FILE NO 2,3,4

خبرنامہ نمبر 117/2019
کوئٹہ 11جنوری :۔صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی نے کہا ہے کہ حلقہ انتخاب کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائیگا۔ حلقے میں بہت جلد ترقیاتی منصوبوں کا جال بچھایا جائیگا۔ علاقے کی پسماندگی کو دور کرنے کی ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں۔ نصیر آباد اور ملحقہ علاقوں میں آبنوشی سکیموں کا جلد اجراء کیا جائیگا۔صاف پانی کی کمی کو دور کرنے کیلیے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کئیے جائینگے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلوچستان عوامی پارٹی کے سینئیر رہنماء میر عطاء اللہ بلیدی اور نیشنل پارٹی کے رہنما سردار منظور حسین سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی مشیر نے کہا کہ عوام بہت جلد صوبے میں تعلیم سمیت مختلف شعبوں میں بہتری دیکھیں گے۔ عوام کو ریلیف دینا صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ عوامی مفادات پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔ گزشتہ ادوار میں عوامی مفادات کو ملحوظ خاطر نہیں رکھا گیا۔ ہم عوام میں سے ہیں اور عوام کے حقوق سلب نہیں ہونے دیئے جائیں گے۔ موجودہ حکومت صحیح معنوں میں عوام کے حقوق کے تحفظ کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تعلیمی پالیسی کا ازسر نو جائزہ لے کر اس میں اصلاحات لائے جارہے ہیں۔ اس حوالے سے ٹھوس اقدامات کیے جا رہے ہیں موجودہ حکومت تعلیم کے حوالے سے جامع پالیسی پر عمل کر رہی ہے۔ کوشش ہے تعلیم کے شعبے کو دوسرے صوبوں کے برابر لایا جائے۔ جس کیلئے بعض سخت فیصلے ناگزیر ہوگئے ہیں۔
خبرنامہ نمبر 118/2019
خضدار11جنوری :۔کمشنر قلات ڈویژن و چیئرمین ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے دفتر سے جاری اعلامیہ کے مطابق کوئٹہ کراچی روٹ پر چلنے والی کوچ مالکان کو سختی سے ہدایت کی جاتی ہے کہ کوئٹہ کراچی روٹ پر روانگی کے دوران ضلعی انتظامیہ مستونگ سے وقت روانگی پرچی لیکر خضدار تک 3گھنٹے کا سفر جاری رکھیں خضدار پہنچتے ہی ضلعی انتظامیہ خضدار سے مزید 3گھنٹے کی روانگی پرچی لیکر بیلہ تک سفر جاری رکھیں مزید براں ضلعی انتظامیہ لسبیلہ سے حب چوکی پل تک ٹریفک قوانین اور ٹریفک کی بڑھتی ہوئی رش کو مدنظر رکھ کر جووقت مقررکی جائے گی اس پر کوچ مالکان اور ڈرائیورز کو عمل کرنے کی تاکید کی گئی ہے یہ فیصلہ آئے روز تیز رفتاری کے باعث حادثات کے پیش نظر دی گئی ہے کیونکہ کراچی کوئٹہ روٹ پر آئے روز حادثات سے قیمتی انسانی جان اور مسافر کوچ مالکان کی پراپرٹی نقصان ہونے کی بناپر کمشنر قلات ڈویژن بشیر احمد بنگلزئی کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کے پیش نظر مسافر بسوں کی ٹائمنگ چیک کی جائے گی قوانین پر عمل درآمد نہ کرنے کی صورت میں ٹریفک قوانین کی تحت مالکان مسافر بس ڈرائیورز پر کارروائی عمل میں لائی جائے گی ۔
خبرنامہ نمبر 119/2019
پشین 11 جنوری :۔بلوچستان پولیس کی جرائم پیشہ افراد کی بیخ کنی کے لئے ایک اور اہم پیش رفت۔ صوبائی دارالحکومت کوئٹہ کے بعد پشین میں بھی انسداد جرائم کے لئے پولیس ایگل اسکاڈ اور ریسکیو 15 قائم کردئیے گئے۔ جمعہ کے روز سینئر سپریٹنڈنٹ آف پولیس پشین طارق الٰہی مستوئی نے ایگل اسکاڈ اور ریسکیو 15 کا افتتاح کیا۔ افتتاحی تقریب میں اراکین اسمبلی مقامی بلدیاتی نمائندوں ٹریڈ یونین اور سول سوسائٹی کے نمائندگان نے شرکت کی اور نئی پولیس سروسز کے اجراء پر خوشی اور اطمینان کا اظہار کیا اور اپنے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ہوئے ایس ایس پی پشین طارق الٰہی مستوئی نے کہا کہ سربراہ بلوچستان پولیس محسن حسن بٹ کی خصوصی توجہ اور احکامات پر پشین سمیت صوبے بھر میں بحالی امن اور عوام کے جانی و مالی تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے پولیس جدید خطوط پر متحرک کردار ادا کررہی ہے اور روایتی طریقہ انسداد جرائم کو بتدریج دور جدید کے تقاضوں سے ہم آہنگ کیا جارہا ہے صوبائی دارالحکومت کوئٹہ میں ایگل اسکاڈ کے خاطر خواہ نتائج کے بعد اب پشین میں بھی دستیاب وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے اس کا افتتاح کردیا گیا ہے جبکہ فوری پولیس رسپاونس کے لئے 15 ریسیکو کا آغاز کردیا گیا ہے اس طرح بلوچستان میں کوئٹہ کے بعد پشین وہ دوسرا ضلع ہوگا جہاں ایگل اسکاڈ اپنی خدمات سرانجام دیتے ہوئے بحالی امن کے لئے فعال خدمات سرانجام دے گی انہوں نے کہا کہ پولیس اور عوام کے مابین حائل خلیج کو ختم کرکے عوام دوست پولیسنگ کے تصور کو فروغ دیا جارہا ہے تاکہ کمیونٹی کے باہمی تعاون سے جرائم سے پاک پر امن معاشرے کی بنیاد رکھی جاسکے۔ اس سے قبل ایس ایس پی پشین طارق الٰہی مستوئی نے ایگل اسکاڈ اور ریسیکو 15 کا باقاعدہ افتتاح کیا۔
خبرنامہ نمبر 120/2019
کوئٹہ 11جنوری :۔محکمہ خزانہ حکومت بلو چستان کے ایک اعلامیہ کے مطابق اکاؤنٹ ٹائٹل ”سپریم کورٹ آف پاکستان ۔دیا میر بھاشا اینڈ مومند ڈیمزفنڈ”میں عطیات /امداد دینے والے رجسٹرڈ اشخاص کو اس ضمن میں سروسز پر ٹیکس سے مستشنیٰ قرار دے دیا گیا ہے یہ سروسز اشتہاارت واشتہاراتی ایجنٹس پر لاگو 15%ٹیکس سے متعلق ہیں اسی طرح بنکس ،بینکنگ کمپنیاں جو اکاؤنٹ ٹائٹل سے متعلق سروسز فراہم کرے ینگی اور ان پر اس مدمیں 15%ٹیکس لاگوہے وہ بھی مستشنیٰ ہونگی ساتھ ہی ساتھ ٹیلی کمیونیکشن کی سروسز پر عائد 19.5%ٹیکس بھی اس ضمن میں مستشنیٰ ہوگا۔محکمہ خزانہ حکومت بلو چستان نے یہ اقدام بلو چستان سیلز ٹیکس آن سروسز ایکٹ 2015(ایکٹ نمبر2015,6)کے سیکشن 12کے تحت تفویض کردہ اختیارات ،سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے اور صوبائی حکومت کی منظوری کی روشنی میں کیا۔
خبرنامہ نمبر 121/2019
کوئٹہ 11جنوری :۔گورنر بلو چستان امان اللہ خان یسیٰن زئی سے وفاقی وزیر برائے پیڑولیم غلام سرور خان نے ملاقات کی ۔ملاقات کے دوران صوبے میں جاری ترقیاتی منصوبے ،امن وامان کی مجموعی صورتحال ،صوبے اور وفاق کے درمیان تعلقات میں بہتری لانے اور انہیں مزید خوشگوار بنانے پر اتفاق کیا گیا۔
خبرنامہ نمبر 122/2019
کوئٹہ 11جنوری :۔محکمہ ملازمتہائے نظم ونسق کے ایک اعلامیہ کے مطابق حکو مت بلو چستان نے ”بلو چستان گورنمنٹ رولز آف بزنس 2012کے رول(6 )،سب رول(3)کے بعد پارلیمانی سیکریٹریز کے سب رول 4کااضافہ کر دیا گیا ہے یہ ترمیم اسلای جمہوریہ پاکستان کے آئین1973کے آرٹیکل 139بمعہ آرٹیکل129میں مہیا کئے گئے اختیارات کے تحت کئے گئے ہیں جن کے مطابق پارلیمانی سیکریٹری وزیر اعلیٰ بلو چستان کے احکامات کے تحت اپنے محکمہ کے پارلیمانی اموروزیراعلیٰ و متعلقہ محکمہ کے وزیر کی ایماء پر طے کر سکے گا مزید برآں ترمیم کے تحت پارلیمانی سیکریڑی ایسے اقدامات سے گریز کرگا جو متعلقہ محکمہ اور اس سے منسلک محکمہ یا ریجنل آفس کے اندرونی نظم ونسق میں خلل کا باعث بن سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment