خبر نامہ نمبر 3336/2018
کوئٹہ 03دسمبر۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت بلوچستان کے نوجوانوں کو تعلیم اور ہنر کی فراہمی کے ذریعہ قومی دھارے میں لانے کی منصوبہ بندی پرعمل پیراہے تاہم یہ ایک بڑا چیلنج ہے جس سے نمٹنے کے لیے مجموعی طور پر ایک مضبوط حکمت عملی وضع کرنا ہوگی ، معاشی ترقی، معیاری تعلیم کی وسعت اور فنی تربیت کے ساتھ ساتھ مڈل کلاس کو اوپر لانے اور نجی شعبہ میں روزگار کی فراہمی کے مواقعوں کے ذریعہ ’’پولیٹیکل کاؤنٹر انسرجنسی سٹریٹیجی‘‘ بنانے کی ضرورت ہے لیکن حکومت یہ سب کچھ تنہا نہیں کرسکتی اس میں نجی شعبہ اہم کردار کرسکتا ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز لاہور میں امن،ثقافت اور جامع معاشروں کے موضوع پر منعقدہ دوسری بین الاقوامی یوتھ سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے کیا جس کا انعقاد یونیورسٹی آف لاہور نے کیا تھا، سمٹ میں مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے طلباء اور طالبات کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ وزیراعلیٰ نے سمٹ کے موضوع اور انعقاد کو عصر حاضر کے تقاضوں سے ہم آہنگ قراردیتے ہوئے کہا کہ اس قسم کی سرگرمیوں سے نہ صرف پاکستان کے بارے میں ایک مثبت تاثر اجاگر ہوگا بلکہ یہ سمٹ ہمارے ملک کو دنیا سے منسلک کرے گی اور بین الاقوامی سیاحوں اور سرمایہ کاروں کو پاکستان کی جانب راغب کرے گی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ سمٹ کا موضوع نہ صرف ہمارے ملک بلکہ دنیابھر کی ضرورت ہے، انہوں نے کہا کہ اگر ہم بلوچستان کو درپیش چیلنجز کا جائزہ لیں تو سمٹ کا موضوع اور بھی اہمیت اختیار کرجاتا ہے، ہمارے نوجوانوں کی بہت چھوٹی تعداد سیکنڈری تعلیم مکمل کرتی ہے جبکہ ان کی بڑی تعداد تعلیمی نظام سے نکل کر بغیر کسی ہنر کے لیبر مارکیٹ میں داخل ہوجاتی ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ اس صورتحال کا دوسرے لفظوں میں مطلب غیر تعلیم یافتہ بے روگار اور غیر ہنر مند نوجوانوں کی تعداد میں اضافہ ہے، انہوں نے کہا کہ نجی شعبہ میں روزگار کے محدود مواقعوں کی وجہ سے بھی بیروزگاری میں اضافہ ہورہا ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ یوتھ کو باروزگار بنانے میں بعض دیگر عوامل بھی رکاوٹ ہیں جن میں سماجی اور ثقافتی رویے، معیاری تکنیکی مراکز کی کمی اور غیرپائیدار شہری ترقی بھی شامل ہے، وزیراعلیٰ نے کہاکہ نوجوانوں کی بے روزگاری سے جرائم اور سماج دشمن رویے جنم لیتے ہیں۔ مقامی شورش اور صوبے کے کچھ علاقوں میں بدامنی کابراہ راست تعلق بیروزگاری اور غربت سے ہے جنہیں ہمسایہ ممالک کی دشمن تنظیمیں اپنے مذموم مقاصد کے حصول کیلئے استعمال کرتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس کے باوجود کہ صوبائی حکومت پاک فوج کے تعاون سے صوبے کے نوجوانوں کو تعمیری سرگرمیوں میں حصہ لینے کے بھرپور مواقع فراہم کررہی ہے تاہم اب بھی مزید بہت کچھ کرنے کی گنجائش موجود ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ اگر ہم قومی سطح پر دیکھیں تو پاکستان کو غیرمنصوبہ بندی کے شہری آبادیوں میں اضافے، پانی کی کمی، ماحولیاتی آلودگی، سالٹ ویسٹ مینجمنٹ ، خشک سالی اور سیلاب کی صورت میں ماحولیاتی تبدیلی، بنیادی ڈھانچہ کی خامیوں اور اداروں کی استعداد کار میں کمی جیسے سنگین چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کے لئے بہت سے وسائل اور وقت کی ضرورت ہے، تاہم وزیراعلیٰ نے کہا کہ آج کی دنیا میں کچھ بھی ناممکن نہیں، ہمارے پڑھی لکھی یوتھ جدید اور پرکشش منصوبوں کے ذریعہ ملک کو درپیش چیلنجز سے نکال سکتی ہے، وزیراعلیٰ نے کہاکہ ان کے خیال میں حکومت اور یوتھ ان چیلنجز سے نمٹنے کے لئے اپنا اپنا کردار ادا کرسکتے ہیں۔ اس کے لئے ضروری ہے کہ متعلقہ ادارے اور مجاز حکام یوتھ کے لئے کاروباری منصوبے بنائیں، وزیراعلیٰ نے ملک کے نوجوانوں پر زور دیا کہ وہ صنفی امتیاز سے بالاتر ہوکر سرکاری نوکریوں پر انحصار کرنے کی بجائے ذمہ دارانہ طور پر اپنے آئیڈیاز کو اچھے بزنس کی بنیاد بنائیں۔ وزیراعلیٰ نے سمٹ کے کامیاب انعقاد پر منتظمین کو مبارکباد دی اور انہیں نوجوانوں سے مخاطب ہونے کا موقع فراہم کرنے پر شکریہ ادا کیا۔ بعدازاں وزیراعلیٰ نے سمٹ میں شریک مختلف ممالک کے نوجوانوں میں شیلڈ تقسیم کئے۔ 
()()() 
خبر نامہ نمبر 3337/2018
کوئٹہ 03دسمبر۔صوبائی مشیر کھیل و ثقافت عبدالخالق ہزارہ نے کہا ہے کہ خصوصی افراد معا شر ے کا نہایت ہی اہم حصہ ہیں ان کی فلاح بہبود کے لئیے موجو د ہ حکومت تمام دستیاب و سائل بروے کار لائیگی ان کا خیالات کا اظہار انہوں نے عالمی یوم معذوری کی منا سبت سے منعقد ہ ایک تقریب کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ تقریب میں سیکرٹری ثقافت ظفر علی بلیدی، سیکرٹری پی ایچ ای عبدالفتح بھنگر کے علاوہ مختلف مکا تب فکر کے افراد سمیت معذ ور افراد کی کثیر تعدادنے شرکت کی ۔صوبائی مشیر نے کہا کہ موجود ہ حکومت ہرلحا ظ سے خصوصی افراد کی معا ونت کریگی اور ملازمتوں میں معذور وں کے 5 فیصد کوٹے پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائیگا اور حکومت نے معذورافراد کو تمام دستیا ب بنیادی سہولیات کی فراہمی کویقینی بنانے کے لیے اقدامات کررہی ہے ۔انہوں نے اس امر پر زور دیتے ہوئے کہا کہ خصوصی افراد کے لیے مذید مو ثر قا نون سازی کی ضرورت ہے تاکہ انہیں ہرجگہ یکسا ں مواقع میسر آسکیں انہوں نے معذور افراد پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی جدو جہد جاری رکھیں انہیں ہر موٹرپر ہمارا تعا ون ملے گا۔ صوبائی مشیر نے کہاکہ معاشرے میں مثبت سرمیوں کے فروغ اور معاشرتی برائیوں کے خاتمے کے لئے ہمیں اپنے تعلیمی نصاب میں انسانیت کادرس دینا ہوگا اس کے ساتھ ساتھ معاشرے میں خصوصی افراد کے حوالے سے مثبت سوچ اور رویوں کوپروان چڑھانے کے لئیے ہر سطح پر مشعوروآگاہی پیدا کرنا ہوگی ۔صوبائی مشیرنے کہا کہ معذور افراد کو بنیادی ضروریات میسر کرنا ہمارا فرض ہے میر ے درو ازے ہمیشہ کے لیئے خصوصی افراد کے لیئے کھلے ر ہیں گے ۔تقریب کے آخر میں صوبائی مشیر کوسیکر ٹری ثقا فت ظفر بلیدی نے یا دگاری شیلڈ پیش کی جبکہ صوبائی مشیر نے تقریب کے شرکاء میں شیلڈ تقسیم کئیے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3338/2018
زیارت 03دسمبر۔حلقہ انتخاب میں تعمیر وترقی کے لیے ہرممکن اقدامات کریں گے ،آنے والے دنوں میں حلقے کی تقدیر بدل دیں گے ان خیالات کا اظہارت صوبائی وزیر پی ایچ ای ،واسا حاجی نورمحمد دمڑ نے کواس زیارت میں استقبالیہ اورگورنمنٹ ورچوم زیارت کرکٹ گراونڈ میں کرکٹ ٹورنامنٹ کے اختتام پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر بے اے پی تحصیل زیارت کے صدر حبیب اللہ پانیزئی، گورنمنٹ ہائی اسکول کے ہیڈ ماسٹر امان اللہ سارنگزئی،محمداسماعیل کاکڑ،عثمان غنی دوتانی قبائلی عمائدین اور بڑی تعداد میں لوگ موجود تھے۔صوبائی وزیر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نوجوان معیاری تعلیم کے ساتھ کھیلوں میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور ملک اورقوم کا نام روشن کریں ،نوجوانوں کی ہر فورم پر حوصلہ افزائی کریں گے ،نوجوانوں کو کھیلوں کے مواقع فراہم کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ کھیل انسان کی زندگی پر خوشگوار اثرات مرتب کرتے ہیں،جہاں کھیل کے میدان آباد ہوتے ہیں وہاں ہسپتال ویران ہوتے ہیں ،کھیلوں کے میدان آباد رکھنا موجودہ حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے۔پروگرام کے آخر میں صوبائی وزیر حاجی نورمحمد دمڑ نے گورنمنٹ ہائی اسکول ورچوم کے لیے واٹرسپلائی دینے،ٹورنامنٹ کمیٹی کے لیے پچاس ہزار روپے دینے کا اعلان کیا اور کھیلاڑیوں میں انعامات بھی تقسیم کئے۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3339/2018
کوئٹہ 03دسمبر :۔صوبائی مشیر تعلیم حاجی محمد خان لہڑی نے کہا کہ صوبے میں بد عنو انی کے خاتمے میں نیب بلوچستان کی کوششیں نہایت اہمیت کی حامل ہیں ۔ بد عنوانی ایک نا سور ہے اور اس سے نجات حاصل کرنے کیلئے ہمیں مل جل کر کام کرنا ہوگا ۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے نیاں گورنمنٹ گرلز مشن ہائی سکول میں عالمی یوم انسداد پر عنوانی کے حوالے سے منعقدہ تقریری مقابلے کے پروگرام میں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ڈائر یکٹر نیب بلوچستان محمد فیصل قریشی نے کہا کہ قومی احتساب بیورو ملک بھر میں بدعنوانی کے خا تمے کیلئے کو شاں ہے تقریب کے شرکاء سے ڈائریکٹر سکولز سید انور شاہ نے طلبا ء واور اساتذہ کے بد عنوانی کے متدارک کے حوالے سے کردار پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اساتذہ اور طلباء اس سلسلے میں اپنا کلیدی کردار ادا کر سکتے ہیں ۔آخر میں تقریری مقابلو ں میں پو زیشن حاصل کرنے والے طلباء وطالبات میں صوبائی مشیر اور ڈائر یکٹر نیب نے انعامات تقسیم کئے ۔اس سلسلے میں اورل ،دوئم او رسوم آنے والے طلبا ء وطالبات کو مورخہ 06دسمبر 2018ء کوسیر ینا ہوٹل میں نیب بلوچستا ن کی طرف سے انعامات دئیے جائینگے ۔
()()()
خبر نامہ نمبر 3340/2018
کوئٹہ03 دسمبر۔بلوچستان پبلک سرو س کمیشن نے بورڈ آف ریو نیو میں تحصیلدار ( بی ۔ 16) کی آسامیوں کے لئے مقابلے کے امتحان کے شیڈول کا اعلان کردیا ہے پریس ریلیز کے مطابق پیپر ۔I انگلش جنرل کا امتحان 27 دسمبر 2018 ء کو صبح 10 بجے جبکہ پیپر ۔ II جنرل نالج اینڈپاک اسٹڈیز 28 دسمبر 2018ء کوصبح 9:30 بجے ایوب اسٹیڈیم جعفر خان جمالی روڈ کوئٹہ میں ہوگا۔ 
()()()
پریس ریلیز
خضدار 3 دسمبر .ڈویژنل ڈائریکٹر بینظیر انکم سپورٹ پروگرام یوسف علی رودینی نے کہا ہے کہ انسانیت کی خدمت کرنا ہمارا مذہبی اور اخلاقی فرض بنتا ہے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تحت غریب بیوہ اور مستحق خواتین کو انکا حق اور پوری رقم کی فراہمی کو یقینی بناتے ہوئے اد ائیگی کے طریقہ کار میں نمایاں بہتری لائی گئی ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلع خضدار کے مختلف علاقوں وڈھ .نال اور زیدی کے دورے کے دوران بنیفشریز سے بات چیت کرتے ہوئے کیا .انہوں نے کہا کہ اس پروگرام کا مقصد نادار بیوہ اور مستحق خواتین کی مالی معاونت کرنا ہے تاکہ وہ محدود وسائل میں رہ کر اپنی گھریلو ضروریات پوری کرسکیں انہوں نے کہا کہ اب اس پروگرام میں جدت لانے کے بعد بائیو میٹرک سسٹم کے تصدیق کے نظام ادائیگی کے ذریعے مڈل مین کلچر کا خاتمہ ہوا ہے جس کے باعث شفافیت میں مزید اضافہ ہوا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مستحقین کی رقم میں اضافہ کرکے اب یہ رقم بڑھا کر پانچ ہزار روپے کر دی گئی ہے خواتین بے نظیر ڈیبٹ کارڈ یا انگو ٹھے کے تصدیق بی وی ایس کے ذریعے اپنی رقم اپنے قریبی کیش سنٹر یا پاز POS ایجنٹ یا اے ٹی ایم سے حاصل کرسکتی ہیں انہوں نے مستحقین کو کہا کہ اگر ان کے رقوم میں کہیں سے کمی کی گئی وہ اپنے شکایات ہمارے اداریکے افسران تک پہنچائیں ۔مستحقین کی رقوم میں کمی کرنے والے اہلکاروں کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی اور کسی سے کوئی رعایت نہیں برتی جائیگی انہوں نے کہا کہ میرے دورں کا مقصد بھی یہی ہے کہ بنفشریز سے مل کر انکے مسائل سے آگاہی حاصل کرنا ہے اور انہیں یقین دلانا ہے کہ ان کی پوری رقم کی رسائی ممکن ہو رہی ہے۔
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ03 دسمبر۔ ڈائریکٹر جنرل بلوچستان بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی طرف سے دی جانے والی سہ ماہی امداد کو 4834 روپے سے بڑھا کر رواں سہ ماہی ( جولائی ۔ ستمبر 2018ء) سے پانچ ہزار روپے (5000/-) کردی گئی ہے ۔ رقم وصول کرتے وقت بی آئی ایس پی بینیفشری اس بات کی تسلی کرلے کہ پورے 5000/- ہزارروپے وصول کرلئے ہیں۔ رقم وصول کرتے وقت دکاندار /POS ایجنٹ سے رسید ضرور حاصل کریں پیسے کم یا رسید نہ ملنے یاکسی قسم کے خورد برد /فراڈ کی صورت میں متعلقہ BISPتحصیل آفس تشریف لائیں یا فو ن نمبر 0800-26477پر اپنی شکایت درج کرائیں۔ 
()()()
پریس ریلیز
گوادر 03 دسمبر۔ ملک بھر کی طرح گوادر میں پاکستان آرمی انجمن معذوراں مکران اور ضلعی انتظامیہ و محکمہ سماجی بہبود گوادر کے زیر اہتمام معذور افراد کا دن منا یا گیا منعقدہ پروگرام میں معذور افراد سمیت لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی تقریب سے پاکستان آرمی کے بریگیڈ راجیل ارشاد انجمن معذ وران کے صدر شکیل غریب محکمہ سماجی بہبود کے قدیر لقمان اور عبیداللہ بلوچ سمیت دیگر نے خطاب کرتے ھوئے کہاکہ پاکستان سمیت پوری دنیا میں معذور افراد کا عالمی دن منایا جارہا ہے اس دن کومنانے کا مقصد دنیا بھر میں موجود 65کروڑ سے زائد معذور افراد سے اظہار یکجہتی کرنا ہوتا ہے۔ پاکستان میں معذور افراد کی تعداد ڈیڑھ سے پونے دوکروڑ کے لگ بھگ ہے جو مختلف نوعیت کے مسائل سے دو چار ہیں جبکہ گوادر ضلع میں 1250معذور افراد رجسٹرڈ ہیں اور ایسے بہت سے افراد ہیں جو ابھی تک رجسٹرڈ نہیں ہوئے ہیں ان رجسٹرڈ کیلئے جامع حکمت عملی تشکیل دے رہے ہیں بریگیڈ راجیل ارشاد نے کہا کہ پاکستان آرمی معذور افراد کے ساتھ ہرممکن مدد کررہی ہے اور آئندہ بھی کرے گی انہوں نے کہا کہ ایسے تمام معذور بچے اور بچیاں جو تعلیم حاصل نہیں کرسکتے ۔ ان کو پاکستان آرمی اسکول گوادر میں داخلہ فراہم کریں کے تقریب میں مقررین نے معذور افراد کے عالمی دن پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ معذور افراد کی حواصلہ افزائی کے ساتھ ساتھ ان حقوق کی فراہمی کے لیے بھی ان کا ساتھ دیں ۔مقررین نے کہا اگرچہ حکومتوں نے وقتاً فوقتاً ان افراد کی بحالی کے لئے کچھ اقدامات اٹھائے ہیں تاہم مزید ہر اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔ 
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment