HomeNews11-05-2019 Saturday (File No.2)

11-05-2019 Saturday (File No.2)

11-05-2019 Saturday (File No.2)

خبرنامہ نمبر 1674/2019
کوئٹہ 11مئی :۔بلوچستان عوامی پارٹی کے صدر وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال کی جانب سے پارٹی کے عہدید اروں اورکا رکنوں کے اعزازمیں افطارو عشائیہ دیا گیا بی اے پی کے بانی رہنما سعید احمد ہاشمی پارٹی کے سیکرٹری جنرل سینٹر منظور احمد خان کاکڑ ،وفاقی وزیر محترمہ زبیدہ جلال صوبائی وزراءواراکین صوبائی اسمبلی پارٹی کی خواتین اراکین وکارکنان نے افطار وعشائیہ میں شرکت کی ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر 16752019
کوئٹہ 11مئی :۔محکمہ ثانوی تعلیم بلوچستان نے غیر حاضری اور متبادل ڈیوٹی سرانجام دینے کی پاداش میں دو روز کے دوران صوبے کے دو اضلاع میں 56 خواتین معلمین سمیت 137 اساتذہ کو معطل کرتے ہوئے جواب طلبی کر لی سیکرٹری ثانوی تعلیم بلوچستان کے احکامات کے مطابق غیر حاضری اور متبادل ڈیوٹی سرانجام دینے والی پشین کی 56 خواتین ٹیچرز کو معطل کرتے ہوئے شوکاز نوٹس جاری کیا گیا جبکہ ڈیرہ بگٹی کے 81 غیر حاضر اساتذہ اور ماتحت عملے کو معطل کردیا گیا اور ان سے اندر معیاد پندرہ ایام جواب طلبی تحریری طور جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔ سیکرٹری ثانوی تعلیم بلوچستان محمد طیب لہڑی نے بتایا ہے کہ یہ کارروائی تمام تر جانچ پڑتال اور متعلقہ ضلعی تعلیمی افسران کی تصدیق کے بعد حسب ضابطہ عمل میں لائی گئی انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی بلوچستان جام کمال خان کی جانب سے بلوچستان میں تعلیمی اصلاحات کے لئے نافذ ایمرجنسی کے بعد سرکاری تعلیمی اداروں میں بنیادی سہولیات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ نظم و نسق کے قیام اور تدریسی و غیر تدریسی عملے کی حاضری کو سو فیصد یقینی بنانے کے لئے چیک اینڈ بیلنس اور مانیٹرنگ کے موثر نظام کو فروغ دیا جارہا ہے اور عادی غیر حاضر ملازمین کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے پہلے مرحلے میں انہیں معطل کرکے انکوائری کمیٹی قائم کردی گئی ہے جبکہ دوسرے مرحلے میں غیر تسلی بخش جواب کی صورت میں انہیں برطرف کرکے گھر بھیجوا دیا جائے گا یہ واضح ہے اب ہم گھر بیٹھے کسی کو تنخواہیں نہیں دے سکتے جزاءاور سزا کا یہ عمل پورے صوبے میں یکساں طور پر غیر حاضر ملازمین کے خلاف جاری ہے اور تمام تر مصلحت اور دباو¿ سے بالا تر ہوکر صوبے کے بہتر تعلیمی مستقبل کے لئے سخت فیصلے کئے جاررہے ہیں اس ضمن میں سول سوسائٹی اور تمام طبقہ فکر کے افراد کو اصلاحاتی عمل میں ہمارا ساتھ دینا ہوگا انہوں نے کہا کہ صوبے میں تدریسی عملے کی کمی کو پورا کرنے کے لئے محکمہ تعلیم میں ریکروٹمنٹ کا آغاز کردیا گیا ہے اور تھرڈ پارٹی کے ذریعے صاف شفاف انداز میں ہونے والی ان بھرتیوں کے بعد سرکاری تعلیمی اداروں میں تدریسی عملے کی کمی کو پورا کرلیا جائے گا جس سے مجموعی تعلیمی صورتحال میں نمایاں بہتری آئے گی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر 1676/2019
کوئٹہ 11 مئی :۔محکمہ صحت حکومت بلوچستان کے ایک اعلامیہ کے مطابق سول ہسپتال سے فوری طور پر امراض اطفال کے یونٹ ون کو چلڈرن ہسپتال وسیع طر عوامی مفاد میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ تمام ڈاکٹرز، ٹرینی ڈاکٹرز، ہاوس آفیسرز، فارماسسٹ، نرسز، پیرامیڈیکل سٹاف اور دیگر عملہ سول ہسپتال امراض اطفال یونٹ ون سے چلڈرن ہسپتال منتقل ہوجائے گا تاہم ان تمام عملے کا انتظامی کنٹرول ایم۔ایس سول ہسپتال کے پاس ہوگا۔چلڈرن ہسپتال میں ان ڈاکٹروں اور عملے کی زیر نگرانی بچوں کو مفت علاج و معالجہ کی سہولیات فراہم کی جائینگی اور تمام ادویات اور دیگر سہولیات بلا معاوضہ فراہم کی جائنگی۔ چلڈرن ہسپتال کو جلد ہی پی۔ایم۔ڈی۔سی، سی۔پی۔ایس۔پی اور پی۔جی۔ایم۔ائی سے بطور تدریسی ادارہ منظور کروایا جائے گا اور دریں اثنا تمام تدریسی عملے کے سروس کو پروموشن کیلئے زیر غور لایا جائے گا۔ چلڈرن ہسپتال کے معیاری بلڈنگ میں قابل ترین ڈاکٹروں کی تعیناتی سے بچوں کو مفت جدید طبی سہولیات میسر ہونگی اور اس ہسپتال کو 24 گھنٹے بلا معاوضہ خدمات کی فراہمی کیلئے فعال بنایا جائے گا جس میں نہ صرف ایمرجنسی سہولیات ہونگی بلکہ اعلیٰ ڈاکٹروں کی زیر نگرانی امراض اطفال کے سلسلے میں سپیشلائزد علاج و معالجہ کی سہولیات میسر ہونگی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

Share With:
Rate This Article

bk@gmail.com

No Comments

Leave A Comment