HomeNews02-06-2019 Sunday (File No.1)

02-06-2019 Sunday (File No.1)

02-06-2019 Sunday (File No.1)

خبرنامہ نمبر 1875/2019
کوئٹہ 02 جون:۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان سے چیف ایگزیکٹیو آفیسر شوکت خانم کینسر ہسپتال لاہور ڈاکٹر فیصل سلطان اور ڈائریکٹر ایچ آر ڈاکٹر عاصم علی نے گذشتہ روز ملاقات کی، ملاقات کے دوران کوئٹہ میں کینسر ہسپتال کے قیام سے متعلق امور اور اس حوالے سے شوکت خانم ہسپتال کی معاونت پر تبادلہ خیال کیا گیا، وزیراعلیٰ نے اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ موجود ہ صوبائی حکومت شعبہ صحت کو جدید خطوط پر استوار کررہی ہے اور عوام کو سرجری اور علاج معالجہ کی دیگر سہولتیں ان کی دہلیز پر فراہم کرنے کے لئے ضلعی ہسپتالوں کو پوری طرح فعال کیا جارہا ہے، انہوں نے کہا کہ عام لوگوں کو جان لیوا امراض کے حکومتی خرچ پر علاج کی فراہمی کے لئے اندومنٹ فنڈ کا قیام بھی عمل میں لایا گیاہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ ایک جدید کینسر ہسپتال کا کوئٹہ میں قیام ہمارا مشن ہے جس کے لئے وزیراعظم عمران خان نے بھی بھرپور معاونت کی یقین دہانی کرائی ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ ابتدائی طور پر صوبائی حکومت شیخ زید ہسپتال کوئٹہ میں کینسر کا شعبہ قائم کرنے کی منصوبہ بندی کررہی ہے اور جدید سہولتوں اور وسیع عمارت کا حامل یہ ہسپتال کینسر کے علاج معالجہ ریسرچ اور کیمو تھراپی جیسی سہولتوں کی فراہمی کے لئے موزوں ہے، سی ای او ڈاکٹر فیصل سلطان نے صحت کے شعبہ میں صوبائی حکومت کے اقدامات اور کوئٹہ میں کینسر ہسپتال کے قیام کے منصوبہ کو سراہتے ہوئے یقین دلایا کہ ان کا ہسپتال کوئٹہ میں کینسر ہسپتال کے منصوبے میں ہر طرح کی معاونت کے لئے تیار ہے اور ان کی جانب سے ماہرین کی ٹیم جلد کوئٹہ کا دورہ کرکے صوبائی حکومت کی رہنمائی کرے گی۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿
خبرنامہ نمبر1876/2019
پشےن02 جون:۔ ڈپٹی کمشنر میجر (ر) اورنگزیب بادینی نے کہا کہ صوبائی حکومت صحت کے شعبے میں مزید ترقی کیلئے ٹھوس اقدامات کررہی ہے ڈسٹرکٹ کے عوام کو بہتر نظام صحت فراہم کرنا ہماری اولین ترجیحات میں شامل ہے یقینا ہسپتال میں وسائل کی کمی ہوگی لیکن آہستہ آہستہ ہسپتال کو تمام بنیادی سہولیات فراہم کریں گے کسی کو ہسپتال کا ماحول خراب کرنے نہیں دیں گے ڈاکٹرز اپنی حاضریوں کو یقینی بنائے ہمیں کام چاہئے جو بہتر طریقے سے فرائض انجام دے گا انکی حوصلہ افزائی کریں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر سول ہسپتال پشےن میں نئی تعمیر شدہ او پی ڈی، چلڈرن وارڈ اور آپریشن تھیٹر کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر اراکین صوبائی اسمبلی حاجی سید فضل آغا ،حاجی اصغر خان ترین سابق ڈسٹرکٹ چیئرمین محمد عیسیٰ روشان ، میڈیکل سپرنٹنڈنٹ عبدالجبار بنگلزئی ،ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفےسر زمان جمالی اور دیگر بھی موجود تھے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ڈسٹرکٹ کی انتظامیہ اور عوامی نمائندوں کا دورہ ہسپتال سے نہ صرف میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹرز اور دیگر اسٹاف کی حوصلہ افزائی ہوگی بلکہ ہسپتال میں جاری تعمیراتی کاموں میں بھی تیزی آئیگی گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے اندر ہسپتال میں جتنا کام ہوا ہے شاہد وہ بیس دنوں میں نہ ہوا ہو ۔انہوں نے کہا کہ جب انہوں نے پہلی بار سول ہسپتال کا دورہ کیا تو کافی مایوس ہوا قبائلی علاقے میں غریب خواتین مریضوں کو پریشان دیکھ کر دلی دکھ ہوا وزیر اعلیٰ بلوچستان کو پشےن کے عوام کو درپیش گھمبیر مسئلے سے آگاہ کیا اور اس سلسلے میں ضلع سے منتخب عوامی نمائندوں سے بھی بات کی اب چونکہ انہیں فی الحال بجٹ نہیں ملا لیکن عوامی نمائندوں نے ہسپتال کی بہتری میں ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے مجھے معلوم ہوا کہ سی آر سی میں ہمارے پاس 52لاکھ روپے پڑے ہیں Cooperative Social Responsibilityکا ہیڈ متعلقہ ڈسٹرکٹ کا رکن قومی اسمبلی اور ڈپٹی کمشنر ممبر ہوتا ہے ہسپتال کی حالت زار پر ڈسٹرکٹ کے رکن قومی اسمبلی اور تینوں ایم پی اےز ملاقات ہوئی انہیں ہسپتال کی صورتحال سے آگاہ کیا اور مشورہ دیا کہ کیوں نہ سی آر سی سے ہسپتال کی حالت بہتر کئے جائے اس پر انہوں نے میری بات کی تائید کی انہوں نے کہا کہ ہسپتال کی حالت کو بہتر بنانے کیلئے محکمہ بی اینڈآر سے بھی بات کی گئی ہے لیکن انہوںنے کہا کہ 52لاکھ روپے میں صرف و صرف آپریشن تھیٹر بن سکتا ہے اور کچھ نہیں تمام سرکاری ٹیکس کی کٹوتی وغیرہ کے بعد ہمیں 35لاکھ روپے مل گئے پھر ہم نے باہمی مشاورت سے فیصلہ کیا کہ چلڈرن وارڈ کی نئی بلڈنگ کی تعمیر کےلئے مستری مزدور لگا ئیں گے انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں دس کروڑ کا نہیں بلکہ 35لاکھ کا تعمیراتی کام کرچکے ہیں ہمیں کوئی فنڈز نہیں ملے۔انہوںنے کہاکہ ڈسٹرکٹ کے واحد ڈی ایچ کیو میں جہاں ایک آپریشن تھیٹر ہوا کرتا تھا آج الحمد اللہ دو ہوگئے ہیں ہسپتال کے وارڈوں میں مزید بیڈز اور لائٹنگ کا نظام بہتر کردیا گیا ہے سابقہ دور حکومت میں ہسپتال کی او پی ڈی میں پانی بجلی اور گیس کی سہولیات موجود نہیں تھی ترجیحی بنیادوں پر اس مسئلے کو حل کروایا انہوں نے کہا کہ سولر سسٹم لگا کر ہسپتال کو چوبیس گھنٹے بجلی فراہم کرچکے ہیں عید کے بعد بھی ہسپتال میں مزید بہتری لائیں گے ۔آخر میں اراکین صوبائی اسمبلی اور میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کے ہمراہ ہسپتال کے مختلف شعبوں کا دورہ کیا اور ہسپتال میں نصب کئے جانیوالے بائیو میٹرک،واٹر کولر اور دیگر مشینری کا معائنہ کیا۔
﴾﴿﴾﴿﴾﴿

Share With:
Rate This Article

bk@gmail.com

No Comments

Leave A Comment