کہ آج بروز اتوار وزیراعظم عمران خان سیلابی تباہ کاریوں کا جائزہ لینے کے لیے ایک روزہ دورہ بلوچستان پر آرہے ہیں اور توقع ہے کہ آج وزیراعظم عمران خان اپنے دورہ کے دوران سیلاب متاثرین کی بحالی کے لیے 10ارب روپے کی گرانٹ کا اعلان کریں گے ،انہوں نے مکران کوسٹل ہائی وئے پر بزی ٹاپ پر ہونے والی دہشت گردی کے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ بلوچستان میں ہونے والی دہشت گردی کے واقعات میں بھارت برائے راست ملوث ہے جس کے ملوث ہونے کے ہمارئے پاس ٹھوس شواہد بھی موجود ہیں انہوں نے کہا کہ جب سے دہشت گردی کے واقعات رونماء ہو ہے ہیں تب سے بھارت افغان سرزمین کو پاک سرزمین کے خلاف استعمال کررہا ہے جبکہ موجودہ دہشت گردی کی لہر سے یہ شواہد ملے ہیں کہ بھارت ایران کی سرزمین کو بھی بلوچستان کے پرامن ماحول کو خراب کرنے کی سازشوں میں مصروف ہے اور صوبے میں بے گناہ عوام کا قتل عام کرکے پاکستان کو غیر مستحکم بنانے کی ناکام کوشش کررہا ہے انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے عوام نے ہمیشہ سینہ سپر ہوکر دہشت گردوں کے عزائم کوناکام بنایا ہے اور صوبے کے عوام کے ایسی بزدلانہ کاروائیوں سے حوصلے پست کبھی نہیں کیئے جاسکتے ہیں ،انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان جلد ہی ایران کا دورہ کریں گے اور ایرانی سرحدی علاقوں میں جہاں جہاں دہشت گردوں کی پناگاہیں موجود ہیں اس پر تفصیلی طور پر برادر ملک ایران سے بات چیت کریں گے ،اس موقع پر صوبائی وزیرلیبراینڈ مین پاور سردارسرفراز خان ڈومکی نے کہا کہ سیلاب و طوفان قدرتی آفات ہیں جو قدرت کی جانب سے آتی ہیں ہمیں قدرتی آفات کا مقابلہ صبروتحمل کے ساتھ کرنا چاہیے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت بلوچستان سیلاب متاثرین کو تنہاء نہیں چھوڑئے گی بلکہ متاثرین کی بحالی بلخصوص زمینداروں کی بحالی ترجیحات میں شامل ہیں انہوں نے کہا کہ سیلابی ریلوں سے بچاؤ کے لیے ہمیں ایری گیشن نظام کو مزید موثر و پائیداربنانے کی ضرورت ہے تاکہ آئندہ اس قسم کے واقعات رونما نہ ہوسکیں انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت پی ڈی ایم ائے اور ضلعی انتظامیہ مل کر سیلاب سے متاثرین کی بحالی میں مصروف عمل ہیں اور آخری متاثر تک ہماری بحالی کاکام جاری رہے گا۔
()()()
خبرنامہ نمبر1456/2019 
سبی 20اپریل :۔کمشنر سبی ڈویژ ن سید فیصل احمد نے آج یہاں ڈویژ نل پبلک سکول سبی میں منعقدہ ایک پروقار تقسیم انعامات کی تقریب میں شرکت کی اس موقع پر ڈائریکٹر ترقیات وقار الزماں کیانی و دیگر ضلعی انتظامی افسران موجود تھے تقریب میں طلباء و طالبات کو مختلف شعبوں میں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے پر انعامات دئیے۔ اسکول کے پرنسپل پروفیسر اقبال قریشی نے معزز مہمان کو خوش آمدید کہا اور سکول کی کارکردگی نصابی و غیر نصابی سرگرمیوں سکول کو درپیش مسائل اور مشکلات سے متعلق تفصیل سے آگاہ کیا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کمشنر سبی ڈویڑن سید فیصل احمد نے کہا کہ طلباء و طالبات کو بہتر سہولتوں کی فراہمی کے لیے نجی اسکولوں کا کردار اہمیت کا حامل ہے اس درس گاہ سے علم حاصل کرکے آج کئی اہم اشخاص مختلف سرکاری کلیدی عہدوں پر فرائض انجام دے رہے ہیں انہوں نے کہا کہ آج دنیا کی ترقی یافتہ ممالک کا مقابلہ صرف اور صرف تعلیم کے حصول سے ہی کیا جاسکتا ہے اچھا طالب علم عملی زندگی میں بھی اپنی جوہری صلاحیتوں کا بہتر مظاہرہ کر سکتا ہے جبکہ اس کے برعکس نقل سے حاصل کی گئی ڈگری والا طالبعلم عملی زندگی میں ہر قدم پر ناکامی اور شرمندگی کا سامنا کرتا ہے انہوں نے اس توقع کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ اسکول مستقبل میں بھی اپنی بھرپور کارکردگی کا بہتر مظاہرہ کرے گا انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ وہ درپیش مسائل کے حل کے لیے ضروری نوعیت کے اقدامات کریں گے۔
()()()
خبرنامہ نمبر1457/2019 
کوہلو20اپریل :۔صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ خان مری گزشتہ روزاپنے حلقے کوہلو کے دورے پر پہنچ گئے ہیں صوبائی وزیر صحت نے تحصیل ماوند میں نبی گل مری ، صوبہ خان مری سمیت دیگر فوت ہونے والے لوگوں کی فاتحہ خوانی کی اور اُن کے لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیا ۔ صوبائی وزیر صحت نصیب اللہ مری حلقے کے دورے میں سیلاب کی صورت حال سمیت ترقیاتی کاموں کا جائزہ لیں گے اور قبایلی عمائدین وپارٹی ورکروں سے ملیں گے۔
()()()

خبرنامہ نمبر1458/2019 
ڈیرہ مراد جمالی 20اپریل :۔صوبائی وزیر داخلہ و پی ڈی ایم اے میر ضیاء اللہ لانگو صوبائی وزیر محنت و افرادی قوت سردار سر فراز خان ڈومکی اور صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمدخان لہڑی نے ہفتے کے روز نصیر آباد لہڑی بختیا آباد لانڈھی بابا کوٹ قبولہ سمیت سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا فضائی دورہ کیا اور نقصانات کا جائزہ لیا بعدازاں سر کٹ ہاؤس ڈیرہ مراد جمالی میں کمشنر نصیر آباد ڈویڑن جاوید اختر محمود اور ڈپٹی کمشنر نصیر آبادظفر علی بلوچ نے صوبائی وزراء کو نصیر آباد میں ہونے والی حالیہ بارشوں اور سیلاب کی تباہ کار یوں ونقصانا ت اور امدا دی سر گر میوں کے حوالے سے بریفنگ دی اور ضلعی انتظامیہ کی جانب سے سیلاب سے متاثرہ علاقوں اورسیلابی پانی میں پھنسے ہوئے افراد کو ریسکیو اور دی جانے والی راشن کی فراہمی اور امداد کے حوالے سے انہیں تفصیلات سے آگاہ کیا جبکہ ڈپٹی کمشنر ظفر بلوچ نے بتایا کہ سیلاب میں پھنسے ہوئے لوگوں کو ایف سی کی مدد سے ہیلی کاپٹر کے ذریعے ریسکیو کر کے متاثرین کو فوری امداد دے دی گئی جن میں راشن پیکٹس اور ٹینٹ شامل ہیں اور مختلف علاقوں میں سیلاب متاثرین کو طبی سہولیات کے لیئے میڈیکل کیمپ بھی لگائے گئے ہیں صوبائی وزیر داخلہ و پی ڈی ایم اے میر ضیاء اللہ لانگو نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ بلوچستان میں حالیہ بارشوں اور سیلاب سے صوبے کے متعدد اضلاع کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے جن میں سے نصیر�آباد بھی شامل ہے نصیر آباد بلوچستان کا سب سے بڑا گرین بیلٹ ہے سیلاب متاثرین کی بحالی اورانکے ہونے والے نقصانات کے ازالے کے لیئے فوری اقدامات کئے جا رہے ہیں تمام سیلاب کی ہونے والی صورتحال کے متعلق وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کو آگاہ کیا جائے گا صوبے کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں کی بحالی اور نقصانات کے ازالے کے لیئے دس ارب روپے گرانٹ وفاقی حکومت سے مانگ لی ہے تاکہ صوبے میں ہونے والے نقصانات کا ازالہ کیا جا سکے انہوں نے بتا یا کہ محکمہ ریو نیو ضلعی انتظامیہ سیلاب سے ہونے والے نقصا نات کے متعلق رپوٹس مرتب کر رہی ہیں جسکے مطابق نقصانات کا مکمل جائزہ لیکر ازالہ کیا جائے گا حکومت متاثرین کو کھبی بھی تنہا نہیں چھوڑے گی اس مشکل کی گھڑی میں حکومت متاثرین کے ساتھ کھڑی ہے انہو ں نے کہا کہ نصیر آباد میں بڑے پیمانے پر گندم کی تیار کھڑی فصل اور دیگر فصلات کو شدید نقصان پہنچا ہے اور مال مویشی بھی ہلاک ہوئے ہیں نصیر آباد کو آفت زدہ علاقہ قرار دیا جائے گا صوبائی حکومت متاثرین کے بحالی کے لیئے بلوچستان حکومت کے تمام تر وسائل کو بروئے کار لا رہی ہے قدرتی آفات کسی امتحان سے کم نہیں متاثرین کو چائیے کہ وہ صبر اور تحمل کا ساتھ دیگر حکومت کے ساتھ تعاون کریں۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment