خبرنامہ نمبر 3344/2018
کوئٹہ04 دسمبر۔ صوبائی وزیر مواصلات و تعمیرات نوابزادہ طارق مگسی نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت عوام کا معیار زندگی بلند کرنے اور عام آدمی کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لارہی ہے عوام کی توقعات پورا کریں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ینگ اتحاد گنداواہ کے صدر راجا شاہ کی قیادت میں ملنے والے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ علاقے کی ترقی کیلئے اہداف مقرر کرلیئے گئے ہیں اور اس مقصد کیلئے سنجیدگی سے اقدامات کررہے ہیں ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ صحت ، مواصلات ، تعلیم اور بنیادی ڈھانچے کی فراہمی کو اولین ترجیحات میں شامل کر رکھا ہے ۔ صوبہ کی تعمیر و ترقی کیلئے ہم سب نے مل جل کر کام کرنا ہوگا ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ پڑھے لکھے نوجوان ہمار ا قیمتی اثاثہ ہیں ان کو با اختیار بنانے کیلئے ہر سطح پراقدامات کئے جائیں گے۔ اس موقع پر نوجوانوں کے وفدنے صوبائی وزیر کو لائبریری اور پرائیوٹ بینک کے قیام سمیت علاقے کے نوجوانوں کو درپیش مسائل و مشکلات سے آگاہ کیا ۔صوبائی وزیر نے ان کے مسائل غور سے سنے اور ان کے ازالے کیلئے احکامات جاری کرتے ہوئے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔ دریں اثناء صوبائی وزیر نوابزادہ طارق مگسی سے سابق صوبائی وزیر میر طارق خان کھیتران نے بھی ملاقات کی ۔ ملاقات کے دوران صوبہ کی مجموعی صورتحال سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔
()()()
خبرنامہ نمبر3345/2018
کوئٹہ 04دسمبر :۔صوبا ئی مشیر کھیل وثقافت عبدالخالق ہزارہ نے گزشتہ روز ہزارہ ٹاؤن میں فٹ با ل گراؤنڈ اور اسپورٹس کمپلیکس کا دورہ کیا ۔سیکرٹری کھیل شاہد سلیم ڈائر یکٹر جنرل اسپورٹس علی گل کرد ودیگر حکام بھی صوبائی مشیر کے ہمراہ تھے اس موقع پر صوبائی مشیر نے فٹ بال گراؤنڈ اور اسپورٹس کمپلیکس کے مختلف حصوں کا معائنہ کیا ۔صوبائی مشیر نے متعلقہ حکام کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ کھیل کے میدان اور اسپورٹس کمپلیکس کوآباد کرکے نو جوانو ں کو مثبت سرگرمیوں کی طرف راغب کیا جائے انہوں نے کہاکہ معاشرے میں مذہبی شد ت پسندی انتہاپسندی اور دیگر تفرقات کے خاتمے کے لئے ہمیں کھیلو ں کی سرگرمیوں کو بھر پور انداز میں فروغ دیناہو گا۔صوبائی مشیر نے کہا کہ موجودہ حکومت سابقہ ادوار میں بنائی گئی غیر فعال عمارتوں کوفعال بنائے گی تاکہ معاشرے میں کھیلو ں سمیت مثبت سرگرمیوں کو اُ جا گر کیا جاسکے انہوں نے کہاکہ صحت مند معاشرے کے قیام کے لیے ڈویژنل سطح پر کھیل وثقافت کی سرگرمیوں کو مزید دوا م دینا ہے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر3346/2018
کوئٹہ 04دسمبر۔مشیر تعلیم بلوچستان حاجی میر محمد خان لہڑی نے کہا ہے کہ تعلیمی پسماندگی کے خاتمے کے لئے ہر فرد کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا بند تعلیمی اداروں کو فعال کرنے کے لئے تمام اساتذہ تنظیمیں ہمارا ساتھ دیں اساتذہ یا تعلیمی افسران کی غیر حاضری قطعی برداشت نہیں کی جائے گی مشیر تعلیم کی ذمہ داریاں سنبھالتے ہی دوست و احباب عزیز و اقارب کو ہدایت کی کہ تمام افراد سے یکساں سلوک کیا جائے گا اور کوئی بھی سرکاری ڈیوٹی سے مبرا نہیں بلوچستان ہم سب کی سرزمین ہے جس کی پائیدار ترقی تعلیم کے فروغ سے ہی ممکن ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف وفود سے بات چیت کرتے ہوئے کیا حاجی محمد خان لہڑی نے کہا کہ تعلیمی ترقی ہم سب کا دیرینہ خواب ہے ماضی میں اس اہم شعبے کو مصلحتوں کی بھینٹ چڑھا یا گیا نتیجہ تعلیمی نظام تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا اب ہمیں سخت فیصلے لینے پڑ رہے ہیں اس کے بغیر کوئی چارہ نہیں تمام اساتذہ اور افسران اپنے فرائض تندہی سے سرانجام دیں غیر حاضر اور غفلت برتنے والے اساتذہ افسران یا کسی بھی سطح کے یونین عہدیداروں سمیت کسی سے قطعی کوئی رعائیت روا نہیں رکھی جائے گی اور کسی بھی شکایت کی صورت میں کسی بھی یونین کے عہدیداروں سمیت بلا امتیاز غیر حاضر اساتذہ اور افسران کے خلاف سخت تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے گی لہٰذاایسی کسی بھی سخت کارروائی سے قبل غیر حاضر اساتذہ اور افسران کو اپنا قبلہ درست کرنا ہوگا۔
()()()
خبرنامہ نمبر3347/2018
گوادر04 دسمبر:۔ ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر گوادر رسول بخش بلوچ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ31 دسمبر تک ووٹر لسٹوں میں تبدیلی کا سلسلہ جاری ہے اس حوالے سے الیکشن ایکٹ 2017 کے سیکشن 27 کیمطابق ووٹ کا اندراج صرف شناختی کارڈ پر درج مستقل یا موجودہ پتہ پر کروایا جاسکتا ہے ایسے تمام ووٹرز جن کا ووٹ کسی دوسرے پتے پر درج ہے وہ اپنے ووٹ کو شناختی کارڈ پر درج ذیل مستقل یا موجودہ پتہ کے مطابق درج کرائیں اندراج و منتقلی ووٹ کیلئے فارم 21 دفتر میں دستیاب ہے جو 31 دسمبر تک ضلعی آلیکشن کمشنر افس گوادر میں جمع کرائیں مذید معلومات شکایات کیلئے ضلعی الیکشن کمشنر آفس گوادر سے رجوع کیا جا سکتا ہے۔
()()()
خبرنامہ نمبر3348/2018
لورالائی 04دسمبر :۔کمشنر ژوب ڈویژن بشیر احمد خان بازئی نے کہا ہے کہ پولیو ایک مہلک اور وبائی مرض ہے اِس بیماری کو ختم کرنا حکومت کی ترجیح ہے آنے والی مہم میں پہلے سے بہتر انداز میں کام کیا کا ئے تمام ڈپٹی کمشنرز مہم کی خود نگرانی کریں ۔ضلعی انتظامیہ ،محکمہ صحت اور دیگر متعلقہ ادارے ملکر مہم کو کامیاب بنائیں کسی قسم کی غفلت ناقابل برداشت ہے اِ ن خیالات کا اظہار انہوں نے ڈویژنل ٹاسک فورس برائے پولیوکے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اجلاس میں ڈپٹی کمشنر لورالائی حبیب الرحمن کاکڑ ،ڈپٹی کمشنر دکی عبدالناصر دوتانی ،ڈپٹی کمشنر قلعہ سیف اللہ سیف اللہ خان کھتران ،ڈپٹی کمشنر بارکھان سہیل انور ہاشمی ،ڈپٹی کمشنر شیرانی عبدالخالق مندوخیل ،ڈپٹی کمشنر موسیٰ خیل منیر احمد کاکڑ ،اسسٹنٹ کمشنر ریونیو ژوب ڈویژن حضرت ولی کاکڑ ،اسسٹنٹ ڈائریکٹر انفارمیشن امیر جان لونی ،ڈبلیو ایچ او کے نمائندے ،ژوب ڈویژن کے تمام ڈی ایچ اوزنے شرکت کی ۔ڈبلیوایچ او کے نمائندے ڈاکٹر نجیب اللہ نے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پورے ملک میں رواں سال پولیو کے کل 8کیس رپورٹ ہوئے ہیں اِن میں 3کیسز کا تعلق ژوب ڈویژن کے ضلع دکی سے ہے انہوں نے کہا کہ ڈبلیو ایچ او کی طرف سے ہر مہم سے پہلے ٹیموں کو تربیت دی جاتی ہے جس میں بعض اہلکار دلچسپی نہیں لیتے اور بعض ٹیموں کو عین مہم کے دوران تبدیل کیا جاتا ہے جس سے مہم متا ثر ہوتی ہے اور بعض اضلاع سے مائیکرو پلان بھی بروقت جمع نہیں کرایا جاتا انہوں نے گزشتہ مہم کی رپورٹ اور ہر یونین کونسل میں ٹیموں کی کارکردگی کے حوالے سے کئے گئے سروے کی تفصیلات بھی بتائیں۔ضلعی ہیلتھ آفیسران نے سٹاپ کی کمی ،معاوضہ نہ ملنے اور دیگر وسائل کی کمی جیسے درپیش مسائل بیان کئے ۔کمشنر ژوب ڈویژن بشیر احمد خان بازئی نے اِس موقع پر کہا کہ حکومت پولیو وائرس کے خاتمے کیلئے ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے ژوب ڈویژن دور دراز علاقوں اور بِکھری ہوئی آبادی پر مشتمل ہے خصوصاً باڈر کے نزدیکی علاقوں پر بھی زیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے ضلعی انتظامیہ دیگر متعلقہ اداروں کے ساتھ ملکر اپنی کارکردگی مزید بہتر بنائے کوتاہی کی گنجائش نہیں ہے انہوں نے کہا کہ ڈبلیوایچ او سمیت تمام سماجی تنظیمیں مہم کے دوران ضلعی انتظامیہ سے رابطہ رکھیں تاکہ مسائل کوکم کیا جا سکے اور مہم کو کامیاب بنا ئیں انہوں نے تمام ڈپٹی کمشنر ز کو مائیکرو پلان بروقت جمع کرنے کی سختی سے ہدایت کی۔
()()()
خبرنامہ نمبر3349/2018
سبی 04دسمبر :۔اسسٹنٹ کمشنر سبی ممتاز مری کی زیر صدارت امن و امان کا جائزہ لینے کے حوالے سے ایک اجلاس منعقد ہوا اجلاس میں ضلعی و انتظامی افسران نے شرکت کی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اسسٹنٹ کمشنر سبی ممتاز مری نے کہا کہ امن و امان کو برقرار رکھنے کے لیے تمام ضروری اقدامات کیے جائیں گے اس ضمن میں کسی قسم کی کوتاہی یا غفلت کا مظاہرہ برداشت نہیں کیا جائے گا انہوں نے متعلقہ افسران و اہلکاروں کو بھی سختی سے تاکید کی کہ وہ اپنے فرائض نیک نیتی و ایمانداری سے انجام دیں وہ خود بھی وقتاً فوقتاً مختلف چیک پوسٹوں کا معائنہ کریں گے انہوں نے کہا کہ کمشنر سبی ڈویژن سید فیصل احمد ڈپٹی کمشنر سبی سید زاہد شاہ نے بھی امن و امان پر خصوصی توجہ مرکوز کررکھی ہے۔
()()()
خبرنامہ نمبر3350/2018
کوئٹہ04 دسمبر۔ ڈائریکٹر جنرل بلوچستان بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی طرف سے دی جانے والی سہ ماہی امداد کو 4834 روپے سے بڑھا کر رواں سہ ماہی ( جولائی ۔ ستمبر 2018ء) سے پانچ ہزار روپے (5000/-) کردی گئی ہے ۔ رقم وصول کرتے وقت بی آئی ایس پی بینیفشری اس بات کی تسلی کرلے کہ پورے 5000/- ہزارروپے وصول کرلئے ہیں۔ رقم وصول کرتے وقت دکاندار /POS ایجنٹ سے رسید ضرور حاصل کریں پیسے کم یا رسید نہ ملنے یاکسی قسم کے خورد برد /فراڈ کی صورت میں متعلقہ BISPتحصیل آفس تشریف لائیں یا فو ن نمبر 0800-26477پر اپنی شکایت درج کرائیں۔
()()()
خبرنامہ نمبر3351/2018
کوئٹہ04دسمبر :۔ عدالت عدلیہ کے حکم اور صوبائی سیکرٹری ٹرانسپورٹ کی خصوصی ہدایت پر سیکرٹری پرونشیل ٹرانسپورٹ اتھارٹی بلوچستان ظفر اللہ خان نے مغربی بائی پاس پر ٹریفک پولیس ،ڈسٹرکٹ پولیس اور پی ٹی اے کے عملے کے کا ہمراہ کوئٹہ لورلائی، ژوب ،چمن ،پشین اوردیگر روٹ پر چلنے والی گاڑیوں کی کنڈیشن اور کاغذات کا معائنہ کیا۔ اس موقع پر کاغذات نہ ہونے ،کنڈیشن کی خرابی اور اوور لو ڈنگ کرنے پر 35گاڑیوں کا چالان کیا۔ سیکرٹری پی ٹی اے بلوچستان نے کہاکہ صوبے کے مختلف روٹس پر چلنے والی گاڑیوں کی کنڈیشن کو بہتر بنانے کے لئے ہرممکن اقدامات کئے جائیں گے اس کے علاوہ اوور لوڈنگ اور آورسپیڈنگ کرنے والی گاڑیو ں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔انہوں نے کہاکہ صوبے کے تمام روٹ پر چلنے والی گاڑیوں کی چیکنگ کا عمل ہنگامی بنیادوں پر روزانہ کی بنیاد پر جارہی ہے۔ان کارروائیوں سے گاڑیوں کی حالت بہتر ہونے کے علاوہ اوور لوڈنگ اور اوور سپیڈنگ کا بھی خاتمہ ہوگا۔ انہوں نے تمام ٹرانسپورٹروں کو سختی سے ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ وہ اپنی گاڑیوں میں تمام کاغذات پرمٹ اور رجسٹریشن بک لازمی رکھیں دوران چیکنگ کاغذات نہ ہونے والوں کے خلاف کاروائی عمل میں لاتے ہوئے گاڑیاں بند اور پرمٹ معطل کیاجاسکتا ہے۔انہوں نے کہاکہ صوبے میں ٹرانسپورٹ کے شعبے کی بہتری اور مسافروں کو آرام دہ اورجدید بسوں کی فراہمی سے عوام کی مشکلات میں کمی واقع ہوگی ۔جدید اور نئے دور کے مطابق گاڑیاں روٹ پر چلنے سے ٹرانسپورٹ کا شعبہ یکساں تبدیل ہورہا ہے۔اور بہت جلد ہمارے صوبے کے ٹرانسپورٹ دیگر صوبے کے مقابلے میں شامل ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ عوام کو بہتر سفری سہولیات کی فراہمی اور گاڑیوں کی حالت زار بہتر بنانے کے سلسلے میں کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا اس لئے جن روٹس پر گاڑیوں کی کنڈیشن خراب ان کی کنڈیشن درست کی جائے بصورت دیگر چیکنگ کے دوران سخت کارروائی عمل میں لائی جائیگی۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment