Download

خبر نامہ نمبر 3134/2018
کوئٹہ 15نومبر ۔ گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا ہے کہ عوام کو فوری اور سستے انصاف کی فراہمی ہمارے آئین کا بنیادی مقصد ہے۔ اس ضمن میں وکلاء براداری پر یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنے حصے کابھر پور کردار ادا کریں ۔ بار ایسو سی ایشن کی فعالیت اور مؤثر کردار ہی غریب اور زیردست لوگوں کو انصاف تک رسائی دینے کی سمت میں اہم قدم ثابت ہوگا ۔ ان خیالات کاا ظہار انہوں نے جمعرات کے روز گورنر ہاؤس کوئٹہ میں بلوچستان بار ایسو سی ایشن کے صدر شاہ محمد جتوئی کی قیادت میں وفد سے ملاقات کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر گورنر بلوچستان نے کہا کہ عدل و انصاف کے بغیر کوئی بھی معاشرہ قائم نہیں رہ سکتا ۔ معاشرے میں عدل و انصاف اور قانون کی حکمرانی کر کے ہی ہر قسم کے سماجی جرائم اور برائیوں سے پاک کیا جاسکتا ہے انہوں نے کہاکہ جس معاشرے میں انصاف کا نظام مؤثر ہو وہاں زندگی کے ہر شعبے پر مثبت اور تعمیری اثرات مرتب ہوں گے انہوں نے کہا کہ عدل و انصاف کی عدم موجودگی سے معاشرے میں مایوسی اور انتشار پھیلے گا ۔ گورنر نے کہا کہ معاشرے میں مثبت اور تعمیری تبدیلی کیلئے ہر ذی فہم شخص کوپوری ذمہ داری کے ساتھ اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ وفد نے گورنر بلوچستان کو وکلاء برادری کو درپیش مسائل و مشکلات سے آگاہ کرتے ہوئے گرانٹ برائے وکلاء برادری اور اراضی کی فراہمی کو یقینی بنانے کی درخواست کی جس پر گورنر بلوچستان نے ان مسائل کے حل کیلئے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 3135/2018 
کوئٹہ 15نومبر ۔ گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی سے جمعرات کے روز گورنر ہاؤس کوئٹہ میں پاکستان میں تعینات ترکی کے سفیر ( Mr I. Mustafa Yurdakul ) نے ملاقات کی ۔ ملاقات کے دوران پاکستان اور ترکی کے تعلقات سمیت باہمی دلچسپی کے امو رپر تبادلہ خیال کیا گیا گورنر نے ترکی کے سفیر کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے درمیان برادرانہ اور خوشگوار تعلقات قائم ہیں تاہم موجودہ دور میں خطے کی معاشی اور سیاسی تبدیلیوں کے پیش نظر باہمی تعاون کو مزید بڑھانے کے روشن امکانات موجود ہیں ۔ آخر میں گورنر بلوچستان اور ترکی کے سفیر کے درمیان تحائف اور یادگاری شیلڈز کا تبادلہ ہو ا۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3136/2018
کوئٹہ 15نومبر ۔بلوچستان پبلک سروس کمیشن کے پریس ریلیز کے مطابق کمیشن ہذا کے زیر اہتمام 15اگست 2018 کو ہونے والے تحریری امتحان میں ریجنل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ و پاپولیشن ویلفیئر میں اکاؤ نٹنٹ ( بی ۔ 16 ) کی آسامی کے لئے ارسلان علی فیصل ولد رحیم الدین ( مرحوم ) ، اسد امین ولد محمد امین ، محمد عرفان ولد اللہ دوایا اور صغیر احمد ولد محمد اسماعیل جبکہ اکاؤنٹنٹ ( بی ۔16) پاپولیشن ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کی آسامی کیلئے ارسلان علی فیصل ولد رحیم الدین ( مرحوم ) ، اسد امین ولد محمد امین ، حرا ملک بنت ملک نوید ، محمد عرفان ولد اللہ دوایا ، محمد اسماعیل ولد حاجی محمد اشرف ، محمد یوسف ولد عبدالحمید ، رضا محمد ولد محمد صدیق ، صغیر احمد ولد محمد اسماعیل اور سائرہ بنت غلام دستگیر انٹرویو کیلئے کامیاب قرار پائے ہیں ۔ کامیاب امیدواروں کو ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ اپنی درخواستوں کے ہمراہ تصدیق شدہ کاغذات ریکروٹمنٹ برانچ میں ایک ہفتہ کے اندر اندر جمع کرادیں ۔ جبکہ انٹر ویو کی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا ۔ 
()()()
خبر نامہ نمبر 3137/2018
کوئٹہ 15نومبر۔ صوبائی سیکریٹری سیکنڈری ایجو کیشن محمد طیب لہڑی نے کہا ہے کہ بلوچستان اور ملک بھر کے نوجوانوں کو ایک ایسا پلیٹ فارم مہیا کیا گیا ہے جس کے ذریعے نوجوانوں میں قیادت کا فروغ معاشرتی اور معائشی نظام کو سمجھنا ، باہمی تعلقات و امن کے فروغ کو برقرار رکھنا، مختلف امور پر باہمی گفتگو ، تعلیمی فروغ ، کیریئر کو نسلنگ ، مثبت سوچ کا فروغ ، مختلف مقامی ، صوبائی ملکی اور بین الاقوامی مسائل کو اجاگر کرکے انہیں ایک منزل کی راہ دے کر ملک کو مزید مستحکم کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی ترقی کیلئے ہمیں مل کر کام کرنے اور معلومات کو شیئر کرنے کا موقع ملے گاجبکہ قوم کو اسکاؤٹس سے بہت توقعات ہیں جس پر ہمیں پورا اترنا ہے ۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کے زیر اہتمام صوبائی اسکاؤٹ ہیڈ کوارٹر میں منعقد ہونے والے یوتھ فورم کی اختتامی تقریب کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر بلوچستا ن بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کے صوبائی سیکریٹری صابر حسین ، خیبر پختونخواہ بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کے صوبائی سیکریٹری امتیاز عالم ، نظام الدین مینگل ، عبدالقیوم بابئی ، محمد عرفان یوتھ کونسل کے آر گنائزر سعد وقاص نے بھی خطاب کیا ۔ یوتھ کونسل میں بلوچستان کے مختلف اضلاع کے 15 اسکاؤٹس، سندھ کے 12، خیبر پختونخواہ کے 15، پی آئی اے کے 05 پاکستان ریلوے کے 05 اسکاؤٹس نے شرکت کی محمد طیب لہڑی نے کہا کہ نوجوانوں کی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے میں اسکاؤٹ تحریک نمایاں کردار ادا کررہی ہے بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن صوبہ بھر کے اسکاؤٹس کیلئے منفرد نوعیت کی سرگرمیوں کا انعقاد کرکے انہیں آگے بڑھنے کا موقع فراہم کررہی ہے ۔ اس کونسل کی خاص بات یہ ہے کہ اس میں بلوچستان کے علاوہ دیگر صوبوں کے اسکاؤٹس کو بھی شرکت کا موقع فراہم کیا گیا ہے جس کے باعث دیگرصوبوں کے اسکاؤئٹس کو باہم مل کر ایک دوسرے کے خیالات جاننے کا موقع ملے گا نیز یہ کونسل آئندہ کیلئے راہیں متعین کرے گی ۔ اس موقع پر بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کے صوبائی سیکریٹری صابر حسین نے کہا کہ بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کی دیگر صوبوں کے ہمراہ نوجوانوں کی رہنمائی کیلئے یوتھ کونسل کا انعقاد ایک کامیاب کوشش ہے جس کے اچھے نتائج برآمد ہوں گے اور نو جوانوں کو ترقی کی راہ پر گامزن کرے گی ۔ نظام الدین مینگل نے تمام شرکاء اور ملک بھر سے آئے ہوئے اسکاؤٹس کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس یوتھ کونسل سے نوجوانوں میں خود اعتمادی پیدا ہوگی اور وہ اس ملک کے اچھے پارلیمنٹرین بن سکیں گے جس سے ملک میں تبدیلی کی لہربیدار ہوگی تقریب کے آخر میں سیکریٹری سیکنڈری ایجو کیشن محمد طیب لہڑی اور دیگر نے تمام صوبوں اور بلوچستان کے مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے اسکاؤٹس اور اسکاؤٹس کے عہد یداروں میں شیلڈ اور سرٹیفکیٹ تقسیم کئے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3138/2018
کوئٹہ 15نومبر :۔صوبائی محتسب بلوچستان عبدالغنی خلجی کی ہدایت پرگورنمنٹ گرلز پر ائمر ی سکول کلی کرم خان تدنی کنگری ضلع موسی ٰ خیل میں تعلیمی سرگرمیاں بحال کردی گئیں ۔اس سلسلے میں شکایت کنندہ کرم خان نے گز ارش کی تھی کہ مذکورہ سکول ٹیچر کی غیر حا ضری کی وجہ سے بندہے او ر طالبات مشکلات سے دو چار ہیں ۔صوبائی محتسب نے کاروائی کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر موسی ٰ خیل کو ہدایات جاری کیں کہ مذکورہ سکول میں ٹیچر کو ڈیوٹی کا پابند بناکر تعلیمی سرگرمیاں بحال کی جائیں ۔جس پر عمل درآمد کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر موسی ٰ خیل نے تحر یری طور پر آگاہ کیا کہ متعلقہ ٹیچر کے خلاف قانونی کاروائی کرکے انہیں ڈیوٹی کا پابند بنا دیا گیاہے ۔ شکایت کنندہ نے سکول میں تعلیمی سرگرمیوں کی بحالی کی تصدیق کی ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3139/2018
کوئٹہ 15نومبر :۔ ڈائر یکٹر جنرل دیہی ترقیاتی اکیڈمی نعمت اللہ بابر نے کہا ہے کہ صرف تربیت یافتہ اور ذہین لوگ اداروں کو بہتر طور پر چلاسکتے ہیں انہوں نے کہا کہ ہم انسانی وسائل سے صیح طور پر استفادہ اس لئے نہیں کرپار ہے کیونکہ ہم میں تربیت او رجد ید تحقیق او رٹیکنا لوجی کی کمی ہے جس کے نتیجے میں ہم وہ نتائج نہیں دے سکتے جس کے لئے ہمارا تقر ر کیا گیا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے دیہی ترقیاتی اکیڈمی کے زیر اہتمام ایک ماہ کے تربیتی کورس بعنوان پیشہ درانہ مہارت کا فروغ برائے انجینئرز کی اختتام تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب کے مہمان خصوصی سیکرٹری بلدیات دویہی ترقی قمبر دشتی تھے ۔جبکہ تقریب میں ڈائریکٹر جنرل لوکل گورنمنٹ ظفر عزیز زہری ،عطا اللہ بلوچ ،او ر اختر بلوچ ڈائر یکٹر ٹیکنیکل نے بھی شرکت کی ۔اس موقع پر کورس کوارڈ ینٹر نے کورس کے اہم مو ضوعات او ر سہو لتکاروں کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ دوران کورس اہم موضوعات جن میں PCفارمز MBاو ر دیگر مانیڑنگ ، ٹنڈ رنگ پراس او ردیگر اہم موضوعات وغیرہ پر تفصیلی آگاہی فراہم کی گئی ہے شرکاء کورس نے اس تربیتی پروگرام کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ معلومات اورمہارتوں میں یہ کورس بہت معاون اور مدگار ثابت ہوگا اورانہوں نے اکیڈمی کے انتظامیہ سے درخواست کی کہ وہ اس طرح کے کو رسز دوسرے انجینئر ز کے لئے بھی منعقدکرائیں کی ڈی جی دیہی ترقیاتی اکیڈ یمی نے کہا کہ یہ اہم کورس باقاعدہ تربیت میں شامل کیا جائے گا آخر میں مہمان خصوصی نے شرکاء میں اسنا د تقسیم کیں ۔
()()()

خبر نامہ نمبر 3140/2018
کوئٹہ 15نومبر :۔محکمہ خزانہ حکومت بلوچستان کے اعلامیہ کے مطابق انضباطی کا روائی کی تکمیل پر محمد عمر جمالی( ٹی اینڈاے/بی ایس 17-) اسسٹنٹ ڈسٹرکٹ اکاونٹ آفیسر جھل مگسی او رمحمد اسماعیل ( ٹی اینڈ اے /بی ایس 14-) سب اکا ونٹنٹ ڈسٹرکٹ اکا ونٹ آفس جھل مگسی کو مس فردوس بند خالد حسین لیڈی ہیلتھ ورکر کی غیر قانونی طور پر تنخواہیں نکالنے پر بیڈ ایکٹ 2011ء کے تحت سرکاری ملازمت سے معطل کردیا گیا ہے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3141/2018 
کوئٹہ 15نومبر :۔محکمہ خزانہ حکوت بلوچستان کے اعلامیہ کے مطابق اپنی عمرکی بلائی حد 60سال کوپہنچنے پر علی محمد ڈسٹرکٹ اکا ونٹس آفیسر ( بی ایس 18-)بارکھان 14مارچ2019ء ،عبدالحنان اسسٹنٹ ڈسٹرکٹ اکا ونٹس آفیسر )بی ایس 17-) مو سی ٰ خیل ، نورمحمد اسسٹنٹ ڈسٹرکٹ اکا ونٹس آفیسر ( بی ایس 17-) نوشکی 4اگست 2019ء ،محمد حنیف اسسٹنٹ ڈسٹرکٹ اکا ونٹس آفیسر ( بی ایس 17-) کچھی بمقام ڈ ھا ڈر 30ستمبر2019ء ، غلام مصطفی اسسٹنٹ ڈسٹرکٹ اکاونٹس آ فیسر (بی ایس 17-) محکمہ خزانہ 11اگست 2019ء ،نوراللہ اسسٹنٹ ڈسٹرکٹ اکا ونٹس آفیسر ( بی ایس 17-) خضدار 2مارچ 2019ء، اورمحمد انور اسسٹنٹ اکا ونٹنٹ )بی ایس 16-) آ وران 11اگست 2019ء کو سرکاری ملازمات سے ریٹائر ہو جائیں گے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3142/2018
لورالائی15نومبر۔صوبائی وزیر صنعت وتجارت حاجی محمد خان طوراتمانخیل نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال لورالائی کااچانک دورہ کیااور ہسپتال کے مختلف شعبوں کا معائنہ کیا۔ایم ایس ڈاکٹر فہیم،ڈاکٹر عبدالحکیم اورڈاکٹریعقوب سمیت دیگر آفیسران بھی اس موقع پرصوبائی وزیر کے ہمراہ تھے۔ اس موقع پر صوبائی وزیرنے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹرو دیگر عملہ اپنی حاضر ی کو یقینی بنائیں ڈاکٹروں کا ڈیوٹی سے غیرحاضر ہونا اپنے مقدس پیشے اورعلاقے کے عوام سے ناانصافی کے مترادف ہے علاقے کے مریضوں کوعلاج معالجے کی سہولیات کی فراہمی میں مشکلات کاسامناہے ،مریضوں کے علاج معالجے کے معاملے میں کوتاہی ناقابل برداشت ہے ۔انہوں نے کہاکہ صحت انتہائی اہم شعبہ ہے جس کابراہ راست تعلق انسانیت کی خدمت سے ہے اس حوالے سے حکومت اپنی ذمہ داری ہر صورت پوری کرے گی انہوں نے کہا کہ دوردراز علاقوں میں بنیادی مراکز صحت اہمیت کے حامل ہیں ،ان مراکز میں ڈاکٹروں کی کمی بڑا مسئلہ ہے، بہت جلد ڈاکٹروں کی کمی دور کی جائے گی تاکہ ان مراکز کی کارکر دگی کو مزید بہتر کیا جا سکے انہوں نے کہا کہ تعلیم ،صحت اورپانی کے حوالے سے کوئی کوتاہی برداشت نہیں کریں گے اور انشاء اللہ بہت جلد پینے کی صاف پانی کا مسئلہ حل کریں گے انہوں نے کہا کہ بجلی کی عدم فراہمی کے باعث پانی کی کمی کا جو مسئلہ ہے اسے سولر سسٹم لگا کر حل کیا جائیگا۔ عوام کے حقوق پرسودابازی نہیں کریں گے عوام نے ہم پرجواعتماد کیاہے اس پرپوراا ترے گے ۔انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان نے یقین دلایا ہے کہ بہت جلد نوکریوں سے پابندی ختم کی جائے گی تاکہ نوجوانوں کوروزگارکے مواقع فراہم ہوسکیں انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام دوست اور صوبے کی مجموعی ترقی اور لوگوں کو اقتصادی طورپر خوشحال بنانے کیلئے موثر پالیسیاں اور ٹھوس بنیادوں پر اقدامات اٹھا رہی ہے عوامی فلاح وبہود کیلئے ہر ممکن کوشش کی جائیگی اور نامکمل منصوبوں کو مکمل کیا جائے گا تاکہ عوام تک ان منصوبوں کے ثمر ات پہنچ سکیں۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3143/2018
لو رالائی 15نومبر :۔ محکمہ سول ڈیفنس ژوب ڈویژن کی جانب سے حلقہ پی بی 5ضلع دکی اور حلقہ این اے 258لورالائی ،دکی ،ہرنائی اور سنجاوی کے حوالے سے ضلع دکی میں بم ڈسپوزل کنٹرول روم کا قیام عمل میں لایا گیا ۔ڈپٹی ڈائریکٹر سول ڈیفنس ژوب ڈویژن تاج محمد کاکڑ کی ہدایت پر کرائسز مینجمنٹ آفیسر عبدالقدوس کی سربراہی میں بم ڈسپوزل کی مختلف ٹیموں نے دکی میں بی ایریا کے معائنہ کے بعد کلیئرنس سرٹیفیکیٹ جاری کیا جبکہ اے ایریا میں پولیس اسپیشل برانچ کے ساتھ تعاون بھی کیا جائیگا ۔حلقہ پی بی 5اور این اے 258میں ضمنی انتخابات کے دورا ن بم ڈسپوزل کا عملہ بم اور دیگر خطر ناک اوزار ناکارہ بنانے کیلئے جدید طرز کے آلات استعمال میں لا رہے ہیں محکمہ سول ڈیفنس کے آفیسران اور اسٹاف ممبرز کسی بھی مشکل صورت حال سے نمٹنے کیلئے تیار ہیں ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3144/2018
کوئٹہ 15نومبر :۔محکمہ سماجی بہبودآبادی حکومت بلوچستان کے اعلامیہ کے مطابق ،مسز نسیم ظفر زوجہ محمدظفر اقبال فیلڈ ٹیکنیکل آفیسر )بی16-) موبائل سروس یو نٹ خاران اپنی عمر کی بالائی حد60سال کو پہنچنے پر 4فروری 2019ء کو سرکاری ملازمت سے ریٹا ئر ہو جا ئیں گی ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3145/2018 
سبی 15نومبر :۔ صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ مری نے کہا ہے کہ محکمہ صحت کو فعال کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جارہے ہیں اب وعدے نہیں عملی اقدامات کیے جائیں گے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال سبی کی حالت زر دیکھ کر افسوس ہوا عوام کو صحت کی سہولیات فراہم کرنے والا ہسپتال خود بیمادی کا گڑھ بن چکا ہے محکمہ صحت ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں ڈاکٹرز اورکی کمی ادویات کی قلت کو دور کرنے کیلئے وعدے نہیں بلکہ عملی قدم اٹھائیں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال سبی اچانک دورے کے موقع پر اور گفتگو کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈویژنل ڈائریکٹر ہیلتھ سبی ڈاکٹر فضل الرحمن بگٹی ، ضلعی ناظم صحت سبی ڈاکٹر محمد اکبر سولنگی ، ایم ایس ڈاکٹرغلام سرور ہاشمی ، ڈاکٹر علی احمد بلوچ ، ڈاکٹر شفقت سلطانہ ، ڈاکٹر عشرت کے علاوہ محکمہ صحت کے آفیسران واہلکاروں کی بھی موجود تھے، صوبائی وزیر صحت میر نصیب اللہ مری نے کہا کہ وگردونواح کے عوام کو صحت کی سہولیات فراہم کرنے والا ہسپتال خود بیمادی اور مسائل کی کی دلدل میں گھیرا ہوا ہے ڈاکٹر ز کی کمی ادوایات کی قلت ہسپتال کی موجودہ صورت حال درست کرنے کی ضرورت ہے سابق ادوار میں ڈاکٹرز کی کمی کو دور کرنے کے اعلانات سے ہمیں کئی مسائل کاسامنا کرنا پڑا انہوں نے ہسپتال میں پانی کی قلت کا بھی نوٹس لیا اور ڈاکٹرز کی کمی کو دور کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی انہوں نے کہا کہ وسائل میں رہ کر ہسپتال کو درپیش ومسائل مشکلات کا ازالہ کریں گیا انہوں نے کہا کہ 15سو سے زائدعارضی بنیادوں پر ڈاکٹرز کی بھرتی کی جائے گی اور ان کو دوردراز علاقوں میں بھیجا جائے گا اور ڈبل تنخواہ بھی محکمہ صحت دے گا تاکہ ان کی کارکردگی کو مدنظر رکھ کر مستقبل بنیادوں پر بھرتی کریں گے انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت میں اب کام چور ملازمین کی ہمیں ضرورت نہیں جو کام کرے گا اس کی قدر کریں ۔انہوں نے ایل آر بی ٹی کے وراڈ سمیت ہسپتال کے مختلف وراڑز کا تفصیلی معائنہ کیا اور ڈاکٹرز پیرامیڈیکل اسٹاف کے مسائل بھی سننے پولیو سے بچاؤ کے قطرے بھی پلائے اس موقع پر ایم ایس سول ہسپتال سبی ڈاکٹر غلام سرور ہاشمی نے ہسپتال کو درپیش مسائل ادویات و ڈاکٹر ز کی قلت کے حوالے سے بھی تفصیلی آگاہ کیا۔ 
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment