خبرنامہ نمبر1357/2019 
کوئٹہ 13اپریل :۔گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا کہ صوبے کو معاشی اور سیاسی پسماند گی سے نکالنے اور ترقی یافتہ دنیا کے ساتھ ہم قدم کرنے کیلئے سب سے ہم ضرورت اعلیٰ تعلیمی اداروں کو جد ید خطوط پر استوار کرنے اور نئی نسل کو بن الاقومی معیا ر کے مطابق جدید تعلیم اور سا ئنسی شعو ر سے لیس کرنا ہے ۔یہ بات انہوں نے ہفتہ کے روز گورنر ہاوس کوئٹہ میں ہا ئیر ایجوکیشن کمیشن کی اکر یڈ یشن /انسپکشن ٹیم کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی ۔وفد پرنسپل سی ایم ایچ لاہور میجر جنرل عبدالخالق نوید ، وائس چانسلر بولان یونیو رسٹی آف میڈ یکل اینڈ ہیلتھ سائنسزڈاکٹر نقیب اللہ اچکزئی ، ذوالفقار شہید میڈ یکل یونیو رسٹی اسلام کے پروفیسر حسن عباس ظہیر ،ڈائر یکٹر جنرل اکر یڈ یشن اینڈ سر ٹیفیکشن ایچ ای سی اسلام آباد ڈاکٹر طاہر عباس زیدی اور ہا ئیر ایجوکیشن کمیشن ریجنل سینٹر احمد ییحیٰ سمیت بولان میڈ یکل یو نیو رسٹی کے پر نسپلز اور ڈ ینز فیکلٹیز پر مشتمل تھا ۔اس موقع پر گورنر بلوچستان نے کہاکہ ہماری مسلسل جدوجہد اور بھرپور توجہ کے باعث بلوچستان کی تمام یو نیو رسٹیوں کی کا رکردگی میں بہتری آئی ہے ۔اعلیٰ تعلیم کو فروغ ملا ہے ۔تعلیمی امور معاملات اور درس تدریس کو پروان چڑ ھانا شروہوا ۔گورنر بلوچستان نے کہا کہ موجودہ وائس چانسلر بولان یونیو رسٹی آف میڈ یکل اینڈ ہیلتھ سائنسیز اور ان کی پوری ٹیم کی صلا حیتوں، کاوشوں او ر خدمت خلق کے جذبے وولو لہ دیکھ کر ہی بات یقین کے ساتھ کی جاسکتی ہے کہ بہت جلد میڈ یکل سائنسسز میں نہ صرف پی ایچ ڈی سکا لرز پیدا ہونگے بلکہ ملک کی دیگر میڈ یکل یونیورسٹیوں میں بھی یہاں کے سکالز خدمات سر انجام دینگے ۔گورنر بلوچستان نے کہاکہ اعلیٰ تعلیم کے لئے فنڈز میں اضافہ اور اُن کی بروقت ادائیگی سے کئی مثبت اور تعمیری اثرات مرتب ہونگے ۔گورنر نے ہائیر ایجو کیشن کمیشن کے حکام ، صوبائی حکومت او روائس چانسلر صاحبا ن کے درمیان مسلسل اور متحرک رابطے کی فروغ پر زور دیا ۔قبل ازیں مذکورہ ٹیچر نے بولان یونیو رسٹی آف میڈ یکل اینڈ ہیلتھ سا ئنسز اور بی ایم سی ہسپتال کادورہ بھی کیا ۔ٹیم کو تفصیلاً بریفنگ دی گئی اور ادارے کی کا رکر دگی اور درپیش مشکلات سے بھی آگاء کیا ۔
()()()
خبرنامہ نمبر1358/2019 
کوئٹہ 13اپریل :۔گورنر بلوچستان امان اللہ خان یا سین زئی نے کہا ہے کہ پورے خطے میں معاشی اور تجارتی تبدیلیاں نمایاں ہورہی ہیں اور چائینا پاکستان اقتصادی راہداری کی بدولت پوراخطہ بالخصوص پاکستان معاشی اور تجارتی سر گرمیوں کا مرکز بنے گا لہذ ا ضروری ہے کہ بلوچستان کے تمام بڑے تجار، صنعتکار او رکاروباری حضرات اپنی تجارت پر بھرپور توجہ مرکوز رکھیں اور دیگر ممالک کی تجارتی منڈیوں تک رسائی حاصل کرنے کی کوشش کریں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کے روز کوئٹہ ائیر پورٹ پر ٹو یو ٹا کوئٹہ موٹرز کی مناسبت سے منعقدہ اختتامی تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پرسابق گورنر بلوچستان محمد خان اچکزئی اراکین صوبائی اسمبلی سمیت صوبے بھر کے تجار،صنعتکا ران اور کاروباری حضرات موجودتھے۔ اختتامی تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے گورنر بلوچستان نے کہا کہ ملک قوم کی پائیدار ترقی ،خو شحالی او رسر خروئی کا انحصار معاشی نظام پر ہوتا ہے ۔اس ضمن میں قومی معیشت کواستحکام بخشے ،روزگار کے مو اقع فراہم کرنے میں تا جروں صنعتکاروں اور کاروبارحضرات کا کلیدی کردار ہے ۔گورنر نے کہا کہ ہماری خوش قسمتی ہے کہ ہمارا صوبہ قدرتی وسائل ومعدنیات اور زیار کش اور،ملنسارافرا دسے مالا مال ہے ۔ معدنی وسائل اور مقامی افراد ی قوت کی صلا حیتوں کوبروے کار لانے کیلئے زیادہ سے زیادہ معاشی سرگرمیوں کو فروغ دینے کی اشد ضرورت ہے ۔انہوں نے تمام لوکل تجاراور صنعتکاروں پر زور دیاکہ وہ سرمایہ کاری کے حوالے سے آگے بڑ ھیں ،لوگوں کو روزگار فراہم کرنے کے موقع دیں اورملک و صوبے کی ترقی و خوشحالی میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں ۔قبل ازیں گورنر بلو چستان نے ایر پورٹ روڈ پر ٹو یو ٹامو ٹرز کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اس موقع پر چیف ایگز یکٹیو افیسرٹو یو ٹا کمپنی بلوچستان حا جی نصیب اللہ اچکزئی اور انڈ س موٹر کمپنی کے نمائندوں نے بھی خطاب کیا ۔آخر میں گورنر بلوچستان نے منتظمین اور نما ئیند گان میں یاد گار ی شیلڈ تقسیم کی ۔
()()()
خبرنامہ نمبر1359/2019 
کو ئٹہ 13اپریل :۔ترجمان محکمہ صحت حکو مت بلوچستان نے کہا ہے کہ خاران میں اپوزیشن رکن ثناء بلوچ کی جانب سے ڈائیلاسز یونٹ کا افتتاح انتہائی غلط اقدام ہے، اپوزیشن جماعتیں ہماری کارکردگی پر صرف تنقیدی سیسات چھوڑ کرکے تعمیری سیاست اپنائیں،اپنے ایک بیان میں ترجمان نے کہا ہے کہ ڈائیلاسز یونٹس کا قیام وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان اور موجودہ حکومت کے وژن کا حصہ ہے ترجمان نے کہا ہے کہ اپوزیشن جماعتیں حکومتی کارکردگی اور تکمیل پانے والے منصوبوں پر افتتاحی تختی لگانے کا سلسلہ ترک کریں خاران میں ڈائیلاسز یونٹ کا قیام صوبائی حکومت کی بہتر منصوبہ بندی کا نتیجہ ہے اپوزیشن رکن اسمبلی ثناء بلوچ کی جانب سے منصوبے کا افتتاح افسوسنا ک اور علاقے کے عوام کو دھوکہ دینے کے مترادف ہے ا نہو ں نے کہا کہ اس ہی منصوبے کے تحت سب سے پہلے نصیر آباد، چاغی اور لورالائی میں ڈائیلاسز یونٹس قائم کئے گئے اور 70 سے زائد میڈیکل کیمپس کا انعقاد کیا گیا جن میں سرجیکل کیمپ کوہلو اور اب خاران میں 3روزہ سرجیکل کیمپ شامل ہے ترجمان نے کہا کہ منصوبے کے تحت بلوچستان کے تمام ڈویڑنل ہیڈ کوارٹرز میں ڈائیلاسز یونٹس کا قیام ، ایم سی ایچ سینٹرز کا قیام ، کنٹریکٹ بنیادوں پر سرجن اورماہرامراض ڈاکٹروں کی تعیناتی، کثیر تعداد میں ادویات کی فراہمی اور سہولیات کی فراہمی شامل ہے انہو ں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں تعمیری سیاست اپنا کرعوام کی خدمت کریں اورصوبے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں، حکومتی اقدامات پر تختیاں آویزاں کرکے اور افتتاح کرنے سے عوام کی خدمت نہیں ہوسکتی۔
()()()
خبرنامہ نمبر1360/2019 
کوئٹہ13اپریل :۔گز شتہ روز دوروزہ پا نچواں بچوں کے ہڑ یوں کے امراض کا کا نفرنس سر کٹ ہاؤس تربت کے مقام پر اختتام پذپر ہوا، تقریب کا انعقادتربت کے معروف آر تھو پیڈ ک سرجن او ر اسسٹنٹ پر وفیسر ڈاکٹر واحد بخش نے مکران میڈیکل کالج تربت کے اشتر اک کے ساتھ کیا تھا۔اختتامی تقریب کے مہما ن خا ص صوبائی وزیر اطلاعات واعلیٰ تعلیم ظہور احمد بلیدی تھے جبکہ دوسرے مہمان گرامی میں صوبائی اسمبلی لالہ رشید دشتی کے علاوہ ضلع کیچ کے ڈاکٹروں کی بڑی تعداد بھی موجود تھیں ۔اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہاکہ حکمران میڈیکل کالج تربت کی جانب سے اس طرح کے کا نفر نس کا انعقاد یقیناًایک بہت بڑے اعزاز کی بات ہے جسکا بڑ اکر یڈ ٹ ممتا ز آ ر تھو پیڈ ک سرجن اور کالج کے اسسٹنٹ پر وفیسر ڈاکٹر واحد بخش کو جاتا ہے جن کی کوششوں سے آج کے نامور آرتھو پیڈ ک سرجن آج بلو چستان کے پسما ندہ علاقے تربت میں جمع ہوئے ہیں، انہوں نے کہا کہ اس طرح کے کا میاب کانفرانس کے انعقاد سے ملک بھر کے دوسرے علاقوں کو ایک مثبت پیغام جائیے گا کہ بلوچستان کے عوام با شعور ہیں اور تعلیم حاصل کرنے کیلئے خصوصی توجہ دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا بلوچستان میں تبدیلی تیزی کے ساتھ آرہی ہے اس طرح کے کا نفرنس تربت کے علاوہ بلوچستان کے دیگر علاقوں میں بھی مستقبل میں منعقدہ ہونے چائیے تاکہ بلوچستان کے تمام علاقوں میں لوگ ا س سے مستفید ہوسکیں ۔دریں اثنا ء تقریب میں ملک کے ممتاز آرتھو پیڈ ک سر جنوں نے پیدائشی بچوں میں کلب فٹ Club Footبیماری جسکی وجہ سے نوزا ئیدہ بچوں کے پیر معز ور ہوجاتے ہیں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ بچوں میں اس طرح کی بیما ری کے تدارک کیلئے ابتد اہی مر حلے میں پید ائش کے وقت علاج کرانا ضروری ہے ورنہ بچوں میں معزوری کاخطرہ بڑ ھ جایئے گا ۔ انہوں نے تفصیلات بتائے ہوئے کہا کہ ابتد اہی طور پرعلاج کے لیئے صرف پلاسٹر کے با ند ھنے کی ضرورت ہوتی ہے جبکہ آخری مرحلے پر علاج کیلئے آپر یشن کی ضرورت پڑتی ہے۔واضح رہے یہ کانفرنس تربت میں اپنی نو عیت کاپہلا کا نفرنس ہے جس سے ملک کے ممتاز آرتھو پیڈ ک سرجن ڈاکٹر تحسین چیمہ ،پروفیسر انیس الدین ،پروفیسر مسعو د قاضی ،پر وفیسرمحمد امین چنا ئے ،اسلم مینگل ،ذوالفقار مینگل ،محمد یوسف اور پر وفیسر علی شامل تھے ۔مکران میڈیکل کالج کی طرف سے کالج کے پرنسپل ڈاکٹر سید عبدالروف شاہ وائس پر نسپل ڈاکٹر محمد اسلم آزاد ،سینئر لیکچر ار ڈاکٹر عطاء اللہ قحطانی ممتاز آرتھو پیڈ ک سرجن ڈاکڑ واحد بخش اور دیگر شریک تھے جبکہ تقریب کے اختتامی دن کے مہمان خاص سابقہ وزیر اعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ تھے ۔تقریب کے اختتام میں صوبائی و زیر اطلاعات تعلیم ظہو ر احمد بلیدی اور لالہ رشید دشتی نے کا نفر نس میں شامل ہونے والے ڈاکٹروں میں سر ٹیفیکیٹ بھی تقسیم کئیے ۔
()()()