خبرنامہ نمبر 3352/2018
گوادر 10 دسمبر:۔ ڈپٹی کمشنر گوادر کیپٹن ریٹائر ڈ محمد وسیم کی خصوصی ہدایت پر اسسٹنٹ کمشنر گوادر میر باز خان نے ضلعی ہسپتال میں پانچ سال تک کے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلا کر انسداد پولیو مہم کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر ضلعی افیسر صحت ڈاکٹر محمد آصف شاہوانی ایم ایس سول ہسپتال ڈاکٹر عبدالطیف دشتی اور ڈبلیو ایچ او کے ڈاکٹر نوروز بلوچ سمیت دیگر سرکاری و غیر سرکاری تنظیموں کے نمائندوں نے شرکت کی اس موقع پر بتایا گیا ہے کہ انسداد پو لیو مہم 10سے 13 دسمبر تک جاری رہے گی مہم کے دوران ضلع گوادر کے پانچ سال تک کی عمر کے 37076 بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔جبکہ اس سلسلے میں ضلع بھر میں محکمہ صحت اور رضا کار انسداد پولیو کی تین روزہ مہم کے دوران گھر گھر جا کر بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائیں گے ۔اس عمل کو یقینی بنانے کے لیے محکمہ صحت نے تقریباَ 142 ٹیمیں تشکیل دی ہیں۔جن میں 22 مستقل سینٹر اور دس ٹرانزٹ پوائنٹس قائم کئے گئے ہیں جو کہ پیدائش سے لیکر پانچ سال تک کے بچوں کو پو لیوسے بچاؤ کے قطرے پلائیں گے پولیو ٹیمیں بس اڈوں اور دوسرے عوامی مقامات پربھی موجود ہوں گی۔ پولیو ٹیموں کے لیے سیکیورٹی کے خصوصی اقدامات کیے گئے ہیں۔اس سلسلے میں ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت نے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد سے اپیل کی ہے کہ وہ اس مہم میں بھر پور ساتھ دیں تاکہ پولیو کے خاتمہ میں مدد مل سکے۔
()()()
خبرنامہ نمبر3353/2018 
. گوادر:10 دسمبر:۔ سینیٹ کی سب کمیٹی برائے میرین ٹائم آفیسر ز کاایک اعلیٰ سطحی اجلاس زیر صدارت سب کمیٹی کے کنوینرسینٹر کہدہ بابر منعقد ہوا ۔اجلاس میں سینٹر شمیم آفریدی چیئر مین گوادر پورٹ اتھارٹی دوستین خان جمالدینی سمیت سینیٹ اور پورٹ اعلیٰ حکام نے شرکت کی اجلاس میں میرین آفیسرز گوادر ایسٹ بے ایکسپریس وے سمیت ماہی گیروں کی فلاح و بہبود اور ان کے مسائل سے متعلق مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ اجلاس کو چائنا اور سینر پورٹ ہولڈنگ کمپنی کے چیئرمین ژونگ پاؤزوانگ نے گوادر بندرگاہ اور سی پیک منصوبوں سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔ا جلاس میں گوادر پورٹ کے ترقیاتی کاموں کا بھی جائزہ لیا گیا اور مختلف منصوبوں پر پیشہ فت کا جائزہ لیاگیا۔اجلاس میں جی پی اے کے چیئرمین نے سینیٹ اسٹینڈنگ کمیٹی کے ارکان کو گوادر بندرگاہ ست متعلق بریفنگ دی۔ اجلاس میں کہا گیا ہے کہ گو ادر پورٹ کے معاملات سے متعلق اگلا اجلاس 17 دسمبر کو اسلام اباد میں ہوگاسینیٹ کی قائمہ کمیٹی کے ارکان نے ایکسپریس وے اور فری زون کا دورہ بھی کیا۔
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ10 دسمبر۔ آفیسر ز ویلفیئر ایسو سی ایشن کی کابینہ کا ایک ہنگامی اجلاس پیر کے روز ایسو سی ایشن کے صدر ظفر علی ظفر کی زیر صدارت منعقد ہوا ۔ اجلاس میں ایسو سی ایشن کی کار کردگی ، مسائل اور نئے ڈی جی پی آر کی جانب سے اٹھائے جانے والے دفتری اقدامات پر غور و خوض کیا گیا اجلاس میں ڈی جی پی آر محمد نعیم بازئی کی جانب سے محکمہ کے امور کو بہتر انداز میں چلانے ، گڈ گورننس ، میرٹ وسینارٹی کی بنیاد پر افسران و اہلکاروں کی تعیناتی و دفتری امور کو سٹریم لائن کرنے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے انہیں اپنے بھر پور تعاون کا یقین دلایا اور اس امر پر بھی اطمینان کا اظہار کیاگیا کہ دفتری امور کو انتہائی مہارت اور لگن سے سر انجام دینے واے افسران و اہلکاروں کی حوصلہ افزائی کی جارہی ہے نیز دفتر کے تمام منصوبوں کو خالصتاً سینارٹی و میرٹ کی بنیادوں پر استوار کرکے اسے جدید تقاضوں کے مطابق بنایا جارہا ہے جو قابل ستائش ہیں اجلاس میں اخبارات و حکومت کے درمیان بعض معاملات پر اختلاف رائے پر بھی باتی چیت ہوئی اور اس امر پر زور دیا گیا کہ یہ اختلافی معاملات عمومی نوعیت کے ہیں اور امید ہے کہ اسے باہمی افہام و تفہیم سے حل کرلیا جائے گا اور اس امید کا اظہار کیا گیا کہ اس معاملے کے دیر پا حل کیلئے تشکیل دی گئی کمیٹی بہتر تجاویز دے گی اجلاس کے شرکاء نے کہا کہ اخباری صنعت کو درپیش مسائل کے حل کیلئے حکومتی کاوشیں قابل قدر ہیں اور محکمہ اخباری صنعت کو ہرممکن تعاون و سہولتیں فراہم کرنے کیلئے کوشاں ہے لیکن اس کے لئے قانونی و متعلقہ ضابطوں کو پورا کرنا ضروری ہے ۔ اس ضمن میں صوبائی حکومت ، صوبائی وزیر اطلاعات ظہور احمد بلیدی ، سیکریٹری اطلاعت ہاشم ندیم اور ڈی جی پی آرمحمد نعیم بازئی معاملات کو خوش اسلوبی سے حل کرنے کیلئے کوشاں ہیں جو قابل قدر ہیں ایسو سی ایشن کے اجلاس میں افسران خصوصاً ڈویژن و اضلاع میں تعینات افسران کو درپیش مسائل اور ان کے حل کیلئے تجاویز کو بھی حتمی شکل دی گئی ۔ بعد ازاں دفتر کے افسران و ایسو سی ایشن کی کابینہ نے ڈی جی پی آر محمد نعیم بازئی سے ملاقات کی اوردفتری امور ، اصلاحات و اسے مزید جدید بنانے کیلئے بعض تجاویز پر بھی غور کیا گیا ۔ اجلاس کے دوران افسران نے ڈی جی پی آر کو اپنے ہر ممکن تعاون کا یقین دلاتے ہوئے اس امر کا اظہار کیا کہ ایک طویل عرصے کے بعد دفتری امور سینارٹی ، میرٹ و گڈ گورننس کی بنیادی پر چلائے جارہے ہیں۔ 
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment