HomeNews09-10-2019 Wednesday (File No.1)

09-10-2019 Wednesday (File No.1)

09-10-2019 Wednesday (File No.1)

خبرنامہ نمبر 3568/2019
کوئٹہ09اکتوبر:۔گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے ہدایت کی ہے کہ بولان یونیورسٹی آف میڈیکل اینڈ ہیلتھ سائنسز کے اہاسٹلوں کو صرف زیرتعلیم ایم بی بی ایس او بی ڈی ایس کے طلبائ و طالبات کو فراہم کرنے کے لیے بروقت اقدامات اٹھائے جائیں اور فوری طور پر تمام غیر قانونی طور پر رہائش پذیر افراد سے یونیورسٹی ہاسٹلوں کو خالی کرایا جائے۔ گورنر بلوچستان نے واضح کیا کہ تمام غیر قانونی طور پر رہنے والے قابضین کو کسی بھی صورت ہاسٹل میں رہنے کی اجازت نہیں دی جائے گی اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ اعلی تعلیمی اداروں میں طلبائ و طالبات کے ذہنوں کو جدید تحقیق و تخلیق سے روشن کرنے کے ساتھ ساتھ ایک صحت مند اور پر امن تعلیمی ماحول فراہم کرنا ہماری ذمہ داری ہے گورنر نے مزید کہا کہ صوبے کے تعلیمی اداروں میں صحت مند تعلیمی و تدریسی ماحول کو فروغ دینے اور یونیورسٹیوں کے معیار کو مزید بلند کرنے کے لیے کوئی کسر نہیں چھوڑی جائے گی انہوں نے کہا کہ ہاسٹل الاٹمنٹ میں کسی کی مداخلت برداشت نہیں کی جائے گی اور خلاف ورزی کی صورت میں قانونی کارروائی بھی کی جائے گی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3569/2019
کوئٹہ 09اکتوبر :۔ صوبائی وزیر خزانہ میر ظہور احمد بلیدی کی سربراہی میں تربت سٹی ڈویلپمنٹ پروگرام فیز 2 اور میرانی ہاو¿سنگ سوسائٹی کے حوالے سے ایک اہم اجلاس پر منعقد ہوا۔ جس میں ممبر صوبائی اسمبلی لالہ رشید دشتی ایڈیشنل چیف سیکریٹری بلوچستان عبدالرحمان بزدار، کمشنر مکران کیپٹن ر طارق زہری تربت، ڈپٹی کمشنر کیچ ذیشان سکندر ، تربت سٹی ڈویلپمنٹ پروگرام کے ڈپٹی پروجیکٹ ڈائریکٹر انجینئر رفیق احمد، ڈائریکٹر ڈیویلپمنٹ مکران شے ظہور بلوچ، چیف آفیسر میونسپل کارپوریشن تربت شعیب ناصر اور معروف کنسلٹنٹ سی جی گروپ کے آرکیٹکٹ عابد رحیم شامل تھے۔وزیر خزانہ میر ظہور احمد بلیدی نے کہا کہ صوبائی دارالحکومت کوئٹہ کے بعد تربت شہر بلوچستان کا دوسرا بڑا شہر ہے۔ جس کی آبادی چاروں اطراف سے تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے جسکی وجہ سے تربت شہر کو بنیادی ڈھانچے اور رہائش کمی جیسے شدید مسائل کا سامنا ہے اور صوبائی حکومت اس حوالے سے شہر کی توسیع کے لیے مختلف منصوبوں پر کام کررہی ہے جس کے مکمل ہونے کے بعد شہری سہولیات میں بہتری پیدا ہونگیں۔انہوں نے کہا کہ ہمیں تربت شہر میں لوگوں کی آبادکاری کے لیے جامع اور مربوط طریقے سے منصوبہ بندی کرنا ہوگا تاکہ بڑھتی ہوئی آبادی کو موثر طریقے سے نمٹا جاسکے۔ انہوں نے متعلقہ اداروں پر زور دیتے ہوئے کہا کہ میرانی ہاو¿سنگ اسکیم میں لگے عوام کے سرمایہ کو استعمال میں لاتے ہوئے اس اسکیم میں ترقیاتی کام کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے تاکہ لوگوں کو سہولیات ملے اورسرکاری اداروں پر انکا اعتماد بحال ہوسکے۔اس دوران اجلاس میں ایڈ یشنل چیف سیکریٹری بلوچستان عبدالرحمان بزدار نے تربت شہر میں توسیعی منصوبوں کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ ان منصوبوں کے مکمل ہونے کے بعد شہر میں بنیادی ڈھانچے میں بہتری آئے گی انہوں نے کہا کہ ضرورت اس چیز کی ہے کہ لوگوں کی ضروریات اور سہولیات کو مدنظر رکھ کر کام کیے جائیں تاکہ عام آدمی کو زیادہ سے زیادہ فائدہ پہنچ سکے۔اس دوران کمشنر مکران کیپٹن ر طارق زہری نے ارکان اجلاس کو منصوبہ کی بہتری اور کامیابی کیلئے اپنی تجاویز دئیے جبکہ ڈپٹی پروجیکٹ ڈائریکٹر انجینئر رفیق احمد نے میرانی ہاو¿سنگ سوسائٹی میں پانی کی فراہمی اور سڑکوں کی تعمیر اور دیگر سہولیات کے بارے میں اپنی آراءئیے۔قبل ازیں سی جی گروپ کے آرکیٹکٹ عابد رحیم نے میرانی ہاو¿سنگ سوسائٹی کے ماسٹر پلان کے بارے میں بریفنگ بھی دی۔انہوں نے کہا کہ ایم 8 سے متصل سرکاری سرپرستی میں شروع کیا جانے والا یہ رہائشی منصوبہ ترقبت کی تاریخ کا سب سے بڑا رہائشی منصوبہ ہے جو 1000 ایکڑ رقبے پر محیط ہے جسمیں ساڑھے چار ہزار کے قریب 200 ، 400 اور 1000 گز کے رہاشی پلاٹ کے علاوہ کمرشل پلاٹ بھی دستیاب ہونگے۔انہوں نے کہا کہ پلاٹوں کی قیمت بالترتیب 2 لاکھ، 5لاکھ اور 10 لاکھ ہوگی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3570/2019
کوئٹہ 09اکتوبر :۔ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی نے کہا ہے کہ بلوچستان میں شعبہ زراعت کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جا رہا ہے۔زراعت پاکستان کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہیں جس کا مجموعی قومی پیداوار میں تناسب تقریباً 30 فیصد ہے اور یہ ملک کی 50 فیصد افرادی قوت کو بلواسطہ یا بلاواسطہ روزگار یا روزگار کے مواقعے فراہم کرتا ہے، موجودہ صوبائی حکومت وزیر اعلی بلوچستان جام کمال کی قیادت میں شعبہ زراعت کے مسائل کو سنجیدگی سے دیکھ رہی ہے تاکہ ان کا موثر حل نکال کر زراعی پیداوار کو بڑھایا جا سکے،فی ا یکڑ پیداوار کو بڑھانے کیلئے جدید ٹیکنالوجی کو یقینی بنایا جائے گا،اس حوالے سے ہر ڈویڑنل ہیڈکواٹرز میں زراعت کے متعلقہ افسران کو ٹریننگ بھی دی جا رہی ہے تاکہ وہ کاشتکاروں کو کاشتکاری کے جدید طریقوں سے ہمکنار کروا سکیں ،ترجمان صوبائی حکومت لیاقت شاہوانی نے کہاکہ موجودہ صوبائی حکومت صوبے میں نئے ڈیمز بھی تعمیر کر رہی ہے جس سے پانی کی کمی کو پورا کرنے میں مدد ملے گی اور زیر زمین پانی کا تناسب بھی برقرار رہے گا،انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں زراعت کے شعبہ کو درپیش مسائل میں پانی کا مسئلہ سب سے سنگین ہیں، اگر صوبہ کو پانی کا مقررہ حصہ پورا مل جائے تو پانی کا مسلہ جلد حل ہو سکے گا،اس حوالے سے صوبائی حکومت اقدامات کر رہی ہے۔ترجمان نے مزید کہا کہ زراعت کی پیداوار بڑھنے سے اور پانی کی کمی پر قابو پانے سے صوبے میں ترقی و خوشحالی آئے گی اور صوبے میں ترقی کا نیا دور شروع ہو جائے گا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3571/2019
کوئٹہ09اکتوبر:۔صوبائی محتسب عبد الغنی خلجی کی خصوصی ہدایت پر گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول گوٹھ میر محمد جان رند خجک سبی میں نامکمل کام مکمل کردیا گیا۔تفصیلات کے مطابق شکایت کنندہ نے درخواست دی تھی کہ محکمہ بی اینڈ آر نے مذکورہ اسکول میں تعمیراتی کام شروع کیا مگر کام مکمل کئے بغیر کام ادھورا چھوڑ دیا جب کہ مذکورہ کام کا فنڈ بھی جاری ہوچکا ہے جس پر ڈائریکٹر انوسٹی گیشن عبدالمنان اچکزئی نے تحقیقات کی اور محکمہ بی اینڈ آر کے ایکیسین سے جواب طلبی کی اور تحقیقات مکمل کرکے صوبائی محتسب بلوچستان عبدالغنی خلجی کو پیش کیا جس نے فوری طور پر کام مکمل کرنے کی ہدایت کی بعدازاں متعلقہ حکام نے ٹھکید ار سے مذکورہ اسکول کا کام مکمل کروا کر رپورٹ پیش کی۔ جس پر صوبائی محتسب بلوچستان نے کیس نمٹا دیا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3572/2019
کوئٹہ 09اکتوبر۔محکمہ زراعت تو سیع بلو چستان ان سروس ٹر ئینگ اکیڈمی کے زیر اہتمام لورالائی میں” بدلتے ہوئے موسمی حالات میں گندم کی پیداوار ی ٹیکنالوجی” کے موضوع پر ایک روزہ تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا جس میں محکمہ زراعت تو سیع کے آفیسروں، اہلکاروں اور زمینداران نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ جس کے مہمان خصوصی شاہ حسین صاحب ڈپٹی ڈاریکٹر محکمہ زراعت توسیع لورالائی تھے اور مہمان خاص لورالائی کے زمیندار عبدلجبار تھے۔ محب اللہ زراعت افیسر محکمہ زراعت تو سیع لورالائی نے ٹر ئینگ کی اہمیت کو اجاگر کیا ،انہو ں نے کہا کہ بدلتے ہوئے موسمی حالات میں گندم کی پیداوار ی ٹیکنالوجی پر کس طرح اثر انداز ہورے ہیں اور زمیندار کو ان سے آگاہی اور گندم کو کس طرح بچایا جا سکتا ہے اور ضلع میں گندم کی فصل روائتی طریقہ کار سے کاشت کے طریقہ کار کو اب وقت آگیا ہے کہ اس کو چھوڑ دیا جائے اور زمیندار کو جدید طریقہ کار سے کاشت کے طریقے کو اپنانا ہونگے۔نئی ترکی دادہ گندم کی اقسام اور جدید مشینری اور مناسب کھادوں کے استعمال وقت کی اہم ضرورت ہے۔ ان سروس ٹرئینگ اکیڈمی کے ڈپٹی ڈائریکٹر فاروق احمد کھتیران نے کہا کہ بدلتے ہوئے موسمی حالات میں گندم کے تصدیق شدہ بیج کی اہمیت کو اجاگر کیا جائے اور شرکاءکو ژوب ڈویژن میں گندم کی شورش کردہ اقسام جن میں زرغون ،زرلشتہ ،امید ،2014 راسکوہ بینظیر 2013،اور اجالا 2015 شامل ہیں ان اقسام کی پیداوار ی صلاحیت” فی ایکڑ پیداوار “میں اضافہ خاطر خواہ نتائج حاصل کیے گے ہیں ان اقسام میں کم پانی کی اقسام، مشکل موسمی حالات کو برداشت اور جلد اور دیر سے کاشت کی صلاحیت بھی سے آگاہ کیا تاکہ فی ایکڑ پیداوار اچھی حا صل کی جاسکے۔موضوع کو مزید آگے بڑھا تے ہوے لیاقت علی ایس ایس ایم ایس ان سروس ٹر ئینگ اکیڈمی نے زمین کی تیاری کی اہمیت ،جڑی بوٹیوں کو زمین کی تیاری ہی میں تدارک کیا جانے کی اہمیت کو اجاگر کیا اور شرکاءکو زمین کی پی ایچ (PH ) ،غذائی عناصر جن میں نائثروجن ،فارفورس، پوٹاشیم ،آئرن،ذنک ،بوران وغیرہ کے استعمال اور ان کا پودوں میں ضرورت اور ان کا کام کے بارے میں تفصیل سے آگاہی دی۔اور گھادوں کی صحیح مقدار ،صحیح وقت ،اور ضرورت کی اہمیت اور استعمال کو واضح کیا اس کے علاوہ محمد اقبال ایس ایس ایم ایس ان سروس ٹریننگ اکیڈمی نے موضوع کو مزید آگے بڑھا تے ہوے گندم کی کٹائی کے طریقے کے اس میں ہو نے والے نقصان کو کم کرنے میں مددگار عوامل کے بارے میں تفصیل سے بیان کیا اور گندم کو ذخیرہ کرنے کے طریقے سکھانے اور اپنانے کی اہمیت کو اجاگر کیا مہمان خاص عبدالجبار زمیندار لورالائی نے ٹر یننگ کی اہمیت اور اس کے خاطر خواہ نتائج حاصل ھوں گے اور زمینداران کو یقیننا اس سے فائدہ حاصل ہوگا اور آخر میں مہمان خصوصی شاہ حسین صاحب نے خطاب کیا کثیر تعداد میں شرکاءکی شرکت کو بہت سراہا اور آئیندہ بھی اس طرح کی ٹریننگ کے انعقاد کی امید ظاہر کی اور ڑاریکٹر ان سروس ٹر ینگ اکیڈمی محکمہ زراعت تو سیعی بلو چستان ڈاکٹر امان اللہ سالارزءکا شکریہ ادا کہ انہو ں نے اس سال کے ٹریننگ شیڈول میں ضلع لورالائی کا انتخاب کیا۔ ٹریننگ کے آخر میں شرکاءکے سوالات کے جوابات دے گے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3573/2019
کوئٹہ09اکتوبر :۔محکمہ صحت، حکومت بلوچستان کے وضاحتی بیان کے مطابق سیکرٹری صحت کے چھٹی پر جانے کے حوالے سے سوشل میڈیا پر خبر من گھڑت اور جھوٹ پر مبنی ہے اور یہ واضح کیا جاتا ہے کہ صوبائی سول سروس آفیسران ہمہ وقت ہر قسم کے حالات میں اپنی خدمات سر انجام دینے کیلئے تیار رہتے ہیں۔ صوبائی سول سروس ایک پر وقار سروس ہے جس کے آفیسران ہر قسم کے چیلینجز سے نمٹنے کی استعداد رکھتے ہیں اور حکومتی پالیسیوں کے مطابق حکومتی نظام چلانے میں مہارت رکھتے ہیں۔ ایسی جھوٹی اور من گھڑت خبریں پھیلانے سے پہلے متعلقہ آفیسران کا موقف لینا چاہیے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3574/2019
کوئٹہ09اکتوبر :۔ مجلس قائمہ برائے محکمہ ما لیات ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن،بورڈ آف ریو نیو، ٹرانسپو رٹ کی نشست زیر صدارت چیئر مین مجلس احسان شاہ بروز منگل مورخہ 15اکتوبر 2019 ءبوقت صبح 11بجے بلوچستان صوبائی اسمبلی کے کمیٹی روم میں ہوگی ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3575/2019
کوئٹہ09اکتوبر :۔ محکمہ معدنیات کے ایک اعلامیہ کے مطابق محمد افضل (سپر ٹینڈ نٹ 17-) 19جون 2020کو ملازمت کی بالائی حد پر پہنچ کر ریٹاڈ ہو جائیں گے ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3576/2019
کوئٹہ 09اکتوبر:۔ یونیو رسٹی آف بلوچستان کوئٹہ کے ایک اعلامیہ کے مطابق تمام پرائیو ٹ اُمیدوارجو کہ ایم اے کے سالانہ امتحانات کیلئے رجسٹریشن کروانے والوں کو اطلاع دی جاتی ہے کہ بغیر لیٹ فیس رجسٹر یشن فارم 18اکتوبر تک جمع کر واسکتے ہیں ۔جبکہ 22اکتوبر تک 300روپے لیٹ فیس کے ہمراہ 27اکتوبر تک دوگنا۔ جبکہ نومبر تک تین گناہ فیس کے ساتھ رجسٹر یشن کرواسکتے ہیں ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر 3577/2019
گوادر 09اکتو بر :۔محکمہ کھیل کے زیر اہتمام منعقدہ بلوچستان ڈویژنل گیم مکران ڈویژ ن کرکٹ و فٹبال کا افتتاح سینیٹر کہدہ بابر نے شاٹ لگا کر کیا۔ جبکہ بیڈمنٹن کا افتتاح ارشد کلمتی نے کیا۔اس موقع پر سینیٹر کہدہ بابر نے محکمہ کھیل بلوچستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے کھیلوں کے انتخاب کے لئے گوادر کو منتخب کیا جس پر محکمے کے اور خاص طور پر ڈائریکٹر جنرل کھیل دورا بلوچ کے شکرگزار ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ کھلاڑی سفیر ہوتے ہیں جو پورے پاکستان کا نام روشن کرتے ہیں اس سلسلے میں گوادر کا کھیلوں کی ترقی میں اہم کردار ہے۔ انہوں نے صوبائی حکومت کے اقدام کی تعریف کی اور کہا کہ اس سے پہلے کبھی بھی اس طرح سے کھیل اور کھلاڑیوں کو پرموٹ نہیں کیا گیا جس طرح سے موجودہ حکومت کر رہی ہے۔ اس موقع پرمیر ارشد کلمتی نے محکمہ کھیل کی کارکردار گی کو سہراتے ہوئے کہاکہ محکمہ کھیلوں کے ایسے اقدامات نہ صرف کھلاڑیوں کی حواصلہ افزائی ہونے کے ساتھ ساتھ لوگوں کو تفریح کے مواقع فراہم ہوتے ہیں انہوں نے ڈسٹرکٹ اسپورٹ آفیسر حبیب اللہ دشتی کی کارکردگی قابل تعریف ہے انہوں نے کہا کہ یہ نوجوان افسر جس لگن سے پنا فرض منصبی ادا کررہے ہمیں وہ دن دور نہیں کہ یہاں کے کھلاڑیوں دوسرے صو بے کے کھلاڑیوں کے برابر ہونگے انہوں نے کہا کہ اس نے چارج سنبھالتے ہوئے کھلاڑیوں ہر،طرح کے سپورٹ کرنے اور کھیل کو پرموٹ کرنے میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ میر ارشد کلمتی نے کہا کہ وہ حکومت سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ بلوچستان کے علاقے گوادر میں مزید کھیلوں کو فروغ دینے کے لیے اقدام اٹھائے اور یہاں پر کھیلوں کے مقابلے جنوری فروری یا مارچ میں کرائے تاکہ کھیلوں کے ذریعے گوادر کو آباد کیا جاسکے۔ اس سے پہلے ڈسٹرکٹ سپورٹس آفیسر حبیب اللہ بلوچ نے کھلاڑیوں میں اور سامان تقسیم کیا جس سے کھلاڑی نے بڑی خوشی کا اظہار کیا اور ارشد کلمتی صاحب نے اسپورٹس آفیسر کی اس کاوش کو سراہا اور محکمہ کھیل کا شکریہ ادا کیا۔ کہدہ بلوچ اور ارشد کلمتی نے ڈپٹی ڈائریکٹر عبدالحید کاکڑ کو اپنے پورے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔جبکہ عبدالحی کاکڑ نے دونوں مہما نا خاص کا شکریہ ادا کیا اور ان کی گزارشات کو ڈائریکٹر جنرل کھیل مشیر کھیل اور سیکرٹری کھیل تک پہنچائیں۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

خبرنامہ نمبر3578/2019
کوئٹہ09اکتوبر:۔ڈپٹی کمشنر کوئٹہ کے ایک حکم نامے کے مطابق محمد علی ولد محب اللہ اور محمد ولی ولد محب اللہ کے لوکل سرٹیفکیٹس انکوائری کمیٹی کی سفارشات کی روشنی میں منسوخ کردیا جاتا ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر 3579/2019
کوہلو09اکتوبر ؛۔ڈپٹی کمشنر عبداللہ خان کھوسہ کی سربراہی میں ضلعی انتظامیہ نے کوہلو شہر میں تجاوزات کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے تجاوزات ہٹا دیا ہے تفصیلات کے مطابق ڈپٹی کمشنر عبداللہ کھوسہ نے اسسٹنٹ کمشنر عبدالستار مینگل،رسالدار میجر شیر محمد مری،تحصیلدار عبدالصمد، ایس ایچ او میر ریاض اور پولیس و لیویز کے ہمراہ شہر میں تجاوزات کے خلاف کریک ڈاﺅن کرتے ہوئے دکانوں کے سامنے تھڑے اور دیواریں مسمار کردئیے ہیں اس موقع پر ڈپٹی کمشنر عبداللہ کھوسہ نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان کے واضع احکامات کے بعد ضلع میں تجاوزات کے خلاف کارروائی شروع کردی ہے کسی دباﺅ میں آئے بغیر بلاتفریق کارروائی کررہے ہیں دکانداروں کو ایک ہفتے کا نوٹس دیا تاہم جنہوں نے تجاوزات ختم نہیں کئے ہیں ان کے ساتھ اب کسی قسم کی رعایت نہیںبرتی جائے گی ہماری اولین کوشش ہے کہ شہر میں قائم تجاوزات کوہٹا کرشہر کی خوبصورتی اور ٹریفک کی روانی کو بحال کریں ۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3580/2019
کوئٹہ 09 اکتوبر:۔سیکرٹری محکمہپر اسیکیویشن ڈاکٹر عمرخان بابر اور یو این ڈی پی کے اسسٹنٹ ریزیڈنٹ نمائندہ قیصر اسحاق نے لاءلائبریری کا افتتاح کیا جس کا مقصد پراسیکیوٹر جنرل کے بابت قانون کی حکمرانی ، پروگرام کو مضبوط و مستحکم بنانا ہے لائبریری کے قیام کا مقصد بلوچستان میں قانون کی حکمرانی کے روڈ میپ پر عمل درآمد کرانا ہے ساتھ ہی اس سے پراسیکیوٹر بھی تحقیقی معاملات کی تیاری مروجہ قانونی معاملات پر تحقیق کر پائیں گے۔لائبریری کے قیام سے پراسیکیوٹرز کی صلاحیت و استعداد کار میں بھی اضافہ ہوگا جس سے بروقت اور معیاری انصاف یقینی ہو سکے گا اس موقع پر سیکرٹری پراسیکیویشن نے تقریب سے خطاب کیا اور پراسیکیوٹر زکے پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو بڑھانے پر شکریہ ادا کیا۔قصیراسحاق نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ یو این ڈی پی بلوچستان میں قانون کی حکمرانی اور انصاف پر مبنی اداروں کی مضبوطی کے لیے پرعزم ہے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر3581/2019
لسبیلہ 09اکتوبر :۔لسبیلہ کی تحصیل کنراج میں سڑکوں کی بحالی کے منصوبے کی منظوری 19کروڑ روپے کی لاگت سے عبدالرحمان گوٹھ سے لیکر صاحب خان گوٹھ تک سڑک اور پل تعمیر کیا،جائیگا ،،منصوبے پر عملدرآمد کیلئے ورک آرڈر جاری کردیے گئے ہیں ایکسئن سی اینڈ ڈبلیو کی بریفنگ تفصیلات کے مطابق لسبیلہ کی تحصیل کنراج جو قیمتی معدنیات بلیک اینڈ گولڈ ،برائٹ،،، برماٹک ماربل اور مائنگ سیکٹر کے حوالے سے ملک گیر شہرت رکھتا ہے وزیر اعلی بلوچستان جام کمال نے حلقہ نتخاب کنراج کے عوام سے عام انتخابات کے دوران کئے گئے وعدوں پر عملدرآمد ترجیحی بنیادوں پر شروع کردیا ہے ایکسئن سی اینڈ ڈبلیو بہرام گچکی نے بریفنگ میں بتایا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے کنراج کے دورافتادہ علاقے عبدالرحمن گوٹھ سے لیکر صاحب خان گوٹھ تک سڑک کی بحالی اور پل کی تعمیر کیلئے مطلوبہ فنڈذ فراہم کردیے ہیں منصوبے پر فوری کام کے آغاز کیلئے ورک آرڈر بھی جاری کردیے گئے ہیں واضح رہے کہ لسبیلہ کی تحصیل کنراج کے عوام نے اکثریتی ووٹوں سے جام کمال کو الیکشن 2018 میں تاریخی کامیابی دلاءتھی ڈسٹرکٹ کونسل کے سابق وائس چیئرمین قادر بخش اور جاموٹ قبائل کی سرکردہ شخصیت وڈیرہ موسی جاموٹ نے کنراج میں ترقیاتی منصوبوں کی منظوری دینے پر وزیر اعلی بلوچستان جام کمال کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعلی کے اس اقدام سے مائننگ سیکٹر کو فروغ حاصل ہوگا دیہی علاقہ کنراج کے عوام کوسفر کی بہترسہولیات میسر آئیں گے اور کنراج کے عوام قومی ترقی کے دھارے میں شامل ہونگے۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

Share With:
Rate This Article

bk@gmail.com

No Comments

Leave A Comment