خبر نامہ نمبر 1398/2019
کوئٹہ 17اپریل۔ گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں اعلیٰ تعلیمی اداروں کی بہترین کار کردگی نے اعلیٰ تعلیم کے فروغ کو مضبوط اور مستحکم بنیادیں فراہم کی ہیں اور مختلف اضلاع میں ہائر ایجو کیشن کمیشن کے امبریلا پروجیکٹ کے تحت نئے کیمپسز کے قیام کے مثبت اور تعمیری اثرات مرتب ہوں گے ۔ گورنر بلوچستان نے وائس چانسلر بلوچستان یونیورسٹی اور ان کی پوری ٹیم کی انتھک کاوشوں سے یونیورسٹی ترقی کی راہ پر گامزن ہوچکی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے یونیورسٹی آف بلوچستان کے16ویں کانووکیشن کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر بلوچستان یونیورسٹیوں کے وائس چانسلر صاحبان ، صوبائی وزیر اطلاعات و ہائر ایجو کیشن ظہور احمد بلیدی، ماہرین تعلیم ، فار غ التحصیل ہونے والے طلباو طالبات سمیت والدین کی ایک بڑی تعداد بھی موجود تھی ۔ کانووکیشن کے شرکاء سے خطاب کرے ہوئے گورنر نے اعلیٰ تعلیم کی اہمیت و افادیت کے حوالے سے کہا کہ اعلیٰ تعلیمی اداروں کا ملک وقوم کی ترقی و خوشحالی میں کلیدی کردار ہے ۔ اگر ہم نوجوانوں کے اذہان کو جدید علمی جہان بینی سے روشن کرنے میں کامیاب ہوئے تو اسی سے ترقی یافتہ پاکستان او رپر امن بلوچستان کو یقینی بنانے کیلئے راہ ہموار ہوجائیگی ۔ اس ضمن میں آپ پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ لوگوں میں قومی اہداف کے حصول میں بھر پور رہنمائی فراہم کریں ۔ گورنر نے فارغ التحصیل ہونے والے طلبہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آج کی یہ پر وقار تقریب آپکی محنت لگن اور مطالعہ سے شوق رکھنے کااعتراف ہے ۔ لہٰذا ضروری ہے کہ آپ اپنے علم و تجربے کو معاشرے کی فلاح و بہبود کیلئے بروئے کار لائیں ۔ آپ کی مسلسل جدو جہد اور لگن سے معاشرے میں مضبوطی اور استحکام پیدا ہوگا ۔ گورنر نے اس یقین کا اظہار کیا کہ یونیورسٹی میں سیکھنے کے دوران مشکلات جھیلنے سے کامیابی اور سر خروئی کومضبوط بنیادیں فراہم ہوگیں لہٰذا آپ اپنا سفر دیانتداری اور خلوص سے جاری رکھیں ۔ انہوں نے کہا کہ آج کا یہ کانووکیشن آپ کی زندگی میں ایک نئے باب کا آغاز ہے او ر اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے سے آپ پاکستان کے ایک مفید شہری بن جائیں گے ۔ گورنر بلوچستان یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہونے والے طلباو طالبات کو دلی مبار کباددی اور ان کی مزید کامیابی اور سر خروئی کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ۔ قبل ازیں بلوچستان یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جاوید اقبال نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا ۔ صوبائی وزیر اطلاعات و ہائر ایجوکیشن ظہور احمد بلیدی نے کہاکہ موجودہ حکومت اعلیٰ تعلیم کے فروغ کیلئے پر عزم ہے اور میرٹ اور کوالٹی ایجوکیشن کی فراہمی کے حوالے سے ٹھوس اقدامات اٹھارہی ہے ۔ آخر میں گورنربلوچستان نے یونیورسٹی کے فارغ التحصیل گریجوئیٹس میں گولڈ میڈلز اور اسناد تقسیم کیئے۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 1399/2019
کوئٹہ 17اپریل ۔ صوبائی وزیر سماجی بہبود میر اسد للہ بلوچ کی زیر صدارت بلوچستان عوامی انڈو ومنٹ فنڈ کے بورڈ کا اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں سیکریٹری سماجی بہبود عبدالرؤف ، ایم ایس بی ایم سی ڈاکٹر فہیم خان کے علاوہ محکمہ صحت ، محکمہ فنانس ، سی ایم سیکریٹریٹ ، محکمہ سی اینڈ ڈی ، کوئٹہ چیمبر اور دیگر متعلقہ آفیسران اور نمائندگان بھی تھے ۔ اجلاس میں سیکریٹری سماجی بہبود نے بتایا کہ صوبے بھر سے تقریباً مریضوں کے 100 کیسز موصول ہوئے جوکہ منظوری کیلئے پیش ہیں اجلاس میں مریضوں کے کیسز کا تفصیلی جائزہ لیا گیا اور بورڈ نے تمام قوانین پہلوؤں اور قواعد و ضوابط پرپورا اترنے والے کیسوں کو اصولی طور پر منظوری دی ۔ اس موقع پرصوبائی وزیر میر اسد اللہ بلوچ نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ تمام منظور شدہ کیسز کو فوری طور پر متعلقہ ہسپتالوں کو بھجوایا جائے تاکہ مریضوں کا علاج و معالجہ ملک کے مصروف ہسپتالوں میں ممکن اور بروقت ہوسکے ۔ صوبائی وزیر نے ہدایت کی کہ دل کے امراض میں مبتلا مریضوں کے علاج ومعالجہ کیلئے فوری طور پر فنڈز کے اجراء کو ممکن بنایا جائے ۔ اس کے ساتھ ساتھ صوبے کی سرکاری ہسپتالوں میں میسر طبی سہولیات سے استفادہ بھی کیا جائے اور جن مریضوں کا علاج صوبے میں ممکن ہے ان کا علاج یہاں کیا جائے ۔ اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ پینل کے تمام ہسپتالوں میں مریضوں کو علاج و معالجہ کی سہولیات اور دیگر امور کاجائزہ اور معائنہ کیا جائے تاکہ مریضوں کو بہترین سہولیات مل سکیں۔ موصول شدہ تمام کیسوں کے قانون تقاضوں کو پورا کرکے جلد از جلد ریفر کیا جائے تاکہ ان کے علاج و معالجہ کیلئے فوری اقدامات اٹھائے جائیں ۔ صوبے میں صحت کی بہترین سہولیات میسر ہیں ۔ تھیلسمیا کے مریضوں کے علاج و معالجہ کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ اجلا س میں بلوچستان عوام انڈوو منٹ فنڈ ہسپتالوں میں سہولیات ، مریضوں اور عوام کی رہنمائی اور دیگر امور پر شرکاء کی جانب سے تجاویزدی گئیں ۔ اجلاس میں صوبائی وزیر نے کہا کہ عوامی انڈوو منٹ فنڈ کا قیام ملکی تاریخ میں پہلی دفعہ ہمار ے صوبے میں ہو ا ہے جوکہ غریب اور نادار مریضوں کیلئے حکومت کی جانب سے بہترین تحفہ ہے تاکہ کینسر ، امراض قلب ، جگر کی پیوند کاری ، ہیپاٹائٹس اور دیگر مہلک امراض میں ان کا مکمل علاج ہوسکے۔ صوبائی حکومت عوام کو بہترین صحت کی سہولیات کی فراہمی کیلئے اقدامات اٹھارہی ہے تمام متعلقہ ادارے عوام کو بنیادی سہولیات فراہم کرنے کیلئے ہر ممکن کوشش کررہے ہیں ۔ انسانی ہمدردی کے تحت حکومت اقدامات کررہی ہے ۔ اس سلسلے میں کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی عوام کو صحت کی سہولیات فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری اور حکومت اپنی اس ذمہ داری کو پورا کریگی ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 1400/2019
اسلام آباد 17اپریل ۔وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی خالد مقبول صدیقی سے صوبائی وزیر پبلک ہیلتھ انجینئرنگ / واسا حاجی نور محمد دمڑ نے اسلام آباد میں ملاقات کی اور انہیں اپنے حلقہ انتخاب زیارت میں کمیو نیکیشن کے مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ زیارت میں موبائل ٹاورز نصب کئے جائیں تاکہ جدید دور میں لوگوں کو در دراز علاقوں میں رابطے کی بہترین سہولیات میسر آسکیں ۔ صوبائی وزیر نے وفاقی وزیر کو زیارت کی جغرافیائی حدود اور علاقے کے مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ زیارت ایک سیاحتی مقام ہے جہاں پر ملک بھر سے لوگ بڑی تعداد میں آتے ہیں جنہیں علاقے میں موبائل سگنلزنہ ہونے کی وجہ سے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے وفاقی وزیر پی آئی ٹی خالد مقبول صدیقی نے عوامی مشکلات کو مد نظر رکھتے ہوئے زیارت کے مختلف علاقوں میں موبائل ٹاورز لگانے کی منظوری دیتے ہوئے یقین دہانی کرائی کہ جلد ہی اس سلسلے میں فنڈز جاری کرکے منصوبے کے افتتاح کیلئے بذات خود زیارت کا دورہ کروں گا اور زیارت کے عوام کو 3G اور 4G جیسی جدید سہولیات سے مستفید ہوں گے اس موقع پر یونیورسل سروس فنڈ او رآئی ٹی کے ماہرین بھی موجود تھے۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 1401/2019
نصیرآباد17اپریل ۔کمشنر نصیرآباد ڈویژن جاوید اختر محمود کا سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا دورہ انتظامیہ کی جانب سے کیے جانے والے انتظامات اورسیلاب سے ہونے والے نقصانات کا جائزہ لیا اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر نصیرآباد غلام حسین بھنگر تحصیلدار بہادر خان کھوسہ نے سیلابی ریلے سے ہونے والے نقصانات وسیلاب متاثرین کی امدادکے متعلق انہیں بریفنگ دی کمشنر نصیرآباد ڈویژن جاوید اختر محمود نے آفیسران کو ہدایت دی کہ سیلاب سے متاثرہ افراد کی ہر ممکن مدد کی جائے مصیبت کی اس گھڑی میں سیلاب متاثرین کو تنہا نہیں چھوڑا جائے ہم متاثرین کی خدمت میں کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے خوراک و ادویات کی فراہمی کوجلد از جلد فراہم کیاجائے اس میں کسی قسم کی کوتاہی یا لاپرواہی ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی انتظامیہ سیلاب متاثرین کے ساتھ ہے کمشنر نصیرآباد نے کہا کہ لہڑی او دریائے بولان سے آنے والے سیلابی پانی کے بہاؤ میں کمی واقع ہوئی ہے جس کی وجہ سے اب کوئی خطرے کی بات نہیں ہماری جانب سے تمام انتظامات مکمل کرلیے گئے ہیں بھاری مشینری کے ذریعے کام کیا جا رہا ہے سیلابی پانی کو مختلف جگہوں پر کٹس دے کرپانی کے بہاؤ کو تقسیم کیا جا رہا ہے تاکہ پانی کے دباؤ اور پریشر میں کمی لائی جا سکے جس سے کم سے کم نقصانات ہونے کا اندیشہ ہو انہوں نے کہاکہ ڈیرہ مراد جمالی شہر مکمل طور پر محفوظ ہے سیلابی پانی کے راستے میں دو بڑی نہروں کی صورت میں بند ہیں ہماری کوشش ہے کہ پانی کے بہاؤ کو ربیع کینال میں چھوڑ دیا جائے تاکہ آبادی سے خطرہ ٹل جائے اور پانی کا مکمل بہاؤ اس نہر میں آجائے انہوں نے مزید کہا کہ سیلاب متاثرین کیلئے ریلیف کیمپ قائم کیے گئے ہیں جو 24 گھنٹے سیلاب متاثرین کی خدمت کرنے میں مصروف عمل ہونگے انہوں نے کہاکہ سیلاب سے متاثرہ کاشتکاروں کی مالی امداد کے لیے صوبائی حکومت سے اپیل کریں گے تاکہ متاثرہ کاشتکاروں کی ہر ممکن امداد کی جائے
()()()
خبر نامہ نمبر 1402/2019 
کوئٹہ 17اپریل ۔چیئرمین مجلس قائمہ کمیٹی برائے محکمہ جات سماجی بہبود ، ترقی نسواں ، زکواۃ ،عشر حج واوقاف اقلیتی امور و امور نوجوانان احمد نواز بلوچ نے کہا ہے کہ مذکورہ محکمہ جات اپنے امور کو صاف و شفاف بنانے کیلئے مستعدی سے کام کریں ۔ اس کیلئے رائج اصول و ضابطوں کو ملحوظ خاطر رکھا جائے اور غیر قانونی کوئی کام سر انجام نہ دیا جائے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قائمہ کمیٹی کے تعارفی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر صوبائی وزیر سوشل ویلفیئر اسد بلوچ ،اراکین صوبائی اسمبلی مولوی نو ر اللہ ،ماہ جبین شیرین ، زبیدہ ، دنیش کمار ، ٹاٹس جانسن اور مذکورہ محکمو ں کے سیکریٹریز بھی موجود تھے ۔ انہوں نے کہا کہ قائمہ کمیٹی کے آئندہ اجلا س میں تمام محکموں کے سربراہ مکمل تیاری کے ساتھ آئیں اور معزز اراکین کو محکموں کی آئندہ حکمت عملی اور منصوبہ بندی پر بریف کریں تاکہ صوبے کی ترقی و خوشحالی کیلئے سفار شات مرتب کی جاسکیں ۔ انہوں نے کہا کہ اس تعارفی اجلاس میں معزز اراکین کی طرف سے پیش کی گئیں تجاویز پر کام کیا جائے اور ان کو دستاویزی شکل دے کر آئندہ کے اجلاس میں پیش کیا جائے ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 1403/2019
لورالائی17اپریل۔تعلیم کسی بھی معاشرے اور ریاست کے ا فراد کے ساتھ ساتھ اجتماعی ترقی کیلئے بے حد ضروری ہے ۔ ابتدائی تعلیم ایک ایسی بنیاد ہے جس پر انسانی ترقی کی پوری عمارت کھڑی ہے یہ بچوں کو نئی دنیا کیلئے بنیادی بصیرت فراہم کرتی ہے ان خیالات کا اظہار بائٹمز لورالائی کے ریکٹر انجینئر سید اورنگ زیب ، ہیڈ آف ڈپارٹمنٹ انجینئر ظاہر شاہ ،محمد اعظم حسنی اور عزیر الرحمن نے طلباء کے نئے سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہو ں نے کہا کہ بلوچستان انسٹیٹیوٹ آف انفارمیشن ٹیکنالوجی لورالائی جدیدٹیکنالوجی کے ذریعے تعلیم کی صورتحال کو بہتر بنانے کی کوشش کر رہا ہے۔بائٹمز لورالائی اپنے مقاصدکے حصول کے لیے مختلف سرکاری اور غیر سرکاری سکولوں کے ساتھ مشاورت سے ورکشاپ منعقد کر رہا ہے تاکہ طلباء کی کارکردگی بہتر کیا جا سکے ، فنی تعلیم میں تین سالہ ڈپلومہ موجودہ دور میں نہایت اہمیت کا حامل ہے ملک میں غیر ملکی سرمایہ کاری خصوصاً بلوچستان میں سی پیک اور گوادر جیسے منصوبے روزگار کے سینکڑوں مواقع پیدا کر رہا ہے صوبے میں بیروزگاری ایک اہم مسئلہ ہے ادارے کا مقصد ہے کہ بلوچستان کے نوجوانوں کو فنی تعلیم کے زیور سے آراستہ کیا جا سکے تاکہ وہ صوبے اور ملک کی ترقی میں کردار ادا کر سکیں، ریکٹر انجینئر سید اورنگ زیب نے کہا کہ ان کی اور اسٹاف کی انتھک محنت کے باعث بائٹمز لورالائی فنی تعلیم کے معیار کو بہتر بنانے میں کامیاب ہورہا ہے اگر ہم اپنی آئندہ نسلوں کو دنیا کے چیلنجز کیلئے تیار کر نا چاہتے ہیں تو معیاری تعلیم ہی اس کی بنیاد ہے اور ملک کے حالات سنوارنے میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے انہوں نے نئے آنے والے طلباء کو خوش آمدید کہا ادارہ ہر مقام پر ان کی رہنمائی کرنے کے عزم کا اظہار کیا ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 1404/2019 
نصیر آباد 17اپریل ۔ڈپٹی کمشنر نصیرآباد ظفر بلوچ نے کہا کہ سیلاب متاثرین کی ہر ممکن امداد کو یقینی بنایاجارہا ہے متاثرین میں اشیاء خوردونوش خیمے اور دیگر ضروریات زندگی تقسیم کیئے جارہے ہیں ہماری بھرپور کوشش ہے کہ متاثرین کو سہولیات فراہم کریں مشکل کی اس گھڑی میں متاثرین کو تنہا نہیں چھوڑیں گے صوبائی حکومت سیلاب متاثرین کی ہرممکن امداد کر رہی ہے سیلاب سے متاثرہ کسانوں کی بھی مالی امداد کے لیے صوبائی حکومت سے درخواست کریں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے نصیر آبادمیں سیلاب متاثرین میں اشیاء خوردو نوش تقسیم کرنے کے موقع پربات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر غلام حسین بھنگر تحصیلدار بہادر خان کھوسہ بلوچستان عوامی پارٹی کے رہنماء سابق چیئرمین میونسپل کمیٹی میر غلام نبی عمرانی میر رانا خان مغیری سمیت دیگر افراد موجود تھے ڈپٹی کمشنر نصیرآباد ظفر بلوچ نے کہا کہ قدرتی آفات سے مقابلہ نہیں جا سکتا مگر قدرتی آفات کی زد میں آنے والے افراد کی بھرپور امداد کی جا سکتی ہے متاثرین کی مشکلات کو کم کرنے کے لیے انتظامیہ دن رات کوشاں ہیں سیلاب متاثرین میں راشن اورخیمے تقسیم کیے جا رہے ہیں انہوں نے کہاکہ فری میڈیکل کیمپس کے ذریعے سیلاب متاثرین کو طبی سہولیات کی فراہمی کو بھی یقینی بنایا جارہا ہے نوتال اور ربیع کینال کے مقام پر نصیرآباد انتظامیہ کے کیمپ قائم کیے گئے ہیں جہاں پر سیلاب متاثرین کی رجسٹریشن کی جا رہی ہے جس کی بنیاد پر متاثرین میں مزید راشن اورخیمے تقسیم کئے جائیں گے ۔
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ 17اپریل ۔پرنسپل گورنمنٹ بوائز ماڈل ہائی اسکول زیارت کے ایک اعلامیہ کے مطابق ان تمام والدین کو مطلع کیا جاتا ہے جن کے بچے زیارت ماڈل ہائی اسکول میں زیر تعلیم ہیں وہ اپنے بچوں کو فوری طور پر اسکول بھیجیں تاکہ تعلیمی سال ضائع نہ ہو ۔ نیز زیارت ماڈل ہائی اسکول کے تمام کلسٹرز کے ہیڈ ٹیچرز کو بھی پابند کیا جاتا ہے کہ وہ اپنی ڈیوٹی پر حاضر ہوجائیں۔ 
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ 17اپریل ۔زبانیں قوموں کی نفسیات اور تاریخی ادراک کاذریعہ ہوتی ہیں پاکستان کی تمام زبانوں میں ادب تخلیق ہوتا ہے اور یہ مختلف نسلی گروہوں کے درمیان یگانگت اور ہم آہنگی کا سبب ہیں اس لئے حکومتی اور ادارتی سطح پرملک کے ایک خطے کے شاعر اور ادیبوں کا دیگر علاقوں کا دورہ کرنے سے ایک دوسرے کی مشترک قدروں کا پتہ چلتا ہے اور باہم تجربے سے قربت بڑھتی ہے ان خیالات کا اظہار سرائیکی زبان کی ادیبہ محقق اور صحافی سعدیہ کمال نے اکادمی ادبیات کوئٹہ کے زیر اہتمام ایک ادبی نشست میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ 
()()()