خبرنامہ نمبر 3357/2018
کوئٹہ 05دسمبر :۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ آج کے مربوط عالمی ماحول میں شنگھائی تعاون تنظیم جیسے علاقائی فورم، سیکیورٹی، امن اور ترقی کے لئے رکن ممالک کے درمیان ہم آہنگی کے فروغ میں بہترین کردار ادا کررہے ہیں۔ شنگھائی تعاون تنظیم ایک منفرد تنظیم ہے جس نے امن ،سیکیورٹی، رابطوں اور پائیدار ترقی کا بین الریاستی ماڈل پیش کیا ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے روس کے صوبے چیلیابنسک میں شنگھائی تعاون تنظیم کے ہیڈ آف ریجنز فورم سے خطاب کرتے ہوئے کیا، وزیراعلیٰ بلوچستان اس فورم میں شریک پاکستانی وفد کی قیادت کررہے ہیں جس میں پنجاب اور خیبرپختونخوا کے وزراء اور وفاقی نمائندے شامل ہیں۔ 4دسمبر سے 6دسمبر تک منعقد ہونے والے فورم میں مستقل ممبر ممالک پاکستان ،چین، روس، بھارت، ازبکستان، تاجکستان، کازغستان اور کرغستان کے علاوہ مبصر ممالک ایران، افغانستان، بیلاروس، منگولیا اور ڈائیلاگ شراکت دار ممالک آرمینیا، آذربائیجان، کمبوڈیا، نیپال، سری لنکا اور ترکی کے مندوبین شریک ہیں۔ اپنی نوعیت کا یہ پہلا ریجنز فورم ہے جس کا مقصد ان ممالک کے درمیان باہمی اعتماد سازی، اچھی ہمسائیگی اور سیاسی، تجارتی، معاشی، سائنس اینڈ ٹیکنالوجی، ثقافت، تعلیم، توانائی، ٹرانسپورٹیشن، سیاحت اور ماحولیاتی تحفظ کے شعبوں میں باہمی تعاون کافروغ ہے، وزیراعلیٰ نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ شنگھائی سپرٹ کے تحت باہمی اعتماد، برابری، ترقی میں شراکت داری اور ثقافت کے احترام کے طے شدہ اصولوں کی بنیاد پر شنگھائی تعاون تنظیم عالمی اور علاقائی تعاون کے حوالے سے ایک نیا نمونہ بن کر ابھری ہے، انہوں نے کہا کہ پاکستان شنگھائی تعاون تنظیم کو نہایت اہمیت اور احترام دیتا ہے کیونکہ یہ تنظیم پاکستان کے علاقائی رابطوں کے فروغ ،علاقائی امن استحکام اور ترقی کے بہترین مفاد کی عکاسی کرتی ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ شنگھائی تعاون تنظیم کے اراکین کو علاقائی اور صوبائی حکومتوں کی سطح پر مل بیٹھنے کا جو موقع ملا ہے اس سے ہم ایک دوسرے کے تجربات سے مستفید ہوسکیں گے جس کے لئے میں رشین فیڈریشن اورچیلیا بنسک صوبے کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کرتا ہوں، انہوں نے کہا کہ شنگھائی تعاون تنظیم علاقائی تعاون کی سب سے بڑی تنظیم ہے جس میں شریک ممالک کا وسیع ترین رقبہ اور آبادی دنیا کی تقریباً نصف ہے، یہ تنظیم معاشی ترقی اور سیکیورٹی تعاون کے لئے ایک ماڈل کے طور پر فعال کردار ادا کررہی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ خوشحالی کا حصول علاقائی رابطوں اور مربوطیت سے منسلک ہے پاکستان شنگھائی تعاون تنظیم کے ممالک اور یورپ کو جنوبی ایشیا سے منسلک کرنے کا قدرتی راستہ ہے، ہم پاکستان کے راستے بین العلاقائی یا بین الاقوامی تجارت اور توانائی ٹرانزیکشن کی پیشکش کرتے ہیں۔ انہوں نے اپنے خطاب میں بلوچستان کی اہمیت اجاگرکرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان پاکستان کا رقبہ کے لحاظ سے سب سے بڑا جبکہ آبادی کے لحاظ سے سب سے چھوٹا صوبہ ہے تاہم ہمارا صوبہ جو قدرتی وسائل سے مالا مال ہے میں سرمایہ کاری کے عظیم مواقع موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ رکن ممالک کو دعوت دیتے ہیں کہ وہ خود دورہ کریں یا پھر باہمی تعاون کے فروغ کا جائزہ لینے کے لئے اپنے سرمایہ کاروں کو بلوچستان بھیجیں ہماری حکومت انہیں ہر قسم کی سہولیات کی فراہمی کے لئے تیار ہے، انہوں نے کہا کہ بلوچستان کی گوادر پورٹ لینڈ لاکڈ وسطی ایشائی ریاستوں کو دنیا کے ساتھ سمندری راستے کے ذریعہ تجارت کے مواقع فراہم کرسکتی ہے۔ پاکستان اور چین رابطوں کی سہولت میں اضافے کے لئے گوادر بندرگاہ کو جدید بنانے کے لئے مشترکہ طور پر کام کررہے ہیں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ بلوچستان عظیم ثقافتی ورثے کا حامل صوبہ ہے اور ہم شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ممالک کے ساتھ ثقافتی تعاون کے فروغ کے امکانات کی تلاش کے لئے تیار ہیں۔ وزیراعلیٰ نے اپنے خطاب میں مہمان نوازی پر چیلیابنسک صوبے کی انتظامیہ اور عوام کا شکریہ ادا کیا۔ 
()()()
خبرنامہ نمبر3358/2018 
گوادر05 دسمبر:۔ وزیراعظم یوتھ اسکل ڈویلپمنٹ پروگرام نیوٹیک کے زیر اہتمام مکران ریجن کے وکیشنل ٹیکنیکل ٹریننگ کمیشن کی طالبات کے درمیان بیوٹیشن اور ٹریلرنگ کا مقابلہ ہوامقابلے میں دونوں ٹریڈکی پہلی پوزیشن تربت کے طالبات نے جبکہ دوسری اور تیسری پوزیشن گوادر کی طالبات نے حاصل کی اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم یوتھ اسکل ڈویلپمنٹ پروگرام کے ڈائریکٹر ظریف بلوچ ویمن وکیشنل ٹریننگ سنٹر کے پرنسپل نورصباء اور میر عبدالغفور ٹرسٹ کے ڈائریکٹر ارشدکلمتی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گوادرترقی کی راہ پر گامزن ہورہا ہے ترقی کے ثمرات سے مستفید ہونے کیلئے ہمیں اپنے بچے اور بچیوں کو ہنر مند بنانا ہوگا انہوں نے کہا کہوی ٹی سی اور نیوٹک کا گوادر سمیت مکران میں اسکلیڈ پاور پیدا کرنے میں اہم کردار ادا کررہے ہیں بلوچ خواتین کا ہنرمندی کی جانب برھتا رجحاں گوادر کے باشعور ہونے کی غمازی کرتاہے ہنر مند افراد معاشرے کی ترقی میں بنیادی کردار ادا کرتے ہیں گوادر کی بچیاں اسی جذبہ سے علم کے ساتھ ہنر کے میدان میں بھی کامیابی کے گامزدہیں تو سی پیک سمیت ملکی ترقی میں اپنا کردار بھتر انداز میں ادا کرسکتی ہیں مقررین نے کہا کہگوادرکے بچے اور نوجوان طبقہ مثبت سرگرمیوں کو اپنا شعار بنائیں اور سوشل میڈیا کو مثبت کاز کیلئے استعمال کریں تقریب سے مقررین نے فنی تعلیم پر زوردیتے ہوئے کہااس دور کی سب سے بڑی ضرورت فنی مہارت اور صنعتی پیشہ ورانہ تعلیم ہے تقریب کے آخری میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنیوالے طالبات کو تعریفی اسناد پیش کیے گئے جبکہ طالبات کی حواصلہ افزائی کے میر عبدالغفور ٹرسٹ کی طرف سے دس ہزار روپے کا بھی اعلان کیا گیا ہے۔
()()()
خبرنامہ نمبر3359/2018 
کوئٹہ 05دسمبر :۔سیکر ٹری محکمہ ترقی نسواں صدیق مندوخیل کے کہا ہے کہ عالمی یوم رضا کا ر ہر 05دسمبر کو منایا جا تا ہے ۔جس کا مقصد رضا کاری کے عمل کو فروغ وتقویت دینا ہے ۔انہوں نے مزید کہاکہ رضا کار اور رضاکار تنظمیں بین الاقومی سطح پر اپنے دائرہ اختیار میں دہتے ہوئے امن ،خوشحالی ، ترقی اور اگاہی لائے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہو ں نے عالمی یوم رضا کار05دسمبر 2018ء کے موقع پر کیا ۔انہوں نے مزید کہاکہ اس دن کو منانے کا اصل مقصد مظلوم طبقو ں ،عورتو ں اور بچوں کو اپنے حقوق سے باخبر رکھنے اور ان کے حقوق کرتا ہے ۔سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے صدیق مند وخیل نے کہا کہ رضاکا ر او ر رضاکار تنظیمیں پاکستان میں اھم کردار اد ا کرتی ہے ۔اس موقع پر ڈائر یکٹر ریڈیو پاکستان سہیل خٹک ،عائشہ بتول ،عظمت بلوچ ،ضیا ء خان او ردیگر بھی موجو دتھے ۔سیمنار کے اختتام پر گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی اور سیکرٹری محکمہ ترقی نسواں نے رضا کاروں اور رضا کار تنظیموں کے اہلکاروں میں سر ٹیفیکٹ تقسیم کئیے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر3360/2018
خضدار 05دسمبر :۔ پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کی ٹیم نے جھالاوان میڈیکل کالج خضدار اور گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال خضدار کا دورہ کیا جہاں انہوں نے جاری ترقیاتی کام ،ڈاکٹروں اور متعلق امور سے آگاہی حاصل کی اور ہسپتال و میڈیکل کالج کے معیار کا بھی معائینہ کیا پرنسپل جھالاوان میڈیکل کالج ڈاکٹر منیر احمد سمالانی اور گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال خضدار کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد اسماعیل باجوئی نے پی ایم ڈی سی کے ٹیم کو میڈیکل کالج اور ہسپتال میں دستیاب سہولیات کے متعلق بریفنگ دی۔ اس موقع پر ڈویژنل ڈائریکٹر محکمہ صحت قلات ڈویژن ڈاکٹر محمد مراد مینگل سمیت دیگر بھی موجود تھے 
()()()
خبرنامہ نمبر3361/2018 
خضدار 05دسمبر:۔ پرنسپل جھالاوان میڈیکل کالج خضدار ڈاکٹر منیر احمدسمالانی نے اپنے عہدے کا چارج سنبھال کر کام شروع کردیا مسلم لیگ خضدار کے مرکزی راہنما میر عبدالرحمان زہری ڈویژنل ڈائریکٹر ہیلتھ ڈاکٹر محمد مراد مینگل سابق پرنسپل جھالاوان میڈیکل کالج خضدار ڈاکٹر مسعود احمد قاضی و خضدارکے سیاسی وسماجی راہنماؤں نے پرنسپل جھالاوان میڈیکل کالج خضدار ڈاکٹر منیراحمد سمالانی کو پرنسپل کے عہدے کا چارج سنبھالنے پر مبارکباد دیتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ نئے پرنسپل ادارے کو مزیدفعال بنائیں گے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر3362/2018 
کوئٹہ05 دسمبر۔ صوبائی وزیر زراعت انجینئر زمرک خان اچکزئی سے انجمن تاجران کے ایک وفد نے صدر انجمن تاجران رحیم کاکڑ کی سربراہی میں سبزی منڈی ہزار گنجی میں آرتی زمیندار و ماشہ خور کو گزشتہ ڈھائی مہینے سے درپیش کاروباری مشکلات پر تفصیلی بات چیت کی ۔ وفد کو اس بات کا یقین دلایا گیا کہ ہزار گنجی کے مسائل حل کرنے کے لئے ترجیحی بنیادوں پر عملی اقدامات کئے جائیں گے۔
()()()
خبرنامہ نمبر3363/2018 
کو ئٹہ 05دسمبر :۔ صوبائی سیکرٹری تعلیم و سکولز محمد طیب لہڑی نے بدھ کو کوئٹہ کے مختلف سکولوں اور امتحانی مراکز کا دورہ کیا ان میں گورنمنٹ بوائز پرائمری سکول کی شادی خان کلی قمبرانی گورنمنٹ بوائز پرائمری سکول سہراب خان کلی قمبرانی گورنمنٹ گرلز ہائی سکول کلی قمبرانی اور گورنمنٹ گرلز ہائی سکول ریلوے کالونی شامل ہیں۔ اس موقع پر چیف ایگزیکٹیو آفیسر بلوچستان اسسمنٹ اینڈ ایگزامینیشن کمیشن (بیک) سید عارف شاہ اور ڈسٹرکٹ آفیسر ایجوکیشن کوئٹہ عرفان محمد خان ان کے ہمراہ تھے اس موقع پر سیکرٹری تعلیم نے کہا کہ صوبے میں پرائمری تعلیم کی بہتری کے لیے تمام دستیاب وسائل بروکار لائے جارہے ہیں۔ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان اور صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمدخان لہڑی کے خصوصی ہدایات کے مطابق صوبے میں تعلیم کی بہتری کے لیے ٹھوس اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں انہوں نے بعض سکولوں میں تدریسی عملے کی غیرموجودگی کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ حکام سے فوری رپورٹ طلب کر لی امتحانی مراکز کے دورے کے موقع پر انہوں نے گورنمنٹ گرلز ہائی سکول ریلوے کالونی کوئٹہ میں قائم امتحانی مرکز کا دورہ کیا اس موقع پر سیکرٹری تعلیم نے کہا کہ(بیک) کے حق میں بلوچستان ہائی کورٹ کا فیصلہ اس بات کا ثبوت ہے کہ ادارہ صوبے میں نقل کے خاتمے، نظام تعلیم کو جدید خطوط پر استوار کرنے اور امتحانات میں شفافیت پر یقین رکھتا ہے اس موقع پر انہوں نے گورنمنٹ گرلز ہائی سکول ریلوے کالونی میں تمام سٹاف کو موجود پاکر اطمینان کا اظہار کیا اور پرنسپل فرحانہ نواز کی کارکردگی کی تعریف کی ان کا کہنا تھا کہ گورنمنٹ گرلز ہائی سکول ریلوے کالونی کوئٹہ کا شمار دارالحکومت کے بہترین سکولوں میں ہوتا ہے اور اس کو بہتر بنانے کے لئے سکول اور پرنسپل کی خدمات قابل تعریف ہیں اس موقع پر سیکریٹری تعلیم نے اسکول میں جاری تعمیر و مرمت کے منصوبوں کا معائنہ بھی کیا اور کام میں سست روی پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ محکموں سے رپورٹ طلب کرنے کی ہدایات جاری کیں۔ انہوں نے مہمانوں کے کتاب میں اپنے تاثرات بھی قلم بند کیے اور اسکول کی بہتری اور لائبریری کے لیے کتب کی فراہمی کی یقین دہانی بھی کروائی۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment