خبرنامہ نمبر01/2019
کوئٹہ 02جنوری :۔وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ بے گھر افراد کو رہائش کی عارضی سہولت کی فراہمی کے لئے کوئٹہ کے مزید علاقوں کے علاوہ دیگر ڈویژنل ہیڈکوارٹرز میں بھی دارالپناہ قائم کئے جائیں گے، ٹیوٹرپر دیئے گئے اپنے ایک پیغام میں وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ کوئٹہ میں قائم کئے گئے دارالپناہ میں فراہم کی گئی رہائشی سہولتوں کو عوام میں پذیرائی ملی ہے جس کی نگرانی کمشنر کوئٹہ، ڈی سی کوئٹہ اور اسسٹنٹ کمشنر کوئٹہ کررہے ہیں، کوئٹہ کے دیگر علاقوں میں مزید دارالپناہ قائم کئے جائیں گے تاکہ زیادہ سے زیادہ افراد اس سہولت سے استفادہ کرسکیں۔
()()()
خبرنامہ نمبر 02/2019
موسیٰ خیل02جنوری:۔ڈپٹی کمشنر موسیٰ خیل منیر احمد خان کاکڑ نے کہا کہ نئے تعلیمی سال کے شروع ہوتے ہی سکولوں میں سہولیات کی فراہمی کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جائیں گے ۔تمام بند سکولوں کو کھولا جائے گا اور غیر حاضر اساتذہ کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی عمل میں لائی جائیگی ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن گروپ کے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اجلاس میں ڈسٹرکٹ ایجوکیشن گروپ کے تمام ممبران نے شرکت کی ۔اس موقع پر گذشتہ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں پر عمل درآمد کا جائزہ لیا گیا تمام غیر فعال سکولوں کو فعال کرنے، اساتذہ کی حاضری یقینی بنانے،سکولوں میں سہولیات فراہم کرنے سمیت درپیش مسائل کے حل پر غور کیا گیا اور سکولوں میں شجر کاری مہم کے دوران درخت لگانے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔
()()()
خبرنامہ نمبر03/2019
زیارت02جنوری:۔ ڈپٹی کمشنر زیارت قادر بخش پرکانی نے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال زیارت ،گورنمنٹ انٹر کالج زیارت ، اورسلاٹر ہاوس کا دورہ کیا ،ہسپتال کے دورے کے دوران مختلف شعبوں کا معائنہ کیا اور ملازمین کی حاضری رجسٹر چیک کیا۔اس موقع پر ڈپٹی کمشنر زیارت نے ہسپتال انتظامیہ کو سخت ہدایت کی کہ غریب اور لاچار مریضوں کے علاج معالجے کو یقینی بنایا جائے ،تعلیم اور صحت اہم شعبے ہیں ان میں کوتائی برتنے والوں کے خلاف بھرپور کاروائی کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت اور تعلیم کے اہلکار اپنی ڈیوٹی کی پابندی کریں ،اس سلسلے میں کسی قسم کی رعایت نہیں برتی جائے گی۔ 
()()()
خبرنامہ 04/2019
کوئٹہ 02جنوری :۔صوبائی مشیر لائیو سٹاک مٹھا خان کاکڑ نے کہا کہ صوبائی حکومت تعلیم اور صحت پر خصوصی توجہ دے رہی ہے انہوں نے کہا کہ ضلع ژوب میں صحت اور تعلیمی نظام کی بہتری کے منصوبوں پر کوئی سمجھو تہ نہیں ہوگا ۔غیر ڈاکٹر ز اور اساتذہ کے خلاف سخت کاروائی ہوگئی ۔انہوں نے کہا کہ وہ ژوب کے تمام ہیلتھ سینٹرز اور سکولوں کا دورہ کرکے ان کے مسائل معلوم کریں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ژو ب کے مختلف اسکولوں اور ہیلتھ سینٹروں کے معائنہ کے موقع پر کیا۔صوبائی مشیر نے کہا کہ ژوب ایک وسیع علاقہ ہے جس کی سر حد یں وزیر ستان اور افغا نستان سے بھی ملتے ہیں ۔ضلع ژوب کے عوام کے علاوں وزیر ستان اور دیگر قریبی علاقو ں سے بھی علاج کے غرض ژوب آتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے سابقہ حکومت نے ہیلتھ اور تعلیمی نظام کو تباہ کر دیا ہے ۔
()()()
خبرنامہ نمبر05/2019
کوئٹہ 02جنوری :۔ صوبائی وزیر پی ایچ ای اینڈ واسا حاجی نور محمد دمڑ نے کہا ہے کہ اقلیتوں کے مسائل حل کرنے کیلئے ہم کوششیں کررہے ہیں پانی جیسی بنیادی نوعیت کے مسئلے پر قابو پانے کیلئے دن رات کوشاں رہوں گا ہماری حکومت وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی سربراہی میں لوگوں کی فلاح و بہبود کیلئے روز اول سے جدوجہد کررہے ہیں ان خیالات کا اظہا رانہوں نے بستی پنچائیت کاسی روڈ اور کرسچین کالونی میں ٹیوب ویلوں کا معائنہ کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی و زیر نے کہا کہ اقلیتوں کا ہمارے معاشر ے میں کلیدی کردار ہے جو زندگی کے مختلف شعبہ جات میں لوگوں کی خدمت کرنے کیلئے ہر وقت حاضر رہتے ہیں ان کے مسائل حل کرنا ہماری ترجیحات میں شامل ہے صوبائی و زیر نے ایم ڈی واسا کو موقع پر ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ ان کے پانی کے مسئلے کو حل کرنے کیلئے اپنی ٹیکنیکل ٹیم بھجواکر ٹیوب ویلوں کی خرابی دور کی جائے اور اس کے علاوہ نئے ٹیوب ویلز لگانے کیلئے تخمینہ لگائیں ان کی کالونیوں میں نئے ٹیوب ویلز نصب کئے جائیں تاکہ ان کے پانی کا مسئلہ حل ہوسکے۔ صوبائی و زیر حاجی نور محمد دمڑ کے ہمراہ رکن صوبائی اسمبلی دینش کمار، ایم ڈی واسا مجیب الرحمن قمبرانی اور دیگر لوگ بھی ہمراہ تھے۔
()()()
خبرنامہ نمبر06/2019 
دالبندین 02جنوری :۔بوگ کے علاقے میں گاڑیوں پر ڈاکو وں کی فائرنگ اور نو ٹنے پر صوبائی وزیر خزانہ میر محمد عارف محمد حسنی نے بر ہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بوگ میں لیو یز اہلکاروں کے ڈ یوٹی ہیں وہ مکمل طور پر ناکام ہو چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام کی جان ومال کا تحفظ حکومت کی زمہ دار ی ہے لیکن اپنے فرائض سے کوتاہی کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی ۔انہوں نے کہاکہ امن وامان کی بحا لی کیلئے متعلقہ لیو یز اہلکا روں اور آفیسران کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی ۔انہوں نے کہا کہ امن وامان کی صورتحال خراب کرنے اور عوام کو لو ٹنے والوں کے خلاف حکومت آئینی ہاتھوں سے نمٹے گی ۔
()()()

خبرنامہ 07/2019
کوئٹہ 2جنوری:۔کمشنر کوئٹہ ڈویژن کی خصوصی ہدایت پر حادثات روک تھام کے سلسلے میں سیکرٹری آر ٹی کوئٹہ حبیب اللہ خان نے اپنے عملے ،ڈسٹرکٹ پولیس،ٹریفک پولیس اور لیویزکے ہمراہ میاں غنڈی کوئٹہ کراچی قومی شاہرا ہ پر پبلک گاڑیوں اور مال بردار گاڑیوں پر لگی سرچ لائٹس کے خلاف کریک ڈاؤن کرتے ہوئے274 پبلک ٹرانسپورٹ اور مال بردار گاڑیوں سے سرچ لائٹ اتاردیئے ۔اس موقع پر پبلک ٹرانسپورٹ کی آورلوڈ نگ اور تیز رفتاری کرنے والی گاڑیوں کے خلاف بھی کارروائی عمل میں لاتے ہوئے 27گاڑیوں کا چالان کیا۔سیکرٹری آر ٹی اے کوئٹہ نے کہا کہ گاڑیوں پر لگی سرچ لائٹس کی وجہ سے صوبے کے قومی شاہراؤں پر حادثات کی شرح میں اضافہ ہورہا ہے ۔رات کے اوقات میں سرچ لائٹس کی وجہ سے سامنے سے آنے والی گاڑیوں کو خطرات لاحق ہیں۔انہوں نے کہا کہ کوئٹہ کراچی شاہراہ پر رش زیادہ ہونے اور ان لائٹس کی وجہ سے خطرناک حادثات رونماہونے کا خدشہ رہتا ہے۔ان حادثات میں کئی قیمتی جانیں ضیاع اور خاندان برباد ہوتے ہیں۔لہٰذاان کے خلاف کریک ڈاؤن ناگزیر ہوچکا ہے۔اس سلسلے میں تما م ٹرانسپورٹروں کو ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ انسانی زندگیوں کا خیال کرتے ہوئے اپنی گاڑیوں پر سرچ لائٹس بذات خود اتاریں بصورت دیگر کارروائی کے موقع پر سرچ لائٹس توڑ دیئے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ پبلک ٹرانسپورٹ اور لوڈ نگ اور تیز رفتار ی سے گریز کئے جائیں ۔کیونکہ ان کی جلد بازی اور کوتاہی سے سینکڑوں جانوں کو خطرات لاحق ہوسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کسی ٹرانسپورٹروں کو قانون کے خلاف اقدامات اٹھانے کی اجازت نہیں ہوگی۔
()()()

خبرنامہ نمبر08/2019
نصیرآبا02جنوری :۔کمشنر نصیرآباد ڈویژن عثمان علی خان ،برگیڈیئرسیکٹرانچارج سبی سکاؤٹس ذوالفقارباجوہ ،ڈی آئی جی پولیس نصیرآباد رینج راؤ منیرضیاء نے کہا کہ ہم ہتھیارپھینکنے والوں کو خوش آمدیدکہتے ہیں جنہوں نے صوبے اور ملک کے وسیع تر مفاد میں ہتھیار پھینک کر قومی دھارے میں شمولیت کا فیصلہ کیا تھا یہاں وہ یقیناًان کی طرف سے اٹھایا ہوا یہ بہتر ا قدم تھا پاکستان کی ترقی میں بلوچستان کا نہایت اہم کردار ہے جو ان کے اپنے لیے بلکہ آئندہ آنے والی تمام نسلوں کے مستقبل کے لیے بہتر ہے اور بھٹکے ہوئے لوگوں کے لئے بھی ایک مثال ہے جو ایک غلط راستہ چھوڑ کر آپ بھائیوں کی طرح صحیح راستے کی نشاندہی کی ہمارے مذہب میں ہمیں ہمیشہ اس چیز کو تلقین کی ہے کہ صراط مستقیم کا راستہ کبھی بھی مومن کے لیے آسان نہیں رہامگر کامیابی بھرا راستہ ضرورہوتا ہے دیگر فراری بھی امن پسندی کو ترجیح دیتے ہوئے امن کے دامن کو ہاتھ میں تھامیں تاکہ ملک کی تعمیر وترقی میں وہ بھی اپنا کرداراداکرسکیں پاکستان کی ترقی میں بلوچستان کے عمل سے وابستہ ہے گزشتہ سالوں میں ایک سازش کے تحت بلوچستان کی عوام کو ورغلا کر پہاڑوں پر بھیجا گیا کچھ اسباب پیدا کیے گئے جس سے اپنی ہی ملک اور قوم کو نقصان دیا اور ترقی کی طرف بڑھتے ہوئے صوبے کواندھیرے کی طرف دھکیلنے کی ناکام کوشش کی مگراب لوگ باشعوروہ کسی کے بہکاوے میں آنے والے نہیں بڑی تعدادمیں فراری ہتھیارڈال کر امن پسندی کے پیغام کو عام کرکے حب الوطنی کا ثبوت دے رہیں ہیں ہم نے پاکستان کو خوشحال بنانا ہے ہمارے دشمن پاکستان کو کمزور کرنا چاہتے ہیں پوری قوم فوج کے شانہ بشانہ کھڑی ہے اودشمنوں کے ناپاک عزائم کو خاک میں ملانے کیلئے بھرپورجدوجہد کررہی ہے دشمن ہمیں کبھی کسی مذہبی بنیاد پر توکبھی کسی لسانی بنیاد پر تقسیم کرنے کی ناکام کوششیں کررہے ہیں ہم سب کو تمام بنیادی تعصبات سے بالاترہوکرملک کی خدمت کرنے کا تہیہ کرنا ہوگا ان شاء اللہ پاکستان کا کوئی بال بھی بیکا نہیں کرسکتا پاکستان ہمیشہ شاد و آباد رہے گا ان خیالات کااظہار انہوں نے ڈیرہ مرادجمالی میں وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی جانب سے پرامن بلوچستان کے تحت ہتھیارڈالنے والوں میں راشن تقسیم کی منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب میں 351ہتھیارپھینکنے والوں میں راشن ،خیمے اوردیگر ضروریات زندگی کی اشیاء تقسیم کی گئیں تقریب میں ڈپٹی کمشنر نصیرآبادقربان علی مگسی،کرنل ضیاء اللہ ، چیئرمین میونسپل کمیٹی میر غلام نبی عمرانی،اسسٹنٹ کمشنر غلام حسین بھنگر،عبدالرؤف لہڑی،میرفرحان سہراب مگسی سمیت بڑی تعدادمیں معتبرین نے شرکت کی تقریب میں ایف سی بلوچستان کی جانب سے بھی فراریوں میں راشن تقسیم کیا گیا مقررین نے کہاکہ صوبائی حکومت اورایف سی بلوچستان ہتھیارڈالنے والوں بچوں کو تعلیم کے زیورسے آراستہ کرنے کیلئے تمام وسائل بروئے کارلارہے ہیں دیگر افراد بھی بچوں کوتعلیم دلائیں تاکہ ملک وصوبے سے جہالت کا خاتمہ ممکن ہوسکے کیونکہ غریب افرادکے بچوں کو تعلیم صحت اور دیگر ضروریات زندگی سے نہ صرف محروم کیا بلکہ ان خاندانوں کو کئی کئی سال پیچھے چھوڑ دیا لیکن موجودہ حکومت نے بلا تفریق تمام علاقوں میں صحت تعلیم پینے کے پانی صاف کی سہولیات اور زندگی کی دوسری ضروریات کی طرف کوششیں شروع کی ہیں جن کے ثمرات جلد عوام کے سامنے آئیں گے اور وہ دن دور نہیں جب بلوچستان کے عوام دیگر صوبوں کی طرح شانہ بشانہ اس ملک کی ترقی کا حصہ بنے گا ہمارے ان بھائیوں کی بحالی کے لیئے حکومتی سطح پر مختلف قدامات کیے جا رہے ہیں انہوں نے کہاکہ ہم آپ بھائیوں کے ساتھ کھڑے ہیں یہ جو ٹینٹ رضائیاں اشیائے خوردونوش اس قسم کی چیزیں آپ لوگوں کو دیئے جا رہے ہیں انشاء اللہ مستقبل قریب میں بھی آپ لوگوں کی امدادکا سلسلہ جاری رہے گا۔
()()()

خبرنامہ نمبر 09/2019
کوئٹہ 02جنوری :۔صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو نے کہا ہے کہ ایف سی کیمپ لورالائی میں دہشت گردوں کے حملے کے نتیجے میں شہید ہونے والے ایف سی اہلکاروں کا خون رائیگاں نہیں جائے گا، ایف سی اہلکاروں نے ہمت اور جرائت سے دہشت گردوں کا مقابلہ کر کے انہیں واصل جہنم کیا۔ بلوچستان میں امن و امان کے قیام اور عوام کے تحفظ کے لئے قربانیاں دینے والے شہیدا اور زخمی سیکیورٹی اہلکاروں کا خون رائیگاں نہیں جائے گا ۔ پاک فوج، پولیس اور دیگر سیکیورٹی اداروں کے اہلکاروں کی قربانیوں کو تاریخ کے اوراق میں سنہری حروف میں لکھا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کا کردار دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہمیشہ صف اول کا رہا ہے۔ پاکستان ہمیشہ امن کا خواہاں رہا ہے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کردار اور قربانیوں کو عالمی سطح پر تسلیم بھی کیا گیا ہے۔ پاکستان کے ہمیشہ امن کا خواہاں رہا ہے اور دہشت گردی کی کسی بھی صورت کی بھرپور مذمت کرتا ہے ۔بلوچستان میں عوام اور سیکیورٹی فورسز کو نشانہ بنانے والے دہشت گردوں کا آخری حد تک تعاقب کر کے انہیں نشانِ عبرت بنایا جائے گا۔ صوبائی وزیر داخلہ نے کہا کہ الف عالمی منظر نامہ ہیں۔ پاکستان کو ایک بڑھتی ہوئی سیاسی اور معاشی قوت بنتا دیکھ کر دشمن بوکھلاہٹ کا شکار ہو چکا ہے اور مختلف گھناؤنی حربوں سمیت دہشتگردی پہلا کر ملک اور بلوچستان کی ترقی کو متاثر کرنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کے تمام حربوں اور سازشوں کو کر ناکام بنائیں گے ۔انہوں نے کہا حکومت ایسے تمام شیطانی قوتوں اور عناصر کے خلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹنے گی جو پاکستان کی سالمیت اور ترقی کے خلاف برسر پیکار ہیں ۔
()()()
خبرنامہ نمبر10/2019
کوئٹہ 02جنوری :۔صوبائی وزیر داخلہ و قبائلی امور میر ضیاء اللہ لانگو نے کہا ہے کہ حالت جنگ ہو یا کہ حالت امن یا پھر کوئی بھی غیر معمولی حالات سول ڈفینس کو اپنا کردار دیانتداری اور تندہی سے نبھانا چاہیے ۔ محکمہ سو ل ڈفینس کی افادیت اور اہمیت کو کسی بھی صورت نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ۔ حکومت محکمہ کو درپیش مسائل کو حل کرنے اور اسے جدید خطوط پر استوار کرنے کے لیے بھرپور اقدامات اٹھائے گی ۔ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر داخلہ نے سول ڈفینس ڈائریکٹوریٹ کے دورہ کے موقع پر کیا۔ اپنے دورہ کے موقع پر صوبائی وزیر نے مختلف شعبوں اور سول ڈیفنس میں استعمال ہونے والے آلات کابھی معائنہ کیا اور صوبائی وزیر کو بریفنگ بھی دی گئی ۔صوبائی وزیر نے کہا کہ سول ڈفینس غیر معمول حالات و واقعات سے نمٹنے اور تیار رہنے کے لیے عوام میں شعور بیدار کرنے کے ساتھ عوام کی کسی بھی نا مساعد حالات سے نمٹنے کے لئے تربیت بھی کرنی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ کا دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کردار مثبت اور اہمیت کا حامل رہا ہے ۔
()()()

پریس ریلیز 
نوشکی 02جنوری :۔قبائلی رہنما حاجی محمد خان مینگل کی اہلیہ انتقال کر گئیں مرحومہ میر جمعہ مینگل مرحوم ،میر احمد مینگل ، محمدرمضان مینگل کی بھائی، ظاہر خان مینگل ،طاہر خان مینگل ،حاجی اللہ بخش ( بابو مینگل ) کی والد ہ ما جدہ تھیں ،مرحومہ کی فاتحہ خوانی نوشکی انکی رہائش گاہ میں جاری ہے ۔
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ02جنوری:۔ ملک داد محمد زہری کی والد ہ انتقال کر گئیں مر حو مہ ملک داد محمدزہر ی ،خان خدائیداد زہری ،مو لا بخش زہری ،محمد آصف زہری کی والدہ محترمہ ،عبد المجید زہری ،عبد الغفار زہری ،ظفر زہری ،کا مران زہری کی نا نی، حا جی محمد وفا زہری ،حا جی عبد القا در زہری ، عا شق حسین زہری، حا جی غلا م دستگیر زہری ، محمد اختر زہری ،عبدا لقیوم زہری ،عبدالحکیم زہری کی چا چی ،حاجی خیر بخش زہری،حا جی غوث بخش زہری ،ا للہ بخش زہری کی ما می قضا ئے الہیٰ سے وفا ت پا گئیں ہے ۔جن کی فا تحہ خوانی کو چہ حا جی شیر دل زہری سٹریٹ میں جا ری ہے ۔ 
()()()
پریس ریلیز 
کوئٹہ 02جنوری :۔ حاجی محمد حنیف سمالانی انصاف کلاتھ ہاوس جیل روڈ والا قضائے الٰہی سے انتقال کرگئے مرحوم سیف اللہ سمالانی ،عنایت اللہ سمالانی کے والد ،حاجی محمد شریف ،محمد ایوب ،محمد عظیم ،محمد سلیم ،محمد اقبال ،محمد زمان سمالانی کے بھائی، کرنل نعمت اللہ ،عصمت اللہ اور مقصود احمد سمالانی کے کزن تھے۔ مرحوم کی فاتحہ خوانی کا سلسلہ منو جان روڈ سمالانی اسٹریٹ سمالانی ہاؤس میں جاری ہے۔ دریں اثناء رکن صوبائی اسمبلی اختر حسین لانگو، سردار اورنگزیب سمالانی ،محمد جمال لانگو، ٹکری شمس سمالانی، میر حیبت خان، حاجی غنی سمالانی، سیکٹریٹ آفیسر ایسوسیئیشن کے صدر، رمضان لانگو، ملک سلیم شاہوانی ، جاوید بلوچ، محمد اقبال سرپرہ، نذر بلوچ، حاجی منان و دیگر افسران، علماء و مشائخ، سیاسی و قبائلی رہنما نے لواحقین کے گھر جا کر ان سے تعزیت کی ۔
()()()

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Post comment