خبرنامہ نمبر 46/2019
کوئٹہ 07جنوری ۔صوبائی وزیرمواصلات و تعمیرات نوابزادہ طارق مگسی نے کہا ہے کہ کوئٹہ شہر ہمارا مشترکہ گھر ہے اس کی پرانی رونقیں بحال کرنے کیلئے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لایا جائے گا ۔ موجودہ حکومت مواصلاتی نظام کو مزید بہتر بنانے اور بنیادی ڈھانچے کی فراہمی کے لئے کوشاں ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کے روز ایڈو وکیٹ بہلول کاسی کی قیادت میں یہاں ملنے والے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ ترقیاتی منصوبے عوام کی ضروریات کے مطابق بنائے جائیں گے تو عوام کو ریلیف ملے سکے گا۔ عوامی خدمات کی فراہمی کے محکموں کی کار کردگی بہتر ہونے سے ترقیاتی منصوبے بروقت مکمل ہوسکیں گے۔ لہٰذا ہم ترقیاتی منصوبوں میں تاخیر اور وسائل کے ضیاع کے ہر گز متحمل نہیں ہوسکتے ۔ انہوں نے کہا کہ کوئٹہ شہر میں بڑھتی ہوئی آبادی اور ٹریفک کے دباؤ کو کنٹرول کرنے کیلئے اہم سڑکوں کی توسیع کیلئے جامعہ حکمت عملی اپنائی جائے گی ۔ ملاقات کے دوران وفد نے صوبائی وزیر کو گولی مار چوک ، سبزل روڈ اور کڈنی سینٹر روڈ کی توسیع کے حوالے سے اپنے تحفظات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ مذکورہ سڑک کو 162 فٹ چوڑا کرنے کی بجائے 80فٹ چوڑی سڑک تعمیر کی جائے تو اس سے قومی خزانے پر نہ صرف بوجھ کم ہوگا بلکہ سڑک کی توسیع کے دوران سڑک کے اطراف قائم رہائشی گھر کو بھی نقصان کم سے کم ہوگا ۔ صوبائی وزیر نے وفد کے مسائل غور اور توجہ سے سنے اور کہا کہ وہ اس حوالے سے وزیراعلیٰ بلوچستان سے رابطہ کرکے انہیں اس بارے میں تفصیلات سے آگاہ کریں گے ۔ صوبائی وزیر نے وفد کو یقین دلایا کہ اس مسئلے کے حل کیلئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 47/2019
کوئٹہ07 جنوری: ۔ صوبائی مشیر وزیر اعلیٰ برائے لائیو اسٹاک مٹھا خان کاکڑ نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت صوبے میں با صلاحیت نوجوانوں کے لئے بہتر روزگار کے مواقع فراہم کرنے کی دیر پا پالیسیوں پر عمل پیرا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح ماضی میں بلوچستان کے نوجوانوں کی صلاحیتوں کو نظر انداز کیا گیا موجودہ حکومت اس کا ازالہ کرنے کا بھر پور اعادہ رکھتی ہے بلوچستان کے نوجوانوں میں صلاحیتوں کی کمی نہیں تاہم انہیں اپنی صلاحیتوں کو منوانے کا موقعہ نہیں ملا۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے ملاقات کے لئے ژوب سے آنے والے نوجوانوں کے مختلف وفود سے گفتگو کے دوران کیا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیرا علیٰ بلوچستان جام کمال نوجوانوں کو درپیش مسائل کے ازالے کیلئے شب و روز محنت کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے نوجوانوں میں صلاحیتوں کی کوئی کمی نہیں انہوں نے تعلیم وکھیل سمیت تمام شعبہ ہائے زندگی میں اپنا لوہا منوا یا ہے ۔ لیکن بد قسمتی سے بلوچستان کے نوجوانوں کو وہ مواقع میسر نہیں آئے جو ان کا حق بنتا تھا موجودہ حکومت ان امور کا نہ صرف ادراک رکھتی ہے بلکہ نوجوانوں کیلئے ایسے پلیٹ فارم مہیا کرنے کی پالیسی پر گامزن ہے جسکے تحت بلوچستان کے تمام بلاصلاحیت نوجوانوں کو مناسب روزگار فراہم کیا جائے گا۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 48/2019 
کوئٹہ07 جنوری: ۔ صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت عوام کی فلاح و بہبود اور معیار زندگی بہتر بنانے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لا رہی ہے۔ حکومت عوام کی تعلیمی پسماندگی دور کرنے کیلئے کوشاں ہے موجودہ حکومت عوامی مسائل کے حل میں خصوصی دلچسپی لیتی ہے۔ عوامی مسائل سے بخوبی آگاہ ہیں۔ اس ضمن میں عوام کو بہت جلد خوشخبری ملے گی۔ صوبائی مشیر نے کہا کہ وزیراعلی جام کمال خان صوبے کی پسماندگی خصوصاً تعلیمی پسماندگی دور کرنے کیلئے جامع منصوبہ بندی پر عمل پیرا ہیں۔ پوری کابینہ خلوص نیت سے صوبے کے مسائل پر توجہ دے رہی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں یہاں کوئٹہ میں مختلف وفود سے ملاقات کے موقع پر کیا۔ محمد خان لہڑی نے کہا کہ صوبے میں معیار تعلیم کی بہتری اور اسے دوسرے صوبوں کے برابر لانے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ سائنس آئی ٹی اور تحقیق کے شعبے کو زیادہ اہمیت دی جارہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اساتذہ کو بہترین تربیت دے کر ہی ہم پڑھے لکھے بلوچستان کا خواب شرمندہ تعبیر کرسکتے ہیں۔ اس سلسلے میں عملی اقدامات کئے جا رہے ہیں جس کے ثمرات جلد عوام کے سامنے ہوں گے۔ صوبائی مشیر نے کہا کہ سال 2019 صوبے میں تبدیلی کا سال ثابت ہوگا اور عوام کو جلد ریلیف ملے گا۔
()()()
خبرنامہ نمبر 49/2019 
کوئٹہ07 جنوری: ۔ڈائریکٹر جنرل محکمہ تعلقات عامہ محمد نعیم بازئی نے کہا ہے کہ محکمہ اطلاعات صحیح معنوں میں حکومت اور عوام کی درمیان پل کا کردار ادا کررہا ہے ۔ تحقیق پر مبنی معلومات کے اجراء سے عوام منفی معلومات سے بچ سکتے ہیں ۔ حکومت کے ترقیاتی منصوبوں اور عوامی فلاح و بہبود کیلئے اٹھائے جانے والے اقدامات کی صحیح اور بروقت تشہیر سے عوام میں حکومت کیلئے مثبت رائے عام بنانے میں مدد ملتی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے محکمہ تعلقات عامہ کے ریٹائر ڈ ہونے والے افسران کے اعزاز میں دیئے گئے عشائیہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈائریکٹر نور کھیتران، ڈپٹی ڈائریکٹر وحید زہیر کے علاوہ محکمہ کے افسران اور اہلکاران بھی موجود تھے۔جبکہ ریٹائر ہونے والے افسران میں سابق ڈائریکٹر جنرل تعلقات عامہ نور خان محمد حسنی ، ڈائریکٹر ممتاز ترین ، ڈپٹی ڈائریکٹرمحمد کریم سر پرہ ، پرائیویٹ سیکریٹری ٹو ڈی جی پی آر انور رشید، چیف فوٹو گرافر عبدالرحمن کی خدمات کو بھی سہرایا گیا ۔ اس موقع پر انہوں نے ریٹائر ہونے والے افسران کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ افسران ہمارا قیمتی اثاثہ ہیں ان کی تجاویز اور آر اء ہمارے لئے مشعل راہ ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ تعلقات عامہ کے دروازے ریٹائرڈ افسران کیلئے ہمیشہ کھلے رہیں گے۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ ریٹائرڈ ہونے والے افسران اپنی قیمتی تجربات سے عوام کو مستفید کرتے رہیں گے ۔ آخر میں انہوں نے ریٹائر ہونے والے افسران کو یاد گاری شیلڈزاور کتابوں کے تحفے بھی دیئے ۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 50/2019 
کوئٹہ 07جنوری ۔ بلوچستان پبلک سروس کمیشن کے ایک پریس ریلیز کے مطابق بلوچستان پبلک سرو س کمیشن نے اسسٹنٹ کمپیو ٹر آپریٹر بی ۔ 12 ، ڈیٹا انٹری آپریٹر بی ۔ 12 کی آسامیوں کیلئے ایم سی کیوز ٹیسٹ میں کامیاب قرار پانے والے امید واروں کی ٹائپنگ ٹیسٹ 14جنوری 2019 کو لی جائے گی جبکہ ٹائپنگ ٹیسٹ میں کامیاب قرار پانے والے امید واروں کے انٹر ویوز 16جنوری 2019 کو ہوں گے۔ اسی طرح اسٹینو گرافر بی ۔ 14 اور کیئر ٹیکر بی ۔ 8 کی آسامیوں کیلئے شارٹ ہینڈ ٹائپنگ / تحریری امتحان میں کامیاب قرار پانے والے امید واروں کے انٹر ویوز 15جنوری 2019کو منعقد کئے جائیں گے ۔تمام کامیاب امیدواروں کو زبانی امتحان / ٹائپنگ ٹیسٹ کے کال لیٹرز ارسال کر دیئے گئے ہیں اگر کسی امیدوار کو کال لیٹر موصول نہیں ہوا ہے تو ان کو ہدایت کی جاتی ہے کہ کمیشن ہذا کے انتظامی سیشن سے فوری طور پر رابطہ کریں ۔ متعلقہ امیدواروں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اپنے انٹر ویوز کی تاریخ سے ایک دن قبل اپنے اصلی دستاویزات تصدیق کیلئے لائیں۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر 51/2019
کوئٹہ 07جنوری :۔بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے زیر اہتمام گزشتہ روز تین روزہ ٹریننگ ورکشاپ کا انعقاد کیا گیاورکشاپ کی اختتامی تقریب کے مہمان خصوصی ڈائر یکٹر جنرل بی آئی ایس پی یو سف علی رودینی تھے ۔اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بی آ ئی ایس پی کی جانب سے جہاں مستحق افراد میں ماہانہ بنیادوں پر مالی معا ونت فراہم کرنے کے علادہ تعلیم کے میدان میں بھی اپنا اہم کردار اد کررہی ہے اور اس میں کوئی شک نہیں کہ BISPمعاشی طور پر پسے ہوئے طبقے کی حقیقی معنوں میں مالی وتعلیمی معاونت کے لیے سر گرم ہے انہوں نے کہا کہ BISPکے فیلڈ اسٹا ف کے لیے اعلیٰ پائے کی تربیت اور پیشہ وارنہ مہار ت کو اجاگر کرنے کے لیے ایک اہم قدم ہے ،انہوں نے اس اُمید کو بھی اظہار کیاکہ BISPکے اہلکاراس ٹریننگ سے بھرپور استفادہ کرتے ہوئے اپنے فرائض منصبی بہترانداز میں ادا کر سکیں گے ۔اس موقع پر مقررین نے BISPکے زیر اہتمام بعنوان (RECOSTRUCTED OPERATIONAL GUIDLINES & REVISED JOB DESCRIPTION)کے تربیتی پروگرام کی افادیت اور اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے اسے ایک اہم قدم قراردیا۔واضح رہے کہ مذ کورہ ٹریننگ ورکشاپ صوبہ بلوچستان کے تین اضلاع قلات ڈویژن ،ژوب ڈویژن او ررخشاں ڈویژن میں تعینات BISPکے اہلکاروں کے لیے منعقد کیا گیا تھا ۔ٹریننگ ورکشاپ میں دویژنل ڈائر یکٹر ز، اسسٹنٹ ڈائر یکڑز ،اسسٹنٹ کمپلینٹ ،فیلڈ سپر وائزر اور دیگر نے بھی شرکت کی ۔تین روز ٹریننگ ورکشاپ میں ڈاکٹر تنویر کیانی ،ڈائر یکٹر ٹریننگ اسلام آباد حبیب کیانی، ڈائریکٹر انعام ٹریننگ کنسلٹنٹ اسلام آباد نے BISPکے اہلکاروں کو تربیت فراہم کی ۔اس موقع پر ڈائریکٹر ہیڈ کوارٹر منظور احمد، ڈویژنل ڈائر یکٹر BISPعوض بلوچ ،ڈویژنل ڈائریکٹر سید وحید اللہ ، اسسٹنٹ ڈائر یکٹر ز رک خان و دیگر بھی موجو د تھے ۔تربیتی ورکشاپ کے اختتام پر مہمان خصوصی نے تربیتی ورکشاپ کے شرکا ء میں اسناد تقسیم کیں ۔
()()()
خبرنامہ نمبر 52/2019
لورالائی07جنوری ۔ڈپٹی کمشنرلورالائی حبیب الرحمن کاکڑ نے کہا کہ رسالہ لائن محلہ کے حوالے سے متعلقہ حکام سے رابطے میں ہیں ان کی ہرممکن مددکی جائے گی جہاں تک ہوسکے انھیں مہلت دے دیں گے یا انھیں متبادل جگہ فراہم کی جائے گی ان خیا لات اظہار انہوں رسالہ لائن محلہ کے مکینوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا جنہوں نے آج یہاں ان کے دفتر میں ڈسٹرکٹ چیرمین شمس حمز ہ زئی کے ہمراہ ان سے ملاقات کی۔ رسالہ لائن محلہ کے رہائیشیوں نے ڈپٹی کمشنر کو بتا یا کہ وہ گذشتہ چالیس سال سے یہاں رہائش پذیر ہیں اور سب پر امن لوگ اور اکثریت سرکاری ملازم ہیں لورالائی چھاؤنی پر حملے کے بعد ہمیں گھروں سے بے دخل کیا جارہاہے ڈپٹی کمشنر نے اس موقع پر کہا کہ تمام متاثرہ گھروں کی ایک فہرست بنائیں اور نمائندہ کمیٹی تجویز کریں ان کی ہرممکن مدد کی جائے گی اور انھیں متبادل زمین یا جگہ فراہم کرنے پر غور کیا جا ئے گا۔
()()()
پریس ریلیز
کوئٹہ07 جنوری: ۔محکمہ تعلقا ت عامہ آفیسرزویلفیئر ایسوسی ایشن کے صدر ظفر علی ظفر ،سیکرٹیری جنرل وقاص شاہین اور ایسوسی ایشن کی کابینہ واراکین نے ڈائریکٹر جنرل محمد نعیم بازئی کی جانب سے گزشتہ روز محکمہ کے ریٹائر ہونے والے آفسران کے اعزاز میں دیئے گئے عشائیہ پر ان کا بھر پور شکریہ ادا کیا ہے کہ اس طرح محکمہ میں ایک اچھی ،مثبت اور خوشگوار تبدیلی دیکھنے میں آئی ہے جس سے افسران و اہلکاروں کے حوصلے بلند ہوئے ہیں اور انہیں اس امرکا احساس ہوا ہے کہ ہماری خدمات کو سرکاری طورپر اعلی سطح پر تسلیم کیا جارہا ہے اور اسے سراہا بھی جارہا ہے۔ایسوسی ایشن نے ڈی جی پی آر کے اس مثبت و خیر سگالی جذبے کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس رویے اور ڈی جی پی آر کے دفتری امور چلانے کے انداز اور گڈ گورنٹس سے افسران کو درپیش مسائل میں سے آدھے توخود بخود حل ہوگئے ہیں۔جبکہ باقی رہ جانے والے مسائل ومطالبات کا تعلق ڈی جی کے د ائرہ اختیار میں نہیں ہے ان کا تعلق اعلی ترین سطح پر مسائل کے حل کی بات کی جائے گی۔ایسوسی ایشن نے ریٹائرڈ ہونے والے سینئر آفیسران سابق ڈی جی نورخان محمدحسنی،سابق ڈائریکٹر ممتاز شیرخان ترین،سابق ڈپٹی ڈائریکٹر حاجی پرویز احمد،اسسٹنٹ ڈائریکٹر عبدالکریم سرپرہ،سابق چیف فوٹو گرافر محمد رحمن،اور سابق پرائیوٹ سیکرٹری انور رشید کی خدمات کو بھی سراہا اورکہا کہ انہوں نے محکمے کے لیے اپنی تمامتر صلاحتیں بروئے کار لاتے ہوئے سروس کا دورانیہ مکمل کیا انہیں یہ اعزاز حاصل ہوا کہ انہوں نے اپنی اپنی شعبوں میں اپنا لوہا منوایا اور محکمے کے لیے باعث افتخار بنے۔عشائیہ میں ڈی جی پی آر محمد نعیم بازئی ،ڈائریکٹر نور کھتیران کے علاوہ تمام افسران وایسویشن کے نمائندوں اور اہلکاروں کی نمائندہ یونین کے عہدیدران بھی شریک تھے۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment