Download

خبر نامہ نمبر3080/2018
کوئٹہ12نومبر ۔ صوبائی وزیر خزانہ میر محمد عارف محمد حسنی نے ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری کی والدہ کے انتقال پر اظہار افسوس کرتے ہوئے دعا کی ہے کہ اللہ تعالیٰ مرحومہ کو جنت الفردوس میں جگہ دے اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر3081/2018
کوئٹہ12نومبر ۔صوبائی وزیر خزانہ میرمحمد عار ف محمد حسنی نے بی این پی( مینگل) کے مرکزی رہنما ملک عبدالولی کاکڑ کی اہلیہ کے انتقال پر افسو س کا اظہار کرتے ہوئے دعا کی ہے کہ اللہ تعالیٰ مرحومہ کو اپنی جوار رحمت میں جگہ عطا فرمائے اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا کرے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر3082/2018
کوئٹہ 12نومبر ۔ صوبائی وزیر مواصلات و تعمیرات نوابزادہ طارق مگسی نے کہا ہے کہ ایگزیکٹو کمیٹی آف دی نیشنل اکنامک کونسل ( ECNEC) کے ہونے والے اجلاس میں ہم بھر پور اندازمیں اپنا مؤقف پیش کریں گے اوروفاقی حکومت کو صوبے کی ترقیاتی ضروریات اور مشکلات کے بارے میں آگاہی دی جائے گی ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایکنک اجلاس کے حوالے سے تیاری کیلئے منعقدہ اجلاس کے دوران کیا ۔ جس میں ایڈیشنل چیف سیکریٹری ترقیات و منصوبہ بندی سجاد احمد بھٹہ نے صوبائی وزیر کو بریفنگ دی ۔ اجلاس میں وفاقی پی ایس ڈی پی میں بلوچستان کو ملنے والے حصہ اور ترقیاتی منصوبوں کے لیئے فنڈ ز کے اجراء کا جائزہ لیا گیا اور اتفاق کیا گیا کہ ایکنک اجلاس میں صوبہ کی ترقیاتی ضروریات اور اہم نوعیت کے اجتماعی منصوبوں کے بارے میں آگاہی دی جائے گی ۔ واضح رہے کہ وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کی زیر صدارت ایکنک کا آئندہ اجلاس اسلام آباد میں ہوگا جس میں صوبائی وزیر مواصلات و تعمیرات نوابزادہ طارق مگسی اور ایڈیشنل چیف سیکریٹری ترقیات و منصوبہ بندی سجاد احمد بھٹہ شرکت کریں گے۔
()()()
خبر نامہ نمبر3083/2018
کوئٹہ 12نومبر ۔صوبائی وزیر مواصلات و تعمیرات نوابزادہ طارق مگسی نے کہا ہے کہ عوام کی ترقی و خوشحالی کا خواب پورا کرنے کے لئے ہمہ وقت کام کرنا ہوگا۔ لوگوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے موجودہ صوبائی حکومت تمام دستیاب و سائل کو بروئے کار لارہی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے کیا جنہوں نے گزشتہ روز یہاں ان کے دفتر میں ملاقات کی ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کے وژن کے عین مطابق اجتماعی نوعیت کے ترقیاتی منصوبے مرتب کئے جائیں گے تاکہ صوبہ کے پسماندہ علاقوں کی ترقی اور لوگوں کو بنیادی ضروریات زندگی کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے صوبائی وزیر نے کہا کہ بین الصوبائی شاہراہوں کے ساتھ ساتھ تمام ڈویژن کے مواصلات رابطے بہتر بنانے کیلئے معیاری سڑکوں کا جال بچھا یا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام دوست اور صوبے کی مجموعی ترقی اور لوگوں کی اقتصادی طو پر خوشحالی بنانے کیلئے مؤثر پالیسیاں اور ٹھوس بنیادوں پر اقدامات اٹھارہی ہے او ر لوگوں کی ترقی اور بہتری کیلئے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گی ۔ عوامی فلاح و بہبود کیلئے ہر ممکن کوشش کی جائیگی اور نامکمل منصوبوں کو مکمل کیا جائے تا کہ عوام تک ان منصوبوں کے ثمرات پہنچ سکیں ۔
()()()
خبر نامہ نمبر3084/2018
کوئٹہ12نومبر ۔صوبائی سیکریٹری خزانہ نور الامین مینگل کی زیر صدارت او ایم موڈیول پر عملدرآمد کے حوالے سے اجلاس منعقد ہوا ۔اجلاس کے شرکاء میں ڈائریکٹر ( FABS) اسلام آباد تجمل الہٰی ، ایڈیشنل سیکریٹری خزانہ لعل جان جعفر ، ڈی جی ٹریژری سعید عمرانی ، ایڈیشنل اے جی ثناء اللہ ود یگر شامل تھے ۔ اس موقع پر اجلاس میں او ایم موڈیول کے تصور ، ضروریات موجودہ نظام اور نفاذ کی حکمت عملی پر غور و خوض کے بعدفیصلہ کیا گیا کہ او ایم موڈیول پرکام کا آغاز پہلے مرحلے میں کسی چھوٹے محکمہ سے کیا جائے تاکہ اس کے بعد اس منصوبے کو دیگر محکموں تک وسعت دی جائے۔
()()()
خبر نامہ نمبر3085/2018
کوئٹہ12نومبر ۔سابق نگران صوبا ئی وزیر اطلاعات بلوچستان و ڈیم فنڈز مہم بلوچستان کے فوکل پرسن ملک خرم شہزاد نے کہا ہے کہ قناعت پسندی اور وسائل کے بہتر استعمال سے نہ صرف ہم مالی مشکلات سے باہر نکل سکتے ہیں بلکہ ملک کو در پیش مسائل میں بھی کمی لائی جاسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نگران دور حکومت میں وزیر اعلیٰ علاؤ الدین مری اور ان کی کابینہ نے جس محنت اور جانفشانی کا مظاہرہ کرتے ہوئے صوبے کی ترقی اور مسائل پر قابو پانے کی جو کوششیں کیں ہیں ان کو مد نظر رکھتے ہوئے موجودہ سیٹ اپ ان کے بہتر طرز حکومت اور ٹیم ورک کے تحت درپیش چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے اقدامات کرسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نو منتخب صوبائی حکومت وزیر اعلیٰ جام کمال کی سربراہی میں جس طرح پر عزم طریقے سے صوبے میں گڈ گورننس اور مالی مشکلات پر قابو پانے کیلئے مصروف عمل ہے امید کی جا سکتی ہے کہ وہ اپنی بہتر حکمت عملی سے صوبے کو درپیش مسائل سے نکالنے میں جلد ہی کامیاب ہوں گے ۔ انہوں نے اس ضمن میں عوام اور خصوصاً صوبائی حکومت کے ماتحت تمام اداروں سے اپیل کی ہے کہ وہ موجودہ حکومت کی بہترین کاوشوں کو شرمندہ تعبیر کرنے کیلئے ان کے ساتھ بھر پور تعاون کریں تاکہ ہمارا صوبہ ترقی ، خوشحالی اور روشن مستقبل کے ساتھ عالم دنیا کے افق پر روشن ستارے کی مانند نمودار ہوسکے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر3086/2018
کوئٹہ 12نومبر ۔ صوبائی مشیر کھیل و ثقافت عبدالخالق ہزار ہ نے کہاہے کہ تجارت اور صنعت کاری کے فروغ کے لئے موجودہ صوبائی حکومت جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات اٹھا رہی ہے اقتصادی اور معیشت کی ترقی میں صنعت کا روں اور تاجر برادری کا کلیدی کردار ہے صوبے میں مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں تاجر برادری کے ساتھ ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلوچستان تاجر فورم کے سیکریٹری افتخار حسین کی قیادت میں ملنے والے وفد سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ وفد میں صدر ہزارہ ٹاؤن یونٹ اسد یوسفی ، صدر مشاورتی کونسل ماسٹر حفیظ ، سیکریٹری ہزارہ ٹاؤن یونٹ رحمان علی و پریس سیکریٹری ہزارہ ٹاؤن یونٹ ڈاکٹر فکرت و دیگر شامل تھے وفد کے شرکاء سے صوبائی مشیر کھیل و ثقافت نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ صوبے میں امن و امان کی صورتحال کافی بہتر ہے تاجر برادری صوبے میں کاروبار اور صنعت کاری کے فروغ کے لئے آگے آئیں تاکہ ہمارا صوبہ بھی اقتصادی اور معاشی لحاظ سے باقی صوبوں کے یکساں آسکے اس موقع پر وفد نے صوبائی مشیر کو ہزارہ ٹاؤن کے عوام کو درپیش مسائل و مشکلات سے آگاہ کیا جس پر صوبائی مشیر نے انہیں یقین دلایا کہ ہزارہ ٹاؤن کے مسائل کے حل کیلئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔
()()()
خبر نامہ نمبر3087/2018
کوئٹہ 12نومبر ۔ ڈپٹی میئرمیٹرو پولیٹن کارپوریشن محمد یونس بلوچ نے کہا ہے کہ کوئٹہ شہر میں 58 حلقوں میں ترقیاتی کام بہت تیزی سے جاری ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ 2016-17 کے لئے تمام ترقیاتی کام جاری کردیئے گئے ہیں اور تمام کونسلروں کو ہدایات جاری کی ہیں کہ وہ اپنے اپنے حلقوں میں ترقیاتی کاموں کی خود نگرانی کریں اور جہاں پر کوئی مسئلہ درپیش ہو وہ اس کا ازالہ کریں انہوں نے کہا کہ تمام انجینئر ز کو بھی ہدایات جاری کی گئیں ہیں کہ وہ موسم سرماسے پہلے تمام کاموں کو مکمل کریں تاکہ عوام کے تمام بنیادی مسائل حل ہوسکیں اور اس ضمن میں کوالٹی کا خاص خیال رکھنا انتہائی ضروری ہے تاکہ کونسلروں کو کوئی شکایت نہ ہو ۔ انہوں نے تمام کونسلروں کو خراج تحسین پیش کی کہ کم وسائل میں بھی انہوں نے زیادہ سے زیادہ کام کئے ہیں ۔ انہوں نے وفد کو بتایا کہ کوئٹہ شہر میں تمام بنیادی مسائل کے حل کیلئے مزید فنڈدرکار ہیں تاکہ عوام کو ان کے بنیادی حقو ق انکی دہلیز پرمل سکیں۔
()()()
خبر نامہ نمبر3088/2018
نصیر آباد12نومبر ۔ ڈپٹی کمشنر نصیر آباد کے اعلامیہ کے مطابق بشیر احمد ولد غلام حسین قوم مینگل سکنہ وارڈ نمبر 5 ڈیرہ مراد جمالی ڈسٹرکٹ نصیر آباد کا لوکل سر ٹیفکیٹ ان کی اپنی درخواست پر منسوخ کردیا گیا ہے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر3089/2018
کوئٹہ12نومبر ۔محکمہ صحت حکومت بلوچستان کے اعلامیہ کے مطابق سید عبدالنسیم سینئر ڈرگ انسپکٹر ( بی ۔18) ڈسٹرکٹ کوئٹہ کا تبادلہ کرکے انہیں سیکریٹری کوالٹی کنٹرول بورڈ بلوچستان کوئٹہ تعینات کردیا گیا ہے ۔جبکہ باسط کریم داد فارمسٹ ( بی ۔ 17)ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال پنجگور کو صوبائی ہیلتھ ڈائریکٹوریٹ بلوچستان کوئٹہ میں رپورٹ کرنے کا کہا گیا ہے۔
()()()
خبر نامہ نمبر3090/2018
کوئٹہ 12نومبر ۔بلوچستان پبلک سروس کمیشن کے پریس ریلیز کے مطابق کمیشن ہذا کے زیر اہتمام 15اگست 2018 کو ہونے والے تحریری امتحان میں ریجنل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ و پاپولیشن ویلفیئر میں اکاؤ نٹنٹ ( بی ۔ 16 ) کی آسامی کے لئے ارسلان علی فیصل ولد رحیم الدین ( مرحوم ) ، اسد امین ولد محمد امین ، محمد عرفان ولد اللہ دوایا اور صغیر احمد ولد محمد اسماعیل جبکہ اکاؤنٹنٹ ( بی ۔16) پاپولیشن ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کی آسامی کیلئے ارسلان علی فیصل ولد رحیم الدین ( مرحوم ) ، اسد امین ولد محمد امین ، حرا ملک بنت ملک نوید ، محمد عرفان ولد اللہ دوایا ، محمد اسماعیل ولد حاجی محمد اشرف ، محمد یوسف ولد عبدالحمید ، رضا محمد ولد محمد صدیق ، صغیر احمد ولد محمد اسماعیل اور سائرہ بنت غلام دستگیر انٹرویو کیلئے کامیاب قرار پائے ہیں ۔ کامیاب امیدواروں کو ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ اپنی درخواستوں کے ہمراہ تصدیق شدہ کاغذات ریکروٹمنٹ برانچ میں ایک ہفتہ کے اندر اندر جمع کرادیں ۔ جبکہ انٹر ویو کی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا ۔
()()()
خبر نامہ نمبر3091/2018
لورالائی12نومبر۔صوبائی وزیر صنعت وتجارت حاجی محمدخان طور اتمانخیل نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ بلوچستان اور صوبائی حکومت کی صوبہ بھر میں عوام کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی، تعلیم اورصحت کی بہتر سہولیات اولین ترجیحات میں شامل ہیں ۔محکموں کی کارکردگی بہتراورموثر بنانے میں وقت لگے گالورالائی کے پانی کامسئلہ50فیصد حل کردیا گیاہے۔بجلی کی ترسیل بہتر ہوگی تو پانی کامسئلہ حل ہوجائے گا،سول ہسپتال لورالائی کوفعال کر دیا ہے۔ مسائل کے حل کرنے میں وقت ضرور لگتا ہے لیکن عوام تبدیلی ضرور دیکھیں گے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے دور دراز سے آئے ہوے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ محکموں کی کاکردگی بہتر بنانے کی ہر ممکن کوششیں کی جارہی ہیں صوبے کے تمام فیصلے ہم خود صوبے کے اندرکریں گے انہوں نے کہا کہ لورالائی میڈیکل کالج کا دو رہ کیاہے وہ فعال ہے لیکن کالج کے کچھ مسائل ہیں جنہیں جلدحل کرلیا جائے گا۔انہوں نے بتایا کہ کالج کے پانی کیلئے ذاتی زمین میں رگ کی جگہ د ی ہے۔میری کوشش ہوگی کہ میڈیکل کالج میں قابل ڈاکٹر تعینات ہوں جومیڈیکل کے طلباء کواچھی تربیت دے سکیں اور سول ہسپتال میں علاج معالجے میں بھی مددگار ثابت ہوں۔انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں ڈاکٹروں کی تعیناتی جلد کردی جائے گی۔ ہسپتال میں اس وقت سرجن اور نشہ دینے والاڈاکٹرموجود ہیں۔ لیکن مزید ڈاکٹر کو تعینات کیا جائے گاتاکہ کسی کی رخصت کی صورت میں دوسرا ڈاکٹر خدمات سر انجام دیتا رہے۔ انہوں نے کیا کہ تعلیمی اداروں کی حالت بہتر بنانے میں صوبائی حکومت دلچسپی لے رہی ہے۔ایسے مسائل پیدانہیں ہونے دینگے جس سے طلباء واساتذہ کاقیمتی وقت ضائع ہو۔مارچ میں سکولوں کے کھلنے سے پہلے پہلے درسی کتب تمام سکولوں میں موجودہونگے انہوں نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت بہتر طورپر سمجھتی ہے کہ بلوچستان کو ترقی دینی ہے اورعوام کے مسائل حل کرنے ہیں اگر ہم یہ کام نہ کر سکے تو ہماری حالت بھی سابقہ حکومت جیسی ہوگی۔صوبائی حکومت پورے صوبے کے تمام علاقوں کوبلاامتیازترقی دینے کی خواہاں ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام موجودہ وسابقہ حکومت میں فرق ضرور محسوس کریں گے ہم اپنے فرائض کا احساس رکھتے ہیں عوام کااعتمادضرور بحال کریں گے۔
()()()
خبر نامہ نمبر3092/2018
نصیرآباد12نومبر ۔ ڈپٹی کمشنر نصیرآبادقربان علی مگسی نے کہا ہے کہ حکومت پولیو کے خاتمے کیلئے جنگی بنیادوں پر اقدامات کررہی ہے اس موذی کے خاتمے کے بغیر صحت مندمعاشرہ تشکیل نہیں پاسکتا مستقبل کے معماروں کوپولیو جیسے موذی مرض سے بچانے کیلئے والدین سمیت تمام مکتبہ فکرکے افرادکو آگے آنا ہوگا پوری دنیا میں پولیو کا وائرس ختم کیا چکا ہے مگر پاکستان سمیت چند ایک ملکوں میں یہ وائرس اب بھی خطرے کا باعث بنا ہواہے پولیوانسدادمہم میں ہر مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افرادکو اپنااپناکرداراداکرنا ہوگا تاکہ اس موذی مرض کا مکمل خاتمہ ہوانہوں نے کہا کہ بچے ہمارے مستقبل کے ضامن ہیں ان کی بہتر پرورش اورمستقل صحت یابی سے ہی بہترین معاشرہ تشکیل پاتا ہے ان خیالات اظہار انہوں نے تین روزہ انسداد پولیومہم کے سلسلے میں بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کے موقع پر ڈاکٹروں اوردیگر آفسیران سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈی ایچ او ڈاکٹر عبدالمنان لاکٹی نے بھی بچوں کوپولیو کے قطرے پلائے ڈاکٹرعبدالمنان لاکٹی نے بتایا کہ انسدادپولیو مہم کے سلسلے میں میل اورفیمیل کی ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں ٹرانزٹ پوائنٹ بنادیئے گئے ہیں اورموبائل ٹیمیں گھرگھر جاکر پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کو پولیو کے قطرے پلائیں گی انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ پولیو مہم کی ٹیموں کی مددکرکے اپنے بچوں کو پولیو کے قطرے ضرورپلائیں پولیو مہم کے دوران عملے کی طرف سے کوئی کوتاہی یالاپرواہی ہرگزبرداشت نہیں کی جائے گی ہمارامشن ہے کہ پولیوکے قطرے ہربچہ کو ہربارپلائیں جائیں ملک کو پولیو جیسے موذی مرض سے پاک کرنے کیلئے ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ ہم ملکراپناکرداراداکریں اورملک کی جڑیں کھوکھلے کرنے والے مرض سے پاکستان کو پاک بنادیں علماء کرام سمیت تمام مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افرادکو اس قومی فریضے کو اداکرنا ہے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر3093/2018
کوئٹہ 12نومبر ۔ نوجوان مستقبل کا سرمایہ ہیں ان کی صلاحیتوں کو اجا گر کرکے انہیں ایک منزل کی راہ دے کر ہم ملک کو مزید مستحکم کرسکتے ہیں ، ملک کی ترقی کیلئے ہمیں مل کر کام کرنے اور معلومات کو شیئر کرنے کا موقع ملے گا جبکہ قوم کو اسکاؤٹس سے بہت توقعات ہیں جس پر ہمیں پورا اترنا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار بلوچستان اسمبلی کی سابق اسپیکر اورپاکستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کی سابق چیف کمشنر راحلیہ حمید خان درانی نے بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کے زیر اہتمام صوبائی اسکاؤٹ ہیڈ کوارٹر میں منعقد ہونے والے یوتھ فورم کے افتتاح کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر صوبائی کمشنر بلوچستان اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کے حاجی عبدالکریم بلوچ ، صوبائی سیکریٹری بلوچستان صابر حسین ، سیکریٹری سندھ بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن سیداختر میر ، نظام الدین مینگل ، عبدالقیوم بابائی ، محمد عرفان ، یوتھ کونسل کے آرگنائزر سعد وقاص نے بھی خطاب کیا ۔ یوتھ کونسل میں بلوچستان کے مختلف اضلاع کے 15 اسکاؤٹس ، سندھ کے 12، خیبر پختونخواہ کے 15 ، پی آئی اے کے 5 ، پاکستان ریلوے کے 5 اسکاؤٹس شرکت کررہے ہیں ۔ راحیلہ حمید خان درانی نے کہا کہ نوجوانوں کی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے میں اسکاؤٹ تحریک نمایاں کردار ادا کررہی ہے ۔ بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن صوبہ بھر کے اسکاؤٹس کیلئے منفرد نوعیت کی سر گرمیوں کا انعقاد کرکے انہیں آگے بڑھنے کے مواقع فراہم کررہی ہے ۔ اس کونسل کی خاص بات یہ ہے کہ اس میں بلوچستان کے علاوہ دیگر صوبوں کے اسکاؤٹس کو بھی شرکت کا موقع فراہم کیا گیا ہے جس کے باعث دیگر صوبوں کے اسکاؤٹس کو با ہم مل کر ایک دوسرے کے خیالات جاننے کا موقع ملے گا نیز یہ کونسل آئندہ کیلئے راہیں متعین کرے گی ۔ اس موقع پر صوبائی کمشنر بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن حاجی عبدالکریم بلوچ نے کہا کہ بلوچستان بوائے اسکاؤٹس ایسو سی ایشن کی دیگر صوبوں کے ہمراہ نوجوانوں کی رہنمائی کیلئے یوتھ کونسل کا انعقاد ایک کامیاب کوشش ہے جس سے اچھے نتائج برآمد ہوں گے اور نوجوانوں کو ترقی کی نئی راہیں متعین کرنے کا موقع ملے گا۔ صوبائی سیکریٹری صابر حسین نے شرکاء کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ اس یوتھ کونسل کے انعقاد سے نوجوانوں میں خود اعتمادی پیدا ہوگی او وہ اس ملک کے اچھے پارلیمنٹرین بن سکیں گے جس سے ملک میں تبدیلی کی لہر بیدار ہوگی ۔ اس موقع پر مہمانوں کو سوینئر بھی دیئے گئے ۔ واضح رہے کہ کانفرنس 14 نومبر تک جاری رہے گی۔
()()()
خبر نامہ نمبر3094/2018
پشین 12نومبر۔ڈپٹی کمشنرپشین اورنگزیب بادینی نے کہا ہے کہ ضلع پشین میں پولیو وائرس کی موجودگی ایک المیہ سے کم نہیں پولیو کے مکمل خاتمے کے لیے عوام میں ہر سطح پر شعور آگاہی کے لیے اقدامات کی ضرورت ہے۔اس موذی مرض کی بیخ کنی کرنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ کیونکہ یہ دشمن وائرس ہمارے بچوں کو عمر بھر کے لیے مفلوج کر دیتا ہے۔اس لاعلاج مرض کے خاتمے اور مہم کو بہتر بنانے کے لیے والدین، علما ء کرام ، قبائلی عمائدین اورسیاسی معتبرین سمیت رضاکاروں کی مدد لی جارہی ہے ۔ ان خیالات کا اظہارا نہوں نے مہم کے ابتدائی دن ایک بچے کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلا کر مہم کا آغاز کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ جاری مہم کے دوران پانچ سال تک عمرکے ایک لاکھ تیس ہزار دو سو بیانوے(130292)بچوں کوپولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جارہے ہیں۔جبکہ ضلع بھر میں چھ سو ترانوے (693)ٹیمیں اور اڑتالیس(48 )فکسڈ سائیٹس سمیت ستائیس(27)خصوصی ٹرانزٹ پوا ئنٹس بھی قائم کئے گئے ہیں ۔ ضلع کے ترتالیس(43) یونین کونسلوں میں پولیو مہم پر مامور سیکورٹی کے فرائض سرآنجام دینے والے دو سو دس(210)پولیس اہلکار ، تین سوننانوے(399) لیویز اہلکاروں سمیت پینتالیس(45) ایف سی کے اہلکاربھی شامل ہیں ۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ پولیو وائرس ایک قومی مسئلہ ہے اور باربار چلائی جانے والی مہم میں کو ئی بچہ حفاظتی قطروں سے محروم نہ رہے مقصود ہوتا ہے ۔کیونکہ بد قسمتی سے کوئٹہ ،قلعہ عبداللہ سمیت ضلع پشین میں بھی پولیو وائرس کی موجودگی کا خدشہ ہے ۔اسی لئے پولیو مہم کو کامیابی سے ہمکنار کرنا ضلع کے ذی الشعور عوام کی مدد سے ہی ممکن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے بچوں کے مستقبل کو کسی صورت داؤ پر لگنے نہیں دینگے ۔مہم میں کسی قسم کی رکاوٹ اور غفلت قابل برداشت نہیں کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ضلعی سرحدوں پر بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کے عمل کو یقینی بنا کر ہی ہم اپنے ضلع کو پولیو وائرس سے پاک کرسکتے ہیں ۔جبکہ نقل مکانی کرنے والے خاندانوں کے لیے ایک مربوط لائحہ عمل تشکیل دیاہے۔ تاکہ کو ئی بچہ پولیو قطرے پینے سے رہ نہ جائے ۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment